Thread: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

Home Forums Siasi Discussion GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

This topic contains 47 replies, has 13 voices, and was last updated by  shahidabassi 2 weeks, 6 days ago. This post has been viewed 926 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 48 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    Govt confident of beating IMF’s inflation projection

    Having been satisfied with the economic performance, the IMF recently released $452 million as the second tranche, bringing total disbursements to about $1.45 billion. — Reuters/File
      
     
     
     
      
     
     
    ISLAMABAD: The finance ministry has announced that decisive policy implementation has started to address deep-seated problems of economy and reverse its large imba­lances, preserving financial stability.

    In a statement issued on Sunday, the ministry said the Inter­national Monetary Fund (IMF) in its first review of Pakistan’s economic performance had acknowledged that the government reforms progra­mme was on track and producing results.

    Having been satisfied with the economic performance, the IMF recently released $452 million as the second tranche, bringing total disbursements to about $1.45 billion.

    The IMF report acknowledged that the business climate had improved and market confidence was returning. The assessment confirmed the government had recognised that structural reforms, particularly in the public sector, were key to reviving economic activity and growth, the ministry said.

    .
    Finance ministry says strategy being finalised to deal with circular debt
    According to the ministry, the IMF report also confirmed that end-September performance criteria were observed with wide margins. They included: zero budgetary borrowing from State Bank; primary budget deficit ceiling; ceiling on government guarantees; zero external public payment arrears; State Bank net international reserves, net domestic assets, and swaps/forwards targets all met.

    .

    With regard to inflation outlook, the IMF lowered the inflation projection for 2020 fiscal year to 11.8 per cent, down from 13pc earlier on account of the fact that the administrative and energy tariff adjustments are expected to offset the effects from weak domestic demand. The report confirmed that inflation had started stabilising along with core inflation, and the SBP stance (no need for further rate hikes) was appropriate.

    .

    However, the government is of the opinion the country would do much better than IMF projection. As inflation during July-November was 10.8pc, the government with the measures taken target to bring inflation down to five per cent in the medium term, according to the ministry.

    With regard to the external sector, significant improvement has been witnessed. Overall current account deficit shrunk by almost two-thirds (74 per cent) in the first quarter of fiscal year 2020 compared to the same period of fiscal year 2019. The current account deficit is projected to decline to 2.4pc of the GDP in fiscal year 2020 (4.9pc), which is lower than earlier IMF forecasts of 2.6pc.

    .

    Total imports fell by 23pc year-on-year in the first quarter of fiscal year 2020, but imports of machinery and equipment were more resilient, rising about two per cent year-on-year. Exports were showing some sign of recovery, up two per cent year-on-year for the same period with 17pc volume growth, mainly driven by food and textiles.

    .

    The IMF report stated that transition to a market-determined exchange rate had allowed the rupee to find its new equilibrium quickly, thereby, successfully correcting the ‘exchange rate overvaluation’ of the last five years.

    .

    The report also acknowledged strong fiscal performance in the first quarter of 2020 fiscal year while stating that primary surplus was 0.6pc of GDP and an overall deficit of 0.6pc of GDP, about one per cent of GDP better than programmed. In addition, tax revenue growth was in double-digits (net of refunds) even though customs receipts and other external sector related taxes had suffered due to import compression.

    .

    The ministry mentioned that the key concessions won by the government included increase in the ceiling on the NDA of the SBP (performance benchmark) to Rs9.1 trillion in the current fiscal year. This was positive for growth and would be utilized for concessional financing for the export industry, it added.

    .

    Similarly, ceiling on government guarantees had been enhanced to Rs1.8 trillion, which would allow the government to settle the outstanding stock of circular debts.

    Besides, floor on the FBR tax collections for the fiscal year 2020 was lowered to Rs5.2 trillion due to strong improvement in non-tax revenue. During the first half of the fiscal year, the government non-tax revenue collection had hit Rs878 billion, which was 75 per cent of the full year budgeted collection of Rs1.16 trillion. The ministry said this would ease the burden on public and businesses.

    .

    The finance ministry said Pakistan economy had witnessed significant improvements in recent months as evidenced from the performance of key economic indicators like stable exchange rate for five months, improvement in stock exchange 100-index, improvement in foreign exchange reserves, and ease of doing index.

    .

    After four years of outflow, the total foreign portfolio investment was up to $1.2 billion during July-November in fiscal year 2020. Foreign Direct Investment increased to $850 million, up by 78.1 per cent. Total foreign investment reached $2 billion as against $147m last year.

    .

    Similarly, incorporation of companies increased 25.8pc during the July-November period of fiscal year 2020.

    .

    The FBR tax collection grew by 16.8pc to Rs1,615.2bn during the July-November period against Rs1,382.9bn of the last year’s corresponding period. Within total FBR tax collection, domestic tax collection grew to 21.5pc and import taxes dropped to 2.6pc (import compression).

    .

    On external side, exports increased by 4.7pc to $10.31bn during July-November of 2020 fiscal year against $9.85bn in the same period last year, while imports decreased by 21.1pc to $18.31bn during this period of the current fiscal year against $23.22bn in the same period last year.

    .

    Consequently, trade deficit decreased 40.1pc to $8.002bn during July-November of fiscal year 2020 against $13.36 billion in the comparable period of last year.

    Explaining other developments, the finance ministry said the government had accelerated the Public Sector Development Programme (PSDP) release system. In this regard, it added, the step of finance division’s endorsement had been eliminated.

    In the last three months, it said, Pakistan Stock Exchange (PSX) became the best-performing market as per Bloomberg, as PSX benchmark KSE 100-Index gained around 10,500 points.

    Similarly, the Moody’s Investors Service upgraded Pakistan’s credit rating outlook to stable from negative.

    On external front, in the month of November 2019, exports increased 11.23pc to $2.110bn against $1.897bn in the same month last year while imports decreased by 13.18pc to $3.648bn as compared with $4.202bn in the comparable period last year.

    In October 2019, on month-on-month, large-scale manufacturing registered a growth of 4.01pc, indicating upward trajectory. Cement dispatches increased 10.6pc in November to 4.35m tonnes. Another important development was that Karkey dispute was renegotiated to save Pakistan $1.2bn.

    On the issue of circular debt, the government claimed that the monthly flow decreased from Rs38bn in July 2019 to about Rs10bn at present. A zero-target had been set for the next year, while a strategy for dealing with the stock of debt was being finalized, it added.

    The energy ministry will issue additional Rs250bn Sukuks with government guarantee in fiscal year 2020 to retire the central power purchasing authority liabilities of the IPPs.

    About the exporter’s package, the ministry said that additional credit of Rs200bn had been allocated for exporters under the Export Finance Scheme (EFS) in 2020 fiscal year. The interest rate differential between Kibor and EFS mark-up would be paid through an additional Rs10bn subsidy by the government. This would boost export sector and further reduce their cost of doing business. SBP will give additional Rs100bn worth of lending to the exporters, to be subsidized by government through SBP profits.

    Published in Dawn, December 30th, 2019

    • This topic was modified 3 weeks, 3 days ago by  shahidabassi.
    #2
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    لگتا ہے کرنٹ اکاؤنٹ ڈیفیسٹ ۲۴ ارب ڈالر سے کم ہو کر صفر ہونے جا رہا ہے۔ انوسٹمنٹ، لارج سکیل مینوفیکچرنگ، ٹیکس کالیکشن، سٹاک ایکسچینج، فارن کرنسی ریزروز اور ایکسپورٹ سب بہتری کی طرف جا رہے ہیں۔ نان ٹیکس ریوینئو کی کالیکشن پانچ ماہ میں ہی ٹارگٹ کا ۷۵ فیصد ہو چکی ہے۔۔

    #3
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    شاہد بھائی جب نون لیگ نے حکومت چھوڑی تو جی ڈی پی چھ فیصد کے قریب تھی – مہنگائی چار فیصد سے کم اور ڈالر ایک سو پندرہ پر تھا – کرنٹ اکاؤنٹ کی حالت بہت خراب تھی کیونکے امپورٹ بہت زیادہ تھی اور ایکسپورٹ نہیں بڑھ رہی تھی آخری سال البتہ ایکسپورٹ پچھلے ایک سال کی نسبت بارہ فیصد زیادہ تھی -اگر نون کی حکومت ہی چلتی رہتی اور جب امپورٹ کے لئے ڈالر ہی نہ ہوتے تو مزید امپورٹ کیسے کرتے – لازما امپورٹ ڈیو ٹی بڑھانی پڑھتی جس سے امپورٹ پر دباؤ کم ہوتا اور کرنٹ اکاؤنٹ ائستہ ایستہ بہتر ہوتا مگر جی ڈی پی چھ فیصد سے جمپ کر کے دو اعشاریہ چار پر کبھی نہ آتی – ممکن ہے چھ سے کم ہو کر پانچ پر آ جاتی ، مہنگائی شاید چھ پر اور روپیہ بھی آٹھ دس روپے بڑھتا مگر ایسی تباہی نہ مچتی کہ روپیہ ایک سو ساٹھ ، جی ڈی پی تین سے کم اور مہنگائی بارہ فیصد ( اشیا خور د نوش سولہ فیصد ) ہوتی – اگلے ساڑھے تین سال خان جتنا بھی زور لگا لے جی ڈی پی چھ کو نہیں پوھنچ سکتی اور مہنگائی چار فیصد تک نہیں آ سکتی ڈالر کی اتنی گراوٹ کے بحد کوسٹ اوف مینو فیکچر نگ اتنی بڑھ چکی ہے کہ ایکسپورٹ میں بہت زیادہ اضافے کا بھی کوئی امکان نہیں تو پھر آپ محیشت کے اچھے ہونے کا ڈھول کیوں پیٹ رہے ہیں میری سمجھ سے باہر ہے -یاد رہے تیس فیصد روپے کی قدر گھٹا کر دس بارہ فیصد ایکسپورٹ کا بڑھنا فخر کی بات نہیں گھاٹے کا سودا ہے – پچھلی حکومت گرا کر کیا حاصل کیا گیا اور کیا حاصل کیا جائیگا سوائے چند لوگوں کی بغض شریفین کو تسکین ملنے کے –

    shahidabassi

    • This reply was modified 3 weeks, 3 days ago by  Awan.
    #4
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    I said you need brains. :bigsmile: :bigsmile:

    #5
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    I said you need brains. :bigsmile: :bigsmile:

    میرے پاس برین نہیں مگر میرے سوالات پر اوروں کو سمجھا دیں – مہیشت کی سست روی اور امپورٹ ڈیو ٹی بڑھانے سے جو امپورٹ کم ہوئی کیا یہ بہت بری ایچیومنٹ ہے ؟ کیا یہی کوئی اور حکومت با آسانی نہیں کر سکتی تھی ؟ پہلے مہیشت کے سارے پیرامیٹر بشمول اسٹاک مارکیٹ ،

    لارج سکیل مینو فیکچرنگ زیادہ گرا کر پھر معمولی بہتر ہونے پر سینا چوڑا کرنا بنتا ہے – بنیادی باتیں وہی ہیں جن کا جواب میں نے مانگا ہے کہ پانچ سال میں دائرے کے اس سفر کا کوئی فائدہ ہے ؟

    ایک برین لیس نے یہ بھی لکھا ہے

    https://propakistani.pk/2019/11/23/pakistans-large-scale-manufacturing-declines-5-91-in-q3-2019/

    #6
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    میرے پاس برین نہیں مگر میرے سوالات پر اوروں کو سمجھا دیں – مہیشت کی سست روی اور امپورٹ ڈیو ٹی بڑھانے سے جو امپورٹ کم ہوئی کیا یہ بہت بری ایچیومنٹ ہے ؟ کیا یہی کوئی اور حکومت با آسانی نہیں کر سکتی تھی ؟ پہلے مہیشت کے سارے پیرامیٹر بشمول اسٹاک مارکیٹ ، لارج سکیل مینو فیکچرنگ زیادہ گرا کر پھر معمولی بہتر ہونے پر سینا چوڑا کرنا بنتا ہے – بنیادی باتیں وہی ہیں جن کا جواب میں نے مانگا ہے کہ پانچ سال میں دائرے کے اس سفر کا کوئی فائدہ ہے ؟ ایک برین لیس نے یہ بھی لکھا ہے https://propakistani.pk/2019/11/23/pakistans-large-scale-manufacturing-declines-5-91-in-q3-2019/

    اعوان بھائی پہلے تو آپ کو نیا سال مبارک۔ دوسری بات، برین والا فقرہ لائیٹر موڈ میں لکھا ہے اسے اسی طرح لیجئے۔
    باقی ن لیگ نے اس ملک کی معیشت کے ساتھ جو کھلواڑ کیا اس پر ان صفحات پر اتنا کچھ لکھا جا چکا ہے کہ اسے دہرانا کچھ اچھا نہی لگتا۔
    اور یہ جو آپ کی آہستہ آہستہ والی تھیوری ہے یہ کسی بھی طرح ممکن نہی تھی کہ اس آہستہ آہستہ کے لئے پچیس تیس بلین اضافی ڈالر چاہئے ہوتے۔  میری باتیں آپ کی سمجھ میں اس وقت تک نہی آئیں گیں جب تک کہ آپ یہ نہ سمجھ لیں کہ امپورٹس میں کمی معاشی سست روی کی وجہ سے نہی ہوئی بلکہ معاشی سست روی امپورٹس کم کرنے کی وجہ سے ہوئی ۔ دوسری بات یہ کہ ن لیگ کے آخری سال میں جو ۵ اعشاریہ ۴ فیصد گروتھ ہوئی وہ سپینڈنگ اور امپورٹس کی بنیاد پر تھی نہ کہ مظبوط معاشی انڈیکیٹرز کی بنیاد پر۔ ایسی گروتھ جعلی، اور ایک الیوژن کی طرح ہوتی ہے جس کی قیمت آنے والے کئی سالوں میں ادا کرنی پڑتی ہے۔ یہ گروتھ اسی طرح ہے کہ آپ اپنی دوکان پر ایک ماچس کی ڈبیا خریدنے والے کو دو پیکٹ سگریٹ مفت دے کر سیل بڑھا کر ٹھٹھے مارنا شروع کر دیں۔ تیسری اور آخری بات، اکانومی میں جو اصلاحات موجودہ حکومت نے کی ہیں ایسا کر تو ہر کوئی سکتا ہے لیکن اس کی سیاسی قیمت بہت ہوتی ہے اس لئے بہت کم سیاست دان ایسا کرنے کے لئے تیار ہوتے ہیں۔ لیکن اس کر گزرنے کے دو چار سال بعد اس کے فوائد ان گنت ہیں جو آنے والے سالوں میں آپ کو نظر آئیں گے بشرط کہ نواز ٹولہ دوبارہ برسرِ اقتدار آ کر اسی ڈگر پر نہ چل پڑے۔

    • This reply was modified 3 weeks, 2 days ago by  shahidabassi.
    #7
    casanova
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 490
    • Total Posts: 490
    • Join Date:
      4 Sep, 2018
    • Location: گلشن گلشن

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    اعوان بھائی پہلے تو آپ کو نیا سال مبارک۔ دوسری بات، برین والا فقرہ لائیٹر موڈ میں لکھا ہے اسے اسی طرح لیجئے۔ باقی ن لیگ نے اس ملک کی معیشت کے ساتھ جو کھلواڑ کیا اس پر ان صفحات پر اتنا کچھ لکھا جا چکا ہے کہ اسے دہرانا کچھ اچھا نہی لگتا۔ اور یہ جو آپ کی آہستہ آہستہ والی تھیوری ہے یہ کسی بھی طرح ممکن نہی تھی کہ اس آہستہ آہستہ کے لئے پچیس تیس بلین اضافی ڈالر چاہئے ہوتے۔ اور آخری بات یہ کہ میری باتیں آپ کی سمجھ میں اس وقت تک نہی آئیں گیں جب تک کہ آپ یہ نہ سمجھ لیں کہ امپورٹس میں کمی معاشی سست روی کی وجہ سے نہی ہوئی بلکہ معاشی سست روی امپورٹس کم کرنے کی وجہ سے ہوئی ۔ دوسری بات یہ کہ ن لیگ کے آخری سال میں جو ۵ اعشاریہ ۴ فیصد گروتھ ہوئی وہ سپینڈنگ اور امپورٹس کی بنیاد پر تھی نہ کہ مظبوط معاشی انڈیکیٹرز کی بنیاد پر۔ ایسی گروتھ جعلی، اور ایک الیوژن کی طرح ہوتی ہے جس کی قیمت آنے والے کئی سالوں میں ادا کرنی پڑتی ہے۔ یہ گروتھ اسی طرح ہے کہ آپ اپنی دوکان پر ایک ماچس کی ڈبیا خریدنے والے کو دو پیکٹ سگریٹ مفت دے کر سیل بڑھا کر ٹھٹھے مارنا شروع کر دیں۔ تیسری اور آخری بات، اکانومی میں جو اصلاحات موجودہ حکومت نے کی ہیں ایسا کر تو ہر کوئی سکتا ہے لیکن اس کی سیاسی قیمت بہت ہوتی ہے اس لئے بہت کم سیاست دان ایسا کرنے کے لئے تیار ہوتے ہیں۔ لیکن اس کر گزرنے کے دو چار سال بعد اس کے فوائد ان گنت ہیں جو آنے والے سالوں میں آپ کو نظر آئیں گے بشرط کہ نواز ٹولہ دوبارہ برسرِ اقتدار آ کر اسی ڈگر پر نہ چل پڑے۔

    عباسی صاحب۔۔۔۔نفسا نفسی کے اس دور میں ۔۔ آپ کو  محبت ، دل لگی اور عشق کی منزلیں طے کرنے والے شُدھ وفادارصرف نون لیگ کی صفوں میں نظر آئیں گے۔۔

    ایک ہندو سنیاسی کا قول ہے کہ “عورت سمجھنے کی نہیں، بلکہ چکھنے کی چیز ہے”۔۔ ٹھیک اسی طرح نون لیگی یقین رکھتے ہیں کہ ” دماغ سمجھنے کیلئے نہیں، بلکہ کھانے کیلئے بنا ہے”۔۔

    آپ دلیل و حجت کے ہزار نشتر چلائیں نون لیگ کی وفاؤں نے اتفاق سرئے کی زرہ بکتر سے اپنے دماغ کو حق شناسی سے محفوظ کر رکھا ہے۔۔۔۔۔ :) ۔۔۔

    نیا سال مبارک۔۔۔

    • This reply was modified 3 weeks, 2 days ago by  casanova.
    #8
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    اعوان بھائی پہلے تو آپ کو نیا سال مبارک۔ دوسری بات، برین والا فقرہ لائیٹر موڈ میں لکھا ہے اسے اسی طرح لیجئے۔ باقی ن لیگ نے اس ملک کی معیشت کے ساتھ جو کھلواڑ کیا اس پر ان صفحات پر اتنا کچھ لکھا جا چکا ہے کہ اسے دہرانا کچھ اچھا نہی لگتا۔ اور یہ جو آپ کی آہستہ آہستہ والی تھیوری ہے یہ کسی بھی طرح ممکن نہی تھی کہ اس آہستہ آہستہ کے لئے پچیس تیس بلین اضافی ڈالر چاہئے ہوتے۔ میری باتیں آپ کی سمجھ میں اس وقت تک نہی آئیں گیں جب تک کہ آپ یہ نہ سمجھ لیں کہ امپورٹس میں کمی معاشی سست روی کی وجہ سے نہی ہوئی بلکہ معاشی سست روی امپورٹس کم کرنے کی وجہ سے ہوئی ۔ دوسری بات یہ کہ ن لیگ کے آخری سال میں جو ۵ اعشاریہ ۴ فیصد گروتھ ہوئی وہ سپینڈنگ اور امپورٹس کی بنیاد پر تھی نہ کہ مظبوط معاشی انڈیکیٹرز کی بنیاد پر۔ ایسی گروتھ جعلی، اور ایک الیوژن کی طرح ہوتی ہے جس کی قیمت آنے والے کئی سالوں میں ادا کرنی پڑتی ہے۔ یہ گروتھ اسی طرح ہے کہ آپ اپنی دوکان پر ایک ماچس کی ڈبیا خریدنے والے کو دو پیکٹ سگریٹ مفت دے کر سیل بڑھا کر ٹھٹھے مارنا شروع کر دیں۔ تیسری اور آخری بات، اکانومی میں جو اصلاحات موجودہ حکومت نے کی ہیں ایسا کر تو ہر کوئی سکتا ہے لیکن اس کی سیاسی قیمت بہت ہوتی ہے اس لئے بہت کم سیاست دان ایسا کرنے کے لئے تیار ہوتے ہیں۔ لیکن اس کر گزرنے کے دو چار سال بعد اس کے فوائد ان گنت ہیں جو آنے والے سالوں میں آپ کو نظر آئیں گے بشرط کہ نواز ٹولہ دوبارہ برسرِ اقتدار آ کر اسی ڈگر پر نہ چل پڑے۔

    شاہد بھائی آپ کو بھی نیا سال مبارک ہو – میرے خیال سے کافی عرصے سے یہ ہمارا اختلافی نقطہ ہے میں سمجھتا ہوں مہیشت کی سست روی سے امپورٹ کم ہوئی اگرچے امپورٹ ڈیو ٹی بڑھانے نے بھی اپنا کردار ادا کیا جس سے امپورٹ کم ہونے میں مزید تیزی آئی – آپ خان حکومت کے ابتدائی دنوں کو یاد کریں جب اسد عمر آئی ایم ایف جانے سے انکاری تھا پہلے تو حکومت کو لگا ہم قرضوں کے بغیر حکومت چلا لیں گے پھر جب زر مبادلہ کے ذخائر گرنے لگے ( جو بھاری امپورٹ کی بھی وجہ سے گرے ساتھ قرضوں کی واپسی بھی ) تو حکومت کو فکر ہوئی آئی ایم ایف کے پاس تو گئے مگر شرطوں پر کھیلنے لگے- اس وقت خان نے بیرون ملک پاکستانیوں سے پیسوں کی اپیل کی اور امید باندھ لی کہ باہر سے پیسوں کی ریل پیل ہو جائے گی ایسا نہ ہوا – پھر دوست ممالک سے رابطہ ہوا اور امید بندھی گئی کہ دوست ممالک سے پیسہ لے کر آئی ایم ایف سے پیسا نہیں لینا ہو گا – دوست ممالک سے بہت تھوڑے پیسے ملے – یوں مہیشت بے یقینی کی کیفیت میں رہی – ابتدائی سست روی مہیشت میں غیر یقینی کی وجہ سے تھی- اس غیر یقینی کی وجہ سے ڈالر بے قابو ہوا مہنگائی بڑھی اسٹاک مارکیٹ بے قابو ہوئی اور انویسٹمنٹ کم ہوئی – یہ سب مہاشی سست روی کی بنیاد بنیں -آخر باجوے نے اسد عمر کو ہٹا کر حفیظ شیخ کو لایا کیونکے مہاشی سست روی پر فوج کو بہت تحفظات تھے – بہترین پالیسی تو یہ تھی کہ شروع سے آئی ایم ایف کے پاس جا کر غیر یقینی کی صورتحال سے بچا جاتا اور ساتھ ہی بھلے ڈیو تی ٹیرف بڑھا دیتے مگر ڈالر بے قابو نہ ہوتا اور مہنگائی پہلے چند مہینوں میں ہی دس فیصد سے تجاوز نہ کرتی جو چار فیصد پر ملی تھی – کیا ان باتوں سے آپ کو اختلاف ہے ؟

    #9
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    عباسی صاحب۔۔۔۔نفسا نفسی کے اس دور میں ۔۔ آپ کو محبت ، دل لگی اور عشق کی منزلیں طے کرنے والے شُدھ وفادارصرف نون لیگ کی صفوں میں نظر آئیں گے۔۔ ایک ہندو سنیاسی کا قول ہے کہ “عورت سمجھنے کی نہیں، بلکہ چکھنے کی چیز ہے”۔۔ ٹھیک اسی طرح نون لیگی یقین رکھتے ہیں کہ ” دماغ سمجھنے کیلئے نہیں، بلکہ کھانے کیلئے بنا ہے”۔۔ آپ دلیل و حجت کے ہزار نشتر چلائیں نون لیگ کی وفاؤں نے اتفاق سرئے کی زرہ بکتر سے اپنے دماغ کو حق شناسی سے محفوظ کر رکھا ہے۔۔۔۔۔ :) ۔۔۔ نیا سال مبارک۔۔۔

    کیسا نوا صاحب میں نے عباسی صاحب کی پوسٹ کے جواب میں حکومتی غلطیوں کی نشاندہی کی ہے ، آپ بھی پڑھیں اور آپ کی بھی ان پٹ چاہوں گا –

    #10
    casanova
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 490
    • Total Posts: 490
    • Join Date:
      4 Sep, 2018
    • Location: گلشن گلشن

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    کیسا نوا صاحب میں نے عباسی صاحب کی پوسٹ کے جواب میں حکومتی غلطیوں کی نشاندہی کی ہے ، آپ بھی پڑھیں اور آپ کی بھی ان پٹ چاہوں گا –

    اعوان صاحب! میں اقتصادی و حسابی علوم میں بالکل زیرو ہوں۔۔۔۔۔ اس موضوع پر تو عباسی صاحب ہی صحیح رہنمائی فرما سکتے ہیں۔۔۔۔۔ ہم تو ان کے تجزیاتی وجدان پر یقین کرتے ہوئے خوش رنگ سپنوں میں کھو جاتے ہیں کہ۔۔۔۔” گُڈ ڈیز اہیڈ”۔۔۔۔۔

    لیکن ایک عام پاکستانی ناگرک کی حثییت سے اتنا شعور رکھتے ہیں کہ سلطنتِ رائیونڈ نے بڑے کھوچل انداز میں اس ملک کی اقتصادی حالت کا بھُرکس نکال کر تبدیلی سرکار کے حوالے کیا تاکہ ان بیچاروں کو اپنا ہنی مون پیریڈ بھی صحرائے عرب میں گزارنا پڑا۔۔۔۔۔۔۔دراصل نون لیگ کے تھنک ٹینکس نے میاں برادران کی کشمیری کھوپڑی میں یہ پلان گھسایا کہ اقتدار چھوڑتے ہوئے اقتصادی حالت کو اتنی گھمبیر حالت میں چھوڑا جائے کہ  نیازی حکومت کو دن میں بلیک ہول نظر آ جائے۔۔۔۔ اور پھر بیرونی و اندرونی و قرضوں میں جکڑی ہوئی نئی نویلی حکومت بتدریج عوامی غیض و غضب کا شکار بنتے ہوئے رئٹائرڈ ہرٹ  ہو جائے گی۔۔۔۔۔ اور اسی دورانیے میں پنجاب کے اکثریتی صوبے کی پھُدّو عوام کو اپنے میڈیائی بھونپوؤں سے ہپناٹائز کرکے رائیونڈی ٹِنڈوں کی محبت میں دوبارہ گرفتا ر کرکے مریم و جنید کے اقتدار کی راہ ہموار کر لی جائے گی۔۔۔۔۔اب اقتدار کی اس جنگ میں نون لیگی سپنوں میں بہار آتی ہے یا خزاں۔۔۔ آئندہ چھ ماہ تک واضع ہو جائے گا۔۔۔۔

    #11
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 12982
    • Total Posts: 13129
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    ایسا دکھائی دیتا ہے کہ پاکستان یوتھیوں کی نئی ریاست مدینہ بننے کے بعد اب یوتھیوں کی جنت بننے کی طرف گامزن ہے

    :hilar: :hilar: :hilar:

    نئی ریاست مدینہ والوں کے ساتھ جو کتے والی اصل ریاست مدینہ والوں نے اپنے پاس بلا کر، کان پکڑا کر اور ناک سے لکیریں نکلوا کر ملائیشا کانفرنس میں شرکت کرنے سے توبہ کروا کر کی ہے، اس کے بعد امید تھی کہ وہ اب نہ صرف اپنے مسلم امّہ کے مامے بننے سے باز رہیں گے بلکہ انکی بھڑکوں میں کچھ کمی آئے گی اور اب یہ اپنی اوقات میں رہ کر بلند و بانگ دعوے کیا کریں گے

    لگتا ہے آخری سپاہی اور آخری گولی کی بھڑکیں لگانے کے بعد پلٹن گراونڈ والی کروانے والوں کی طرح مسلم امّہ کے مامے بننے کی بھڑکیں لگانے لگانے کے بعد سعودی عرب والی کروانے والوں نے بھی اپنے ماضی سے کچھ نہیں سیکھا ہے

    #12
    SaleemRaza
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 669
    • Posts: 12083
    • Total Posts: 12752
    • Join Date:
      13 Oct, 2016
    • Location: سہراب گوٹھ ۔

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    کیسا نوا صاحب میں نے عباسی صاحب کی پوسٹ کے جواب میں حکومتی غلطیوں کی نشاندہی کی ہے ، آپ بھی پڑھیں اور آپ کی بھی ان پٹ چاہوں گا –

    اعوان بھائی ۔۔۔

    مہاشی کو  معیشت  لکھتے تو کب کی ٹھیک ہو چکی ہوتی

    #13
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    اعوان صاحب! میں اقتصادی و حسابی علوم میں بالکل زیرو ہوں۔۔۔۔۔ اس موضوع پر تو عباسی صاحب ہی صحیح رہنمائی فرما سکتے ہیں۔۔۔۔۔ ہم تو ان کے تجزیاتی وجدان پر یقین کرتے ہوئے خوش رنگ سپنوں میں کھو جاتے ہیں کہ۔۔۔۔” گُڈ ڈیز اہیڈ”۔۔۔۔۔ لیکن ایک عام پاکستانی ناگرک کی حثییت سے اتنا شعور رکھتے ہیں کہ سلطنتِ رائیونڈ نے بڑے کھوچل انداز میں اس ملک کی اقتصادی حالت کا بھُرکس نکال کر تبدیلی سرکار کے حوالے کیا تاکہ ان بیچاروں کو اپنا ہنی مون پیریڈ بھی صحرائے عرب میں گزارنا پڑا۔۔۔۔۔۔۔دراصل نون لیگ کے تھنک ٹینکس نے میاں برادران کی کشمیری کھوپڑی میں یہ پلان گھسایا کہ اقتدار چھوڑتے ہوئے اقتصادی حالت کو اتنی گھمبیر حالت میں چھوڑا جائے کہ نیازی حکومت کو دن میں بلیک ہول نظر آ جائے۔۔۔۔ اور پھر بیرونی و اندرونی و قرضوں میں جکڑی ہوئی نئی نویلی حکومت بتدریج عوامی غیض و غضب کا شکار بنتے ہوئے رئٹائرڈ ہرٹ ہو جائے گی۔۔۔۔۔ اور اسی دورانیے میں پنجاب کے اکثریتی صوبے کی پھُدّو عوام کو اپنے میڈیائی بھونپوؤں سے ہپناٹائز کرکے رائیونڈی ٹِنڈوں کی محبت میں دوبارہ گرفتا ر کرکے مریم و جنید کے اقتدار کی راہ ہموار کر لی جائے گی۔۔۔۔۔اب اقتدار کی اس جنگ میں نون لیگی سپنوں میں بہار آتی ہے یا خزاں۔۔۔ آئندہ چھ ماہ تک واضع ہو جائے گا۔۔۔۔

    کیسا نوا بھائی صاحب اگر آپ یوتھی نہیں تو یوتھیوں کی باتوں میں نہ آیا کریں – معیشت بہت گہرائی سے نہ بھی سمجھ آئے لیکن اتنا تو سمجھ میں آتا ہو گا کہ آج کے دور میں امن و امان اور انرجی معیشت کے لئے کتنے ضروری ہیں – کیا موجودہ نالائقوں کے بس کا روگ تھا کہ دس ہزار میگا واٹ سے زیادہ کے انرجی منصوبے لگا سکتے ؟ کیا یہ فوج سے امن و امان کی بحالی کا کام لے سکتے تھے ، اس کے ساتھ ساتھ سی پیک پی ان کے بس کا روگ نہ تھا جن سے تیس کلومیٹر پشاور میٹرو چار سال سے نہیں بن سکی – باقی شاہد بھائی محیشت کے گرو اور ایکسپرٹ ہیں مگر نون کے ساتھ تھوڑا سوتیلوں والا سلوک کرتے ہیں جس کی وجہ میرا خیال ہے ان کا جنوبی پنجاب سے تحعلق ہے – اب کوئی اور کراچی ، پشاور اور کو ئٹہ کو لاہور نہیں بنا سکا تو ملتان تو صوبائی دارالحکومت بھی نہیں ہے –

    • This reply was modified 3 weeks, 2 days ago by  Awan.
    #14
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    شاہد بھائی آپ کو بھی نیا سال مبارک ہو – میرے خیال سے کافی عرصے سے یہ ہمارا اختلافی نقطہ ہے میں سمجھتا ہوں مہیشت کی سست روی سے امپورٹ کم ہوئی اگرچے امپورٹ ڈیو ٹی بڑھانے نے بھی اپنا کردار ادا کیا جس سے امپورٹ کم ہونے میں مزید تیزی آئی – آپ خان حکومت کے ابتدائی دنوں کو یاد کریں جب اسد عمر آئی ایم ایف جانے سے انکاری تھا پہلے تو حکومت کو لگا ہم قرضوں کے بغیر حکومت چلا لیں گے پھر جب زر مبادلہ کے ذخائر گرنے لگے ( جو بھاری امپورٹ کی بھی وجہ سے گرے ساتھ قرضوں کی واپسی بھی ) تو حکومت کو فکر ہوئی آئی ایم ایف کے پاس تو گئے مگر شرطوں پر کھیلنے لگے- اس وقت خان نے بیرون ملک پاکستانیوں سے پیسوں کی اپیل کی اور امید باندھ لی کہ باہر سے پیسوں کی ریل پیل ہو جائے گی ایسا نہ ہوا – پھر دوست ممالک سے رابطہ ہوا اور امید بندھی گئی کہ دوست ممالک سے پیسہ لے کر آئی ایم ایف سے پیسا نہیں لینا ہو گا – دوست ممالک سے بہت تھوڑے پیسے ملے – یوں مہیشت بے یقینی کی کیفیت میں رہی – ابتدائی سست روی مہیشت میں غیر یقینی کی وجہ سے تھی- اس غیر یقینی کی وجہ سے ڈالر بے قابو ہوا مہنگائی بڑھی اسٹاک مارکیٹ بے قابو ہوئی اور انویسٹمنٹ کم ہوئی – یہ سب مہاشی سست روی کی بنیاد بنیں -آخر باجوے نے اسد عمر کو ہٹا کر حفیظ شیخ کو لایا کیونکے مہاشی سست روی پر فوج کو بہت تحفظات تھے – بہترین پالیسی تو یہ تھی کہ شروع سے آئی ایم ایف کے پاس جا کر غیر یقینی کی صورتحال سے بچا جاتا اور ساتھ ہی بھلے ڈیو تی ٹیرف بڑھا دیتے مگر ڈالر بے قابو نہ ہوتا اور مہنگائی پہلے چند مہینوں میں ہی دس فیصد سے تجاوز نہ کرتی جو چار فیصد پر ملی تھی – کیا ان باتوں سے آپ کو اختلاف ہے ؟

    جی ہاں۔ ساری کہانی ہی غلط ہے اور مزاحیہ بھی ۔
    اس سوال پر کی معاشی سست روی کی بدولت روپئہ اور امپورٹس گریں یا روپئہ اور امپورٹ گرا کر خود سے ایک پالیسی کے تحت معاشی سست روی پیدا کی گئی کو صرف ایک ہی طریقے سے سمجھا سکتا ہوں کہ اعوان بھائی جب خود سے معاشی سست روی یعنی ریسیشن آتی ہے تو اشیاء اور پراپرٹی کی قیمتیں گرتی ہیں بڑھتی نہیں۔ یہاں چونکہ ضرورت پر ایک پالیسی کے تحت ایسا کیا گیا ہے تو قیمتوں کا ری ایکشن خود سے سست روی والا نہی ہے۔ اب بھی نہ سمجھ سکیں تو فری ٹائم میں اکنامکس کی بیسک کتابیں پڑھنی شروع کریں بحث کرنا ہم سب کے لئے آسان ہو جائے گا۔

    باقی یہ جو آپ کا کہنا ہے کہ پاکستان کے فارن کرنسی ریزروز گرنے شروع ہو گئے تو بتانا چاہوں گا کہ جس دن سے موجودہ حکومت نے باگ دوڑ سنبھالی ہے ریزروز کہیں بھی ایک چوتھائی ارب سے زیادہ نیچے نہی گرے یعنی اوپر ہی گئے ہیں نیچے نہی۔ اور آج بھی ریزروز اس وقت کی نسبت تین ارب ڈالر زیادہ ہیں۔
    اکنامک میلٹ ڈاون ۲۰۱۷ ( ن لیگ ہی کے دور ) میں شروع ہو چکا تھا جس کی وجہ نواز شریف کی لوگوں کو خوش کرنے کی ایسی پالیسی تھی جو ملک کو ڈبونے جا رہی تھی۔ ذرا سوچئیے، جب ۲۰۱۵ میں ملک کے ریزرو ۲۴ ارب اور سٹاک ایکسچینج ۵۳۰۰۰ پر پہنچ چکی تھی تو یہ ۲۰۱۷ کے شروع سے ڈوبنا کیوں شروع ہو گئے اور مسلم لیگ ہی کے دور میں ریزروز ۱۴ ارب اور سٹاک ایکسچینج ۳۶۰۰۰  پر کیوں آئی؟ وجہ صاف ظاہر ہے کہ جب ۲۰۱۶ کے آخر میں آئی ایم ایف پروگرام ختم ہوا اور ان کی پابندیاں ختم ہوئیں تو میاں صاحب نے کھل کے کھاؤ تے ننگے نہاؤ کا نعرہ لگا دیا۔ اور اس ننگے نہاؤ کے نعرے نے پچھلے تین سال کی بہترین معاشی پالیسی کا ستیاناس کرتے ہوئے کرنٹ اکاؤنٹ کو منفی اڑھائی ارب سے منفی ۲۴ ارب ڈالر پر پہنچا دیا۔

    رہی آپ کی آئی ایم ایف اور اسد عمر والی بچگانہ سی کہانی تو اس بارے وقت ملنے پر پھر سہی۔

    • This reply was modified 3 weeks, 2 days ago by  shahidabassi.
    #15
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    اعوان بھائی ۔۔۔ مہاشی کو معیشت لکھتے تو کب کی ٹھیک ہو چکی ہوتی

    رضا بھائی آپ کتنے لفظ ٹھیک کرائیں گے غنیمت سمجھیں جو دو چار لفظ درست لکھ پاتا ہوں –

    #16
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    عباسی صاحب۔۔۔۔نفسا نفسی کے اس دور میں ۔۔ آپ کو محبت ، دل لگی اور عشق کی منزلیں طے کرنے والے شُدھ وفادارصرف نون لیگ کی صفوں میں نظر آئیں گے۔۔ ایک ہندو سنیاسی کا قول ہے کہ “عورت سمجھنے کی نہیں، بلکہ چکھنے کی چیز ہے”۔۔ ٹھیک اسی طرح نون لیگی یقین رکھتے ہیں کہ ” دماغ سمجھنے کیلئے نہیں، بلکہ کھانے کیلئے بنا ہے”۔۔ آپ دلیل و حجت کے ہزار نشتر چلائیں نون لیگ کی وفاؤں نے اتفاق سرئے کی زرہ بکتر سے اپنے دماغ کو حق شناسی سے محفوظ کر رکھا ہے۔۔۔۔۔ :) ۔۔۔ نیا سال مبارک۔۔۔

    کیسانووا بھائی آپ کو بھی نیا سال مبارک۔ اللہ کرے ہس دے رہو تے ہساندے رہو ۔
    میری طرف سے فورم کے تمام ممبران کے لئے نیک خواہشات کے ساتھ سال نو مبارک۔

    #17
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2396
    • Total Posts: 2517
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    جی ہاں۔ ساری کہانی ہی غلط ہے اور مزاحیہ بھی ۔ اس سوال پر کی معاشی سست روی کی بدولت روپئہ اور امپورٹس گریں یا روپئہ اور امپورٹ گرا کر خود سے ایک پالیسی کے تحت معاشی سست روی پیدا کی گئی کو صرف ایک ہی طریقے سے سمجھا سکتا ہوں کہ اعوان بھائی جب خود سے معاشی سست روی یعنی ریسیشن آتی ہے تو اشیاء اور پراپرٹی کی قیمتیں گرتی ہیں بڑھتی نہیں۔ یہاں چونکہ ضرورت پر ایک پالیسی کے تحت ایسا کیا گیا ہے تو قیمتوں کا ری ایکشن خود سے سست روی والا نہی ہے۔ اب بھی نہ سمجھ سکیں تو فری ٹائم میں اکنامکس کی بیسک کتابیں پڑھنی شروع کریں بحث کرنا ہم سب کے لئے آسان ہو جائے گا۔ باقی یہ جو آپ کا کہنا ہے کہ پاکستان کے فارن کرنسی ریزروز گرنے شروع ہو گئے تو بتانا چاہوں گا کہ جس دن سے موجودہ حکومت نے باگ دوڑ سنبھالی ہے ریزروز کہیں بھی ایک چوتھائی ارب سے زیادہ نیچے نہی گرے یعنی اوپر ہی گئے ہیں نیچے نہی۔ اور آج بھی ریزروز اس وقت کی نسبت تین ارب ڈالر زیادہ ہیں۔ اکنامک میلٹ ڈاون ۲۰۱۷ ( ن لیگ ہی کے دور ) میں شروع ہو چکا تھا جس کی وجہ نواز شریف کی لوگوں کو خوش کرنے کی ایسی پالیسی تھی جو ملک کو ڈبونے جا رہی تھی۔ ذرا سوچئیے، جب ۲۰۱۵ میں ملک کے ریزرو ۲۴ ارب اور سٹاک ایکسچینج ۵۳۰۰۰ پر پہنچ چکی تھی تو یہ ۲۰۱۷ کے شروع سے ڈوبنا کیوں شروع ہو گئے اور مسلم لیگ ہی کے دور میں ریزروز ۱۴ ارب اور سٹاک ایکسچینج ۳۶۰۰۰ ہزار پر کیوں آئی؟ وجہ صاف ظاہر ہے کہ جب ۲۰۱۶ کے آخر میں آئی ایم ایف پروگرام ختم ہوا اور ان کی پابندیاں ختم ہوئیں تو میاں صاحب نے کھل کے کھاؤ نے ننگے نہاؤ کا نعرہ لگا دیا۔ اور اس ننگے نہاؤ کے نعرے نے پچھلے تین سال کی بہترین معاشی پالیسی کا ستیاناس کرتے ہوئے کرنٹ اکاؤنٹ کو منفی اڑھائی ارب سے منفی ۲۴ ارب ڈالر پر پہنچا دیا۔ رہی آپ کی آئی ایم ایف اور اسد عمر والی بچگانہ سی کہانی تو اس بارے وقت ملنے پر پھر سہی۔

    فارن کرنسی ریزرو کیوں نہیں گرے اچھے خاصے گرے یہ دیکھ لیں :

    https://tradingeconomics.com/pakistan/foreign-exchange-reserves

    معیشت کی زبوحالی نواز کے نہ اہل ہونے اور اسحاق ڈار کے ملک چھوڑ دینے کے وقت سے شروع ہو چکی تھی اس وقت بھی وجہ بے یقینی تھی کوئی قومی حکومت کی بات کر رہا تھا تو کوئی مارشل لاء کی زر مبادلہ کے ذخائر نیچے جا رہے تھے یہ آپ کو گراف میں صاف نظر آئے گا – یہ کہانی تحریک انصاف کے ابتدائی دور سے ملتی جلتی ہے اور یہ باتیں میں نے معیشت دانوں ہی کے اداریوں میں پڑھی ہیں اسد عمر کی کہانی بھی نہ اسحاق ڈار اور نہ کسی نونی ماہر معاشیات نے لکھی ہے یہ بھی معیشت کے تجزیے میں بار بار اخباروں میں آئی ہے اور خان کی بچگانہ سوچ کو اس وقت بار بار ہائی لائٹ کیا گیا اور کہا گیا ڈالروں کا بندوبست کریں ورنہ ذخائر تین مہینے کی درامدات سے بھی کم باقی ہیں – جب پہلے چند مہینوں میں کہیں سے کوئی قرض نہیں لیا گیا تو زر مبادلہ کے ذخائر کیسے ا وپر جا سکتے تھے ؟ ذرا معیشت کو بہتر ہونے دیں درامدات پھر اوپر جائیں گی –

    #18
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    فارن کرنسی ریزرو کیوں نہیں گرے اچھے خاصے گرے یہ دیکھ لیں : https://tradingeconomics.com/pakistan/foreign-exchange-reserves معیشت کی زبوحالی نواز کے نہ اہل ہونے اور اسحاق ڈار کے ملک چھوڑ دینے کے وقت سے شروع ہو چکی تھی اس وقت بھی وجہ بے یقینی تھی کوئی قومی حکومت کی بات کر رہا تھا تو کوئی مارشل لاء کی زر مبادلہ کے ذخائر نیچے جا رہے تھے یہ آپ کو گراف میں صاف نظر آئے گا – یہ کہانی تحریک انصاف کے ابتدائی دور سے ملتی جلتی ہے اور یہ باتیں میں نے معیشت دانوں ہی کے اداریوں میں پڑھی ہیں اسد عمر کی کہانی بھی نہ اسحاق ڈار اور نہ کسی نونی ماہر معاشیات نے لکھی ہے یہ بھی معیشت کے تجزیے میں بار بار اخباروں میں آئی ہے اور خان کی بچگانہ سوچ کو اس وقت بار بار ہائی لائٹ کیا گیا اور کہا گیا ڈالروں کا بندوبست کریں ورنہ ذخائر تین مہینے کی درامدات سے بھی کم باقی ہیں – جب پہلے چند مہینوں میں کہیں سے کوئی قرض نہیں لیا گیا تو زر مبادلہ کے ذخائر کیسے ا وپر جا سکتے تھے ؟ ذرا معیشت کو بہتر ہونے دیں درامدات پھر اوپر جائیں گی –

    پہلے یہ بتائیں کہ معاشی سست روی کی وجہ سے امپورٹس گریں یا امپورٹس گرانے سے معاشی سست روی پیدا کی گئی۔ کچھ سمجھے یا وہیں کھڑے ہیں؟
    دوسرے جو آپ نے لنک دیا ہے یہی میری بات کی دلیل ہے۔ ذرا دیکھ کر بتائیں کہ کہاں ریزروز گرے ہیں؟ کیا کہیں نصف ارب سے زائد کا فرق نظر آتا ہے؟ جب نون حکومت گئی تو یہ ریزروز ۱۴ ارب کے قریب تھے اور آپ کے اس لنک میں بھی کم از کم ۱۴ کے قریب ہی نظر آئیں گے اور اس کے بعد بڑھتے ہوئے۔ ویسے یہ ریزروو آج کل سترہ ارب ہیں۔

    #19
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 169
    • Posts: 2196
    • Total Posts: 2365
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    When IMF is running the show why wouldn’t it grade high. Who expects Fawad Chaudhry and Firdouse BB to critique Govt?

    • This reply was modified 3 weeks, 2 days ago by  Shirazi.
    #20
    SaleemRaza
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 669
    • Posts: 12083
    • Total Posts: 12752
    • Join Date:
      13 Oct, 2016
    • Location: سہراب گوٹھ ۔

    Re: GOOD DAYS AHEAD – BUT YOU NEED A BRAIN TO UNDERSTAND

    معیشت کے موضوع پر آپ جتنی بحث کر  لیں ۔گل کسی پاسے نہیں لگنی ۔۔۔

    جب تک بیلور صاحب  جو  اس سبجکٹ  پر اٹھارٹی رکھتے ہیں ۔۔۔آپنی آرا سے  آگاہ نہیں کرتے ۔۔۔۔۔کچھ دن پہلے انہوں نے کہا تھا کہہ اگر ایک بندے کے پاس دس روپے ہوں اور وہ خرچ نہ کرے تو وہ سب سے  میر  ہوگا ۔۔۔یقین کریں پڑھکر دماغ کی لسی تو بنی ہی تھی کان بھی ابھی تک  سائیں سائیں کر رے ہیں

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 48 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!