Thread: Sheikh Mujeeb on Pakistan

Home Forums Siasi Discussion Sheikh Mujeeb on Pakistan

This topic contains 11 replies, has 7 voices, and was last updated by  Bawa 2 months, 2 weeks ago. This post has been viewed 358 times

Viewing 12 posts - 1 through 12 (of 12 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Shirazi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 157
    • Posts: 2021
    • Total Posts: 2178
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    Sheikh Mujeeb on Pakistan

    • This topic was modified 2 months, 2 weeks ago by  Shirazi.
    #2
    Shirazi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 157
    • Posts: 2021
    • Total Posts: 2178
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    Half a century later we are still stuck at same failed narrative for guaranteed failure.

    #3
    Shah G
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 7
    • Posts: 1708
    • Total Posts: 1715
    • Join Date:
      29 Sep, 2016
    • Location: Milky Way Galaxy

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    ان چار باتوں کا خلاصہ ایک لائن میں بیان کر دیتا ہوں
    .
    سبھی کافر ایک قوم ہیں اور سبھی مسلمان ایک قوم ہیں
    .
    جس کو شک ہو وہ پوچھ لے

    #4
    nayab
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 12
    • Posts: 1352
    • Total Posts: 1364
    • Join Date:
      24 Nov, 2016

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    صدیاں گزر جانے کے باوجود ہماری ترقی کی رہ میں روکاٹ ہماری ہی غلامانہ فطرت ہے ہم آزاد ہو کر بھی آزاد نہ ہو سکے ہمارا مسلہ یہ ہے کہ ہمارے ملک میں کہیں طرح کے غلام اب بھی پائے جاتے ہیں جیسا کہ سعودی،ایرانی، اور بھارتی اور ہاں کچھ تو یہاں یورپین غلام بھی موجود ہیں لہذا ہر ایک غلام اپنے مالک کو خوش کرنے کے لیے ایک دوسرے کو نیچا دکھانے میں ہر وقت کوشاں ہیں جو کہ پاکستا ن میں خراب حالات کا سبب ہیں جب تک ہماری سوچ آزاد نہیں ہوتی تب تک یہاں امن و سکون نہیں آ سکتا توجہاں امن نہ ہو وہاں ترقی کیسی۔۔۔پاکستان کے نام کے ساتھ جمہوریہ کا لفظ دیکھ کر ہی کچھ تسلی ہو جاتی مگر کیا کریں کہ یہاں تو ہمارے سیاستدان بھی اپنے مفادات کی جنگ لڑ رہے ہیں

    #5
    صحرائی
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 7
    • Posts: 316
    • Total Posts: 323
    • Join Date:
      27 Oct, 2018
    • Location: Bermuda

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    While one can’t disagree to this, however there is no authentic source for this to  link  it to Sheikh Mujeeb

    This sourcless image is widely circulated on SM as well

    #6
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 131
    • Posts: 9100
    • Total Posts: 9231
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    خود فریبی سے تو خود شیخ مجیب الرحمان بھی نہ نکل سکا تھا

    اسی خود فریبی کی وجہ سے ہی وہ اپنی فوج کے ہاتھوں اپنی بیوی، اپنے بھائی، تین بیٹوں، دو بہوؤں، بھتیجے اور اسکی بیوی، سالے بمعہ اسکے تیرہ رشتہ دار، تین وزراء اعظم (سابقہ اور حالیہ)، سابقہ وائس پریزیڈنٹ، سابقہ وزیر داخلہ اور ملٹری انٹیلیجنس چیف سمیت قتل ہوگیا. شیخ مجیب الرحمان کی دو بیٹیاں خوش قسمتی سے جرمنی میں ہونے کی وجہ سے بچ گئیں اور انہیں اگلے چھ سال تک بھارت میں پناہ لینا پڑی

    حسن اتفاق دیکھیۓ کہ بنگلہ دیش کی فوج نے اپنے بنگلہ بدھو سے آزادی حاصل کرنے کیلیے ان دو ممالک کے یوم آزادی (چودہ اور پندرہ اگست) کی درمیانی رات کا انتخاب کیا جن میں سے ایک ملک سے اس نے آزادی حاصل کی تھی اور دوسرے ملک کی مدد سے آزادی حاصل کی تھی

    شیخ مجیب الرحمان اس قدر خود فریبی کا شکار تھا کہ تمام سیاسی پارٹیوں پر پابندی لگا کر، پریس پر سنسر شپ عائد کرکے، جوڈیشری کو اپنی لونڈی بنا، انسانی حقوق معطل کرکے، کرپشن کا بازار گرم کرکے، اپنے حامیوں کو بدمعاشی کرنے کی کھلی چھٹی دیکر، صنعتوں کو قومی تحویل میں لیکر، قراء پروری کی انتہا کرکے، عوام کو بھوک اور افلاس کا شکار کرکے، ملک میں افراتفری پر قابو پانے اور امن و امان قائم کرنے میں ناکام ہونے کے باوجود یہ سمجھ بیٹھا کہ اسکے اس کے خلاف عوام، طلبہ، سیاسی پارٹیوں، سول سوسائٹی، جوڈیشری، بیروکریسی اور فوج میں اسکے خلاف کوئی رد عمل نہیں ہوگا

    اگر وہ حالات کا ادراک کر سکتا تو اس خون ریز حادثے سے بچ سکتا تھا لیکن افسوس کہ

    ڈھونڈنے والا ستاروں کی گزر گاہوں کا
    اپنے افکار کی دنیا میں سفر کر نہ سکا

    #7
    Naeem
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 1
    • Posts: 198
    • Total Posts: 199
    • Join Date:
      10 Oct, 2017
    • Location: London

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

     بنگلہ بدھو

    Well done Bawa. Keep it up please.

    #8
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 131
    • Posts: 9100
    • Total Posts: 9231
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    بنگلہ بدھو Well done Bawa. Keep it up please.

    اس میں حیرت والی کونسی بات ہے؟

    شیخ مجیب الرحمن کو بنگلہ دیش میں بنگلہ بدھو یا بنگلہ بندھو یا بنگہ بندھو ہی کہا جاتا ہے جس کا عموما مطلب بابائے قوم لیا جاتا ہے لیکن اس کا لفظی مطلب بنگال کا دوست ہے

    #9
    Naeem
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 1
    • Posts: 198
    • Total Posts: 199
    • Join Date:
      10 Oct, 2017
    • Location: London

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    اس میں حیرت والی کونسی بات ہے؟ شیخ مجیب الرحمن کو بنگلہ دیش میں بنگلہ بدھو یا بنگلہ بندھو ہی کہا جاتا ہے جس کا مطلب بابائے قوم ہے

    I understand Bandhu and for a while I thought you had changed your favouite Phu……. to what it should be Budh——

    I still believe in miracles!

    • This reply was modified 2 months, 2 weeks ago by  Naeem.
    #10
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 131
    • Posts: 9100
    • Total Posts: 9231
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    I understand Bandhu and for a while I thought you had changed your favouite Phu……. to what it should be Budh—— I still believe in miracles!

    پھدو کے تمام جملہ حقوقِ عمران خان کے نام محفوظ ہیں

    جیڑا میانوالی وچ پھدو او بنی گالہ وچ بھی پھدو

    :bigsmile: :lol:   :hilar:

