Thread: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

Home Forums Siasi Discussion نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

This topic contains 60 replies, has 17 voices, and was last updated by  Bawa 1 year, 2 months ago. This post has been viewed 2136 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 61 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Qarar
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 102
    • Posts: 2543
    • Total Posts: 2645
    • Join Date:
      5 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار نامہ
    ٣١ دسمبر ٢٠١٨

    #####

    #####

    سالوں پہلے کی بات ہے کہ پاکستان کے میڈیا میں بنگلہ دیش ماڈل شد و مد کے ساتھ زیر بحث آتا تھا کہ جس طرح بنگلہ دیش کی فوج نے دونوں بڑی پارٹیوں عوامی لیگ اور بنگلہ دیش نیشلسٹ پارٹی کی آپس کی مخاصمت سے تنگ آکر غیر جانبدارانہ بیوروکریٹس کو ابتدائی طور پر تین سال کے لیے عنان اقتدار سونپ دیا تھا …اور یوں بنگلہ دیش کی جان کرپٹ پارٹیوں سے چھوٹ گئی تھی ….اسی اصول کو پاکستان میں اپنانے کے لیے فوج سے “دردمندانہ” اپیلیں کی جاتی تھیں …وہ بنگلہ دیش ماڈل تو پاکستان میں کبھی نافذ نہ ہوسکا مگر میں اس مضمون میں ایک نئے بنگلہ دیش ماڈل (٢.٠) کا ذکر کرنا چاہتا ہوں …جس کو استعمال کرتے ھوئے عمران خان کی موجودہ حکومت نہ صرف اپنی موجودہ مدت پوری کر سکتی ہے بلکہ اپنی مخالف پارٹیوں نون لیگ اور پی پی دونوں کو چاروں شانے چت ..زمین پر گرا سکتی ہے …مزید برآں …یہ نیا فارمولا اسٹیبلشمنٹ کو بھی اپنی حدود میں رکھنے میں مدد گار ثابت ہوسکتا ہے

    بنگلہ دیش میں کل ہونے والے انتخابات میں عوامی لیگ نے براہ راست الیکشن والی… تین سو میں سے دو سو اٹھاسی نششتیں جیت لی ہیں …اپوزیشن اتحاد جس کی سربراہی خالدہ ضیاء کی پارٹی بی این پی کے پاس تھی کو صرف سات سیٹیں مل سکی ہیں ….اگرچہ باقی پارٹیوں نے دھاندلی کا الزام لگایا ہے مگر کسی بھی پارٹی نے انتخابات کا بائیکاٹ نہیں کیا تھا …اپوزیشن کو کامیابی کی امید تو نہیں تھی مگر توقع تھی کہ اتنی سیٹیں مل جائیں گی کہ حسینہ واجد کے اقتدار پر ایک چیک رکھا جاسکتا تھا …مگر اپوزیشن کی امیدیں خاک میں مل گئیں اور حسینہ واجد مسلسل تیسری مرتبہ پانچ سال کے لیے وزیراعظم بن گئی ہے

    حسینہ واجد کی کامیابی کی کیا وجوہات ہیں؟ …اس موضوع پر کئی آراء ہوسکتی ہیں مگر ایک بات یقینی ہے کہ مکمل شفاف انتخابات بھی ہوجاتے تو عوامی لیگ کی کامیابی یقینی تھی …رائے عامہ کے تمام جائزے بھی یہی بتا رہے تھے …البتہ عوامی لیگ کو ملنے والی سیٹیں کچھ زیادہ ہیں …جسے پنجابی میں یوں کہا جاسکتا ہے کہ شاید مٹھا بوہتا پے گیا اے ….لیکن اقتدار حسینہ کو ہی ملنا تھا اور یوں ہی ہوا

    حسینہ واجد کی کامیابی سب سے بڑی وجہ اس کی کارکردگی ہے ….حسینہ واجد کے پچھلے دس سالوں میں بنگلہ دیش کی ….پر کیپیٹا انکم ….ایک سو پچاس فیصد بڑھ چکی ہے ….ورلڈ بینک کی رپورٹ کے مطابق ملک کے انتہائی غریب طبقے کا حجم بیس فیصد سے کم ہو کر نو فیصد رہ گیا ہے ….ایک عشرے سے بنگلہ دیش کی اکانومی سالانہ چھ فیصد سے زائد کی رفتار ترقی کر رہی ہے …بلکہ اس سال کی شرح نمو تو آٹھ فیصد کو چھونے کے قریب ہے …..بنگلہ دیش کی گارمنٹ کی صنعت چین کے بعد دوسرے نمبر پر ہے باوجود اس کے کہ بنگلہ دیش خام مال کی بڑی مقدار ملک کے اندر پیدا نہیں کرتا

    اسی طرح بنگلہ دیش کی آبادی ساڑھے سولہ کروڑ ہے جوکہ پاکستان کی موجودہ آبادی بیس بائیس کروڑ کے مقابلے میں کہیں بہتر ہے…اس سے ثابت ہوتا ہے کہ بنگالیوں کو آبادی بم کا ادراک ہے…اور حکومت عوام کو یہ پیغام دینے میں بھی کامیاب رہی ہے کہ آبادی کو کنٹرول میں رکھا جاۓ

    عمران خان کو بنگلہ دیش سے کچھ سیکھنا چاہئے اور ان پانچ سالوں میں ڈیلیور کرنا ہوگا …پاکستان کے موجودہ حالات میں یہ کوئی بہت مشکل ٹاسک بھی نہیں ہے ….چین پاکستان میں بہت بڑی سرمایا کاری کر رہا ہے …میں ذاتی طور پر دوسروں سے بھیک مانگنے کو انتہائی برا سمجھتا ہوں مگر عمران چاہے وقتی طور پر ہی سہی لیکن سعودی عرب … متحدہ عرب امارات اور ایک دو اور عرب ملکوں سے امداد حاصل کرکے عوام کو وقتی ریلیف دے سکتا ہے….لیکن عمران جو کارکردگی بھی دکھائے اس کا اثر …بدقسمتی سے …چند سالوں بعد ہی ظاہر ہوگا …..عمران کا سب سے بڑا چلینج یہ ہے کہ حکومت کی موجودہ ٹرم کیسے پوری کی جاۓ کہ عوام میں مقبولیت بھی برقرار رہے؟

    یہاں بھی حسینہ واجد عمران کے لیے مشعل راہ بن سکتی ہے …دس سال پہلے الیکشن جیتنے کے بعد حسینہ واجد نے بنگلادیشی عوام کے اس دیرینہ مطالبے پر عمل کرنے کا فیصلہ کیا تھا …انیس سو ستر اکہتر کے جرائم میں ملوث جماعت اسلامی کے سرکردہ رہنماؤں کے خلاف غداری کے مقدمات درج کیے گئے …اور انتہائی برق رفتاری سے مقدمات اور ان کی اپیلیں نمٹائی گئیں ….اگرچہ یہ مقدمات انصاف کے تقاضوں کے مطابق نہیں چلاۓ گئے مگر عوام کی بھرپور حمایت کی وجہ سے کوئی خاص مزاحمت بھی سامنے نہیں آئی ….جماعت اسلامی کی تمام اعلی قیادت اور کئی اور رہنماؤں …بشمول سابق وفاقی وزراء کو پھانسی دی گئی اور یوں حسینہ واجد نے عوام کے اس طبقے کے زخموں کو مندمل کرنے میں مدد دی جن کے پیارے آزادی کی جنگ میں مارے گئے تھے ….پانچ سال پہلے والا الیکشن عوامی لیگ نے کارکردگی کی بنیاد پر کم اور پھانسیوں کی وجہ سے زیادہ جیتا تھا

    کیا عمران خان کے پاس کوئی ایسا کارڈ ہے؟ بلکل سو فیصد ہے …اور یہ کرپشن کارڈ ہے
    پاکستان کے عوام غداری پر پھانسیوں کو پسند نہیں کرتے …اور ویسے بھی اے این پی اور بلوچوں کے علاوہ کسی پر غداری پکا لیبل لگایا بھی نہیں جاسکتا …اور اسفندیار ولی اور اختر مینگل وغیرہ کو لٹکا کر کوئی خاص فائدہ بھی نہیں ہوگا …میری نظر میں کرپشن کارڈ کو استعمال کرکے نون لیگ اور پی پی کی اعلی قیادت کو لمبے عرصے کے لیے اندر کیا جا سکتا ہے اور ان اقدامات کو عوام میں پزیرائی بھی حاصل ہوگی …میڈیا میں موجودہ کوریج دیکھی جاۓ تو نواز شریف ..شہباز شریف …زرداری وغیرہ کے خلاف بڑی اچھی فضاء بنی ہوئی ہے …اگر نیب کو استعمال کرتے ھوئے کچھ اور رہنماؤں کے خلاف مقدمات بنائے جائیں …کرپشن کے خلاف مہم میں تیزی لائی جاۓ تو آیندہ دو تین سالوں میں عوام کی توجہ کارکردگی سے ہٹا کر احتساب پر مرکوز کروائی جاسکتی ہے ….اسلام کی طرح احتساب کا نعرہ عوام میں بہت مقبول ہے …یہی وجہ ہے کہ تمام جرنیلوں نے اسلام اور احتساب کے نام پر قوم کو ماموں بنایا ہے …تو کیا وجہ ہے کہ ایک سویلین اس احتساب کو استعمال کرکے اپنے اقتدار کو نہ صرف دوام دے بلکہ اپنے سیاسی مخالفین کو بھی دھول چٹاۓ؟ یہاں بھی بنگلہ دیش ماڈل مدگار ثابت ہوسکتا ہے ….دو سال پہلے خالدہ ضیاء کو کرپشن کے ایک مقدمے میں سزا ہوئی تو اسے ضمانت پر رہائی مل گئی …لیکن اس سال کے شروع میں جب خالدہ ضیاء نے اعلان کیا کہ وہ دسمبر میں ہونے والے الیکشن میں بھرپور مہم چلاۓ گی تو اپریل میں کرپشن کے ایک اور مقدمے میں خالدہ کو اندر کر دیا گیا …اور وہ آج تک جیل میں ہے …اس کے سیاسی وارث اور بیٹے پر بھی کئی مقدمات ہیں اور وہ گرفتاری کے خوف سے بیرون ملک مقیم ہے ….حسینہ واجد کی مقبولیت اپنی جگہ مگر خالدہ ضیاء سمیت بی این پی کی تمام اعلیٰ قیادت کا جیل میں ہونا یقیناً حسینہ کے لیے بہت فائدہ مند ثابت ہوا …..کوئی بھی پارٹی انتخابی مہم نہیں چلا سکی اور یوں اقتدار مسلسل تیسری مرتبہ حسینہ واجد کے قدموں میں گر گیا

    احتساب کی موجودہ سازگار فضاء میں ….جبکہ نواز شریف اور شہباز شریف جیل میں ہیں …اور سعد رفیق اور اس کا بھائی بھی پابند سلاسل ہے… عمران خان کے لیے کہیں بہتر ہوگا کہ نون لیگ کے باقی رہنماؤں …حمزہ شہباز …خواجہ آصف…احسن اقبال اور چیدہ چیدہ رہنماؤں کے خلاف نیب کو متحرک کیا جاۓ …اور آیندہ ایک ڈیڑھ سال میں سب کو سزائیں دلوائی جائیں ….سیٹوں سے نااہل کروا کا اپنے بندے پارلیمنٹ میں لاۓ جائیں

    سیاست میں ٹائمنگ کی بہت اہمیت ہوتی ہے ….عمران خان کے پاس ابھی بھی کافی پولیٹیکل کیپٹل ہے …لیکن آئندہ ایک دو بجٹ عوام کے لیے بہت ٹف ثابت ہونگے کیونکہ پاکستان کے حالات میں اچھائی آنے پہلے ان میں مزید خرابی آئے گی ….لیکن اہم بات یہ ہے کہ عوام کو کرپشن …لوٹ مار …احتساب وغیرہ کی بحث میں مصروف رکھا جاۓ…جب میڈیا میں چوبیس گھنٹے یہی موضوع زیر بحث ہو کہ کون جیل چلا گیا …کون نااہل ہوگیا …اور کس نے کتنے ارب کی کرپشن کی …تو عوام کسی بھی حکومت کی اوسط درجے کی کارکردگی سے صرف نظر کر سکتے ہیں ….اور ویسے بھی عمران کا سب سے بڑا نعرا کارکردگی دکھانا نہیں تھا بلکہ یہ کہ وہ کرپشن کا پیسہ واپس لاۓ گا اور ڈاکوؤں اور چوروں کو جیل میں ڈالے گا ….جب تک مخالفین جیل جاتے رہیں گے عوام کا ایک بڑا طبقہ بھی حکومت سے مطمئن رہے گے

    عمران کی خوش قسمتی یہ بھی ہے کہ نون لیگ اور پی پی دونوں میں عوامی تحریک چلانے کی ہمت نہیں …ان دونوں کے ووٹر سڑکوں پر نہیں نکلیں گے …اور پاکستان کی تاریخ بتاتی ہے کہ جب رہنماء جیل میں ہوں تو پارٹیاں الیکشن جیت نہیں سکتیں ….یہاں کوئی مجیب نہیں کہ جیل سے بھی الیکشن جیت سکے

    اقتدار اگر پورا نہ ملے تو وہ بھی کوئی اقتدار نہیں ہوتا ….سندھ پاکستان کا کراؤن جیول ہے …یعنی جب تک سندھ ..اور کراچی قبصے میں نہ ہو تو کسی بھی پارٹی کا اقتدار مکمل نہیں ہوتا ….پی پی کے رہنماؤں پر مقّدمات بنوا کر ….مراد علی شاہ کی حکومت کو گرانا بھی کوئی مشکل مرحلہ ثابت نہیں ہوگا ….اس سلسلے میں عدلیہ سے بھی مد لی جاسکتی ہے ..یہ کوئی سیکرٹ نہیں کہ جج بھی عوام کا حصہ ہیں …اگر عوام کا پڑھا لکھا طبقہ یہ سوچ رکھتا ہے کہ نون لیگ اور زرداری ملک کو سالوں سے لوٹ کر کھا رہے ہیں تو یہ سوچنا بعید نہیں کہ جج حضرات بھی عمران کے لیے ایک نرم گوشہ رکھتے ہیں ….عمران کو سپریم کورٹ سے صادق اور امین ہونے کا سرٹیفکیٹ پہلے ہی دیا جاچکا ہے …لہذا عمران کو مزید سہولت فراہم کرنے کے لیے اگر ججوں کو انصاف کا بازو مروڑ کر نواز …شہباز اور زرداری کو لمبے عرصے کے لیے جیل میں رکھنا پڑتا ہے تو امید ہے کہ وہ اس سے بھی گریز نہیں کریں گے ….عمران عدلیہ کے معاملے میں بھی خوش قسمت ہے ….موجودہ چیف ثاقب نثار کے بعد جسٹس کھوسہ اور پھر جسٹس گلزار چیف جسٹس بنیں گے …اور یہ دونوں جج پانچ رکنی پانامہ بینچ کا حصہ رہے ہیں اور ان ججوں کی طرف سے شریف خاندان کے لیے کوئی اچھے ریمارکس سامنے نہیں آئے ….لہذا امید یہی ہے کہ شریف خاندان اور زرداری دونوں کو سپریم کورٹ سے کوئی ریلیف نہیں ملے گا

    حسینہ واجد کی عمر ستر سے اوپر ہے ….پرانی نسل کے سب سیاستدان شخصی آزادیوں اور انسانی حقوق میں کوئی اچھا ریکارڈ نہیں رکھتے …حسینہ واجد کے دور میں پولیس کو بے انتہا اختیارات دئیے گئے …اور فیس بک اور ٹویٹر اور دوسرے سوشل میڈیا پر بیانات پر پولیس نے وارنٹ گرفتاری جاری کیے ….کارکنوں کو جیل میں ڈالا گیا اور انسانی حقوق کی تنظیموں پر پابندیاں عائد کی گئیں …عمران خان کا تعلق بھی نئی نسل سے نہیں …لہٰذا صحافیوں …اور سیاسی مخالفین کو شتر بے مہار جیسی آزادی دینا بھی عمران خان کے اپنے لیے فائدہ مند ثابت نہیں ہوگا ….چین اور بنگلہ دیش دونوں نے ثابت کیا ہے کہ میڈیا پر پابندیاں لگا کر بھی ملک کو آگے لے جایا جاسکتا ہے …بلکہ دونوں ملکوں میں تو یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ میڈیا کی آزادی ترقی کی راہ میں ایک رکاوٹ ہے …..یہاں بھی عمران خوش قسمت ہے کہ اسٹیبلشمنٹ پہلے ہی میڈیا کا بازو مروڑ چکی ہے …اور عمران کو صرف ایک قدم آگے بڑھنا ہے اور میڈیا کو باور کروانا ہے کہ عمران پر تنقید پاکستان پر تنقید ہوگی ….اگر کوئی صحافی نہ سمجھے تو ریاستی ہتھکنڈے آزمانے میں کوئی حرج نہیں

    اور مضمون کے آخر میں عمران کو باور کروانا ضروری سمجھتا ہوں کہ ملک کو صحیح سمت میں ڈالنے سے پہلے …کچھ ڈیلیور کرنے سے پہلے فوج سے کوئی لڑائی مول نہ لی جاۓ ….حسینہ واجد نے شروع میں فوج کو اپنے حال پر چھوڑ دیا تھا …بعد میں ملک کی ترقی اور مخالفین کی پھانسیوں کے بعد حسینہ نے مقبولیت کا وہ مقام حاصل کرلیا تھا کہ فوج کو جرات نہ ہوئی کہ مارشل لاء لگانے کا سوچے …..عمران خان کو بھی حسینہ کی پیروی کرنی چاہیے …اپنے منشور پر عمل کرنا چاہیے …اور سیاسی مخالفین کے گرد گھیرا تنگ کرنا چاہیے …اور مجھے امید ہے عمران کو کامیابی ملے گی

    اگر میری عمران سے کبھی ملاقات ہو تو میں صرف ایک بات کہوں گا

    If Hasina can do, so can you!

    پس تحریر
    میرے اس مضمون کو صحیح اور غلط کے تناظر میں نہ پڑھا جاۓ بلکہ یوں کہ محبت جنگ اور سیاست میں سب جائز ہوتا ہے

    #2
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2360
    • Total Posts: 2375
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار۔۔۔۔۔

    زبردست مضمون ہے۔۔۔۔۔

    زمینی سیاسی حقیقتوں کے مطابق حکمتِ عملی، اُس کا دائرہ کار اور مستقبل میں اُس سے حاصل کردہ متوقع نتائج پر بھرپور تجزیہ۔۔۔۔۔

    بہت عرصہ بعد اِس فورم پر کوئی شاندار تحریر پڑھی ہے۔۔۔۔۔ ورنہ ہم سب تو آئیڈلسٹ ہی بنے پھرتے ہیں۔۔۔۔۔

    اور سیاست ہوتی ہی ایسی ہے۔۔۔۔۔ ورنہ سالوں پہلے جب مَیں کبھی فنڈو ہوا کرتا تھا تو اُس وقت مَیکیاولی کی دِی پرنس کے کچھ اقتباسات پڑھے تھے۔۔۔۔۔ کانوں کو ہاتھ لگا کر کتاب بند کردی تھی۔۔۔۔۔ اور آج لگتا ہے کہ سیاست کا قرآن یہی کتاب ہے۔۔۔۔۔

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  BlackSheep.
    #3
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 703
    • Posts: 7944
    • Total Posts: 8647
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار صاحب – یہ آپ نے کیا اوچھل پوچھل لکھ مارا ہے – ٹیکنو کریٹ حکومت ہر جگہ کامیاب نہی ہو سکتی ، اگر یہی کرنا ہے تو پھر جمہوری حکومتوں کی کیا ضرورت ہے- یہاں تو آپ مجھے مشرف سے کافی متاثر لگ رہے ہیں – ایک جگہ آپ لکھ رہے ہیں حکومت اپنی مدت کیسے پوری کریں ، دوسری جگہ آپ تمام سیاسی حریفوں کو اندر کرنے کی بات کر رہے ہیں ، اور آخری پیرا میں میڈیا پر پابندی – چلو یہاں تک تو ٹھیک ہے پر آپ نے اتنی جرات کیسی ہوئی کے محکمہ زراعت سے چھیڑ چھاڑ کچھ ڈیلیور کرنے کے بعد تک نہ کی جائے کی بات کر رہے ہیں ، دوسرا آپ نے عمران خان کو شیخ حسینہ واجد سے کیسے ملا دیا ؟ شیخ حسینہ کی یہ تیسری ٹرن ہے اور پاکستان کی تاریخ میں تیسری ٹرن لینے کے لئے پچیس سال لگ جاتے ہیں

    :lol: :bigsmile: باقی آپ شائد نوٹ لگانا بھول گئے کے یہ تھریڈ باوا جی نہ پڑھیں

    Bawa

    #4
    Guilty
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 0
    • Posts: 4694
    • Total Posts: 4694
    • Join Date:
      6 Nov, 2016

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرارجی ۔۔۔۔۔۔

    اول تو آپ کی سٹریٹجی پر  بات ہوسکتی ہے کہ ۔۔۔ کتنی ممکن ہے کتنی نہیں ۔۔۔ کتنی کارگر ہے اور کتنی خواھشات کا ملغوبہ ۔۔

    لیکن اگر ھم بالفرض یہ مان بھی لیں کہ یہ سٹریٹجی کام کرسکتی ہے تو ۔۔۔۔۔

    یہ سٹریٹجی آپ عمران خان سے ۔۔۔۔ توقع کررھے ہیں ۔۔۔۔۔

    جس نے بیس سال کی سیاست میں اپنے اقتدار کی کوئی سٹریٹجی نہیں بنا ئی ۔۔۔۔۔

    جس نے پورے بیس سال کوئی ہوم ورک ہی نہیں کیا ۔۔۔۔ صرف اپنی زاتی پا پولیرٹی اور خفیہ ایجینسی ۔۔۔۔۔ کے  زور پر ۔۔۔۔ لوگوں کی برا ئیاں بیان کرکے ٹائم پاس کرتا رھا

    ۔۔۔۔۔۔

    آپ بھی یہیں ہیں ھم بھی یہیں ہیں ۔۔۔۔۔ دنیا دیکھے گی ۔۔۔ بہت ہی جلد ۔ عمران خان ۔۔۔۔ کا بت کس طرح ۔۔۔ دھڑام ہوتا ہے ۔۔۔

    وہ حسینہ واجد ہوگی زیرک سیاست دان ۔۔۔۔۔ یہاں تو چندا ۔۔۔ چھچھوروں ۔۔۔۔  نا لائقوں  ۔۔۔۔ کا قبیلہ برجمان ہے  ۔۔

    ۔۔۔۔

    آپ عمران خان کو سٹریٹجی بتا نے چلے ہیں ۔۔۔۔۔۔

    میں حیران ہوں کس دنیا میں رھتے ہیں آپ ۔۔۔۔۔۔۔

    خدا کے بندے کیا تو پا کستان کو نہیں جا نتا  کیا تو پا کستان کے بندوں کو نہیں جانتا ۔۔۔۔۔

    ۔۔۔۔

    کیا تونے کبھی ۔۔۔۔ کٹے ۔۔۔۔ کو دودھ  ۔۔۔ دیتے دیکھا ہے ۔۔۔۔۔۔

    سو باتوں کی ایک ہی بات ۔۔۔۔ میں نے سالوں پہلے بھی کی ہے ۔۔۔۔ ٹھیک ثابت ہوئی ابھی پھر بھی دھرا دیتا ہوں ۔۔۔

    ۔۔۔۔۔۔

    کٹے ۔۔۔۔ کبھی دودھ ۔۔۔۔ نہیں دیتے ۔۔۔۔

    ۔۔۔ کٹے سے  دود ھ کی امید یں ۔۔۔۔ مجھے تجھ پر حیرانی ہے ۔۔۔۔۔۔

    ۔

    ۔

    اور ۔۔۔ آخر میں سب سے ۔۔۔ احمقانہ بات کہ ۔۔۔۔ عمران خان کو چاھیے کہ فوج سے  لڑئی نہ مول لی جائے ۔۔۔۔۔

    حد ہوگئی قرار جی ۔۔۔۔ میں تو آپ کو بہت جہا ند یدہ سمجتھا تھا ۔۔۔۔ آپ کا کیا خیال سے فوج لڑائی مول لینے سے آتی ہے

    اور بھائی میرے کس دنیا میں رھتے ہو ۔۔۔۔ فوج تو ھمیشہ بن بلا ئے آتی ہے ۔۔۔

    ۔۔ فوج توخود چل کر دبئی جاتی ہے  ۔۔۔ بے وطن ۔۔۔۔  بے نظیر سے این آر او ۔۔۔ کرکے   زبردستی پاکستان لاتی ہے اور پھر  نظیر کو پار کردیتی ہے

    پتہ نہیں کب سد ھرو گے تم لوگ کب زمین پر آؤ گے ۔۔۔۔ کب ۔۔۔ خواب اور خیالی دنیا ۔۔۔ کی باتیں ختم ہونگی ۔۔۔۔۔۔۔۔

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  Guilty.
    #5
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 126
    • Posts: 2472
    • Total Posts: 2598
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار جی اس فورم پر میں بہت پہلے سے کہہ رہا ہوں کہ نون لیگ کو خالدہ ضیاء کی پارٹی بنانے کی کوشش ہو رہی ہے مگر سوال یہ ہے کہ اس سے کیا ملک کا کوئی بھلا ہو رہا ہے – اگر آپ نواز شریف کی نہ اہلی کے دن سے ملک کی مہاشی حالت کا تجزیہ کریں تو آپ کو یہ اعداد و شمار ملیں گے – زرمبادلہ کے ذخائر اس وقت 22 ارب ڈالر اور اب نو ارب ڈالر – اسٹاک مارکیٹ 52000 اور اب 38000 ، مہنگائی 4 فیصد اور اب آٹھ فیصد ، اس وقت قابل ذکر بیرونی سرمایہ کاری اور اب بیرونی سرمایہ کاری منفی میں جا رہی ہے ، ملک میں کاروباری حالات مناسب مگر آج کاروباری سرگرمیاں رکی ہوئی ہیں – اس وقت بہت سے ترقیاتی اور بڑے پروجیکٹس پر کام کی وجہ سے روزگار کی فراہمی اور اب نہے پروجیٹ تو دور کی بات نواز دور کے منصبوں پر بھی کام روکا ہوا ہے – یہ ساری سیاسی انجینرنگ اور اعتساب ملک کے مفاد میں نہیں اسٹیبلشمنٹ کے مفاد میں تھا تا کہ ایک مضبوط سیاسی پارٹی کو ختم کر کے اپنی مرضی کے لوگ لیے جاییں تا کہ ستر سال سے جاری ان کہ اقتدار کو کوئی خطرہ نہ ہو –

    Qarar

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  Awan.
    #6
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 240
    • Posts: 4255
    • Total Posts: 4495
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    Qarar sahib

    محترم

    بہت شکریہ. تجزیہ اور تجویز میں وزن ہے . کیا اس پر عمل کرنا اتنا آسان ہو گا.

    سیاست میں سب جائز ہے اور سیاست نام ہی طاقت کے حصول کا ہے تو پھر یہ سب جھمیلا کیوں اور جس نے یہ جھمیلا مبینہ طور پر پھیلایا ہے اس کا اس تمام افرا تفریح میں کیا فائدہ ہے.

    میرے خیال میں بنگلہ دیش ممیں سیاسی جنگ تو سیاسی جماعتوں کے درمیان ہے اور یہاں شاید سیاسی اور غیر سیاسی عناصر کے درمیان . کل خان صاحب اگر بھٹو یا محترم میاں صاحب بن گئے تو شائد قابل قبول نہ ہوں .

    ویسے اس منصوبے پر عمل درآمد کے بعد کیا ملک میں سیاسی اور جمہوری نظام زیادہ مضبوط ہو سکتا ہے یا پھر اسکی خیر ہے ہو یا نہ ہو

    #7
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13339
    • Total Posts: 13486
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار جی

    آپکے چول .نامے ……… میرا مطلب ……. قرار نامے پر کومنٹس رات کو کروں گا

    آپکی بات درست ہے کہ حسینہ واجد مسلسل تیسری مرتبہ پانچ سال کے لیے وزیراعظم بن گئی ہے لیکن حقیقت میں اس نے چوتھی بار بنگلہ دیش کی وزیراعظم بننے کا اعزاز حاصل کیا ہے

    Qarar

    #8
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 170
    • Posts: 2218
    • Total Posts: 2388
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    Qarar Sahib

    You quoted many facts from growth rate to population control, per capita to textile accomplishments, cracking down on mullahs to corruption but forgot to mention most important one. RAW killed top military brass of Bangladesh. Now top military leadership in Bangladesh is pro India and pro Haseena. Imran Khan will never have that luxury where our anti-India war mongers military gets eliminated and the next generation accepts India as big brother. We tried much severe form of  Accountability, Islamization, Civil and Media crackdown, Operations against ethnic and religious groups but in vain. We tried direct military rule and indirect military rule. Until our military leadership nation is obsessed with national security no leader, civilian or military, can deliver.

    If Imran was smart and you assure him

    If Hasina can do, so can you!

    He would politely and honestly say,

    I applaud your optimism but I can’t.

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  Shirazi.
    #9
    Qarar
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 102
    • Posts: 2543
    • Total Posts: 2645
    • Join Date:
      5 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار۔۔۔۔۔ زبردست مضمون ہے۔۔۔۔۔ زمینی سیاسی حقیقتوں کے مطابق حکمتِ عملی، اُس کا دائرہ کار اور مستقبل میں اُس سے حاصل کردہ متوقع نتائج پر بھرپور تجزیہ۔۔۔۔۔ بہت عرصہ بعد اِس فورم پر کوئی شاندار تحریر پڑھی ہے۔۔۔۔۔ ورنہ ہم سب تو آئیڈلسٹ ہی بنے پھرتے ہیں۔۔۔۔۔ اور سیاست ہوتی ہی ایسی ہے۔۔۔۔۔ ورنہ سالوں پہلے جب مَیں کبھی فنڈو ہوا کرتا تھا تو اُس وقت مَیکیاولی کی دِی پرنس کے کچھ اقتباسات پڑھے تھے۔۔۔۔۔ کانوں کو ہاتھ لگا کر کتاب بند کردی تھی۔۔۔۔۔ اور آج لگتا ہے کہ سیاست کا قرآن یہی کتاب ہے۔۔۔۔۔

    بلیک شیپ صاحب …مڈل سکول کی مطالعہ پاکستان کی کتاب میں راجہ چندر گپت موریہ کے بارے میں ایک مختصر مضمون پڑھا تھا … جہاں اس کے مشیر چانکیہ کے حکومت کرنے کے اصول بھی درج تھے ….اس وقت تو وہ اصول بلکل فضول لگے مگر بعد میں جاکر احساس ہوا کہ سیاست کا سب سے بڑا اصول ہی شاید وقت پڑنے پر بے اصولی کرنا ہے

    #10
    Qarar
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 102
    • Posts: 2543
    • Total Posts: 2645
    • Join Date:
      5 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    قرار جی آپکے چول .نامے ……… میرا مطلب ……. قرار نامے پر کومنٹس رات کو کروں گا آپکی بات درست ہے کہ حسینہ واجد مسلسل تیسری مرتبہ پانچ سال کے لیے وزیراعظم بن گئی ہے لیکن حقیقت میں اس نے چوتھی بار بنگلہ دیش کی وزیراعظم بننے کا اعزاز حاصل کیا ہے Qarar

    باوا جی ….بات یہ ہے کہ حسینہ واجد کوئی عام عورت نہیں بلکہ باباۓ قوم کی بیٹی ہے ….مگر آرمی کی حکومت کے بعد پہلے انتخاب میں خالدہ ضیاء کو کامیابی ملی تھی ….خالدہ ضیاء کے بعد حسینہ واجد نے پانچ سال حکومت کی ….لیکن اس کے بعد  خالدہ ضیاء پانچ سال کے لئے جیت گئی ….لہذا حسینہ واجد عوام کی آزمائی ہوئی تھی ….پھر کیا وجہ ہے کہ ٹیکنو کریٹ حکومت کے بعد وہ مسلسل تین الیکشن جیت چکی ہے؟ میرا مضمون اسی بارے میں ہے

    بہرحال آپ کی تفصیل والی بونگی کا انتظار رہے گا

    :bigsmile:

    #11
    صحرائی
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 7
    • Posts: 518
    • Total Posts: 525
    • Join Date:
      27 Oct, 2018
    • Location: Bermuda

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    تاریخ تو یہی بتاتی ہے کہ ہم نے اپنے حکمرانوں کو کفن میں یا ذلیل کر کے بھیجا ہے چاہے فوجی ہو یا سویلین

     اب اگر عمران خان ستر سالہ تاریخ تبدیل کرتے ہے تو کیا ہی بات ہے

    اور اسی تبدیلی کی طرف آپ کا اشارہ ہے

    #12
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7206
    • Total Posts: 7238
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    What an evil plan.

    اور کسی صورت کامیاب بھی نہی ہو سکتا۔
    بنگلہ دیش کی فوج کا کوئی دشمن نہیں۔ وہ عوام کو جہاد، شہید، غازی اور خاک و خون کے بھاشن سنانے کا جواز نہی رکھتی اور نہ ہی ان کی فوج کی عوام میں کوئی خاص سیاسی اہمیت ہے۔
    پاکستان میں کوئی لگاتار دس پندرہ سال حکومت پر صرف فوج کا پپو بن کر تو بیٹھ سکتا ہے ان پر سوار ہو کر نہیں۔ ویسے بھی فوجی پپو کی شیلف لائف یہاں اتنی زیادہ ہے ہی نہی۔

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  shahidabassi.
    #13
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7206
    • Total Posts: 7238
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    باوا جی ….بات یہ ہے کہ حسینہ واجد کوئی عام عورت نہیں بلکہ باباۓ قوم کی بیٹی ہے ….مگر آرمی کی حکومت کے بعد پہلے انتخاب میں خالدہ ضیاء کو کامیابی ملی تھی ….خالدہ ضیاء کے بعد حسینہ واجد نے پانچ سال حکومت کی ….لیکن اس کے بعد خالدہ ضیاء پانچ سال کے لئے جیت گئی ….لہذا حسینہ واجد عوام کی آزمائی ہوئی تھی ….پھر کیا وجہ ہے کہ ٹیکنو کریٹ حکومت کے بعد وہ مسلسل تین الیکشن جیت چکی ہے؟ میرا مضمون اسی بارے میں ہے بہرحال آپ کی تفصیل والی بونگی کا انتظار رہے گا :bigsmile:

    اس کی بظاہر وجہ تو یہی ہے کہ ان کی اسٹیبلشمنٹ نے انڈیا اور گنے چنے ٹیکنو کریٹس کے ساتھ مل کر ملک کی ترقی کا ۳۰ سالہ پلان ترتیب دیا اور اسی پر عمل پیرا ہیں۔ حسینہ اس سینڈیکیٹ کی فلیگ بیئرر ہے جبکہ بنگلہ دیش کے ۱۵ فیصد ہندو اور انڈیا کی اس سارے سیٹ اپ کو سیاسی اور معاشی بیکنگ حاصل ہے۔عوام بھی پاگل نہی کہ انڈیا مخالف خالدہ ضیا کو ووٹ دیں۔ ہر ذی شعور سمجھ سکتا ہے کہ ملک کے چاروں طرف موجود ہمسائے سے دوستی ہو گی تو ہی معاشی ترقی ممکن ہے۔ اسی طرح یورپ اور امریکہ نے بلاک پولیٹیکس کے مدِنظر بنگلہ دیش کو چین سے دور رکھنے کے لئے یہاں کی ٹیکسٹائل کو سپیشل پریفرنشل ڈیلز دے رکھی ہیں جن کا مقابلہ کرنا مشکل ہے۔

    #14
    Qarar
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 102
    • Posts: 2543
    • Total Posts: 2645
    • Join Date:
      5 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    Qarar Sahib You quoted many facts from growth rate to population control, per capita to textile accomplishments, cracking down on mullahs to corruption but forgot to mention most important one. RAW killed top military brass of Bangladesh. Now top military leadership in Bangladesh is pro India and pro Haseena. Imran Khan will never have that luxury where our anti-India war mongers military gets eliminated and the next generation accepts India as big brother. We tried much severe form of Accountability, Islamization, Civil and Media crackdown, Operations against ethnic and religious groups but in vain. We tried direct military rule and indirect military rule. Until our military leadership nation is obsessed with national security no leader, civilian or military, can deliver. If Imran was smart and you assure him If Hasina can do, so can you! He would politely and honestly say, I applaud your optimism but I can’t.

    شیرازی صاحب ….آپ کا اشارہ شاید پیرا ملٹری ملیشیا بنگلہ دیش رائفلز کی آرمی کے خلاف بغاوت کی طرف ہے ….مجھے نہیں یاد کہ آرمی کی ٹاپ براس ختم ہوگئی تھی کافی تعداد میں آرمی کے افسر مارے گئے تھے مگر صرف ایک آدھ ہی میجر جنرل ہلاک ہوا تھا

    #15
    Qarar
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 102
    • Posts: 2543
    • Total Posts: 2645
    • Join Date:
      5 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    اس کی بظاہر وجہ تو یہی ہے کہ ان کی اسٹیبلشمنٹ نے انڈیا اور گنے چنے ٹیکنو کریٹس کے ساتھ مل کر ملک کی ترقی کا ۳۰ سالہ پلان ترتیب دیا اور اسی پر عمل پیرا ہیں۔ حسینہ اس سینڈیکیٹ کی فلیگ بیئرر ہے جبکہ بنگلہ دیش کے ۱۵ فیصد ہندو اور انڈیا کی اس سارے سیٹ اپ کو سیاسی اور معاشی بیکنگ حاصل ہے۔عوام بھی پاگل نہی کہ انڈیا مخالف خالدہ ضیا کو ووٹ دیں۔ ہر ذی شعور سمجھ سکتا ہے کہ ملک کے چاروں طرف موجود ہمسائے سے دوستی ہو گی تو ہی معاشی ترقی ممکن ہے۔ اسی طرح یورپ اور امریکہ نے بلاک پولیٹیکس کے مدِنظر بنگلہ دیش کو چین سے دور رکھنے کے لئے یہاں کی ٹیکسٹائل کو سپیشل پریفرنشل ڈیلز دے رکھی ہیں جن کا مقابلہ کرنا مشکل ہے۔

    عباسی صاحب …فوج نے حسینہ واجد اور خالدہ ضیاء کی جلاوطنی کا پروگرام بنایا تھا جوکہ حسینہ واجد نے ناکام بنا دیا تھا …حسینہ واجد کوئی فلیگ بیئرر نہیں ہے

    آپ کے خیال میں بنگلادیشی عوام پہلے پھدو تھے جب انہوں نے دس سال خالدہ ضیاء کو حکومت کرنے دی؟

    وہاں کوئی پاکستان کا دوست نہیں ہے

    #16
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 240
    • Posts: 4255
    • Total Posts: 4495
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    Qarar sahib

    اس بار سوچا کے تحریر کو دوبارہ پڑھوں اور کافی مدت کے بعد دماغ کا تھوڑا استعمال کروں. فرق تو شاید کچھ نہ پڑے مگر اس بار جو بات سمجھ آئی ہے وہ یہ ہے

    ١) ملک کی اقتصادی اور معاشی حالت دو تین سال تک مزید بگڑے گی اور اس دوران عوام میں اضطراب اور مایوسی بڑھے گی جو عزت مآب محترم وزیر اعظم پاکستان جناب عمران خان صاحب اور موجودہ حکومت کے لئے نقصاندہ ہو
    ٢) خان صاحب کو اس اقتصادی اور معاشی بحران اورملک کے عوام کے لئے کوئی بہتری نہ لانے سے توجہ ہٹانے کے لئے کچھ کرنا چاہیے نہیں تو حکومت کرنا مشکل اور مقبولیت کھونا آسان ہو جاۓ
    ٣) ہماری جذباتی عوام کبھی مذہب کے نام پر، کبھی روٹی کپڑا مکان، کبھی جمہوریت بہترین انتقام، کبھی جاگ پنجابی جاگ ، کبھی مجھے کیوں نکالا اور اکثر اسی طرح کے دوسرے نعروں سے آسانی سے بہل جاتی ہے اور اسکی توجہ اپنی بہتری کو چھوڑ کر کسی اور ٹرک کی لال بتی کے پیچھے جا پڑتی ہے
    ٤) احتساب ان نعروں میں سے ایک ہے جو عوام کی توجہ اقتصادی اور معاشی بحران اور اپنی بہتری سے ہٹا کر محترم عمران خان صاحب کو کچھ وقت دے سکتی ہے جس کے دوران وہ شائد ملک کی اقتصادی اور معاشی حالت اور عوام کی بہتری کے لئے کچھ کر پائیں .
    ٥) اگر ایس ہو گیا تو یہ باری بھی پکی اور کافی حد تک اگلی باری بھی یقینی . اسی دوران سیاسی حلیفوں سے چھٹکارا بھی حاصل ہو جاۓ گا اور کھیل کا میدان صرف کپتان کے نام ہو گا
    ٦) عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ کا رجحان احتساب کی جانب ہے تو محترم عمران خان صاحب اس کا فائدہ اٹھا سکتے ہیں. کندھا بھی دستیاب ، بھری ہوئی دو نالی بندوق بھی اور ہدف بھی .
    ٧) مخالفین بکھرے ہوے ہیں، عوام ان مخالفین سے کسی حد تک مایوس اور تنگ ہے، کوئی شعلہ بیاں اور عوام کی بھرپور حمایت رکھنے والا رہنماء بھی نہیں اور جو تھوڑے بہت رہنماء ہیں جب اندر ہو گئے تو پیچھے نہ کوئی شور اٹھے گا نہ تحریک
    ٨) چونکہ مکمل جنگ کے لئے حکومت ابھی کلی طور پر تیار نہیں لہٰذا جنگ جیتنے سے پہلے چھوٹی چھوٹی بازیاں جیتو اور اس طرح دشمن کو ہلکان کرو اور اپنی قوت کو بڑھاؤ

    مجھے تو قرار صاحب کی تحریر سے یہ حکمت عملی سمجھ میں آئی ہے. اس بار تھوڑا سا دماغ بھی استعمال کیا ہے اور اگر اب بھی نہیں سمجھا تو پھر شاید کبھی نہ سمجھ سکوں

    اچھی حکمت عملی ہے . دیکھیں آگے کیا ہوتا ہے

    #17
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7206
    • Total Posts: 7238
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    عباسی صاحب …فوج نے حسینہ واجد اور خالدہ ضیاء کی جلاوطنی کا پروگرام بنایا تھا جوکہ حسینہ واجد نے ناکام بنا دیا تھا …حسینہ واجد کوئی فلیگ بیئرر نہیں ہے آپ کے خیال میں بنگلادیشی عوام پہلے پھدو تھے جب انہوں نے دس سال خالدہ ضیاء کو حکومت کرنے دی؟ وہاں کوئی پاکستان کا دوست نہیں ہے

    قرار صاحب ۔ بنگلہ دیش کے عوام پھدو نہی تھے لیکن آپ کچھ اس قسم کی باتیں ضرور کرتے ہیں جو ایک فکسڈ مائینڈ سیٹ کی عکاس ہوں۔بلکہ مجھے آپ کی تحریروں میں عموما ایک مولوی اور ایک ہلکا پھلکا جہادی نظر آتا ہے۔ ذرا یہ بتائیے کہ یہ پاکستان درمیان میں کہاں سے آگیا؟ کس نے یہ سوال اٹھایا کہ بنگلہ دیش میں پاکستان کے دوست موجود ہیں؍تھے یا نہی؟
    ویسے اس اَن پوچھے سوال کا آپ کا جواب بھی حقیقت سے کچھ دور تھا۔ ضیا الرحمن اور خالدہ ضیا کے ادوار میں آپ نے بنگلہ دیش کے عوام پر نظر ڈالی ہوتی تو وہ انڈیا کے مقابل پاکستان کے دلدادہ نظر آتے۔ ڈھاکہ سٹیڈیم میں کچھا کچھ بھرے کراؤڈز کے سامنے ہوئے انڈیا پاکستان میچز میں شاید پورے سٹیڈیم میں آپ کو ایک بھی پرو انڈیا فین نظر نہ آتا اور وسیم اکرم کو یہ کہتے سنتے کہ اتنی سپورٹ تو ہمیں لاہور میں بھی نہی ملتی۔
    بحرحال نہ سوال یہ تھا اور نہ موضوع ۔ اصل حقیقت یہ تھی اور ہے کہ بنگلہ دیش کی فوج بھی ہماری فوج ہی کا مائنڈ سیٹ رکھتی ہے۔ اوربنگلہ دیش کی جمہوریت ہماری جمہوریت سے بھی گئی گزری ہے۔ وہاں بھی حکومتیں فوج کیں یا فوج کی مرضی سے بنتی ہیں۔ خالدہ ضیا نے دو دفعہ پانچ پانچ سال حکومت کی تو فوج کی سپورٹ سے اور حسینہ واجد آج پھر ایک ڈمی الیکشن کے بعد وزیرِاعظم بنی ہے تو فوج اور انڈیا کی بیکنگ سے۔ جب تک انڈیا سوویت بلاک میں تھا تو امریکہ کے ایما پر فوج اینٹی انڈیا پارٹی کو پروموٹ کرتی تھی اور جب امریکہ کی فارن پالیسی میں انڈیا ایک آلائے بن کر ابھرا تو فوج بھی امریکہ کی لائن پر چلتی ہوئی انڈیا نواز حسینہ واجد کو لے آئی۔ آپ کو شاید یاد ہوگا کہ کیسے روس اور انڈیا نواز مجیب الرحمان کو امریکہ نے فوج ہی کے ہاتھوں مروایا اور کیسے اینٹی سوویت اور اینٹی انڈیا ضیاالرحمن، جنرل اِرشاد اور خالدہ ضیا کی حکومتیں بنوائی گئیں۔

    #18
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 170
    • Posts: 2218
    • Total Posts: 2388
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    An interesting article on why Military may stay aloof between two political parties. It has some insights but frankly not very conclusive

    https://thehill.com/blogs/congress-blog/foreign-policy/236783-why-military-coup-unlikely-in-bangladesh

    • This reply was modified 1 year, 2 months ago by  Shirazi.
    #19
    Zinda Rood
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 16
    • Posts: 2047
    • Total Posts: 2063
    • Join Date:
      3 Apr, 2018
    • Location: NorthPole

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    مجھے نہیں لگتا عمران خان اس ملک میں کوئی قابلِ ذکر تبدیلی لاپائے گا، اگرچہ اس نے ویلتھ کریئشن کی بات کی ہے، مگر کیا وہ اس کو عملی جامہ پہنا پائے گا۔۔؟؟  فی الحال نئی نئی حکومت ہے، نیا نیا جوش ہے، ایسا ہر نئی حکومت کے آنے پر ہوتا ہے، ذرا ایک سال گزر لینے دیں پھر دھند چھٹے گی اور اس حکومت کا کچھ نقشہ واضح ہوگا، فی الحال تو احتساب اور مخصوص چوروں کی پکڑ دھکڑ کے علاوہ مجھے ان کا کوئی پلان نظر نہیں آرہا۔۔۔

    ویسے قرار صاحب آپ کے پلان میں جو میڈیا، سوشل میڈیا پر پابندیوں کی بات ہے اس سے مجھے شدید اختلاف ہے، اگر ایک بار پابندیوں کی روایت پڑگئی تو یہ شیطان کی آنت کی طرح بڑھتی ہی جائے گی اور پھر مزید چیزوں پابندیاں لگیں گی اور شخصی آزادیوں کا گلہ گھونٹا جائے گا۔۔۔

    #20
    Shah G
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 7
    • Posts: 1708
    • Total Posts: 1715
    • Join Date:
      29 Sep, 2016
    • Location: Milky Way Galaxy

    Re: نیا بنگلہ دیش ماڈل اور پاکستان

    کیا عوام کو راضی رکھ کر حکومت کو طول دیا جا سکتا ہے ؟
    .
    مسلمانوں کے ہزار سالہ دور حکومت کے تناظر میں جواب دیں
    .
    ٢
    کیا مخالفین کو کچل کر یا ادھ موا کر کے حکومت کو طول دیا جا سکتا ہے ؟

    نامی گرامی حکومتوں کے زوال کو ذہن میں رکھ کر جواب دیں

    . . . . . . . . . . . . . . . .

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 61 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!