Thread: پاکستان کے آرمی چیف جنرل باجوہ کی سینیٹ میں آمد ایک نئی روایت؟

Home Forums Siasi Discussion پاکستان کے آرمی چیف جنرل باجوہ کی سینیٹ میں آمد ایک نئی روایت؟

This topic contains 0 replies, has 1 voice, and was last updated by  حسن داور 10 months ago. This post has been viewed 68 times

Viewing 1 post (of 1 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    حسن داور
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 3485
    • Posts: 1917
    • Total Posts: 5402
    • Join Date:
      8 Nov, 2016

    Re: پاکستان کے آرمی چیف جنرل باجوہ کی سینیٹ میں آمد ایک نئی روایت؟

    پاکستان کی سیاسی تاریخ میں فوجی قیادت کا پارلیمنٹ میں آ کر عوامی نمائندوں کے سوالات کے جواب دینا کوئی عام بات نہیں۔

    چنانچہ جب منگل کو پاکستان کے آرمی چیف جنرل جاوید قمر باجوہ ملک کی قومی سلامتی اور خطے کی صورت حال پر سینیٹ کے اراکین کے سوالات کے جوابات دینے پارلیمان میں آئے تو یہ یقیناً ایک غیرمعمولی موقع تھا۔

    پاکستانی سیاست کی روایات کے مطابق اعلیٰ عسکری قیادت تو عام طور پارلیمنٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع یا قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار کے سامنے بھی پیش نہیں ہوتی۔

    ہاں ماضی میں ایسا ضرور ہوا ہے کہ ان کمیٹیوں نے خود جی ایچ کیو جا کر فوجی قیادت سے ملاقات کی ہو یا سکیورٹی کی صوتحال پر تبادلہِ خیال کیا ہو۔

    اس حوالے سے سینیٹر فرحت اللہ بابر اور چیئرمین سینیٹ رضا ربانی احتجاج بھی کر چکے ہیں کہ کمیٹی کا جی ایچ کیو جانا نامناسب ہے مگر فوجی حکام کی جانب سے یہ وضاحت دی گئی ہے کہ ان بریفنگز میں درکار خفیہ دستاویزات کو جی ایچ کیو سے باہر نہیں نکالا جا سکتا۔

    دیگر جمہوری ممالک میں فوجی قیادت کو پارلیمان کے سامنے بطور دفاعی امور کے ماہرین بلایا جاتا ہے اور ان کے پالیسی سازی کے حوالے سے رائے کے ساتھ ساتھ فوجی کامیابیوں اور ناکامیوں کے بارے میں پوچھا جاتا ہے۔

    مگر جنرل باجوہ کی سینیٹ میں یہ آمد اس سلسلے میں نہیں تھی۔ بقول ڈی جی آئی ایس پی آر انھیں اراکینِ سینیٹ کی خواہش پر دعوت دی گئی تھی کہ وہ ایوانِ بالا میں آئیں اور جی ایچ کیو میں ارکانِ اسمبلی سے ہونے والی بات چیت سارے ایوان کے سامنے ہو۔

    اس اجلاس میں تقریباً تمام سینیٹر موجود تھے تاہم اس اجلاس کے لیے پورے ایوانِ بالا کو ایک خصوصی کمیٹی بنا کر اسے ان کیمرہ کر دیا گیا تھا۔

    پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں یہ دوسرا موقع ہے کہ کوئی فوجی سربراہ ایوان کو کسی اہم معاملے پر آگاہ کرنے کے لیے پارلیمنٹ میں آیا ہے تاہم جنرل باجوہ سینیٹ میں آنے والے پہلے فوجی سربراہ ہیں۔

    اس سے قبل 2011 میں ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کے کمپاؤنڈ پر امریکی حملے کے تناظر میں اُس وقت کی عسکری قیادت نے پارلیمان کے دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس کو بریفنگ دی تھی۔

    اس موقعے پر جنرل کیانی نے اجلاس سے خطاب تو نہیں کیا تاہم ان کی موجودگی ہی ایک غیر معمولی بات تھی۔ اجلاس کے دوران ڈی جی آئی ایس آئی شجاع پاشا نے عوامی نمائندگان کو بریفنگ دی تھی۔

    اس کے علاوہ چیف آف آرمی سٹاف پرویز مشرف نے بھی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیے مگر انھوں نے ایسا صدرِ مملکت کی حیثیت سے کیا تھا۔

    اب دیکھنا یہ ہے کہ جنرل باجوہ کی سینیٹ میں آمد سے کیا پاکستان میں فوجی قیادت ایک نئی روایت قائم کر رہی ہے یا پھر ایسا ماضی کی طرح صرف خصوصی مواقع پر ہی ہوگا۔

    http://www.bbc.com/urdu/pakistan-42413434

Viewing 1 post (of 1 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation