Home Forums Siasi Discussion عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 86 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    حسن داور
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 4324
    • Posts: 2856
    • Total Posts: 7180
    • Join Date:
      8 Nov, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    الطاف حسین کا اس قتل میں براہ راست تعلق نہیں بلکہ وہ سازش میں ملوث ہیں، میں اُن کا نام براہ راست قتل میں ملوث ملزم کے طور پر نہیں ڈال سکتا۔
    ایف آئی اے میں تعینات پولیس افسر نے وزیراعظم ہاؤس میں اُس وقت کے وزیر اعظم کے خصوصی معاون بیرسٹر ظفراللہ، ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد چوہدری عبدالرؤف اور آئی ایس آئی کے اسلام آباد میں تعینات سیکٹر کمانڈر کے سامنے جب یہ بات کی تو دسمبر کے سرد موسم میں کمرے میں ہیٹر لگا کر کی گئی مصنوعی حدت اور بھی شد ت اختیار کر گئی۔
    اُس وقت کے وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی خان آئی ایس آئی کے افسران سے ملاقاتوں کے بعد اس نتیجے پر پہنچ چکے تھے کہ عمران فاروق قتل کیس میں متحدہ کے بانی سربراہ الطاف حسین کا ہاتھ ہے۔
    سارے متفقہ طورپر چاہتے تھے کہ عمران فاروق قتل کیس کی ایف آئی آر میں الطاف حسین کو براہ راست نامزد کیا جائے تاکہ وہ ایسی گرفت میں آئیں کہ نکل نہ سکیں۔
    اسی مقصد کے لیے قانونی حوالوں سے مشاورتوں کا سلسلہ جاری تھا۔ وزیر اعظم ہاؤس میں اس حوالے سے ایک حتمی مشاورتی اجلاس ہوا جس میں اِس پولیس افسر نے الطاف حسین کا نام ایف آئی آر میں براہ راست لکھنے کی بجائے بالواسطہ لکھنے کا کہہ کر نیا مسئلہ کھڑا کر دیا تھا۔
    یہ پولیس افسر کوئی اور نہیں بلکہ اس وقت ایف آئی اے میں تعینات ڈائریکٹر مظہرالحق کاکا خیل تھے۔ اس اجلاس میں موجود ایک سینیئر سرکاری افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اُس اہم اجلاس کی تفصیلات بتائی ہیں۔
    اس بارے میں جب مظہر الحق کاکا خیل سے رابطہ کیا گیا تو انھوں نے اس واقعے کی تفصیل میں جائے بغیر کہا کہ ’آپ اس معاملے پر بہت گہرائی میں چلے گئے ہیں۔ سرکاری طور پر ایسے اجلاس ہوتے رہتے ہیں لیکن سرکاری افسر کے طور پر ان پر تبصرہ کرنا میرے قانونی دائرہ کار میں شامل نہیں۔
    عمران فاروق قتل کیس کی گتھی آخر کیسے سلجھی اور ملزمان کیسے گرفتار ہوئے اس کی تفصیلات ہم آگے چل کر بیان کریں گے، مگر یہاں بتانا ضروری ہے کہ اس کیس کو کامیابی کے ساتھ پایہ تکمیل تک پہنچانے پر حکومت پاکستان آج (یعنی 14 اگست کو) مظہر الحق کاکا خیل کو تمغہ شجاعت دے گی۔
    کاکا خیل ماضی میں شدت پسندوں کے حملوں کا سب سے زیادہ شکار ہونے والے صوبہ خیبر پختونخوا میں سوات جیسے مشکل علاقے میں پولیس فورس کی کمانڈ کرتے رہے ہیں اور خود بھی ایک بم حملے میں زخمی ہوئے تھے۔
    وہ فیلڈ میں پولیس کو درپیش قانونی پیچیدگیوں اور مشکلات سے آگہی کے ساتھ ساتھ سابق وزیراعلی حیدر خان ہوتی کے اسٹاف افسر کی حیثیت سے سرکاری نزاکتوں کا تجربہ بھی رکھتا تھے۔
    کاکا خیل کو ایف آئی اے کے شعبہ انسداد دہشتگردی کے نئے سربراہ کے طور پر تعینات کیے جانے کا امکان تھا۔ اس وقت ایک اور سینیئر پولیس افسر انعام غنی اس شعبے کے سربراہ تعینات تھے، جو اب معمول کی ٹرانسفر پر جا رہے تھے۔
    وزیرِ داخلہ چوہدری نثارعلی خان کی طرف سے اس اہم عہدے پر کاکا خیل کی تعیناتی کے لیے حتمی فیصلہ کرنا ابھی باقی تھا، مگر کاکا خیل کی طرف سے ایف آئی آر میں براہ راست الطاف حسین کی نامزدگی سے انکار نے ان کی ایف آئی اے میں اس اہم پوسٹ پر تعیناتی کو بھی مشکوک بنا دیا تھا۔
    کاکا خیل کا خیال تھا کہ اس کیس میں جان ہے وہ اس کیس کو اِسی حالت میں منطقی انجام تک پہنچا دیں گے اور یہ کہ کیس میں کسی طرح کی غلط بیانی کیس خراب کرے گی۔
    مندرجہ بالا واقعے کے دوسرے روز کاکا خیل کی وزیرِ داخلہ چوہدری نثار سے ملاقات ہوئی۔ چوہدری نثار علی خان کے سامنے افسران کی پیشی اس لیے بھی مشکل ہوتی تھی کہ وہ (چوہدری نثار) اپنی ناک پر مکھی تک نہ بیٹھنے دیتے تھے، بال کی کھال اتارتے اور اگر کوئی افسر لکیر سے ہٹے تو اسے سختی سے ڈانٹ دیتے۔
    وزیر داخلہ کے اسٹاف افسر وقار چوہان نے چوہدری نثار کے سامنے کاکا خیل سے پوچھا کہ آپ الطاف حسین کا نام براہ راست ایف آئی آر میں درج کیوں نہیں کر رہے؟ اس پر کاکا خیل بولے ’جناب ایسا کرنا جھوٹ ہو گا۔ آج میں جھوٹ پر مبنی ایف آئی آر کاٹوں گا تو کل اسے عدالت میں ثابت نہیں کر سکوں گا، کیس خارج ہو جائے گا اور میں اگلی حکومت میں آپ کو بُرا بھلا کہنے پر مجبور ہو جاؤں گا، اس لیے جو سچ ہے وہی لکھا جائے تاکہ ہر دور میں اس پر قائم بھی رہا جا سکے۔‘
    کمرے میں موجود چوہدری نثار نے پولیس افسر کی بات سنی اور فوری اتفاق کیا اور ساتھ ہی وقار چوہان کو حکم دیا کہ مجھے یہ افسر پسند ہے اور میں انعام غنی کے بعد اسی کو انسداد دہشتگردی ونگ کا سربراہ تعینات کر رہا ہوں، کیونکہ اس میں اتنی جرات ہے کہ وہ چوہدری نثار سے بھی اختلاف کر سکے۔
    اس بات کے بعد یہ ملاقات ختم ہو گئی۔
    اگلے روز پانچ دسمبر کو پنجاب میں لوکل گورنمنٹ انتخابات کی کوریج کے سلسلے میں میں ٹیکسلا میں تھا کہ مجھے ایف آئی اے انسداد دہشتگردی ونگ کے نمبر سے موبائل فون پر بتایا گیا کہ عمران فاروق قتل کیس میں الطاف حسین، محمد انور، افتخار احمد، خالد شمیم، معظم علی، محسن سید اور کاشف کامران کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔
    اگلے چند لمحوں میں یہ خبر پاکستان اور برطانیہ کی شہ سرخیوں کا حصہ بن چکی تھی۔
    یوں تو متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما عمران فاروق کا قتل ستمبر 2010 میں لندن میں ہوا تھا مگر اس کیس پر پاکستان میں سنجیدگی سے کارروائی کا آغاز سنہ 2015 کے آغاز میں اُس وقت شروع ہوا تھا کہ جب اس وقت کے وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کو برطانوی حکومت کی طرف سے اس قتل کیس میں معاونت کی درخواست کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔
    اس سے قبل پیپلز پارٹی کی حکومت کے دورمیں اس کیس پر کوئی پیشرفت نہ ہو سکی تھی۔ اس کی ایک بڑی وجہ پیپلزپارٹی اور متحدہ قومی موومنٹ کے درمیان ایک سیاسی اتحاد تھا جو یوں تو پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف علی زرداری اور ایم کیو ایم کے بانی سربراہ الطاف حسین کے درمیان تھا، لیکن عملی طور پر اس اتحاد کی نگرانی اس وقت کے وزیر داخلہ سینیٹر رحمان ملک کر رہے تھے۔
    سینیئر تجزیہ کار مظہر عباس کا کہنا ہے کہ ’وزارت داخلہ اور گورنر سندھ کی سطح پر ایک اتفاق تھا کہ پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم کے درمیان اتحاد قائم رہے کیونکہ اس وقت تک گورنرسندھ ڈاکٹر عشرت العباد لندن اور رحمان ملک کے درمیان ایک اہم رابطہ تھے۔ میرے خیال میں اس وقت پاکستان میں کیس نہ چل پانے کی دو بڑی وجوہات تھیں ایک رحمان ملک اور دوسری ہماری اسٹیبلیشمنٹ جسے برطانوی پولیس پر اعتماد نہیں تھا کہ وہ سنجیدگی سے یہ کیس برطانوی عدالتوں میں چلائے گی۔‘
    مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں ابتدا میں تو وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کی اس وقت کے آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل ظہیر الاسلام سے اچھی شناسائی تھی مگر دھرنوں کے باعث حکومت اور آئی ایس آئی چیف میں دوریاں ظہیر الاسلام کی آئی ایس آئی سے فراغت کا باعث بنی اور رضوان اختر آئی ایس ائی کے نئے سربراہ بن گئے۔
    چوہدری نثار علی خان کی رضوان اختر سے ڈی جی رینجرز کراچی کے دنوں سے اچھی شناسائی تھی۔ وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان اور آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر پنجاب ہاؤس میں اکثر گھنٹوں بیٹھتے اور ملکی سیاسی و داخلی امور سمیت اہم موضوعات پر تبادلہ خیال کرتے۔
    برطانوی حکومت کی طرف سے اس قتل کیس کی بازگشت اور دو مبینہ قاتلوں محسن علی سید اور کاشف کامران کی پاکستان موجودگی کے بارے میں وزیر داخلہ کو سن گن پہلے ہی تھی۔ ایک روز چوہدری نثار اور آئی ایس آئی کے سربراہ کے درمیان یہ معاملہ بھی زیر بحث آ گیا۔
    اس وقت وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کے سٹاف کے طور پر خدمات سرانجام دینے والے ایک سینیئر سرکاری افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست پر بتایا کہ ’چوہدری نثار اور جنرل رضوان کے درمیان ہونے والی ملاقاتیں عام طور پر ون آن ون ہی ہوتی تھیں تاہم یہ بات درست ہے کہ پنجاب ہاؤس میں اس کیس پر وزیر داخلہ کو آئی ایس آئی کی طرف سے بریفنگز دی جاتی رہی ہیں۔‘
    لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر اس کیس کے بارے میں دو حوالوں سے خوب آشنائی رکھتے تھے۔ اول یہ کہ وہ خود مارچ 2012 سے ستمبر 2014 تک کراچی میں ڈی جی رینجرز سندھ کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے چکے تھے اور اسی دورانیے میں انھوں نے ایم کیو ایم پر بڑا کام بھی کیا تھا اور وہ عمران فاروق قتل کیس کے کچھ بنیادی امور سے واقف تھے۔
    دوئم یہ کہ عمران فاروق کو جن دو افراد یعنی محسن علی سید اور کاشف خان کامران نے مبینہ طور پر قتل کیا تھا وہ پاکستان آمد کے بعد سے آئی ایس آئی کی حراست میں تھے اور رضوان اختر کو اس بات کا علم تھا۔
    عمران فاروق کو جن دو افراد یعنی محسن علی سید اور کاشف خان کامران نے مبینہ طور پر قتل کیا تھا وہ پاکستان آمد کے بعد سے آئی ایس آئی کی حراست میں تھے اور رضوان اختر کو اس بات کا علم تھا (فائل فوٹو)
    وزیرِ داخلہ چوہدری نثار معاملے کو قانون کے مطابق آگے لے جانا چاہتے تھے۔ اول تو وہ ملزمان کو برطانیہ کے حوالے کرنا چاہتے تھے دوسرا یہ کہ اگر برطانیہ ان ملزمان کی حراست نہ لے تو وہ ازخود پاکستان میں ان کے خلاف کیس کرنے پر بھی آمادہ تھے۔
    ظاہر ہے اس سارے معاملے میں بھی انھیں آئی ایس آئی کی معاونت درکار تھی۔
    لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر وزیر داخلہ سے متفق تھے۔ مگر اس سارے معاملے میں دو چیلنجز بڑے اہم تھے اول یہ کہ اب تک عمران فاروق کے مبینہ قاتلوں محسن علی سید اورکاشف کامران جبکہ کراچی میں ان کی معاونت کرنے والے ساتھی خالد شمیم کی آئی ایس آئی کے پاس موجودگی کی کوئی قانونی حیثیت نہیں تھی۔
    دوسرا یہ کہ دو ملزمان میں سے ایک یعنی کاشف کامران حراست کے دوران مبینہ طور پر مارا گیا تھا۔ اس حوالے سے متضاد اطلاعات ہیں تاہم آج تک کاشف کامران کی ہلاکت کی باضابطہ سرکاری سطح پر تصدیق نہیں ہوئی ہے اور اسی لیے کاشف کا نام عمران فاروق قتل کیس کے سزا پانے والے مجرموں کی فہرست میں شامل ہے، تاہم سزا پانے والے دیگر مجرم اپنے خاندان کے افراد کو کاشف کامران کی دوران حراست مبینہ ہلاکت کی خبر ضرور دیتے ہیں۔
    یہ ملزم جس سول افسر کی نگرانی میں تھے ان کے بارے میں اطلاع ہے کہ مبینہ طور پر وہ بھی آج کل برطانیہ میں سیاسی پناہ حاصل کر کے خاموشی کی زندگی گذار رہے ہیں، تاہم حکام نے اس کی بھی باقاعدہ تردید یا تصدیق نہیں کی ہے۔
    دراصل دس ستمبر 2010 کو جب دونوں ملزمان محسن علی سید اور کاشف کامران نے عمران فاروق کا لندن میں مبینہ طور پر قتل کیا تو اگلے چھ گھنٹوں کے دوران دونوں برطانیہ سے سیدھے پاکستان آنے کی بجائے سری لنکا جانے کے لیے کولمبو جانے والی پرواز پر محوِ سفر تھے۔
    کولمبو میں دونوں لڑکوں نے ایک ہفتہ گزارا۔ اس دوران برطانوی پولیس نے موقع پر ملنے والی چھری سے ان کے فنگر پرنٹس لے کر محسن علی کی شناخت کر لی گئی۔ موقع پر چونکہ دو قاتل دیکھے گئے تھے اور یہی دو افراد اکٹھے پاکستان آئے اور اکٹھے واپس جا رہے تھے لہذا پتا چل گیا کہ دوسرا شخص کاشف کامران ہے۔
    سارے معاملے کی اطلاع پاکستان کو بھی کر دی گئی تھی۔ ایک ہفتہ بعد جونہی آئی ایس آئی کو ملزمان کے کولمبو سے کراچی آنے کا پتہ چلا تو 18 ستمبر 2010 کو کراچی ایئر پورٹ پر ملزمان کا مسافر طیارہ لینڈ ہونے کے بعد ایک ٹیم طیارے کے اندر گئی اور دونوں کو گرفتار کر کے ایئرپورٹ سے ہی نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا۔
    شاید انھیں ڈر تھا کہ کراچی میں دونوں ملزمان کو ایم کیوایم کی طرف سے ہلاک کر کے کیس کے اصل سراغ ہی ختم نہ کر دیا جائے۔
    محسن علی سید اور کاشف کامران کی گرفتاری کے بعد پانچ جنوری 2011 کو ایک بینک کی اے ٹی ایم استعمال کرتے ہوئے خالد شمیم نامی شخص کو بھی حراست میں لیا گیا تھا۔ کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے ملازم خالد شمیم پر الزام تھا کہ انھوں نے عمران فاروق کے قتل کے لیے محسن علی سید اور کاشف کامران کو ٹارگٹ دینے اور ٹارگٹ تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔
    خالد شمیم ہی وہ شخص تھا جس نے عمران فاروق کے قتل کے بعد کراچی کے ایک نمبر سے دونوں مبینہ قاتلوں سے فون پر بات کی تھی۔ خالد شمیم کی حراست بھی آئی ایس آئی عمل میں لائی مگر اس کی بھی کوئی قانونی حیثیت سرے سے موجود نہیں تھی کیونکہ اس عمل میں بھی پولیس اور ایف آئی اے کو نظر انداز کیا گیا تھا۔
    مگر اب چوہدری نثار کی مداخلت پر معاملات کو قانونی شکل دی جا رہی تھی۔
    قتل کے تین کرداروں میں سے ایک تو مبینہ طور پر ہلاک ہو گیا تھا جبکہ باقی دو بدستور آئی ایس آئی کے پاس تھے، اس مسئلے کے حل کے لیے وزیرِ داخلہ اور ڈی جی آئی ایس آئی میں طے پایا کہ محسن علی سید اور خالد شمیم کو منظر عام پر لایا جائے اور انھیں ایف آئی اے کے سپرد کر دیا جائے تاکہ اس دوران ان کی برطانیہ حوالگی کا عمل باقاعدہ طور پر شروع ہو۔
    اسی دوران ایک اور شخص یعنی معظم علی کو بھی اس معاملے میں شامل کیا گیا کیونکہ معظم علی کی کمپنی دونوں مبینہ قاتلوں کے برطانیہ جانے میں استعمال کی گئی تھی ۔ اسی لیے معظم کو بھی 11 اپریل 2015 کو کراچی سے حراست میں لے لیا گیا۔
    غیرقانونی حراست کو قانونی شکل اس طرح ملی کہ چند روز بعد ایک سرکاری پریس ریلیز جاری کر کے بتایا گیا کہ دونوں ملزمان پاک افغان سرحد سے گرفتار کر لیے گئے ہیں۔ اسی دوران 26 جون 2015 کو ایف آئی اے شعبہ انسداد دہشتگردی ونگ کے سربراہ انعام غنی نے انکوائری درج کر کے تحقیقات کا آغاز کر دیا، جس کی تصدیق اس کیس کے عدالتی دستاویزات سے بھی ہوتی ہے۔
    اس دوران انعام غنی نے وزارت داخلہ کی منظوری سے برطانوی پولیس کے دو افسران کے ہمراہ ملزمان سے ایک اہم ملاقات کی۔ ملزمان جن میں سب سے اہم محسن سید تھا کو عمران فاروق کی لاش، موقع سے برآمد اینٹ اور چھری دکھائی گئی۔
    انعام غنی نے محسن سے انگریزی میں پوچھا بتاؤ اس کام پر کوئی شرمندگی تو نہیں؟ جس پر محسن نے انگریزی میں برطانوی پولیس اہلکاروں کے سامنے کہا کہ ’نہیں مجھے کسی قسم کی کوئی شرمندگی نہیں میں نے یہ سب عقیدت میں کیا ہے اور اگر مجھے دوبارہ موقع ملا تو دوبارہ بھی ایسا ہی کروں گا۔ یہ سب کچھ حیران کُن تھا۔‘
    ابتدائی طور پر محسن سید، خالد شمیم اور معظم علی کو تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت گرفتار کیا گیا، اِس امید پر کہ برطانوی حکومت ان تینوں ملزمان کو حراست میں لینے کے لیے پاکستان سے درخواست کرئے گی۔
    اس غرض سے برطانوی سکاٹ لینڈ یارڈ پولیس کے افسران نے اسلام آباد کے کم و بیش تین سے زائد دورے بھی کیے۔ برطانوی حکام ایف آئی اے حکام اور ملزمان سے ملاقاتیں کرتےاور واپس چلے جاتےاور واپسی پر جا کر پاکستان سے صرف محسن علی سید کی حوالگی کا مطالبہ کرتے۔
    ان کا کہنا یہ تھا کہ باقی دوملزمان یعنی خالد شمیم اور معظم علی ’غیر متعلقہ‘ ہیں اور ان کا برطانوی کیس میں کوئی اتنا کردار نہیں لیکن اُدھر وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان اس بات پر ڈٹے رہے کہ اگر برطانیہ نے ملزمان کو لینا ہے تو وہ تینوں ملزمان کو لے۔
    اس معاملے میں ایک چیلنج یہ بھی تھا کہ دونوں ملکوں کے درمیان ملزمان کی حوالگی کا باقاعدہ کوئی معاہدہ نہیں تھا۔ وزیرداخلہ نے اس بارے میں معاہدہ کرنے کی کوشش بھی کی مگر برطانیہ کی طرف سے پاکستان میں سزائے موت پر اعتراض کیا گیا اور کہا گیا کہ پاکستان سزائے موت کو ختم کرے۔ اس لیے یہ معاملہ بھی آگے نہ بڑھ سکا اور ایک وقت آیا کہ ملزمان کی برطانیہ حوالگی سے متعلق تمام امیدیں دم توڑ گئیں۔
    دوسری طرف تینوں ملزمان بدستور تحفظ پاکستان ایکٹ کے تحت زیر حراست تھے اور ایک وقت ایسا بھی آیا کہ جب تحفظ پاکستان ایکٹ کی مدت بھی پوری ہونے لگی اور برطانیہ سے ان ملزمان کی حوالگی کے حوالے سے کوئی اطلاع بھی نہ آئی۔ چونکہ ایف آئی اے نے تیاری مکمل کر لی تھی لہذا پانچ دسمبر 2015 کو عمران فاروق قتل کیس کی ایف آئی آر کے اندراج کے بعد تینوں ملزمان کو ایف آئی اے کے حوالے کر دیا گیا۔
    یوں ایک نئے سلسلے کا آغاز ہو گیا۔
    تینوں ملزمان کے لیے امید پیدا ہوگئی کہ اب وہ عدالت کے سامنے انصاف کے لیے پیش ہوں گے۔ اس دوران مجسٹریٹ کے سامنے ملزمان کے اعترافی بیانات ریکارڈ ہوئے۔ ایف آئی اے نے عدالت میں پہلے عبوری اور پھر حتمی چالان پیش کیا اور سب سے اہم بات یہ کہ برطانیہ نے باہمی تعاون کے تحت پاکستان کو کچھ ثبوت بھی فراہم کیے اور ایف آئی اے کے ساتھ ایک مبینہ تحریری معاہدہ بھی کر لیا گیا کہ اگر پاکستانی عدالت میں برطانوی حکام کو بلایا گیا تو وہ ضرور حاضر ہوں گے۔
    برطانوی حکام نے معاہدے کی پاسداری کی اور وہ انسداد دہشتگردی اسلام آباد کی عدالت میں پیش بھی ہوئے۔
    برطانیہ کے ساتھ پاکستانی عدالت میں پیش ہونے کا معاہدہ طے کرنے کے بعد ایف آئی اے شعبہ انسداد دہشتگردی ونگ کے سربراہ مظہرالحق کاکا خیل کا تبادلہ بھی ہو گیا۔ جس کے بعد اس شعبے کا نیا سربراہ مقرر کر دیا گیا تاہم کیس عدالت میں معمول کے مطابق آہستہ آہستہ چلتا رہا اور 18 جون کو اس کیس کا فیصلہ آ گیا اورالطاف حسین سمیت تمام افراد کو سزا سنا دی گئی۔
    حیران ُکن بات یہ ہے کہ سزا پانے والوں میں کاشف کامران کا نام بھی شامل ہے کیونکہ ایف آئی اے کی طرف سے اس شخص کی مبینہ ہلاکت کے بارے میں کوئی ثبوت پیش نہیں کیا گیا لیکن کراچی میں کاشف کامران کے اہلخانہ کو خاموشی سے ان کے بیٹے کی ہلاکت کی اطلاع دے دی گئی ہے، جس پر وہ ابھی تک یقین کرنے کو تیار نہیں۔
    دوسری طرف اس کیس کو آگے لے جانے والے اصل کردار چوہدری نثار علی خان اس کیس سمیت نجانے کتنے رازوں کو اپنے دل میں سموئے راولپنڈی میں خاموشی کی زندگی بسر 

    کر رہے ہیں۔ شاید ایسے کرداروں کے لیے کسی ایوارڈ کی ضرورت بھی نہیں ہوتی

    https://www.bbc.com/urdu/pakistan-53471030

    #2
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 154
    • Posts: 15520
    • Total Posts: 15674
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    ایک بندہ بین ہو کر تھریڈ پوسٹ کر رہا ہے

    ڈالڈے گھی کی طاقت لگتی ہے

    :bigsmile:

    ایک دیہاتی نے ٹرین میں سفر کرتے ہوئے اپنے ڈالڈے گھی کا ڈبہ ٹرین روکنے والی چین سے باندھ دیا۔ ٹرین رکی تو ٹکٹ چیکر نے آ کر اس سے پوچھا کہ تم نے ٹرین کیوں روکی ہے۔ دیہاتی بولا کہ میں نے تو ٹرین نہیں روکی ہے۔ ٹکٹ چیکر گھی کے ڈبے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بولا کہ اس ڈبے کی وجہ سے ٹرین رکی ہے۔ دیہاتی خوش ہو کر بولا

    دیکھیا پھیر ڈالڈے گھیو دیاں طاقتاں
    :hilar: :hilar: :hilar:

    #3
    Judge
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 2
    • Posts: 395
    • Total Posts: 397
    • Join Date:
      20 Mar, 2020

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Its my fault. I forgot to bolck him from dashboard and just blocked him on thread.

    #4
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 16
    • Posts: 2749
    • Total Posts: 2765
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    جس پر محسن نے انگریزی میں برطانوی پولیس اہلکاروں کے سامنے کہا کہ ’نہیں مجھے کسی قسم کی کوئی شرمندگی نہیں میں نے یہ سب عقیدت میں کیا ہے اور اگر مجھے دوبارہ موقع ملا تو دوبارہ بھی ایسا ہی کروں گا‘۔

    ۔

    ۔

    ایک دوست نے کچھ عرصہ پہلے ایک بات بتائی تھی کہ اُس کا ایک رشتہ دار الطاف حسین کا ایسا ڈائی ہارڈ کارکن ہے کہ یہ کہہ رہا تھا کہ اگر الطاف بھائی کہیں تو مَیں خود اپنی بہن کو الطاف بھائی کے پاس چھوڑ کر آؤں گا۔۔۔۔۔

    حق پرستوں کی عقیدت کے کرشمات۔۔۔۔۔

    عقیدت ہو تو ایسی ہو ورنہ نہ ہو۔۔۔۔۔

    :facepalm: :cwl: :facepalm: ™©

    • This reply was modified 1 year, 1 month ago by BlackSheep.
    #5
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 33
    • Posts: 7336
    • Total Posts: 7369
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Its my fault. I forgot to bolck him from dashboard and just blocked him on thread.

    انجان کی غیرمنصفانہ بین ہٹائی جائے
    اور جج صاحب کو ریفریشر کورس پر بھیجا جائے۔
    ۔
    جج صاحب آپ کی ججی میں عاطف صاحب جھلکنے لگے ہیں۔ جس روئیے پر پہلے اعتراض تھا اب وہ اس سے بھی بڑھ کر سامنے آنے لگا ہے۔
    ۔
    کسی دوسرے سے گالیاں سننے اور کچھ نہ کر سکنے پر آپ کا اپنا غصہ انجان پر اتارنا بلکل غلط تھا اور کسی کو ٹانٹ کرنے (بدزبانی نہی) پر پہلے ایک مہینے اور پھر مستقل طور پر بین کر دینا اور دوسری طرف جنہیں آپ نے کسی ایک لفظ سے روکا وہ آپ کو جہاں سے نکلے وہیں واڑنے (ان الفاظ کو دہرانے پر معذرت کے ساتھ) کا نعرہ لگاتے ہوئے منع کئے گئے لفظ کا مستقل استعمال کرکے آپ کی ججی کا تیا پانچہ کرتے رہے بلکہ کچھ اور لوگ بھی ساتھ مل کر آپ کو ٹانٹ کرنے کے لئے اسی لفظ کا بہت بعد تک بھی ورد کرتے رہے لیکن انہیں وارننگ دینے یا بین کرنے کا سوچتے ہی انصاف کا پاجامہ ڈھیلا ہو گیا کہ اوہ ہو ان کا تو اس لسٹ میں نام لکھا ہے جنہیں عاطف نے بین کرنے سے روک رکھا ہے۔

    اب آپ چاہے سو بہانے بنائیں کہ انجان کو ملٹیپل آئی ڈیز بنانے پر بین کیا گیا ہے۔ لیکن یہاں پڑھنے والے اتنے بھولے نہی کہ آپ کا وہ کمنٹ بھول جائیں جو بطور وجہ آپ نے انجان کو بین کرتے ہوئے لکھا تھا حالانکہ کسی بھی سمجھدار کے مطابق آپ کی بتائی گئی وجہ بھی غلط تھی کہ انجان نے تو آپ سے صرف یہی کہا تھا کہ آپ کو بحث نہی کرنی چاہیئے، بس جسے بین کرنا ہے بین کریں اور جسے وارننگ دینی ہے اسے وارننگ دیں۔ مزید یہ کہ بحث و مباحثہ کے لئے آپ ایک الگ آئی ڈی بنا لیں۔ اس کا اندازِ تحریر ٹانٹنگ ضرور تھا لیکن اس کی تحریر میں کوئی ایک بھی غلط لفظ نہی تھا۔ رہا ٹانٹنگ کرنا تو جناب جج صاحب یہاں تو آدھے سے زیادہ کمنٹس ہیں ہی اس زمرے کے۔
    کیا آپ ان سب کو مستقل بین کریں گے۔
    ۔
    میں تو یہ بھی نہی چاہتا کہ آپ باواجی سے الجھتے یا انہیں بین کرتے کہ جو لفظ انہوں نے لکھا وہ ان کے سٹینڈرڈ کے مطابق بہت سے دوسرے الفاظ سے قدرے بہتر تھا۔ اور وہ یہ صدیوں سے عام استعمال کرتے رہے ہیں۔
    لیکن پتہ نہی کیوں اس فورم کی ایڈمنسٹریشن نے کچھ لوگوں کو لمبے عرصے کے لئے یا مستقل بین کرنے کا انداز اپنا رکھا ہے جبکہ بقیہ کچھ لوگوں کو ناٹ بین ایبلز کی لسٹ میں رکھ کر پندرہ منٹ سے لے کر بارہ گھنٹے تک کے بریکٹ میں رکھ لیا ہےکہ اگر بہت ہی مجبوری بن جائے تو سمبولک بین لگا دو۔
    باواجی سے مجھے کوئی خدا واسطے کا بیر نہی بلکہ ہمیشہ عزت داری کا رشتہ رہا ہے۔ لیکن بات انصاف کی ہے۔ کہ اگر بین بین کھیلنا ہی ہے تو چاہے میرا کوئی دوست ہو یا کوئی مجھے سخت نا پسند، ان سب کو ایک ہی پیمانے پر پرکھتے دیکھنا چاہوں گا۔
    اور آخر میں کچھ انجان کی ملٹیپل آئی ڈیز بارے۔ اس مسئلے پر بھی اسے مستقل بین کر دینا کسی طرح ٹھیک نہی کہ پچھلے دو سال سے ایڈمنسٹریشن نے اس کی مختلف آئی ڈیز ہونے بارے جانتے ہوئے یہاں اس کا بارہا مذاقا ذکر تو کیا ہے لیکن اسے روکا نہی۔ اب اگر یہ پالیسی تبدیل کی جارہی ہے تو سب سے پہلے اسے ایک وارننگ دی جائے، کچھ دن کے اندر خود ہی ایک کے سوا ساری آئی ڈٰیز کو ڈیلیٹ کرنے کا کہا جائے۔ اور اگر اس کے باوجود وہ یہ نہ کرے تو پھر اس پر بین لگائی جائے۔

    Atif Qazi

    Bawa

    Anjaan

    Wahreh

    Ghost Protocol

    BlackSheep

    SaleemRaza

    • This reply was modified 1 year, 1 month ago by shahidabassi.
    #6
    Judge
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 2
    • Posts: 395
    • Total Posts: 397
    • Join Date:
      20 Mar, 2020

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    ۔ ۔ حق پرستوں کی عقیدت کے کرشمات۔۔۔۔۔ عقیدت ہو تو ایسی ہو ورنہ نہ ہو۔۔۔۔۔ :facepalm: :cwl: :facepalm: ™©

    What a cheap, shameless, racist and vulgar comment about a very respectfull community of Pakistan.

    Avoid using this type of filthy language for our daughters or You will be banned permanantly.

    #7
    Judge
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 2
    • Posts: 395
    • Total Posts: 397
    • Join Date:
      20 Mar, 2020

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    انجان کی غیرمنصفانہ بین ہٹائی جائے اور جج صاحب کو ریفریشر کورس پر بھیجا جائے۔ ۔ جج صاحب آپ کی ججی میں عاطف صاحب جھلکنے لگے ہیں۔ جس روئیے پر پہلے اعتراض تھا اب وہ اس سے بھی بڑھ کر سامنے آنے لگا ہے۔ ۔ کسی دوسرے سے گالیاں سننے اور کچھ نہ کر سکنے پر آپ کا اپنا غصہ انجان پر اتارنا بلکل غلط تھا اور کسی کو ٹانٹ کرنے (بدزبانی نہی) پر پہلے ایک مہینے اور پھر مستقل طور پر بین کر دینا اور دوسری طرف جنہیں آپ نے کسی ایک لفظ سے روکا وہ آپ کو جہاں سے نکلے وہیں واڑنے (ان الفاظ کو دہرانے پر معذرت کے ساتھ) کا نعرہ لگاتے ہوئے منع کئے گئے لفظ کا مستقل استعمال کرکے آپ کی ججی کا تیا پانچہ کرتے رہے بلکہ کچھ اور لوگ بھی ساتھ مل کر آپ کو ٹانٹ کرنے کے لئے اسی لفظ کا بہت بعد تک بھی ورد کرتے رہے لیکن انہیں وارننگ دینے یا بین کرنے کا سوچتے ہی انصاف کا پاجامہ ڈھیلا ہو گیا کہ اوہ ہو ان کا تو اس لسٹ میں نام لکھا ہے جنہیں عاطف نے بین کرنے سے روک رکھا ہے۔ اب آپ چاہے سو بہانے بنائیں کہ انجان کو ملٹیپل آئی ڈیز بنانے پر بین کیا گیا ہے۔ لیکن یہاں پڑھنے والے اتنے بھولے نہی کہ آپ کا وہ کمنٹ بھول جائیں جو بطور وجہ آپ نے انجان کو بین کرتے ہوئے لکھا تھا حالانکہ کسی بھی سمجھدار کے مطابق آپ کی بتائی گئی وجہ بھی غلط تھی کہ انجان نے تو آپ سے صرف یہی کہا تھا کہ آپ کو بحث نہی کرنی چاہیئے، بس جسے بین کرنا ہے بین کریں اور جسے وارننگ دینی ہے اسے وارننگ دیں۔ مزید یہ کہ بحث و مباحثہ کے لئے آپ ایک الگ آئی ڈی بنا لیں۔ اس کا اندازِ تحریر ٹانٹنگ ضرور تھا لیکن اس کی تحریر میں کوئی ایک بھی غلط لفظ نہی تھا۔ رہا ٹانٹنگ کرنا تو جناب جج صاحب یہاں تو آدھے سے زیادہ کمنٹس ہیں ہی اس زمرے کے۔ کیا آپ ان سب کو مستقل بین کریں گے۔ ۔ میں تو یہ بھی نہی چاہتا کہ آپ باواجی سے الجھتے یا انہیں بین کرتے کہ جو لفظ انہوں نے لکھا وہ ان کے سٹینڈرڈ کے مطابق بہت سے دوسرے الفاظ سے قدرے بہتر تھا۔ اور وہ یہ صدیوں سے عام استعمال کرتے رہے ہیں۔ لیکن پتہ نہی کیوں اس فورم کی ایڈمنسٹریشن نے کچھ لوگوں کو لمبے عرصے کے لئے یا مستقل بین کرنے کا انداز اپنا رکھا ہے جبکہ بقیہ کچھ لوگوں کو ناٹ بین ایبلز کی لسٹ میں رکھ کر پندرہ منٹ سے لے کر بارہ گھنٹے تک کے بریکٹ میں رکھ لیا ہےکہ اگر بہت ہی مجبوری بن جائے تو سمبولک بین لگا دو۔ باواجی سے مجھے کوئی خدا واسطے کا بیر نہی بلکہ ہمیشہ عزت داری کا رشتہ رہا ہے۔ لیکن بات انصاف کی ہے۔ کہ اگر بین بین کھیلنا ہی ہے تو چاہے میرا کوئی دوست ہو یا کوئی مجھے سخت نا پسند، ان سب کو ایک ہی پیمانے پر پرکھتے دیکھنا چاہوں گا۔ اور آخر میں کچھ انجان کی ملٹیپل آئی ڈیز بارے۔ اس مسئلے پر بھی اسے مستقل بین کر دینا کسی طرح ٹھیک نہی کہ پچھلے دو سال سے ایڈمنسٹریشن نے اس کی مختلف آئی ڈیز ہونے بارے جانتے ہوئے یہاں اس کا بارہا مذاقا ذکر تو کیا ہے لیکن اسے روکا نہی۔ اب اگر یہ پالیسی تبدیل کی جارہی ہے تو سب سے پہلے اسے ایک وارننگ دی جائے، کچھ دن کے اندر خود ہی ایک کے سوا ساری آئی ڈٰیز کو ڈیلیٹ کرنے کا کہا جائے۔ اور اگر اس کے باوجود وہ یہ نہ کرے تو پھر اس پر بین لگائی جائے۔ Atif Qazi Bawa Anjaan Wahreh Ghost Protocol BlackSheep SaleemRaza

    Anjan was warned many times to stop using other IDs and to participate properly but he has a habit to criticise administration and for this purpose he makes hundred of IDs. We had made a thread about it where we traced aprx 80 IDs. But still he is making a couple of IDs everyday.

    As far others are concerened, There is no fovourite child for me on the forum.

    I have given a slight space to them who are regular blogger and they discuss everything. Otherwise bawa has a record of getting most ban by me.

    Including bawa everyone will be punished if they donot follow the instructions. And the discussion between me and bawa which you are reffering to, was my personal right to ignore or punish. I decided not to ban him bcz of his personal comment about me.

    For personal attacks, its my discreetion to take appropriate action. If you have problem with anyone who is using bad words with you in discussion you just let me know I will fix the matter but you can’t raise objection on discussion between me and any member.

    You are advised to know all facts before you blame me for unjustice.

    I have to leave the forum soon, if you people think that anyone can handle all this batter than me, plz let me know. I will make him moderator.

    For a trial period I am making you moderator and I will not interfare in moderation for one week. Prove yourself now.

    #8
    Judge
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 2
    • Posts: 395
    • Total Posts: 397
    • Join Date:
      20 Mar, 2020

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Attention everyone.

    I gave all my authrities to our most respectful member Shahid Abbasi sb and he will manage moderation for one week onwards.

    Completing this period succesfully , he will be a permanant moderator.

    Plz cooperate.

    Thanks

    #9
    Jack Sparrow
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 14
    • Posts: 831
    • Total Posts: 845
    • Join Date:
      3 Dec, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Its my fault. I forgot to bolck him from dashboard and just blocked him on thread.

    Keep up the good work. People will try to discourage and demoralize you.

    The infection is still active with two IDs

    • This reply was modified 1 year, 1 month ago by Jack Sparrow.
    #10
    Judge
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 2
    • Posts: 395
    • Total Posts: 397
    • Join Date:
      20 Mar, 2020

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Keep up the good work. People will try to discourage and demoralize you. The infection is still active with two IDs

    Thnx bro.

    I am tired. I should get a referesher course now.

    #11
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 164
    • Posts: 5438
    • Total Posts: 5602
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Anjan was warned many times to stop using other IDs and to participate properly but he has a habit to criticise administration and for this purpose he makes hundred of IDs. We had made a thread about it where we traced aprx 80 IDs. But still he is making a couple of IDs everyday. As far others are concerened, There is no fovourite child for me on the forum. I have given a slight space to them who are regular blogger and they discuss everything. Otherwise bawa has a record of getting most ban by me. Including bawa everyone will be punished if they donot follow the instructions. And the discussion between me and bawa which you are reffering to, was my personal right to ignore or punish. I decided not to ban him bcz of his personal comment about me. For personal attacks, its my discreetion to take appropriate action. If you have problem with anyone who is using bad words with you in discussion you just let me know I will fix the matter but you can’t raise objection on discussion between me and any member. You are advised to know all facts before you blame me for unjustice. I have to leave the forum soon, if you people think that anyone can handle all this batter than me, plz let me know. I will make him moderator. For a trial period I am making you moderator and I will not interfare in moderation for one week. Prove yourself now.

    جج صاحب،
    یہ ججی نہیں ہے آساں بس اتنا سمجھ لیجئے
    اک انجانہ دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے
    ذاتی طور پر میں کبھی کسی بھی اصلی آئ ڈی کو کسی بھی حوالے سے بین کرنے کے حق میں نہیں ہوں
    فورم پر ہمیشہ موڈریشن کی کمی یا غیر موجودگی کا شور انجان نے مچایا ہے انداز اسی فیصد سے زیادہ اسکی پوسٹس کسی نہ کسی ممبر کو روکنے ٹوکنے میں گزریں ہیں اسکے پاس کبھی بھی ان تجاویز کی کمی نہیں رہی کہ کسطرح فورم کو بہتر انداز میں چلانا چاہیے . عموما فورم کی انتظامیہ کو زچ کرنا اسکا دوسرا پسندیدہ مشغلہ رہا ہے (پہلے نمبر پر دو نمبری آئ ڈیز بنا رہا ہے)
    خال ہی انجان نے کسی گفتگو میں مثبت طریقہ سے حصہ لیا ہوگا ، ایک وقت میں انجان انتظامیہ سے التجا کرتا رہا کہ اسکو ماڈ بنادیا جائے پھر ایک دن انتظامیہ نے اس کی سن لی اور اسکو ماڈ بنا دیا . پھر پورے فورم نے تماشہ دیکھا کہ اپنی پہلی ہی آزمائش میں انجان کی سٹی گم ہوگئی اور وہ اپنے پہلے ہی امتحان میں گولڈن ڈک کے ساتھ کلین بولڈ ہوگیا
    یہ ناداں گر گئے سجدوں میں جب وقتِ قیام آیا
    خیر بڑی مشکلوں اور آزمائشوں کے بعد فورم کو ایک متحرک جج نصیب ہو ہی گیا میرا بہت حد تک گمان ہے کہ یہ ایک اعزازی عہدہ ہے اور جج صاحب کا اس عہدے میں کسی قسم کا مالی مفاد شامل نہیں ہے اب جج صاحب بھی ایک انسان ہیں اور اپنی بشری کمزوریوں کے ساتھ انہوں نے اس عہدے کو ایک ایک چیلنج سمجھ کر قبول کیا- اپنی صلاحیتوں کے مطابق انہوں پوری کوشش کی کہ فورم پر موجود بالغان رویہ بھی بالغانہ اپنایں کبھی انکو کامیابی ہویی اور کہیں ناکامی . فورم کے دیگر لوگوں کی طرح میرا بھی یہی خیال تھا کہ جج صاحب فورم پر زیادہ عرصہ ٹک نہیں سکیں گے مگر ایسا نہیں ہوا اور وہ اپنی تمام تر خوبیوں اور کمزوریوں کے ساتھ نہ صرف فورم پر موجود ہیں بلکہ اپنی پوری کوشش کررہے ہیں کہ فورم کا ماحول خوشگوار رہے
    میرے خیال میں تمام دوستوں کو اس بات کا احساس ہونا چاہئے کہ ماڈریشن ایک بہت ہی مشکل اور تھینک لیس جاب ہے فورم کی اکثریت اس ذمہ داری سے کنی کتراتی ہے اس ملک میں تو اصلی جج بھی اپنا کام نہیں کرتے ہیں تو فورم کے جج سے آئیڈیل رویہ کی توقع رکھنا کچھ زیادتی ہو جائے گی
    جج صاحب کو بھی سمجھنا چاہئے کہ اب جب اپنے یہ مشکل کام اپنے سر لے ہی لیا ہے تو دیکھیں کہ فورم پر انکے کردار کے حوالے سے اگر جائز تحفظات اٹھ رہے ہوں تو ٹھنڈے دماغ سے انکا تجزیہ کریں اور دیکھیں کہ وہ کہاں بہتری لاسکتے ہیں
    پس تحریر :
    جج صاحب آپ نے شاہد عباسی بھائی جیسے ایک انتہائی بردبار رکن کو اضافی ذمہ داری تو دی ہے اسکے ساتھ ساتھ فورم کے ارکان کو یہ یقین دھانی بھی کروانی چاہئے کہ کیا اسطرح فورم کے ارکان کی ذاتی معلومات تک رسائی ابھی تک محدود اور محفوظ ہے یا بطور ماڈ یہ معلومات بھی پیکج میں ملتی ہیں ؟

    Atif Qazi

    shahidabassi

    Anjaan

    #12
    Host
    Keymaster
    Offline
    • Threads: 24
    • Posts: 721
    • Total Posts: 745
    • Join Date:
      9 Aug, 2016
    • Location: تار عنکبوت

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    جج صاحب، یہ ججی نہیں ہے آساں بس اتنا سمجھ لیجئے اک انجانہ دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے ذاتی طور پر میں کبھی کسی بھی اصلی آئ ڈی کو کسی بھی حوالے سے بین کرنے کے حق میں نہیں ہوں فورم پر ہمیشہ موڈریشن کی کمی یا غیر موجودگی کا شور انجان نے مچایا ہے انداز اسی فیصد سے زیادہ اسکی پوسٹس کسی نہ کسی ممبر کو روکنے ٹوکنے میں گزریں ہیں اسکے پاس کبھی بھی ان تجاویز کی کمی نہیں رہی کہ کسطرح فورم کو بہتر انداز میں چلانا چاہیے . عموما فورم کی انتظامیہ کو زچ کرنا اسکا دوسرا پسندیدہ مشغلہ رہا ہے (پہلے نمبر پر دو نمبری آئ ڈیز بنا رہا ہے) خال ہی انجان نے کسی گفتگو میں مثبت طریقہ سے حصہ لیا ہوگا ، ایک وقت میں انجان انتظامیہ سے التجا کرتا رہا کہ اسکو ماڈ بنادیا جائے پھر ایک دن انتظامیہ نے اس کی سن لی اور اسکو ماڈ بنا دیا . پھر پورے فورم نے تماشہ دیکھا کہ اپنی پہلی ہی آزمائش میں انجان کی سٹی گم ہوگئی اور وہ اپنے پہلے ہی امتحان میں گولڈن ڈک کے ساتھ کلین بولڈ ہوگیا یہ ناداں گر گئے سجدوں میں جب وقتِ قیام آیا خیر بڑی مشکلوں اور آزمائشوں کے بعد فورم کو ایک متحرک جج نصیب ہو ہی گیا میرا بہت حد تک گمان ہے کہ یہ ایک اعزازی عہدہ ہے اور جج صاحب کا اس عہدے میں کسی قسم کا مالی مفاد شامل نہیں ہے اب جج صاحب بھی ایک انسان ہیں اور اپنی بشری کمزوریوں کے ساتھ انہوں نے اس عہدے کو ایک ایک چیلنج سمجھ کر قبول کیا- اپنی صلاحیتوں کے مطابق انہوں پوری کوشش کی کہ فورم پر موجود بالغان رویہ بھی بالغانہ اپنایں کبھی انکو کامیابی ہویی اور کہیں ناکامی . فورم کے دیگر لوگوں کی طرح میرا بھی یہی خیال تھا کہ جج صاحب فورم پر زیادہ عرصہ ٹک نہیں سکیں گے مگر ایسا نہیں ہوا اور وہ اپنی تمام تر خوبیوں اور کمزوریوں کے ساتھ نہ صرف فورم پر موجود ہیں بلکہ اپنی پوری کوشش کررہے ہیں کہ فورم کا ماحول خوشگوار رہے میرے خیال میں تمام دوستوں کو اس بات کا احساس ہونا چاہئے کہ ماڈریشن ایک بہت ہی مشکل اور تھینک لیس جاب ہے فورم کی اکثریت اس ذمہ داری سے کنی کتراتی ہے اس ملک میں تو اصلی جج بھی اپنا کام نہیں کرتے ہیں تو فورم کے جج سے آئیڈیل رویہ کی توقع رکھنا کچھ زیادتی ہو جائے گی جج صاحب کو بھی سمجھنا چاہئے کہ اب جب اپنے یہ مشکل کام اپنے سر لے ہی لیا ہے تو دیکھیں کہ فورم پر انکے کردار کے حوالے سے اگر جائز تحفظات اٹھ رہے ہوں تو ٹھنڈے دماغ سے انکا تجزیہ کریں اور دیکھیں کہ وہ کہاں بہتری لاسکتے ہیں پس تحریر : جج صاحب آپ نے شاہد عباسی بھائی جیسے ایک انتہائی بردبار رکن کو اضافی ذمہ داری تو دی ہے اسکے ساتھ ساتھ فورم کے ارکان کو یہ یقین دھانی بھی کروانی چاہئے کہ کیا اسطرح فورم کے ارکان کی ذاتی معلومات تک رسائی ابھی تک محدود اور محفوظ ہے یا بطور ماڈ یہ معلومات بھی پیکج میں ملتی ہیں ؟ Atif Qazi shahidabassi Anjaan

    ذاتی معلومات یعنی آئی پی ایڈریس اور ای میل وغیرہ تک رسائی صرف میری یا ڈویلپر کی ہی ہے اور کسی صورت  کسی اور کو نہیں دیجاسکتی۔

    حتی کہ جج صاحب اور الشرطہ کی بھی رسائی وہاں تک نہیں جو کہ سینئیر ماڈریٹرز ہیں۔

    #13
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 154
    • Posts: 15520
    • Total Posts: 15674
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    انجان کی غیرمنصفانہ بین ہٹائی جائے اور جج صاحب کو ریفریشر کورس پر بھیجا جائے۔ ۔ جج صاحب آپ کی ججی میں عاطف صاحب جھلکنے لگے ہیں۔ جس روئیے پر پہلے اعتراض تھا اب وہ اس سے بھی بڑھ کر سامنے آنے لگا ہے۔ ۔ کسی دوسرے سے گالیاں سننے اور کچھ نہ کر سکنے پر آپ کا اپنا غصہ انجان پر اتارنا بلکل غلط تھا اور کسی کو ٹانٹ کرنے (بدزبانی نہی) پر پہلے ایک مہینے اور پھر مستقل طور پر بین کر دینا اور دوسری طرف جنہیں آپ نے کسی ایک لفظ سے روکا وہ آپ کو جہاں سے نکلے وہیں واڑنے (ان الفاظ کو دہرانے پر معذرت کے ساتھ) کا نعرہ لگاتے ہوئے منع کئے گئے لفظ کا مستقل استعمال کرکے آپ کی ججی کا تیا پانچہ کرتے رہے بلکہ کچھ اور لوگ بھی ساتھ مل کر آپ کو ٹانٹ کرنے کے لئے اسی لفظ کا بہت بعد تک بھی ورد کرتے رہے لیکن انہیں وارننگ دینے یا بین کرنے کا سوچتے ہی انصاف کا پاجامہ ڈھیلا ہو گیا کہ اوہ ہو ان کا تو اس لسٹ میں نام لکھا ہے جنہیں عاطف نے بین کرنے سے روک رکھا ہے۔ اب آپ چاہے سو بہانے بنائیں کہ انجان کو ملٹیپل آئی ڈیز بنانے پر بین کیا گیا ہے۔ لیکن یہاں پڑھنے والے اتنے بھولے نہی کہ آپ کا وہ کمنٹ بھول جائیں جو بطور وجہ آپ نے انجان کو بین کرتے ہوئے لکھا تھا حالانکہ کسی بھی سمجھدار کے مطابق آپ کی بتائی گئی وجہ بھی غلط تھی کہ انجان نے تو آپ سے صرف یہی کہا تھا کہ آپ کو بحث نہی کرنی چاہیئے، بس جسے بین کرنا ہے بین کریں اور جسے وارننگ دینی ہے اسے وارننگ دیں۔ مزید یہ کہ بحث و مباحثہ کے لئے آپ ایک الگ آئی ڈی بنا لیں۔ اس کا اندازِ تحریر ٹانٹنگ ضرور تھا لیکن اس کی تحریر میں کوئی ایک بھی غلط لفظ نہی تھا۔ رہا ٹانٹنگ کرنا تو جناب جج صاحب یہاں تو آدھے سے زیادہ کمنٹس ہیں ہی اس زمرے کے۔ کیا آپ ان سب کو مستقل بین کریں گے۔ ۔ میں تو یہ بھی نہی چاہتا کہ آپ باواجی سے الجھتے یا انہیں بین کرتے کہ جو لفظ انہوں نے لکھا وہ ان کے سٹینڈرڈ کے مطابق بہت سے دوسرے الفاظ سے قدرے بہتر تھا۔ اور وہ یہ صدیوں سے عام استعمال کرتے رہے ہیں۔ لیکن پتہ نہی کیوں اس فورم کی ایڈمنسٹریشن نے کچھ لوگوں کو لمبے عرصے کے لئے یا مستقل بین کرنے کا انداز اپنا رکھا ہے جبکہ بقیہ کچھ لوگوں کو ناٹ بین ایبلز کی لسٹ میں رکھ کر پندرہ منٹ سے لے کر بارہ گھنٹے تک کے بریکٹ میں رکھ لیا ہےکہ اگر بہت ہی مجبوری بن جائے تو سمبولک بین لگا دو۔ باواجی سے مجھے کوئی خدا واسطے کا بیر نہی بلکہ ہمیشہ عزت داری کا رشتہ رہا ہے۔ لیکن بات انصاف کی ہے۔ کہ اگر بین بین کھیلنا ہی ہے تو چاہے میرا کوئی دوست ہو یا کوئی مجھے سخت نا پسند، ان سب کو ایک ہی پیمانے پر پرکھتے دیکھنا چاہوں گا۔ اور آخر میں کچھ انجان کی ملٹیپل آئی ڈیز بارے۔ اس مسئلے پر بھی اسے مستقل بین کر دینا کسی طرح ٹھیک نہی کہ پچھلے دو سال سے ایڈمنسٹریشن نے اس کی مختلف آئی ڈیز ہونے بارے جانتے ہوئے یہاں اس کا بارہا مذاقا ذکر تو کیا ہے لیکن اسے روکا نہی۔ اب اگر یہ پالیسی تبدیل کی جارہی ہے تو سب سے پہلے اسے ایک وارننگ دی جائے، کچھ دن کے اندر خود ہی ایک کے سوا ساری آئی ڈٰیز کو ڈیلیٹ کرنے کا کہا جائے۔ اور اگر اس کے باوجود وہ یہ نہ کرے تو پھر اس پر بین لگائی جائے۔ Atif Qazi Bawa Anjaan Wahreh Ghost Protocol BlackSheep SaleemRaza

    شاہد عباسی بھائی

    آپکے ان طویل کومنٹس کا شکریہ

    پہلی بات تو یہ ذہن میں کلیئر کر لیں کہ جج صاحب کی آئی ڈی میں عاطف بھائی کے جھلکنے والی بات میں قطعی طور پر کوئی حقیقت نہیں ہے. میں عاطف بھائی کو پچھلے سات آٹھ سال سے پڑھ رہا ہوں. میں ان کے انداز تحریر سے ہی نہیں بلکہ ان کی سوچ سے بھی اچھی طرح واقف ہوں اور انہیں کسی بھی آئی ڈی میں دیکھکر پہچان سکتا ہوں

    انجان کا بین مجھے بھی اچھا نہیں لگا ہے لیکن انجان کو بین کون کر سکتا ہے؟ وہ پانی کی طرح اپنا راستہ خود بنا لیتا ہے. لوگ کہتے ہیں کہ ایک در بند تو سو در کھلا لیکن انجان کہتا ہے کہ

    ایک آئی ڈی بین تو سو آئی ڈیز کھلی

    ملٹیپل آئی ڈیز بنانے اور پراکسی سرور استعمال کرنے کے بارے میں فورم انتظامیہ کو ایک واضح موقف اختیار کرنا چاہیے. یہاں لوگ دو نمبر آئی ڈیز بنا کر آتے ہیں اور چھ چھ ماہ گالیاں بکتے اور ذاتی حملے کرتے رہتے ہیں. نہ انہیں انتظامیہ بین کرتی ہے اور نہ ہی اخلاقیت کی تبلیغ کرنے والوں کے اندر اتنی اخلاقی جرات ہوتی ہے کہ ان کے خلاف زبان بھی کھول سکیں. حتی کہ یہاں لوگ کھلے عام اور پس پردہ آئی ڈی بدل کر گالیاں بکنے والوں کو انگلی دے رہے ہوتے ہیں اور ان کی پشت بھی تھپتھپا رہے ہوتے ہیں

    جج صاحب سے میں پہلے ہی درخواست کر چکا ہوں کہ انہیں ممبرز سے الجھنے سے گریز کرنا چاہیے. اگر کوئی فورم ممبر کچھ غلط لکھتا ہے تو انہیں ان کے پاس مکمل اختیارات ہیں کہ وہ اسے جتنا عرصۂ چاہیں بین کر سکتے ہیں. ان کے پاس کسی کو مستقل بین کرنے یا کسی کا بین اٹھانے کے مکمل اختیارات ہیں. انہیں ممبرز سے بحث کرنے کی بجائے اپنے اختیارات استعمال کرنے چاہیے

    Atif Qazi

    Judge

    #14
    Host
    Keymaster
    Offline
    • Threads: 24
    • Posts: 721
    • Total Posts: 745
    • Join Date:
      9 Aug, 2016
    • Location: تار عنکبوت

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    جج صاحب کے جانے کا مجھے بےحد افسوس ہے۔ وہ شائید اب واپس نہ آئیں۔ ایک محبت بھرا فون کیا تھا جس کے مندرجات سے آج آگاہ کروں گا اگر شام کو وقت ملا۔

    مجھے لگتا ہے فورم کا ماحول ان کی وجہ سے بہت بہتر ہوگیا تھا حالانکہ ان کے بعض فیصلے مجھے بالکل منظور نہیں تھے اور ہماری بہت بحث بھی ہوئی۔

    لیکن ایسے لگنے لگا ہے جیسے وہ ایک طرف ہیں اور تمام ممبرز ایک طرف۔ یہی ان کی غیرجانبداری کا ثبوت ہے اور جانبداری کا الزام وہ برداشت نہیں کرسکے۔

    خدا کرے واپس آجایں کیونکہ میرا سارا بوجھ اپنے کندھوں پر اٹھا رکھا تھا۔

    #15
    مومن
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 451
    • Total Posts: 451
    • Join Date:
      3 Nov, 2019

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    انجان کی غیرمنصفانہ بین ہٹائی جائے اور جج صاحب کو ریفریشر کورس پر بھیجا جائے۔ ۔ جج صاحب آپ کی ججی میں عاطف صاحب جھلکنے لگے ہیں۔ جس روئیے پر پہلے اعتراض تھا اب وہ اس سے بھی بڑھ کر سامنے آنے لگا ہے۔ ۔ کسی دوسرے سے گالیاں سننے اور کچھ نہ کر سکنے پر آپ کا اپنا غصہ انجان پر اتارنا بلکل غلط تھا اور کسی کو ٹانٹ کرنے (بدزبانی نہی) پر پہلے ایک مہینے اور پھر مستقل طور پر بین کر دینا اور دوسری طرف جنہیں آپ نے کسی ایک لفظ سے روکا وہ آپ کو جہاں سے نکلے وہیں واڑنے (ان الفاظ کو دہرانے پر معذرت کے ساتھ) کا نعرہ لگاتے ہوئے منع کئے گئے لفظ کا مستقل استعمال کرکے آپ کی ججی کا تیا پانچہ کرتے رہے بلکہ کچھ اور لوگ بھی ساتھ مل کر آپ کو ٹانٹ کرنے کے لئے اسی لفظ کا بہت بعد تک بھی ورد کرتے رہے لیکن انہیں وارننگ دینے یا بین کرنے کا سوچتے ہی انصاف کا پاجامہ ڈھیلا ہو گیا کہ اوہ ہو ان کا تو اس لسٹ میں نام لکھا ہے جنہیں عاطف نے بین کرنے سے روک رکھا ہے۔ اب آپ چاہے سو بہانے بنائیں کہ انجان کو ملٹیپل آئی ڈیز بنانے پر بین کیا گیا ہے۔ لیکن یہاں پڑھنے والے اتنے بھولے نہی کہ آپ کا وہ کمنٹ بھول جائیں جو بطور وجہ آپ نے انجان کو بین کرتے ہوئے لکھا تھا حالانکہ کسی بھی سمجھدار کے مطابق آپ کی بتائی گئی وجہ بھی غلط تھی کہ انجان نے تو آپ سے صرف یہی کہا تھا کہ آپ کو بحث نہی کرنی چاہیئے، بس جسے بین کرنا ہے بین کریں اور جسے وارننگ دینی ہے اسے وارننگ دیں۔ مزید یہ کہ بحث و مباحثہ کے لئے آپ ایک الگ آئی ڈی بنا لیں۔ اس کا اندازِ تحریر ٹانٹنگ ضرور تھا لیکن اس کی تحریر میں کوئی ایک بھی غلط لفظ نہی تھا۔ رہا ٹانٹنگ کرنا تو جناب جج صاحب یہاں تو آدھے سے زیادہ کمنٹس ہیں ہی اس زمرے کے۔ کیا آپ ان سب کو مستقل بین کریں گے۔ ۔ میں تو یہ بھی نہی چاہتا کہ آپ باواجی سے الجھتے یا انہیں بین کرتے کہ جو لفظ انہوں نے لکھا وہ ان کے سٹینڈرڈ کے مطابق بہت سے دوسرے الفاظ سے قدرے بہتر تھا۔ اور وہ یہ صدیوں سے عام استعمال کرتے رہے ہیں۔ لیکن پتہ نہی کیوں اس فورم کی ایڈمنسٹریشن نے کچھ لوگوں کو لمبے عرصے کے لئے یا مستقل بین کرنے کا انداز اپنا رکھا ہے جبکہ بقیہ کچھ لوگوں کو ناٹ بین ایبلز کی لسٹ میں رکھ کر پندرہ منٹ سے لے کر بارہ گھنٹے تک کے بریکٹ میں رکھ لیا ہےکہ اگر بہت ہی مجبوری بن جائے تو سمبولک بین لگا دو۔ باواجی سے مجھے کوئی خدا واسطے کا بیر نہی بلکہ ہمیشہ عزت داری کا رشتہ رہا ہے۔ لیکن بات انصاف کی ہے۔ کہ اگر بین بین کھیلنا ہی ہے تو چاہے میرا کوئی دوست ہو یا کوئی مجھے سخت نا پسند، ان سب کو ایک ہی پیمانے پر پرکھتے دیکھنا چاہوں گا۔ اور آخر میں کچھ انجان کی ملٹیپل آئی ڈیز بارے۔ اس مسئلے پر بھی اسے مستقل بین کر دینا کسی طرح ٹھیک نہی کہ پچھلے دو سال سے ایڈمنسٹریشن نے اس کی مختلف آئی ڈیز ہونے بارے جانتے ہوئے یہاں اس کا بارہا مذاقا ذکر تو کیا ہے لیکن اسے روکا نہی۔ اب اگر یہ پالیسی تبدیل کی جارہی ہے تو سب سے پہلے اسے ایک وارننگ دی جائے، کچھ دن کے اندر خود ہی ایک کے سوا ساری آئی ڈٰیز کو ڈیلیٹ کرنے کا کہا جائے۔ اور اگر اس کے باوجود وہ یہ نہ کرے تو پھر اس پر بین لگائی جائے۔ Atif Qazi Bawa Anjaan Wahreh Ghost Protocol BlackSheep SaleemRaza

    مجھے ایک بین کہنے پر بین کر دیا گیا اور یہاں تو بین ہی بین ہیں لیکن پھر ببھی کوئی بین نہیں۔۔یہ بینگردی نہیں تو کیا ہے؟

    #16
    مومن
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 451
    • Total Posts: 451
    • Join Date:
      3 Nov, 2019

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    جج صاحب کے جانے کا مجھے بےحد افسوس ہے۔ وہ شائید اب واپس نہ آئیں۔ ایک محبت بھرا فون کیا تھا جس کے مندرجات سے آج آگاہ کروں گا اگر شام کو وقت ملا۔ مجھے لگتا ہے فورم کا ماحول ان کی وجہ سے بہت بہتر ہوگیا تھا حالانکہ ان کے بعض فیصلے مجھے بالکل منظور نہیں تھے اور ہماری بہت بحث بھی ہوئی۔ لیکن ایسے لگنے لگا ہے جیسے وہ ایک طرف ہیں اور تمام ممبرز ایک طرف۔ یہی ان کی غیرجانبداری کا ثبوت ہے اور جانبداری کا الزام وہ برداشت نہیں کرسکے۔ خدا کرے واپس آجایں کیونکہ میرا سارا بوجھ اپنے کندھوں پر اٹھا رکھا تھا۔

    یہ تو سنا تھا کہ کوئی اللہ کو پیارا ہو گیا۔۔۔یہ پہلی دفعہ دیکھا ہے کہ کوئی بین لگاتے لگاتے خود ہی بین ہو گیا ۔۔۔دنشگردی کو لینے کے دینے پڑھ گئے۔

    • This reply was modified 1 year, 1 month ago by مومن.
    #17
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 599
    • Posts: 4997
    • Total Posts: 5596
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    جج صاحب کے جانے کا مجھے بےحد افسوس ہے۔ وہ شائید اب واپس نہ آئیں۔ ایک محبت بھرا فون کیا تھا جس کے مندرجات سے آج آگاہ کروں گا اگر شام کو وقت ملا۔ مجھے لگتا ہے فورم کا ماحول ان کی وجہ سے بہت بہتر ہوگیا تھا حالانکہ ان کے بعض فیصلے مجھے بالکل منظور نہیں تھے اور ہماری بہت بحث بھی ہوئی۔ لیکن ایسے لگنے لگا ہے جیسے وہ ایک طرف ہیں اور تمام ممبرز ایک طرف۔ یہی ان کی غیرجانبداری کا ثبوت ہے اور جانبداری کا الزام وہ برداشت نہیں کرسکے۔ خدا کرے واپس آجایں کیونکہ میرا سارا بوجھ اپنے کندھوں پر اٹھا رکھا تھا۔

    judge ko wapis aana chahiyee

    #18
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 599
    • Posts: 4997
    • Total Posts: 5596
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    Thnx bro. I am tired. I should get a referesher course now.

    Judge sahab aap  bohut ache Moderator hain

    aap ki moderation se forum ka mahool acha hua , specially your quick decisions and active moderation

    come back plzzzz

    this is my request

    #19
    Jack Sparrow
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 14
    • Posts: 831
    • Total Posts: 845
    • Join Date:
      3 Dec, 2016

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    یہ تو سنا تھا کہ کوئی اللہ کو پیارا ہو گیا۔۔۔یہ پہلی دفعہ دیکھا ہے کہ کوئی بین لگاتے لگاتے خود ہی بین ہو گیا ۔۔۔دنشگردی کو لینے کے دینے پڑھ گئے۔

    مومن صاحب آپ کے فورم کے آباد ہونے کی امید اتنی ہے جتنی کھسروں کے گھر بچے کی پیدائش کی ہوتی ہے 

    • This reply was modified 1 year, 1 month ago by Jack Sparrow.
    #20
    مومن
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 451
    • Total Posts: 451
    • Join Date:
      3 Nov, 2019

    Re: عمران فاروق قتل کیس: پس پردہ کیا کیا ہوا اور اس کہانی کا ایک کردار تمغہ شجاعت کا حقدار کیسے ٹھہرا؟

    مومن صاحب آپ کے فورم کے آباد ہونے کی امید اتنی ہے جتنی کھسروں کے گھر بچے کی پیدائش کی ہوتی ہے

    باوا جی چاھیں تو نا ممکن کو ممکن بنا کر دیکھا دیں ۔۔۔

    Bawa

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 86 total)

You must be logged in to reply to this topic.

×
arrow_upward DanishGardi