Home Forums Siasi Discussion پنجاب پولیس: دو سال کے عرصہ میں کتنے آئی جی تبدیل ہوئے؟

Viewing 11 posts - 1 through 11 (of 11 total)
  • Author
    Posts
  • Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #1
    پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نے پنجاب میں جب سے اقتدار سنبھالا ہے، تب سے اہم عہدوں پر تقرر و تبادلوں کا سلسلہ جاری ہے۔ دو سال کے عرصہ میں پنجاب پولیس کے چار آئی جیز تبدیل ہوئے ہیں۔

    تحریک انصاف کے دور میں چھبیس نومبر دو ہزار انیس کو تعینات ہونیوالے ڈاکٹر شعیب دستگیر پانچویں انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس مقرر ہوئے،جن کو تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

    شعیب دستگیر سے پہلے اس عہدے پر کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز خان موجود تھے،جنہیں سترہ اپریل دو ہزار انیس کو تعینات کیا گیا تھا۔ ان سے قبل امجد جاوید سلیمی نے پندرہ اکتوبر دو ہزار اٹھارہ کو بطور سربراہ پنجاب پولیس قلمدان سنبھالا اور وہ اس عہدے پر سولہ اپریل دو ہزار انیس تک موجود رہے۔

    پی ٹی آئی کے دور حکومت میں دوسرے مقرر ہونیولے آئی جی پنجاب محمد طاہر تھے، جن کی تقرری دس ستمبر دو ہزار اٹھارہ کو عمل میں لائی گئی اور صرف ایک ماہ بعد ہی چودہ اکتوبر دو ہزار اٹھارہ کو تبدیلی کے نشانے پر آ گئے تھے۔

    جنرل الیکشن دو ہزار اٹھارہ کے وقت کلیم امام آئی جی پنجاب پولیس تھے جنہیں موجودہ پنجاب حکومت نے دس ستمبر دو ہزار اٹھارہ کو تبدیل کر دیا تھا۔

    دوسری جانب ذرائع کا بتانا ہے کہ انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس شعیب دستگیر کو تبدیل کرنے کا کرلیا گیا ہے۔

    شعیب دستگیر کو 26 نومبر 2019 کو آئی جی پنجاب تعینات کیا گیا تھا۔ شعیب دستگیر بطور آئی جی پنجاب 10 ماہ بھی مکمل نہ کرسکیں۔  پنجاب میں دو سالوں میں پانچ آئی جی تبدیل ہوچکے ہیں۔

    ذرائع کے مطابق مشاورت کے بغیر سی سی پی او لاہور کی تعیناتی پر انسپکٹر جنرل آف پنجاب پولیس شعیب دستگیر صوبائی حکومت سے ناراض ہوئے تھے اور احتجاجا تین روز سے دفتر نہیں گئے تھے۔

    ذرائع کے مطابق آئی جی شعیب دستگیر کی مرضی کے خلاف عمر شیخ کو سی سی پی او لاہور  تعینات کیا گیا تھا، جس کے سبب انہوں نے تین دن سے دفتر کا رخ نہیں کیا تھا۔

    https://www.humnews.pk/latest/273373/

    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #2
    عمر شیخ آئی جی پنجاب کو گالیاں دیتے ہوۓ پایا گیا ، جس کی وڈیو مختلف وٹس ایپ گروپوں میں گردش کررہی ہے ، کرپشن کی شکایات پر پچھلے سال عمران خان نے عمر شیخ کی گریڈ اکیس میں تقرری روک دی تھی ، کل سے لاہور کا میڈیا اس انتظار میں تھا کہ دیکھیں کس کی چھٹی ہوتی ہے ، عمر شیخ اور شہزاد اکبر جیت گئے اور نیک نام آئی جی پنجاب کو فارغ کردیا گیا
    GeoG
    Participant
    Offline
    • Expert
    #3
    اک دفعہ چوہی تبدیل کر کے دیکھ لو

    :lol: :lol:

    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    #4
    اچھا ہے چلا گیا ، کسی کام کا نہی تھا
    Qarar
    Participant
    Offline
    • Professional
    #5
    استعفیٰ تو اسلامآباد کے آئی جی سے لینا چاہیے جو ہر ہائی پروفائل اغوا کے بعد دم ہلاتا عدالت پونھچ جاتا ہے کہ میں کیا کروں کوئی فوٹیج نہیں دیتا ..نادرا سمیت کوئی ادارہ تعاون نہیں کرتا

    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #6
    استعفیٰ تو اسلامآباد کے آئی جی سے لینا چاہیے جو ہر ہائی پروفائل اغوا کے بعد دم ہلاتا عدالت پونھچ جاتا ہے کہ میں کیا کروں کوئی فوٹیج نہیں دیتا ..نادرا سمیت کوئی ادارہ تعاون نہیں کرتا

    اسلام آباد کا آئی جی آبپارہ کے ڈی جی کے سامنے ایسے ہی ہے جیسے پرویز خٹک جنرل باجوہ کے سامنے

    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #7
    کل ایک استاد گلہ کررہے تھے کہ پچھلے دو سالوں میں ایجوکیشن کے سات سیکرٹری تبدیل ہوۓ کسی نے اتنا شور نہیں مچایا جتنا پانچویں آئی جی کی تبدیلی پر مچایا جا رہا ہے

    ہر شاخ پر الو بیٹھا ہے

    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #8

    ایک اور نیک نام آئی جی کی تقرری

    https://pbs.twimg.com/media/EhaZE9iXYAAdmbN?format=jpg&name=large

    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    #9
    پشاور میں موصوف ایس پی الائچی کے نام سے بھی جانے جاتے ہیں پشاور میں ایس ایس پی آپریشن کے دور میں الائچی کا ٹرک پکڑا اور اس میں سے ایک بوری بازار میں فروخت کے لئے گئی شومئی قسمت سے بوری اسی دکاندار کے پاس گئی جس کی الائچی پکڑی گئی تھی انہوں نے احتجاج کیا پھر تحقیقات کے بعد ایسے نکلے کہ کبھی اس صوبے واپس نہ گئے

    :rock:

    unsafe
    Participant
    Offline
    • Advanced
    #10

    عمران خان جب کنٹینر پہ تھا تو اسے پنجاب پولیس گلو بٹ نظر آتی تھی اور آج وہ تارا مسیح بنی ہوئی ہے  …

    پنجاب پولیس کا کردار بھی تو طوائفوں والا ھے اگر آپکی جیب میں پیسے اور طاقت ہے  تو آپکے سامنے کپڑے اتار کر ناچے گی اور اگر آپکی جیب خالی ھے تو سربازار آپکو ننگا کرکے نچواے  گی

    Anjaan
    Participant
    Offline
    • Professional
    #11

    اگلی قسط کا انتظار فرمائیے

Viewing 11 posts - 1 through 11 (of 11 total)

You must be logged in to reply to this topic.

×
arrow_upward DanishGardi