    #11
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 197
    • Posts: 3603
    • Total Posts: 3800
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    خود فریبی سے تو خود شیخ مجیب الرحمان بھی نہ نکل سکا تھا اسی خود فریبی کی وجہ سے ہی وہ اپنی فوج کے ہاتھوں اپنی بیوی، اپنے بھائی، تین بیٹوں، دو بہوؤں، بھتیجے اور اسکی بیوی، سالے بمعہ اسکے تیرہ رشتہ دار، تین وزراء اعظم (سابقہ اور حالیہ)، سابقہ وائس پریزیڈنٹ، سابقہ وزیر داخلہ اور ملٹری انٹیلیجنس چیف سمیت قتل ہوگیا. شیخ مجیب الرحمان کی دو بیٹیاں خوش قسمتی سے جرمنی میں ہونے کی وجہ سے بچ گئیں اور انہیں اگلے چھ سال تک بھارت میں پناہ لینا پڑی حسن اتفاق دیکھیۓ کہ بنگلہ دیش کی فوج نے اپنے بنگلہ بدھو سے آزادی حاصل کرنے کیلیے ان دو ممالک کے یوم آزادی (چودہ اور پندرہ اگست) کی درمیانی رات کا انتخاب کیا جن میں سے ایک ملک سے اس نے آزادی حاصل کی تھی اور دوسرے ملک کی مدد سے آزادی حاصل کی تھی شیخ مجیب الرحمان اس قدر خود فریبی کا شکار تھا کہ تمام سیاسی پارٹیوں پر پابندی لگا کر، پریس پر سنسر شپ عائد کرکے، جوڈیشری کو اپنی لونڈی بنا، انسانی حقوق معطل کرکے، کرپشن کا بازار گرم کرکے، اپنے حامیوں کو بدمعاشی کرنے کی کھلی چھٹی دیکر، صنعتوں کو قومی تحویل میں لیکر، قراء پروری کی انتہا کرکے، عوام کو بھوک اور افلاس کا شکار کرکے، ملک میں افراتفری پر قابو پانے اور امن و امان قائم کرنے میں ناکام ہونے کے باوجود یہ سمجھ بیٹھا کہ اسکے اس کے خلاف عوام، طلبہ، سیاسی پارٹیوں، سول سوسائٹی، جوڈیشری، بیروکریسی اور فوج میں اسکے خلاف کوئی رد عمل نہیں ہوگا اگر وہ حالات کا ادراک کر سکتا تو اس خون ریز حادثے سے بچ سکتا تھا لیکن افسوس کہ ڈھونڈنے والا ستاروں کی گزر گاہوں کا اپنے افکار کی دنیا میں سفر کر نہ سکا

    Bawa sahib

    محترم باوا صاحب

    سلام عرض خدمت ہے

    محترمہ فاطمہ جناح صاحبہ کی صدارتی امیدوار کی مہم چلانے والا، بنگلہ میں اکثریت حاصل کرنے والا، اپنے حق حکومت سازی سے مبینہ طور پر محروم کیا جانے والا اتنی جلدی آمر کیوں بن گیا

    ویسے ہمارے خطے میں جتنی جلدی جمہوریت کا نام لینے والے آمر بنتے ہیں ایسی مثالیں کم کم ملتی ہیں دنیا میں

    اور پھر وہی قومیں ان آمروں کی بیٹیوں اور بیٹوں اور کبھی کبھار بہوؤں کو بھی دوبارہ جمہوریت کے نام پر اپنا رہنماء بنا لیتی ہیں

    #12
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 131
    • Posts: 9100
    • Total Posts: 9231
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: Sheikh Mujeeb on Pakistan

    Bawa sahib

    محترم باوا صاحب

    سلام عرض خدمت ہے

    محترمہ فاطمہ جناح صاحبہ کی صدارتی امیدوار کی مہم چلانے والا، بنگلہ میں اکثریت حاصل کرنے والا، اپنے حق حکومت سازی سے مبینہ طور پر محروم کیا جانے والا اتنی جلدی آمر کیوں بن گیا

    ویسے ہمارے خطے میں جتنی جلدی جمہوریت کا نام لینے والے آمر بنتے ہیں ایسی مثالیں کم کم ملتی ہیں دنیا میں

    اور پھر وہی قومیں ان آمروں کی بیٹیوں اور بیٹوں اور کبھی کبھار بہوؤں کو بھی دوبارہ جمہوریت کے نام پر اپنا رہنماء بنا لیتی ہیں

    و علیکم السلام محترم جے بھائی جی

    آپ نے بہت اہم سوالات اٹھائے ہیں. ان سوالات کا تعلق انسانی سوچ اور عمل سے ہے. بنیادی طور پر آپکے دو سوالات بنتے ہیں. ایک سوال کا تعلق خاص انسان جسے ہم لیڈر یا سیاستدان یا حکمران کہتے ہیں اس کی سوچ اور عمل کے بارے میں ہے جبکہ دوسرا سوال عام انسانوں یعنی عوام الناس کی سوچ اور عمل سے تعلق رکھتا ہے

    جب کوئی خاص انسان کوئی کام کرنا شروع کرتا ہے تو وہ اکیلا ہوتا ہے. اپنے مقصد کو حاصل کرنے کیلیے اسے ایک ٹیم کی ضرورت ہوتی ہے. کبھی یہ ٹیم اسے بنی بنائی مل جاتی ہے اور کبھی خود ٹیم بنانی پڑتی ہے. اگر ٹیم بنی بنائی مل جائے تو اسکا کام نسبتا آسان ہو جاتا ہے اور اگر اسے ٹیم خود بنانی پڑے تو اس میں اسے کافی محنت کرنی پڑتی ہے. اس کی ٹیم میں اسکے ہمخیال لوگ ہوتے ہیں، اسکے دوست احباب ہوتے ہیں اور اسکے اہل خانہ اور رشتہ دار ہوتے ہیں. جب یہ ٹیم تیار ہو جاتی ہے تو وہ اس خاص انسان کے مقصد کے حصول میں اسکی معاونت کرتی ہے اور قربانیاں دے کر اسے کامیابی کی منزل تک لیکر جاتی ہے. جب وہ کامیاب ہوتا ہے تو وہ اپنی ٹیم کا مقروض ہوتا ہے اور چاہتا ہے کہ اسکی کامیابی کے ثمرات اسکے ساتھ ساتھ اسکی ٹیم بھی سمیٹے. کامیابی خاص انسان کو تھوڑا مغرور اور خوشامد پسند بھی بنا دیتی ہے. یہیں سے خاص انسان کی قائدانہ صلاحیتوں کا اصل امتحان شروع ہوتا ہے. اب تک جو کامیابی ملی ہوتی ہے وہ خاص انسان کی قائدانہ صلاحیتوں سے زیادہ ٹیم ورک کی مرہون منت ہوتی ہے. اگر خاص انسان اپنی ٹیم کے کامیابی کے ثمرات کو سمیٹنے کے عمل کو کنٹرول میں رکھے اور اسے ایک جائز حد سے آگے نہ بڑھنے دے تو وہ کامیابی ترقی کا سبب بنتی ہے لیکن اگر کامیابی کے ثمرات سمیٹنے کے عمل کو کنٹرول نہ کیا جائے تو وہاں سے اقراء پروری اور دوست نوازی جنم لیتی ہے جو معاملات کو بگاڑنا شروع کر دیتی ہے اور کامیابی کو ریورس گیئر میں ڈال دیتی ہے. کامیابی کے نشے میں سرشار خاص انسان صحیح مشورہ دینے والے اور تنقید کرنے والے ٹیم ممبرز سے کٹ جاتا ہے اور خوشامد پسندوں میں اسقدر گر جاتا ہے جس کی وجہ سے وہ زمین پر تبدیل ہونے حالات کا ادراک نہیں کر پاتا ہے. نتیجتا انجام وہی ہوتا ہے جو شیخ مجیب الرحمان کا ہوا تھا

    جہاں تک عام لوگوں کی سوچ کا تعلق ہے تو اس پر بہت سارے عوامل اثر انداز ہوتے ہیں. ان عوامل میں عام انسان کا ماحول، اسکی تعلیم، اسکی تاریخ، اسکا مذھب یا عقیدہ، اسکا کلچر، اسکی معاشی و معاشرتی حالت وغیرہ شامل ہیں. ہماری خطے کے عام لوگوں نے چونکہ بادشاہوں، راجوں، مہا راجوں، جاگیر داروں، سرمایہ داروں، وڈیروں، فوجی جرنیلوں اور طاقتور لوگوں کو ہی حکومت کرتے پڑھا اور دیکھا ہے اس لیے انکے نزدیک لیڈر یا حکمران کا ایک الگ ہی تصور ہے. انکی سوچ یہ ہے کہ لیڈر یا حکمران ہم جیسا عام انسان نہیں ہونا چاہیے بلکہ اس میں کچھ خاص خوبیاں ہونی چاہیے. ہمارے خطے کے لوگ اپنے جیسے یا اپنے سے کمتر حیثیت والے کسی عام آدمی کو، بیشک وہ کتنا ہی پڑھا لکھا، قابل، مخلص، ملنسار، خدمتگار اور شریف النفس ہو، اپنی قیادت کے اہل نہیں سمجھتے ہیں. اپنی اسی سوچ کی وجہ سے ہمارے خطے کے عام لوگ خاص لوگوں کو ہی اپنی قیادت کے اہل سمجھتے ہیں. ان خاص لوگوں میں کچھ نئے خاص لوگ بھی ہو سکتے ہیں اور کچھ پہلے سے موجود خاص لوگوں کے عزیز و اقارب بھی ہو سکتے ہیں

Viewing 12 posts - 1 through 12 (of 12 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation