Thread: مَیں

This topic contains 241 replies, has 24 voices, and was last updated by  Ghost Protocol 8 months, 1 week ago. This post has been viewed 7640 times

Viewing 20 posts - 41 through 60 (of 242 total)
  • Author
    Posts
  • #41
    shahidabassi
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 32
    • Posts: 7197
    • Total Posts: 7229
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: مَیں

    ۔۔ ریاست کے شہریوں کے ٹیکس سے۔۔۔۔۔ اُمراء کی آمدنی پر شرح ٹیکس کی حد۔۔۔۔۔ اِس نکتہ پر تو مَیں نے کافی دفعہ لکھا ہے کہ اُمراء کی آمدنی پر اگر شرح ٹیکس زیادہ ہے تو یہ نظریاتی طور پر، منطقی طور ناانصافی ہے۔۔۔۔۔ میری نظر میں ریاست کا قیام یا نکتہِ آغاز ہی کچھ دو اور کچھ لو کی بنیاد پر ہوتا ہے۔۔۔۔۔ سیاسی بائیں بازو(ڈیموکریٹ یا لیبر) کے افراد یہ راگ تو بڑے زور و شور سے گاتے ہیں کہ ریاست کی نظر میں تمام افراد کو برابر ہونا چاہئے لیکن وہ خود اپنے ہی اِس اُصول کے خلاف جاتے ہیں جب یہ کہتے ہیں کہ جس کے پاس زیادہ پیسہ ہو وہ زیادہ ٹیکس دے۔۔۔۔۔ اب ٹیکس کیا ہے۔۔۔۔۔ میری نظر میں ٹیکس کی بنیادی تعریف قیمت ہے جو آپ ادا کرتے ہو اور اُس کے بدلے ریاست سے سہولیات لیتے ہو۔۔۔۔۔ میری نظر سے ابھی تک کوئی ایسا موقف یا بیانیہ نہیں گذرا جس کو پڑھنے کے بعد مَیں ٹیکس کی بنیادی تعریف میں تبدیلی کروں۔۔۔۔۔ مَیں ایک مثال دیتا ہوں۔۔۔۔۔ کچھ سال پہلے کی بات ہے ایک نوجوان میری دکان میں آیا کرتا تھا۔۔۔۔۔ اُس نوجوان سے کافی موضوعات پر گفتگو ہوتی تھی۔۔۔۔۔ وہ شخص اِس بات کا کٹر حامی تھا کہ جو زیادہ پیسے کمائے تو پھر اُس کو ٹیکس بھی زیادہ دینا چاہئے لیکن ساتھ ساتھ وہ اِس بات کا شدید حامی تھا کہ ریاست کی نظر میں ہر شخص برابر ہونا چاہئے۔۔۔۔۔ مَیں اُس کو کہتا تھا کہ مَیں مانتا ہوں کہ اِس وقت ایسا ہی ہوتا ہے کہ جو زیادہ پیسے کماتا ہے وہ زیادہ ٹیکس دیتا ہے لیکن مجھے اِس عمل کے پیچھے کوئی منطقی یا نظریاتی وجہ بتاؤ جس کی بنیاد پر آپ اِس عمل کو دُرست گردانتے ہو۔۔۔۔۔ اُس شخص کے پاس صرف ایک وجہ ہوتی تھی کہ امیر شخص کے پاس زیادہ پیسے ہیں یا اُس نے زیادہ پیسے کمائے ہیں تو وہ زیادہ دے۔۔۔۔۔ مَیں نے اُس کو اپنی وہ ٹریڈ مارک مثال بھی دی جو دو افراد کے اپنے اپنے کاروبار شروع کرنے کے بارے میں تھی کہ ایک شخص نے زیادہ پیسے کاروبار میں لگائے یعنی زیادہ رِسک لیا لیکن پھر زیادہ پیسے بھی کمائے بجائے دوسرے شخص کے۔۔۔۔۔ مگر رِسک اُس کا اپنا تھا لیکن جب ریوارڈ(منافع) کی بات آئی تو ریاست(ریاست کے دوسرے شہری) اِس منافع میں سے زیادہ حصہ چاہتی ہے کیا یہ ناانصافی نہیں ہے، لیکن وہ شخص نہیں مانا اور بس یہی کہتا رہا کہ امیر شخص زیادہ ٹیکس دینا افورڈ کرسکتا ہے۔۔۔۔۔ خیر پھر اُس نوجوان کو سمجھانے کیلئے ایک دوسرا طریقہ اختیار کیا۔۔۔۔۔ مَیں نے اُس سے کہا کہ آپ میری دوکان سے یہ شئے خریدنے آتے ہو۔۔۔۔۔ اِس شئے کی ایک مقرر کردہ قیمت ہے۔۔۔۔۔ لیکن ایک دوسرا شخص بھی میری دوکان میں آتا ہے اور وہ بھی یہی شئے خریدتا ہے۔۔۔۔۔ لیکن اُس دوسرے شخص کے مالی حالات آپ سے کمزور ہیں تو ایسا کیوں نہیں کیا جائے کہ مَیں اُس دوسرے شخص سے تو اُس مخصوص شئے کی وہی مقرر کردہ قیمت وصول کروں لیکن آپ چونکہ زیادہ مالی سکت رکھتے ہیں تو پھر مجھے آپ سے زیادہ قیمت وصول کرنی چاہئے کیونکہ آپ بھی زیادہ قیمت افورڈ کرسکتے ہو۔۔۔۔۔ مگر پھر وہ نوجوان شروع ہوگیا کہ یہ کیسی بات ہے ہر دوکان میں سپرمارکیٹ میں مقرر کردہ قیمت ہوتی ہیں اور ہر گاہک کیلئے وہ قیمت ایک جیسی ہوتی ہے ورنہ یہ تو ڈسکریمینیشن ہوگی۔۔۔۔۔ خیر مگر اُس شخص کو سمجھانا کافی مشکل ثابت ہوا کہ وہ ایک موقع(ٹیکس کے معاملے پر) پر شہریوں کے درمیان تفریق کو قطعاً ناانصافی نہیں گردانتا لیکن دوسری طرف جب خود اُس پر بات آتی ہے تو وہ ڈسکریمینیشن کی دہائی دینا شروع ہوجاتا ہے۔۔۔۔۔ یہ مثال دینے کا مقصد یہ ہے کہ لوگ عموماً اپنی غلطی نہیں مانتے اور جب بات اپنے اوپر آتی ہے تو موقف بڑی آسانی سے بدل لیتے ہیں۔۔۔۔۔ اب آتے ہیں حقیقی زمینی صورتحال پر۔۔۔۔۔ کیا میرا موقف، جس کو مَیں منطقی اور نظریاتی طور پر دُرست سمجھتا ہوں، مکمل طور پر نافذ کیا جاسکتا ہے۔۔۔۔۔ مَیں ایسا نہیں سمجھتا۔۔۔۔۔ اور اِس کی وجہ مَیں وہی دوں گا جو اپنی مثال میں دی ہے کہ لوگ اپنی غلطی نہیں مانتے اور اگر خود پر بات آجائے تو اپنا موقف ایک سو اسی ڈگری کے زاویے پر بڑی آسانی سے تبدیل کرلیتے ہیں۔۔۔۔۔ اور پھر اَیٹ دی اینڈ آف دی ڈے کسی ریاست کے بنیادی اجزاء لوگ ہی تو ہوتے ہیں۔۔۔۔۔ میرے اور آپ کے نزدیک آسمانوں میں کوئی خدا نہیں ہے تو ریاست کا نظام لوگوں نے ہی چلانا ہے، تو پھر ہم اِس ناانصافی کی شکایت خدا سے نہیں کرسکتے۔۔۔۔۔ اب آپ یا کوئی اور کہہ سکتا ہے مَیں یعنی بلیک شیپ، ایک ہی تحریر میں ایک ہی نکتے پر دو مختلف موقف دے رہا ہوں۔۔۔۔۔ آپ یا کسی اور کا یہ مشاہدہ دُرست ہوگا لیکن میرا یہ کہنا ہے کہ مَیں اِس کو مجبوری کا نام دوں گا۔۔۔۔۔ جیسا کہ کہا جاتا ہے کوسٹ آف ڈوئنگ بزنس، اُسی طرح کہوں گا کہ ریاست میں رہنے کی قیمت۔۔۔۔۔ اور اِسی معاملہ میں انتہائی اہم پہلو۔۔۔۔۔ اگر ایک شخص کا نوعمر بچہ دو دن سے بھوکا ہو اور اُس شخص کے گھر کے برابر میں کھانا کچرے میں پھینک رہا ہو تو آپ اُس شخص کو نظریاتی طور پر قائل نہیں کرسکتے فلاں فلاں عمل انصاف ہے اور یہ یہ ناانصافی ہے۔۔۔۔۔ بات پھر صرف نظریاتی نہیں رہتی بلکہ جذباتی ہوجاتی ہے۔۔۔۔۔ کیونکہ جہاں ہمارے اذہان میں منطق کے اُصول ہیں تو ساتھ ہی جذبات بھی تو ہیں۔۔۔۔۔ ایک اور اہم پہلو اِس معاملہ کا ہمدردی(اَیمپیتھی) بھی ہے۔۔۔۔۔ مَیں سمجھتا آیا ہوں کہ ہم لوگوں میں جُبلی طور پر ہمدردی کا جذبہ ہوتا ہے لیکن لوٹ جاتی اُدھر کو بھی نظر کیا کیجئے کہ کچھ لوگوں کا طرزِ عمل دیکھ کر لگتا ہے کہ مَیں غلط سوچتا ہوں اور ہمدردی کچھ لوگوں میں پائی جاتی ہے اور کچھ اِس صِفت سے محروم ہوتے ہیں۔۔۔۔۔ باقی تین نکات پر بھی دو چار دن میں لکھتا ہوں۔۔۔۔۔ اگر بھول نہ گیا۔۔۔۔۔ :) ;-) :)

    آپ کی امیر وغریب کے ٹیکس بارے منطق سے متفق نہیں ہوں۔ اور نہ ہی ٹیکس کی اس تعریف سے کہ ٹیکس دراصل ان سہولیات کی قیمت ہے جو شہری اپنی حکومت سے لیتے ہیں۔

    .
    ۔(۱) میرے نزدیک معاشرے (ملک) میں ٹیکس کا نظام ایک جوائنٹ فیملی گھر کی طرح چلتا ہے جہاں سالیڈیرٹی کی اصطرح بہت اہمیت رکھتی ہے۔
    گھر میں تین بھائیوں میں ایک بے روزگار ہو ، ایک پچاس ہزار کمائے اور تیسرا تین لاکھ تو لازما جو زیادہ کما رہا ہے وہ زیادہ کانٹریبیوٹ کرتا ہے اور جو بے روزگار ہے وہ کچھ بھی کانٹریبیوٹ نہی کرتا بلکہ مجموعی کِٹی سے کچھ لے ہی رہا ہوتا ہے۔
    اگر آپ کی تعریف مان لی جائے تو ٹیکس فیصد کے حساب سے نہی بلکہ ایک فکسڈ رقم فی کس کے حساب سے لاگو ہونا چاہئے اور بھوکے ننگے کو بھی وہی رقم ادا کرنی چاہیئے جو میاں منشاء پر لاگو ہوتی ہے۔ ایسا کرنے سے آپ کی ٹیکس بارے تعریف اور سہولیات کی یکساں قیمت تو ادا ہو جائے گی لیکن جو بیروزگار ہے وہ نہ تو کسی سوشل الاؤنس اور نہ ہی کسی بے روزگاری الاؤنس کا حق دار ہوگا بلکہ اسے ٹیکس کی پوری قیمت ادا نہ کر سکنے کی پاداش میں کسی کالے پانی کے جزیرہ پر چھوڑ آنا پڑے گا۔ تو اس سے پہلی بات تو یہ ثابت ہے کہ آپ کی ٹیکس بارے تعریف ہی غلط ہے۔ یہ سہولیات کی قیمت ہی نہی بلکہ سالیڈیرٹی فیکٹر پر منطقی طور کانسیپٹ ہے۔

    .
    ۔(۲) اگر برائے بحث یہ مان بھی لیا جائے کہ ٹیکس سہولیات کی قیمت ہے تو بھی امیر شخص عموما ان سہولیات کو ایک غریب شخص کی نسبت کہیں زیادہ استعمال کرتا ہےسب سے بڑھ کر فضا کو پالیوٹ کرتا ہے۔ اسی کی گاڑیوں سے دھواں نکلتا ہے، اسی کے گھر سے زیادہ گندا پانی نکلتا ہے، اسی کے ایئر کنڈیشن اور دوسرے ہوم اپلائنسز چلتے ہیں۔ آپ شاید نہی جانتے کہ دنیا کے امیر ترین ۱۰ فیصد آدھے سے زیادہ کاربن پالیوٹ کر رہے ہیں۔یعنی وہی پانی گیس لکڑی اور بجلی کا کئی گنا زیادہ استعمال کرتا ہے۔ اب کیا اسے بھی سہولیات کی وہی قیمت ادا کرنی چاہئے جو تھر کے صحرا میں ایک جھگی میں رہنے والا فتح دیں عرف پھتو ادا کرے۔ کیا یہ انصاف ہوگا۔

    .
    ۔(۳) ریاست کی دی گئیں سہولیات صرف صحت، سکول، سڑک، پولیس دفاع اور یوٹیلیٹیز کی ترسیل ہی نہی ہیں۔ ریاست ملک کی مالک یا کسٹوڈین ہے وہ میاں منشاء کو ۲۲۰ ملین کی مارکیٹ بھی مہیا کر رہی ہے جو غریب استعمال نہی کر رہا لیکن میاں منشاء اسی کو استعمال کر کے پیسہ کما رہا ہے۔ پھر اس کا بزنس جو پیسہ بنا رہا ہے اس پر بھی وہ ایک عام آدمی کی نسبت عموما کم شرح سے ٹیکس (کارپوریٹ ٹیکس ) دے رہا ہے۔

    .
    ۔(۴) اگر آپ کا کلیہ ایک فکسڈ اماؤنٹ فار ایوری ون کی بجائے ایک جیسی فیصد پر قائم ہے تو بتاتا چلوں کہ ایک رپورٹ کے مطابق امریکہ میں ٖغریب ترین ۲۰ فیصد لوگ اپنی انکم کا گیارہ فیصد ٹیکس دیتے ہیں جبکہ ایک فیصد امیر ترین شہری اپنی انکم کا صرف پانچ فیصد ٹیکس کی مد میں ادا کرتے ہیں۔

    #42
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 235
    • Posts: 4196
    • Total Posts: 4431
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    آپ محترم ہستیوں کے درمیان اچھی بات چیت ہو رہی ہے اور میں ٹانگ اڑا بیٹھا ہوں

    میرے خیال میں اکثر لوگوں کو یہ خوش فہمی ( مجھ جیسے منفی سوچ رکھنے والے غلط فہمی بھی کہہ سکتے ہیں ) کے وہ زیادہ محنت کرتے ہیں اور باقی کم

     اسی طرح میرے خیال میں اکثر لوگوں کا خیال ہوتا ہے کے ان سے نہ انصافی ہو رہی ہے یا زیادہ نا انصافی ہو رہی ہے یا انکو پورا حق نہیں
    مل رہا

    البتہ میرے خیال میں انسان عمومی طور پر کام چور نہیں ہے . اکثر انسانوں کو کچھ پانے کی کچھ حاصل کرنے کی اور کامیاب ہونے کی خواہش اور لگن ہوتی ہے

    BlackSheep

    Awansahib

    • This reply was modified 8 months, 4 weeks ago by  JMP. Reason: حاصل
    #43
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 235
    • Posts: 4196
    • Total Posts: 4431
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    ایک اچھی گفتگو چھڑ گئی ہے. اس گفتگو کو مد نظر راختے ہوۓ کچھ سوال ذہن میں اتے ہیں اور ان میں سے چند مندرجہ ذیل ہیں

    وہ کیا عوامل. کردار اور ذرایع ہیں جو کسی کو امیر بننے کی ترغیب دیتے ہیں یا اور مدد کرتے ہیں اور وہ کیا عوامل ہیں جو کسی اور کو امیر بننے میں مدد نہیں کر پاتے . کیا ان میں انسان کی اپنی محنت، لگن کے علاوہ کچھ اور بھی شامل ہے ؟

    محصولات کا مقصد اور استعمال کیا ہوتا ہے ؟

    کمائی اور محصولات کے حوالے سے انصاف کی تعریف کیا ہے ؟

    ریاست کے کیا فرائض ہیں

    کیا ریاست کے ہر شہری کے حقوق اور فرائض ایک جیسے ہونے چاہیں یا مختلف

    اگر ریاست اپنے فرائض نہیں ادا کر پا رہی تو کیا شہریوں پر محصولات ادا کرنا فرض ہیں یا نہیں

    اگر کوئی امیر شخص کم محصولات ادا کرتا ہے مگر اپنی کمائی کو کاروبار کو بڑھاوا دینے میں لگاتا ہے اور دوسرے لوگوں کو روزگار میسر کرتا ہے اور یہ دوسرے لوگ اپنی کمائی میں سے محصول ادا کرتے ہیں تو کیا یہ بہتر ہے یا امیر آدمی کا زیادہ محصول دینا مگر روزگار کے کم مواقع پیدا کرنا . دونوں صورتوں میں ریاست اور اسکے شہریوں کے لئے زیادہ فائدہ کس میں ہے

    کیا امیر شخص زیادہ محصول دے کر کچھ اور ایسا فائدے یا ترجیحات حاصل نہیں کرتا جو ایک کم امیر آدمی کو حاصل نہیں ہوتے .

    #44
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: مَیں

    اعوان بھائی غلطی کو ہی انگلش میں مسٹیک ہی کہتے ہیں
    اعوان بھائی غلطی کو ہی انگلش میں مسٹیک ہی کہتے ہیں

    باوا بھاہی یہ ایک پرانی انڈین مزاحیہ فلم کا مکالمہ ہے جہاں غلطی پکڑے جانے پر اعتراف یوں کیا جاتا ہے – آپ بھی کچھ اس بحث میں حصہ ڈالیں – ویسے چونکے بلیک شیپ صاحب کی اپنی ذات زیر بحث ہے اس لئے وہ آپ سے ٹکرانے سے کترا رہے ہیں – ویسے ہم دونوں نے ملتی جلتی بات کی ہے کہ یہ منکر اپنے ماں باپ کے سامنے بھی اپنا اعتراف ترک اسلام نہیں کر سکتے – صرف یہاں آ کر ہمیں اپنے باسی پکوڑے بیچنے کی کوشش کرتے ہیں – ان کے بدبودار پکوڑے کبھی تو اتنی باس مارتے ہیں کہ میں ناک منہ پر ہاتھ رکھ کر فورم سے ہی کچھ دن کے لئے چلا جاتا ہوں – فلحال وہ پکوڑے نیچے کر کے نیا چاٹ بیچ رہے ہیں کچھ دن تو انہیں چار آنے وٹ لینے دیں آخر کو ہم محنتی لوگوں کے ساتھ ہیں –

    #45
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: مَیں

    آپ محترم ہستیوں کے درمیان اچھی بات چیت ہو رہی ہے اور میں ٹانگ اڑا بیٹھا ہوں

    میرے خیال میں اکثر لوگوں کو یہ خوش فہمی ( مجھ جیسے منفی سوچ رکھنے والے غلط فہمی بھی کہہ سکتے ہیں ) کے وہ زیادہ محنت کرتے ہیں اور باقی کم

    اسی طرح میرے خیال میں اکثر لوگوں کا خیال ہوتا ہے کے ان سے نہ انصافی ہو رہی ہے یا زیادہ نا انصافی ہو رہی ہے یا انکو پورا حق نہیں مل رہا

    البتہ میرے خیال میں انسان عمومی طور پر کام چور نہیں ہے . اکثر انسانوں کو کچھ پانے کی کچھ ہحاصل کرنے کی اور کامیاب ہونے کی خواہش اور لگن ہوتی ہے blacksheep Awansahib

    جے بھاہی ، آرام پسندی بھی انسانی فطرت کا حصہ ہے ورنہ سوشلزم کبھی فیل نہ ہوتا – جیسے غریب آدمی دو وقت کی روٹی کے چکر میں ایک ٹریپ میں پھنس جاتا ہے اور نسل دار نسل بھی اس سے نکل نہیں سکتا یا نکلنے کے لئے مطلوبہ رسک کی ہمت نہیں کر سکتا اسی طرح آرام پسند بھی ایک ایسی ہی مزے کی صورت میں پھنس جاتا ہے جہاں وہ اس مزے کو قربان کرنے کا رسک نہیں لیتا – انسانی فطرت یہ بھی ہے کہ جب اس کہ سر پر ذمے داری پڑتی ہے تو ہاتھ پاؤں مارتا ہے جیسے کے بڑے بوڑھے نا کارہ کے لئے تجویز دیتے ہیں کہ اس کی شادی کر دو ذمے داری پڑے گی تو کما کر لاہے گا بہت بار یہ درست بھی ہوتا ہے مگر کبھی ویلا پھر بھی نہیں سدھرتا – میں تو فطرت ایسے جراثیم کو کہتا ہوں جو عام طور پیر بہت عام لوگوں کو با آسانی لگ جاتے ہیں – بے شک انسان اپنی ہمت سے فطرت کو بدلنے کی طاقت رکھتا ہے – یہ میری تھیوری ہے کسی کا اس سے متفق ہونا لازمی نہیں –

    #46
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: مَیں

    باوا بھاہی یہ ایک پرانی انڈین مزاحیہ فلم کا مکالمہ ہے جہاں غلطی پکڑے جانے پر اعتراف یوں کیا جاتا ہے – آپ بھی کچھ اس بحث میں حصہ ڈالیں – ویسے چونکے بلیک شیپ صاحب کی اپنی ذات زیر بحث ہے اس لئے وہ آپ سے ٹکرانے سے کترا رہے ہیں – ویسے ہم دونوں نے ملتی جلتی بات کی ہے کہ یہ منکر اپنے ماں باپ کے سامنے بھی اپنا اعتراف ترک اسلام نہیں کر سکتے – صرف یہاں آ کر ہمیں اپنے باسی پکوڑے بیچنے کی کوشش کرتے ہیں – ان کے بدبودار پکوڑے کبھی تو اتنی باس مارتے ہیں کہ میں ناک منہ پر ہاتھ رکھ کر فورم سے ہی کچھ دن کے لئے چلا جاتا ہوں – فلحال وہ پکوڑے نیچے کر کے نیا چاٹ بیچ رہے ہیں کچھ دن تو انہیں چار آنے وٹ لینے دیں آخر کو ہم محنتی لوگوں کے ساتھ ہیں –

    بہت شکریہ اعوان بھائی

    میں کسی کی ذات کو ڈسکس کرنا اچھا نہیں سمجھتا ہوں

    کچھ لوگ احساس کمتری کے مارے ہوتے ہیں، وہ اپنا احساس کمتری دور کرنے کیلیے کبھی اپنی ذات اور کبھی دوسروں کی ذات زیر بحث لاتے ہیں تاکہ لوگ انکی طرف متوجہ ہوں اور انکے احساس کمتری میں کچھ کمی واقع ہو

    آپ ماشاءاللہ پڑھے لکھے اور پروفیشنل آدمی ہیں، آپکو ان فضولیات سے دور رہنا چاہیے

    #47
    EasyGo
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 4
    • Posts: 952
    • Total Posts: 956
    • Join Date:
      5 Nov, 2016
    • Location: -

    Re: مَیں

    ایزی گو۔۔۔۔۔ تو آپ کے نزدیک یہ منطقی اور نظریاتی وجہ ہے جس کی بنیاد پر زیادہ پیسے کمانے والے کو زیادہ ٹیکس دینا چاہئے۔۔۔۔۔

    بھائی صاحب

    سیدھی باتوں کو پیچیدہ بنانا آپکا کام ہے

    آپ ڈھونڈیں منطق اور فلسفہ اس میں

    #48
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    میرے خیال میں نسبتا زیادہ کمائی پر زیادہ شرح سے محصول ادا کرنا ایک طرح کا جگا ٹیکس ہے جو کامیاب آدمی اپنی کامیابی پر کسی بھی وجہ سے معاشی جدوجہد میں پیچھے رہ جانے والے لوگوں کے شر سے بچنے کے لئے ادا کرتا ہے

    گویا اپنی کامیابی خوشحالی کی قیمت ادا کرتا ہے

    #49
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    باوا بھاہی یہ ایک پرانی انڈین مزاحیہ فلم کا مکالمہ ہے جہاں غلطی پکڑے جانے پر اعتراف یوں کیا جاتا ہے – آپ بھی کچھ اس بحث میں حصہ ڈالیں – ویسے چونکے بلیک شیپ صاحب کی اپنی ذات زیر بحث ہے اس لئے وہ آپ سے ٹکرانے سے کترا رہے ہیں – ویسے ہم دونوں نے ملتی جلتی بات کی ہے کہ یہ منکر اپنے ماں باپ کے سامنے بھی اپنا اعتراف ترک اسلام نہیں کر سکتے – صرف یہاں آ کر ہمیں اپنے باسی پکوڑے بیچنے کی کوشش کرتے ہیں – ان کے بدبودار پکوڑے کبھی تو اتنی باس مارتے ہیں کہ میں ناک منہ پر ہاتھ رکھ کر فورم سے ہی کچھ دن کے لئے چلا جاتا ہوں – فلحال وہ پکوڑے نیچے کر کے نیا چاٹ بیچ رہے ہیں کچھ دن تو انہیں چار آنے وٹ لینے دیں آخر کو ہم محنتی لوگوں کے ساتھ ہیں –

    ملک صاحب۔۔۔۔۔

    آپ بھی۔۔۔۔۔ آپ بھی فرقہِ مالشیہ میں شامل ہوگئے۔۔۔۔۔

    اے چنگی گل نئیں اے۔۔۔۔۔

    :cwl: :cwl: :cwl:

    #50
    bluesheep
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 19
    • Posts: 351
    • Total Posts: 370
    • Join Date:
      7 Dec, 2018
    • Location: Pindi HQ

    Re: مَیں

    بلیک شیپ صاحب، آپ کی تحریر پڑھ کر اندازہ ہوا کے آپ خود کو بلینس رکھتے ہیں یعنی کسی بھی قسم کی قدامت پسندی کا شکار نہیں ہیں، اور اسی لئے آپ اگنوسٹک بھی ہیں، تو آپ سے پوچھنا ہے وہ ایسی کیا چیز ہوگی جو آپ کو اس بات پر قائل کرسکے کے خدا نام کی بھی کوئی چیز ہوتی ہے ؟ یہاں میری مراد مذھبی خداؤں سے نہیں ہے بلکے واقع حقیقی خدا، اگر اس طرح کی کوئی چیز ہے بھی تو، کیا ایسا ہوگا کے آپ کہیں گے ہاں، آئ ایم اے بلیور ؟

    BlackSheep

    #51
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: مَیں

    ملک صاحب۔۔۔۔۔ آپ بھی۔۔۔۔۔ آپ بھی فرقہِ مالشیہ میں شامل ہوگئے۔۔۔۔۔ اے چنگی گل نئیں اے۔۔۔۔۔ :cwl: :cwl: :cwl:

    بلیک شیپ صاحب یہ ہم خیال لوگوں کی باتیں ہیں آپ جو چاھے نام دیں – باوا بھاہی بہت سینئر بلوگر ہیں اور ان کے آشیرور تلے رہنے میں کوئی برائی نہیں- میں نے پچھلے کئی سالوں میں ان سے بہت سیکھا ہے- آپ اپنے منکر نظریات سے باہر نکل کر کم ہی سیاست پر گفتگو کرتے ہیں ورنہ آپ سے بھی سیکھنا میری خوش بختی ہوتی – میں نہیں سمجھتا کسی ایک بات پر اختلاف کسی دوسرے موضوح پر ہم خیال ہونے سے روکتا ھے – آپ کے موسیقی کے ذوق کو میں بہت پسند کرتا ہوں اور سمجھتا ہوں الله نے آپ کو بے پناہ خوبیوں سے نوازہ ہو گا آخر کو خدا سب کا ہے صرف مسلمانوں کا نہیں –

    #52
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    بلیک شیپ صاحب، آپ کی تحریر پڑھ کر اندازہ ہوا کے آپ خود کو بلینس رکھتے ہیں یعنی کسی بھی قسم کی قدامت پسندی کا شکار نہیں ہیں، اور اسی لئے آپ اگنوسٹک بھی ہیں، تو آپ سے پوچھنا ہے وہ ایسی کیا چیز ہوگی جو آپ کو اس بات پر قائل کرسکے کے خدا نام کی بھی کوئی چیز ہوتی ہے ؟ یہاں میری مراد مذھبی خداؤں سے نہیں ہے بلکے واقع حقیقی خدا، اگر اس طرح کی کوئی چیز ہے بھی تو، کیا ایسا ہوگا کے آپ کہیں گے ہاں، آئ ایم اے بلیور ؟
     

    بلیو شیپ۔۔۔۔۔

    اکثر اوقات زبانوں کی اپنی اپنی محدودیات(لِمیٹیشن) ہوتی ہیں۔۔۔۔۔

    ایک زبان میں ایسے الفاظ ہوتے ہیں جو دوسری زبان کسی صورت بھی اُس کیفیت کو یا صورتحال کو مکمل طور پر بیان کرنے سے قاصر ہوتی ہے جو پہلی زبان باآسانی بیان کردیتی ہے، یا دوسری زبان میں وہی کیفیت بیان کرنے کیلئے ایک سے زیادہ الفاظ کی ضرورت پڑتی ہے لیکن اکثر اوقات پھر بھی وہ مطلب نہیں پیدا ہوتا۔۔۔۔۔

    اُردو زبان ایمان اور یقین، دونوں الفاظ کو بہت اچھے طریقے سے بیان کرتی ہے جبکہ انگریزی زبان میں ایسا معاملہ نہیں ہے۔۔۔۔۔ انگریزی میں آپ کو ایمان کی کیفیت کو مکمل طور پر بیان کرنے کیلئے شاید کوئی واحد لفظ نہیں ملے گا۔۔۔۔۔ اگر آپ جانتے ہوں تو مجھے بھی بتائیں کیونکہ مجھے علم نہیں۔۔۔۔۔

    اب اصل نکتہ پر آتے ہوئے کہوں گا میری نظر میں ایمان اور یقین میں بہت فرق ہوتا ہے۔۔۔۔۔

    میری رائے میں ایمان ایک عدد سو فیصدی یقین ہوتا ہے اور شک کی قطعاً کوئی گنجائش نہیں۔۔۔۔۔ اگر ایمان سو فیصد سے کم ہوجائے تو وہ یقین کی حدود میں آجاتا ہے۔۔۔۔۔

    اور یہی ایمان اور یقین کا یہی فرق میری رائے میں مذہب اور سائنس کی انتہائی بنیادوں میں فرق ہے۔۔۔۔۔

    ایمان کا تعلق عمومی طور پر مذہب یا عقیدت سے ہوتا ہے۔۔۔۔۔ ایمان کی ایک خصوصیت یہ بھی ہوتی ہے کہ کسی بھی دوسرے امکان کا کوئی امکان نہیں ہوتا۔۔۔۔۔ جبکہ سائنس میں شک کا عُنصر ہمیشہ رہتا ہے۔۔۔۔۔

    اب جہاں تک میری بات ہے تو آج کی اپنی ذہنی حالت دیکھتے ہوئے کہہ سکتا ہوں مَیں ایمانی ٹرین میں واپس سوار نہیں ہوسکتا۔۔۔۔۔ البتہ جہاں تک یقین کی بات ہے تو مَیں بہت سے عوامل پر یقین رکھ سکتا ہوں مگر وہ ایمانی حدود میں داخل نہیں ہوتے۔۔۔۔۔ اور پھر مَیں ایگنوسٹک بھی اِسی لئے ہی ہوں کہ شک کا عُنصر رہنا چاہئے۔۔۔۔۔

    • This reply was modified 8 months, 4 weeks ago by  BlackSheep.
    #53
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 169
    • Posts: 2197
    • Total Posts: 2366
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: مَیں

    BlackSheep Sahib

    Your anti-progressive taxation arguments reminds me of Herman Cain’s 2012 campaign’s 9-9-9 tax plan. I am not sure how you label that just or equal. It’s very simplistic view of equality like Adam got kicked of haven because he bit apple he wasn’t supposed to and that’s how life started on planet earth. Even with progressive taxation we are far from equality but it’s much much better than 9-9-9 tax plan.

    #54
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 343
    • Posts: 7773
    • Total Posts: 8116
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: مَیں

    ان سب کی باتیں پڑھ پڑھ میرا اب داڑھی رکھنے کو دل کر رہا ہے ۔۔ :bigsmile:

    اس آئیڈیا کو فی الحال چھوڑ دیں کیونکہ داڑھی رکھ کر آپ بحری قزاق دکھای دیں گے

    ;-)

    #55
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 235
    • Posts: 4196
    • Total Posts: 4431
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    ۔ اُردو زبان ایمان اور یقین، دونوں الفاظ کو بہت اچھے طریقے سے بیان کرتی ہے جبکہ انگریزی زبان میں ایسا معاملہ نہیں ہے۔۔۔۔۔ انگریزی میں آپ کو ایمان کی کیفیت کو مکمل طور پر بیان کرنے کیلئے شاید کوئی واحد لفظ نہیں ملے گا۔۔۔۔۔ اگر آپ جانتے ہوں تو مجھے بھی بتائیں کیونکہ مجھے علم نہیں۔۔۔۔۔

    BlackSheep

    What about “faith” and “belief”. I read a book few years ago which explained these two words very effectively. I will see if I can find the book and share the definition and the difference. To me

    faith is ایمان

    belief is یقین

    You most probably will have an opinion and even more probably a better opinion

    • This reply was modified 8 months, 4 weeks ago by  JMP. Reason: changed font size
    #56
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: مَیں

    اس آئیڈیا کو فی الحال چھوڑ دیں کیونکہ داڑھی رکھ کر آپ بحری قزاق دکھای دیں گے ;-)

    آپ کا مطلب ہے

    1200x630

    #57
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    What about “faith” and “belief”. I read a book few years ago which explained these two words very effectively. I will see if I can find the book and share the definition and the difference. To me faith is ایمان belief is یقین You most probably will have an opinion and even more probably a better opinion

    جے ایم پی صاحب۔۔۔۔۔

    میرے خیال میں فیتھ کا لفظ بھی اُردو میں لفظ ایمان کے متبادل قرار نہیں دیا جاسکتا۔۔۔۔۔ ایمان کے لفظ میں جو شدت(انٹینسٹی) ہوتی وہ شاید لفظ فیتھ میں نہیں ہے۔۔۔۔۔ یہ عین ممکن ہے کہ لفظ فیتھ کی باقاعدہ مستند تعریف لفظ ایمان جیسی ہی ہو لیکن شاید میرے خیال میں فیتھ کا لفظ عام بول چال میں یقین کے طور پر ہی استعمال کیا جاتا ہے۔۔۔۔۔

    #58
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    میرے خیال میں نسبتا زیادہ کمائی پر زیادہ شرح سے محصول ادا کرنا ایک طرح کا جگا ٹیکس ہے جو کامیاب آدمی اپنی کامیابی پر کسی بھی وجہ سے معاشی جدوجہد میں پیچھے رہ جانے والے لوگوں کے شر سے بچنے کے لئے ادا کرتا ہے
    گویا اپنی کامیابی خوشحالی کی قیمت ادا کرتا ہے

    گھوسٹ صاحب۔۔۔۔۔

    قرار صاحب کو جواب دیتے ہوئے مَیں بالکل یہی سوچ رہا تھا بلکہ یہی جگا ٹیکس کا لفظ میرے ذہن میں بھی تھا لیکن مَیں اچھی طرح جانتا ہوں کہ میرے پاس کم سے کم الفاظ میں اپنا مطلب لکھنے کی ایسی صلاحیت نہیں ہے جو ایم کیو ایم کے علاوہ دیگر معاملات میں آپ کے پاس ہے۔۔۔۔۔

    لیکن لوٹ جاتی ہے اُدھر کو بھی نظر کیا کیجئے کے مانند جب الطاف حسین نامی جِن آپ پر چڑھ جاتا ہے تو کچھ الگ ہی صورتحال ہوجاتی ہے۔۔۔۔۔۔

    فورم کے ہی کئی لوگوں نے آف دی ریکارڈ یہ کہا ہے کہ گھوسٹ کو متحدہ کے عشق نے نکما کردیا ہے ورنہ آدمی یہ بھی کام کا تھا۔۔۔۔۔

    :) ;-) :)

    • This reply was modified 8 months, 3 weeks ago by  BlackSheep.
    #59
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    سمجھتا ہوں الله نے آپ کو بے پناہ خوبیوں سے نوازہ ہو گا آخر کو خدا سب کا ہے صرف مسلمانوں کا نہیں –

    ملک صاحب۔۔۔۔۔

    مَیں نے خدا کو عاق کردیا ہے۔۔۔۔۔

    :cwl: ;-) :cwl:

    #60
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 2345
    • Total Posts: 2360
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    Your anti-progressive taxation arguments reminds me of Herman Cain’s 2012 campaign’s 9-9-9 tax plan. I am not sure how you label that just or equal. It’s very simplistic view of equality like Adam got kicked of haven because he bit apple he wasn’t supposed to and that’s how life started on planet earth. Even with progressive taxation we are far from equality but it’s much much better than 9-9-9 tax plan.

    اگر برابری ہی آخری منزل ہے تو کمیونزم یا سوشلزم میں پھر آخر کیا برائی ہے۔۔۔۔۔

    • This reply was modified 8 months, 3 weeks ago by  BlackSheep.
Viewing 20 posts - 41 through 60 (of 242 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!