Thread: مَیں

This topic contains 241 replies, has 24 voices, and was last updated by  Ghost Protocol 1 month, 3 weeks ago. This post has been viewed 6375 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 242 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 1972
    • Total Posts: 1987
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    مَیں ملکی سطح پر سَرمایہ دارانہ نظام کا پُرزور حامی ہوں مگر اپنی ذات میں بہت حد تک سوشلسٹ(عوامی فلاح بہبود پر یقین رکھنا) ہوں۔۔۔۔۔

    مَیں جمہوریہ(رِی پبلک) کا پُرزور حامی ہوں لیکن ذاتی کاروبار میں بہت حد تک آمریت کا قائل ہوں، جیسا ایک بہترین فلم کِنگز اِسپیچ میں کہا گیا تھا، مائی کِنگڈم مائی رُولز۔۔۔۔۔

    مَیں اپنے آپ کو مسلمان نہیں کہتا مگر اپنے جاننے والے مسلمان احباب کو السلام و وعلیکم بھی کہتا ہوں۔۔۔۔۔

    مَیں اپنے آپ کو مذہبِ اسلام کا ماننے والا نہیں کہتا مگر زبان و بیان کی وہ تراکیب اور اشعار ضرور استعمال کرتا ہوں جن کا منبع اسلام سے ہی ہے۔۔۔۔۔

    مَیں نعت، قوالی اور بھجن سُننا بہت پسند کرتا ہوں البتہ اُس شخص سے کوئی محبت نہیں کرتا جس کیلئے وہ نعت، بھجن یا قوالی پڑھی(گائی) جارہی ہوتی ہے۔۔۔۔۔

    مَیں اُس نظریہ کو دُرست نہیں سمجھتا جس کیلئے حُسین نے سَر کٹوایا لیکن قربانی حُسین کی کچھ قدر ضرور کرتا ہوں۔۔۔۔۔

    مَیں شخصی آزادیوں کا پُرزور حامی ہوں لیکن ایڈیٹر انچیف کے عُہدے کو بہت پسند کرتا ہوں جو معاملات کو حدود سے باہر نہ جانے دے۔۔۔۔۔

    مَیں ذاتی خیالات میں شفافیت اور دیانتداری کا انتہائی قائل ہوں لیکن سیاسی حوالوں سے ایسے لوگوں کے بَرسرِاقتدار آنے کو اچھا نہیں سمجھتا جو اپنے ذاتی خیالات کی سچائی اور دیانتداری کے مکمل قائل ہوتے ہیں۔۔۔۔۔

    • This topic was modified 6 months, 1 week ago by  الشرطہ. Reason: Thumbnail Added
    #2
    BlackSheep
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 15
    • Posts: 1972
    • Total Posts: 1987
    • Join Date:
      11 Feb, 2017
    • Location: عالمِ غیب

    Re: مَیں

    ایک مِتر سے بات کرتے ہوئے یہ کچھ پہلو تھے، جن پر میرے دوست کو اعتراض تھا کہ یہ میری شخصیت کے تضادات ہیں۔۔۔۔۔ آخری نکتہ کا گھوسٹ صاحب بھی طعنہ مارتے ہیں۔۔۔۔۔ ابھی حالیہ اَتھرا صاحب نے بھی مجھ پر، اور قرار اور شیرازی پر بھی یہی بات کی کہ جب ہم لوگ کسی خدا کو نہیں مانتے تو پھر ہمیں خدا(اللہ) کو کسی صورت بھی اپنی زندگی میں شامل نہیں کرنا چاہئے۔۔۔۔۔

    اکثر لوگوں کا خیال ہوتا ہے کہ ذات پر بات نہیں ہونی چاہئے۔۔۔۔۔ میرا خیال ہے کہ بات ہونی ہی ذاتی نظریات(ذات) پر چاہئے ورنہ باقی سب تو ذہنی عیاشی ہے۔۔۔۔۔ اور پھر عنوان کچھ کچھ میری اِس فورم کی شناخت(کالی بھیڑ) سے بھی کچھ مطابقت رکھتا ہے۔۔۔۔۔

    اَتھرا, Ghost Protocol, Shirazi, Qarar

    #3
    Atif
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 145
    • Posts: 6940
    • Total Posts: 7085
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: مَیں

    اور الحمداللہ میں اصولوں ، نظریات وغیرہ کو صرف تحریر کی حد تک ہی صحیح سمجھتا ہوں ، حقیقی زندگی میں مجھے (اپنے مفاد کیلئے ) یہ باتیں اچھی نہیں لگتیں۔ میں ہندووں کی طرح مرنے کے بعد چتا میں جلنا چاہتا ہوں، انکی طرح اپنے بزرگوں کے پاوں چھو کر ان کا اکرام کرنا چاہتا ہوں، سلام کرتے وقت ہاتھ ملانے کے بجائے ہاتھ جوڑ کر پرنام کرنا مجھے بہت بھاتا ہے لیکن میں مجبور ہوں کہ یہاں ایسی عیاشی میسر نہیں۔

    ویسے اس سے فرق کیا پڑتا ہے کہ دوسروں کی عقیدتوں کا خیال رکھتے ہوئے انہی کا چال چلن اختیار کرلیا جائے؟؟ میں نے ہمیشہ اپنے سِکھ دوستوں کو ست سری اکال ہی کہا ہے اور وہ میری بہت قدر کرتے ہیں اس بات پر۔  کرسمس کی مبارکباد دینے اپنے مسیحی دوستوں کے گھر پہنچ جاتا ہوں بلکہ ان کے بچوں کے لئے چاکلیٹ وغیرہ بھی۔ایسا نہیں کہ میں ان کو لبھا کر اسلام قبول کروانا چاہتا ہوں بلکہ اسلئے کہ وہ کم از کم مجھے ایک اچھا انسان ضرور تصور کریں۔

    ویسے یہ آج میں نے ایک بہت زبردست بات سیکھی ہے، واقعی میں ذات پر بحث کرنا کیا معنیٰ؟؟ ہم جس سے بات کررہے ہوتے ہیں وہ اس کے ذاتی خیالات ہی تو ہوتے ہیں جنہیں ہم درست کرنے کے چکر میں ہلکان ہورہے ہوتے ہیں۔

    بلیک شیپ ایکبار پھر سچے دل سےکلمہ پڑھ لے تو پکا مسلمان ہے اندر سے۔ کمبخت کی ساری عادتیں مسلمانوں والی ہیں۔

    #4
    Atif
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 145
    • Posts: 6940
    • Total Posts: 7085
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: مَیں

    میری یہ حالت تو نہیں ہوتی لیکن حقیقت یہ ہے کہ دل ایسا ضرور چاہتا ہے۔

    #5
    SaleemRaza
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 659
    • Posts: 11758
    • Total Posts: 12417
    • Join Date:
      13 Oct, 2016
    • Location: سہراب گوٹھ ۔

    Re: مَیں

    اور الحمداللہ میں اصولوں ، نظریات وغیرہ کو صرف تحریر کی حد تک ہی صحیح سمجھتا ہوں ، حقیقی زندگی میں مجھے (اپنے مفاد کیلئے ) یہ باتیں اچھی نہیں لگتیں۔ میں ہندووں کی طرح مرنے کے بعد چتا میں جلنا چاہتا ہوں، انکی طرح اپنے بزرگوں کے پاوں چھو کر ان کا اکرام کرنا چاہتا ہوں، سلام کرتے وقت ہاتھ ملانے کے بجائے ہاتھ جوڑ کر پرنام کرنا مجھے بہت بھاتا ہے لیکن میں مجبور ہوں کہ یہاں ایسی عیاشی میسر نہیں۔ ویسے اس سے فرق کیا پڑتا ہے کہ دوسروں کی عقیدتوں کا خیال رکھتے ہوئے انہی کا چال چلن اختیار کرلیا جائے؟؟ میں نے ہمیشہ اپنے سِکھ دوستوں کو ست سری اکال ہی کہا ہے اور وہ میری بہت قدر کرتے ہیں اس بات پر۔ کرسمس کی مبارکباد دینے اپنے مسیحی دوستوں کے گھر پہنچ جاتا ہوں بلکہ ان کے بچوں کے لئے چاکلیٹ وغیرہ بھی۔ایسا نہیں کہ میں ان کو لبھا کر اسلام قبول کروانا چاہتا ہوں بلکہ اسلئے کہ وہ کم از کم مجھے ایک اچھا انسان ضرور تصور کریں۔ ویسے یہ آج میں نے ایک بہت زبردست بات سیکھی ہے، واقعی میں ذات پر بحث کرنا کیا معنیٰ؟؟ ہم جس سے بات کررہے ہوتے ہیں وہ اس کے ذاتی خیالات ہی تو ہوتے ہیں جنہیں ہم درست کرنے کے چکر میں ہلکان ہورہے ہوتے ہیں۔ بلیک شیپ ایکبار پھر سچے دل سےکلمہ پڑھ لے تو پکا مسلمان ہے اندر سے۔ کمبخت کی ساری عادتیں مسلمانوں والی ہیں۔

    ان سب کی باتیں پڑھ پڑھ میرا اب داڑھی رکھنے کو دل کر رہا ہے ۔۔

    :bigsmile:

    #6
    Gulraiz
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 35
    • Posts: 1268
    • Total Posts: 1303
    • Join Date:
      16 May, 2017
    • Location: Santa Barbara

    Re: مَیں

    لو جی بھیڑ آگئی ،،،،،، میں میں میں میں کرتے ،،،،، بھاگو یار ادہر سے

    hahahaha

    #7
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 138
    • Posts: 10843
    • Total Posts: 10981
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: مَیں

    فکری بیواؤں نے بھی عجیب قسمت پائی ہے

    نہ ادھر کی ہیں اور نہ ادھر کی ہیں یعنی دھوبی کے کتے کی طرح نہ گھر کی رہی ہیں اور نہ گھاٹ کی. انتہا یہ ہے کہ نہ اپنے گھر والوں کو اسلام سے منکر کی سکی ہیں اور نہ ہی اپنے ادھرگرد والوں کو. اسلام کا نام مٹانے نکلی ہیں لیکن پچھلے دس سالوں میں چار سے پانچ نہیں ہو سکی ہیں

    بظاہر یہ بیچاری فکری بیوائیں اسلام چھوڑ چکی ہیں لیکن پھر بھی یہ ہم سے زیادہ الله کا نام لینے والی ہیں. اتنی مجبور و بے بس ہیں کہ اپنا مسلمانوں والا نام تک نہیں چھوڑ سکتی ہیں. شادیاں کرتی ہیں تو نکاح بھی مسلمانوں والا پڑھتی ہیں. ان میں اتنی ہمت نہیں کہ مرنے سے پہلے وصیت کر دیں کہ مرنے کے بعد ہمارا جنازہ پڑھانے اور ہمیں دفن کرنے کی بجائے ہماری لاش کتوں کے آگے ڈال دی جائے تاکہ انکی بھی دو چار دن ہڈیاں اور گوشت کھا کر موج ہو جائے

    #8
    Gulraiz
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 35
    • Posts: 1268
    • Total Posts: 1303
    • Join Date:
      16 May, 2017
    • Location: Santa Barbara

    Re: مَیں

    hahaha

    BlackSheep

    • This reply was modified 6 months, 1 week ago by  Gulraiz.
    #9
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 662
    • Posts: 6794
    • Total Posts: 7456
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: مَیں

    مجھے لگتا ہے کے آپ خود پسندی یا دوہری / ملٹیپل شخصیت کا شکار ہیں

    :serious:

    #10
    صحرائی
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 7
    • Posts: 434
    • Total Posts: 441
    • Join Date:
      27 Oct, 2018
    • Location: Bermuda

    Re: مَیں

    میرے خیال میں آپ انٹلکچول ڈیپتھ سینڈروم کا شکار ہے

    #11
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 662
    • Posts: 6794
    • Total Posts: 7456
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: مَیں

    شکر ہے آپ نے زندہ رہ کر چتا میں جلنے کی بات نہی کی ، ورنہ آپ کی یہ خواہش پوری کرنے کے بارے میں سوچا جا سکتا تھا

    آپ کا دل کبھی بیلٹ پہن کر اڑنے کو کیا ہے ؟

    بلیک شیپ اور عاطف کی آئی ڈی کے پیچھے کہی کوئی ایک ہی بندا تو نہی ؟

    اور الحمداللہ میں اصولوں ، نظریات وغیرہ کو صرف تحریر کی حد تک ہی صحیح سمجھتا ہوں ، حقیقی زندگی میں مجھے (اپنے مفاد کیلئے ) یہ باتیں اچھی نہیں لگتیں۔ میں ہندووں کی طرح مرنے کے بعد چتا میں جلنا چاہتا ہوں، انکی طرح اپنے بزرگوں کے پاوں چھو کر ان کا اکرام کرنا چاہتا ہوں، سلام کرتے وقت ہاتھ ملانے کے بجائے ہاتھ جوڑ کر پرنام کرنا مجھے بہت بھاتا ہے لیکن میں مجبور ہوں کہ یہاں ایسی عیاشی میسر نہیں۔ ویسے اس سے فرق کیا پڑتا ہے کہ دوسروں کی عقیدتوں کا خیال رکھتے ہوئے انہی کا چال چلن اختیار کرلیا جائے؟؟ میں نے ہمیشہ اپنے سِکھ دوستوں کو ست سری اکال ہی کہا ہے اور وہ میری بہت قدر کرتے ہیں اس بات پر۔ کرسمس کی مبارکباد دینے اپنے مسیحی دوستوں کے گھر پہنچ جاتا ہوں بلکہ ان کے بچوں کے لئے چاکلیٹ وغیرہ بھی۔ایسا نہیں کہ میں ان کو لبھا کر اسلام قبول کروانا چاہتا ہوں بلکہ اسلئے کہ وہ کم از کم مجھے ایک اچھا انسان ضرور تصور کریں۔ ویسے یہ آج میں نے ایک بہت زبردست بات سیکھی ہے، واقعی میں ذات پر بحث کرنا کیا معنیٰ؟؟ ہم جس سے بات کررہے ہوتے ہیں وہ اس کے ذاتی خیالات ہی تو ہوتے ہیں جنہیں ہم درست کرنے کے چکر میں ہلکان ہورہے ہوتے ہیں۔ بلیک شیپ ایکبار پھر سچے دل سےکلمہ پڑھ لے تو پکا مسلمان ہے اندر سے۔ کمبخت کی ساری عادتیں مسلمانوں والی ہیں۔
    #12
    Gulraiz
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 35
    • Posts: 1268
    • Total Posts: 1303
    • Join Date:
      16 May, 2017
    • Location: Santa Barbara

    Re: مَیں

    میرے خیال میں آپ اچھا شکار ہو ، جسکو بھون کر کھائیں یا چپلی کباب بناکر ،،،، مزہ ہی مزہ آئیگا

    #13
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 662
    • Posts: 6794
    • Total Posts: 7456
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: مَیں

    تھریڈ کا ٹائٹل بھیں یا با با ہونا چاہئیں تھا

    #14
    EasyGo
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 4
    • Posts: 837
    • Total Posts: 841
    • Join Date:
      5 Nov, 2016
    • Location: -

    Re: مَیں

    بھائی جی آپ کو جنگلوں اور ویرانوں میں تیاگ کی ضرورت ہے

    😉😉

    • This reply was modified 6 months, 1 week ago by  EasyGo.
    #15
    SaleemRaza
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 659
    • Posts: 11758
    • Total Posts: 12417
    • Join Date:
      13 Oct, 2016
    • Location: سہراب گوٹھ ۔

    Re: مَیں

    دعا بہار کی مانگی تو اتنے پھول کھلے ۔۔کہیں جگہ نہ رہی میرے آشیانے  کو ۔۔

    بلیک شیپ  کو جتنے مشورے ملنے شروع ہو گئے ۔۔تم ۔کیا ۔ہو ۔ ۔۔تم  کو ایسا ہونا چاہئے تھا ۔۔۔تم یہ ہو تم وہ ہو ۔۔۔

    ان سب مشورہ جیات  کو پڑھکر مجھے ایک بلاگر کی یاد آگئی ہے ۔۔جو دبئ میں تھا ۔تو اس نے مشورہ مانگا تھا ۔کہہ کون سا کاروبار کرنا چایئے ۔

    فیر مفت کے بلاگر نے مشوروں کی وہ توپ چلائی بندہ دبئی چھوڑ کے ہی بھاگ گیا ہے

    • This reply was modified 6 months, 1 week ago by  SaleemRaza.
    #16
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 214
    • Posts: 3924
    • Total Posts: 4138
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    BlackSheep

    میں آپ کو کوئی آٹھ ایک سال سے جنتا ہوں اور مجھے ہمیشہ آپ ایک نارمل (مجھ اس کے اردو معنی نہیں آتے اور میں ام نہیں کہنا چاہا رہ ہوں ) اور یہ احساس مجھے آپکی تحریروں کو پڑھ کر لگا تھا. آج آپکی تحریر سے ثابت ہوئی کے آپ ایک نارمل انسان ہیں. مرے خیال میں ہر ایک انسان میں خیالات کے رنگوں کا وہ ( سپیکٹرم) ہے جس کا آپ نے ذکر کیا ہے . اب پتا نہیں نارمل سننا آپکو اچھا لگے یا برا مگر چونکہ کم لوگ اپنے کو نارمل کہلوانا یا سمجھنا پسند کرتے ہیں تو میری نظر میں نارمل ہونا ایک اچھی بات ہے گو کے میں اپنے کو کافی حد تک ابنارمل کہتا اور سمجھتا ہوں

    ١) شکریہ کے آپ میں اتنی ہمت ہے کے آپ اپنی ذات کی مثال دیکر ایک ایسا موضوع شروع کر سکیں جس میں اپنی ذات نہیں بلکہ انسانوں میں سوچ کی وسعتکو موضوع بنایا گیا ہے (شاید بہت سارے لوگ اسے سوچ کا تضاد کہیں مگر میری نظر میں یہ سوچ کا وہ فیتہ ہے جس کے ایک سرے پر صفر ہے اور دوسرے سرے پر ایک لامحدود ہندسہ) . آپ نے انسانی سوچ، نفسیات، رویہ اور تشکیل کا ایک انتہائی اچھا موضوع اٹھایا ہے . میرے خیال میں آپکی تحریر کامرکز آپکی ذات نہیں ہے بلکہ ہم سب اور ہماری سوچ اور ہمارے رویہ ہیں. یہ وہ موضوع ہے جی پر میں ہزاروں تحریریں لکھوں تو بھی اسطرح اس موضوع کو اجاگر نہ کر سکون جیسا کے آپ نے کیا ہے

    ٢) مرے خیال میں انسان کے خیال اور سوچ موضوع گفتگو ہونا چاہیں نہ کے اسکی ذات. یہ ایک اور بات ہے کے انسان کی سوچ اور خیال انسان کی ذات کی ہی ترجمانی کرتے ہیں . لہٰذا اگر آپکی تحریر کا مقصد آپکی ذات ہی ہے جو کے مرے خیال میں نہیں، پھر بھی بات آپکی اور اس حوالے سے ہم سب کی سوچ کی وسعت ہونی چاہیے نہ کے ذات

    ٣) ہر انسان اپنی اپنی سوچ کا مالک ہوتا ہے اور ہر کسی کو اپنی سوچ رکھنے، سنوارنے، تبدیل کرنے کا اختیار ہے. ممکن ہے کے آپکی سوچ اور رویہ جو آج ہیں وہ گزرے کل میں مختلف تھے اور بہت ممکن ہیں کے آنے والے کل میں اور مختلف ہوں. اگر اس کے پیچھے کوئی علم، کوئی تجربہ، کوئی پہچان ہو تو میری نظر میں یہ انسان کو عظیم بناتی ہے. سوچوں کا ساکت رہنا مرے خیال میں اکثر حالات میں انسان کی صفات اور صلاحیتوں کا ضایع
    ہے

    ٤) ثقافت کا مذہب نہیں ہوتا اور مذہب کی ثقافت نہیں ہوتی. دوسرے کی بھلائی کی دعا دینے کے الفاظ مختلف ہیں مگر اسکے پیچھے انسان کی نیت ایک ہی ہے کے میں آپکی بھلائی چاہتا ہوں.

    ٥) دوسروں میں تضاد ڈھونڈھنے کے بجاۓ اگر ہم سوچ کا محور ، منبع یا معنی ڈھونڈیں تو شاید بہت کچھ سیکھنے کو ملے . شخصی آزادی پر قانون، معاشرے، سماج ، خاندان، دوست اور پتا نہیں کتنے اور حوالوں کے قدغن لگے ہیں. لہٰذا میں اس بات سے اتفاق تو کرتا ہوں کے شخصی آزادی تو ہونی چاہیے مگر اس سے بھی اتفاق کرتا ہوں کے ایک چیف ایڈیٹر بھی ہو. جہاں یہ چیف ایڈیٹر یا طاقت باہر کی طاقت نہیں ہوتی وہاں انسان کے اندر بھی ایک چیف ایڈیٹر ہوتا ہے. یقین نہ آے تو مختلف حالات اور مختلف لوگوں کے درمیان اپنے رویہ ، زبان اور اعمال کو ہی جانچ کر دیکھ لیں .

    ٦) آپ اسلام کے پیروکار ہیں یا نہیں یہ آپکا ذاتی مسئلہ ہے. اسلام کی سب یا کچھ باتوں کو بشمول زبان استعمال کرنا بھی آپکا ذاتی حق ہے . اسلام میں بہت ہی اچھی باتیں ہیں. اگر آپ عمل کرتے ہیں تو بهتخب اور اگر نہیں تو بھی خیر ہے

    ٧) جبتک خود پر ذمےداری نہ ہو ہمارا برتاؤ مختلف ہوتا ہے. اپنا کاروبار ہو، یا اپنے نیچے کچھ ماتحت ہوں تو ہمارے برتاؤ میں کچھ نہ کچھ جھلک آمریت کی ضرور اتی ہے. میری نظر مین اکثر آمریت کے فوائد ہوتے ہیں. خاص طور پر فیصلہ کرنے میں اور فیصلہ کو اپنا کہنے کے وقت . قانون آمریت کی ایک شکل ہے میری نظر میں اور مجھے اس میں کوئی برائی نظر نہیں آتی. گو میں ١٠٠ فیصد آمریت کے خلاف ہوں. رنگ ہر ایک کو اچھے لگتے ہیں مگر کہیں کہیں سفید اور کالا رنگ انتہائی موزوں ہوتا ہے اور کسی اور رنگ میں یہ اہلیت نہیں جو ہوتی اس لمحہ کالے یا سفید رنگ میں ہوتی ہے.

    ٨) ذاتی خیالات کی سچائی اور ذاتی دیانتداری بہت اہم ہے مگر چونکے ذاتی خیالات وقت کے ساتھ تبدیل ہو سکتے ہیں تو انکو ہمشہ سچا کہنا ممکن نہیں میری نظر میں . جہاں تک ذاتی ایمانداری کا تعلق ہے اسکا انسان میں ہونا ایک اہم چیز ہے مگر اسکا مقصد یہ نہیں کے ہر ایماندار شخص اچھا حکمران بھی ثابت ہو سکتا ہے. مرے خیال میں ذاتی ایمانداری ایک جذباتی بات ہے اور اسکا ذکر کر کے سیاسی مقبولیت حاصل کی جا سکتی ہے . ویسے دیانت ہوتی کیا ہے؟ شاید ہم دیانت کو ہمیشہ پیسہ کے حوالے سے دیکھتے ہیں

    ٩) نیلا، سبز، لال ، پیلا اور یہاں تک کے سفید اور کالا کہیں بھی ایک رنگ نہیں ہوتا. ان رنگوں کا ایک لامحدود سپیکٹرم ( شائد کہکشاں موزوں ترجمہ ہے یا شائد نہیں ) ہوتا ہے. سفید رنگ ایک سفید نہیں ہوتا اور ہر لال رنگ لال نہیں ہوتا. کہیں نیلا گہرا نیلا ہوتا ہے تو کہیں ہلکا اور بیچ میں لا محدود نیلے رنگ ہونتے ہیں. انسان کی سوچ بھی ایسی ہے. اس کو تضاد کی نظر سے نہ دیکھیں بلکہ وسعت کی نظر سے دیکھیں . رنگوں اور انسانوں کی سوچ کو محدود کر کے ہم اپنے کو محدود کرتے ہیں

    اپنی ذات کو پیش کر کے اپنے بہت حوصلے کا قدم اٹھایا ہے . مجھ میں یہ بہادری مفقود ہے. مگر بات خیالات کی وسعت (نہ کے تضاد) پر ہو تو شاید ہم سب کچھ سیکھیں

    #17
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 214
    • Posts: 3924
    • Total Posts: 4138
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    بھائی جی آپ کو جنگلوں اور ویرانوں میں تیاگ کی ضرورت ہے 😉😉

    EasyGo sahib

    محترم

    کیسے ہیں آپ. اچھا لگا آپکو اپنے درمیان پا کے

    گو مجھے آپکا یہ جملہ سب تبصروں سے زیادہ بہتر اور جامع لگا مگر ممکن ہے کے ہم سب کو اس کی ضرورت ہے یا پھر ہم سب اپنی اپنی سوچ کے محدود جنگلوں میں قید ہیں اور ہمیں ان سے باہر آنا چاہیے

    #18
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 214
    • Posts: 3924
    • Total Posts: 4138
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    اور الحمداللہ میں اصولوں ، نظریات وغیرہ کو صرف تحریر کی حد تک ہی صحیح سمجھتا ہوں ، حقیقی زندگی میں مجھے (اپنے مفاد کیلئے ) یہ باتیں اچھی نہیں لگتیں۔ میں ہندووں کی طرح مرنے کے بعد چتا میں جلنا چاہتا ہوں، انکی طرح اپنے بزرگوں کے پاوں چھو کر ان کا اکرام کرنا چاہتا ہوں، سلام کرتے وقت ہاتھ ملانے کے بجائے ہاتھ جوڑ کر پرنام کرنا مجھے بہت بھاتا ہے لیکن میں مجبور ہوں کہ یہاں ایسی عیاشی میسر نہیں۔ ویسے اس سے فرق کیا پڑتا ہے کہ دوسروں کی عقیدتوں کا خیال رکھتے ہوئے انہی کا چال چلن اختیار کرلیا جائے؟؟ میں نے ہمیشہ اپنے سِکھ دوستوں کو ست سری اکال ہی کہا ہے اور وہ میری بہت قدر کرتے ہیں اس بات پر۔ کرسمس کی مبارکباد دینے اپنے مسیحی دوستوں کے گھر پہنچ جاتا ہوں بلکہ ان کے بچوں کے لئے چاکلیٹ وغیرہ بھی۔ایسا نہیں کہ میں ان کو لبھا کر اسلام قبول کروانا چاہتا ہوں بلکہ اسلئے کہ وہ کم از کم مجھے ایک اچھا انسان ضرور تصور کریں۔ ویسے یہ آج میں نے ایک بہت زبردست بات سیکھی ہے، واقعی میں ذات پر بحث کرنا کیا معنیٰ؟؟ ہم جس سے بات کررہے ہوتے ہیں وہ اس کے ذاتی خیالات ہی تو ہوتے ہیں جنہیں ہم درست کرنے کے چکر میں ہلکان ہورہے ہوتے ہیں۔ بلیک شیپ ایکبار پھر سچے دل سےکلمہ پڑھ لے تو پکا مسلمان ہے اندر سے۔ کمبخت کی ساری عادتیں مسلمانوں والی ہیں۔

    Atif sahib

    محترم عاطف صاحب

    شاندار

    #19
    JMP
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 214
    • Posts: 3924
    • Total Posts: 4138
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: مَیں

    انسان کی سوچ، الفاظ اور اعمال تک پہنچ

    محدود یا لا محدود

    اپنے اپنے ذوق کی مرہون منت ہے

    #20
    اَتھرا
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 16
    • Posts: 629
    • Total Posts: 645
    • Join Date:
      9 Sep, 2018
    • Location: sydney

    Re: مَیں

    ایک مِتر سے بات کرتے ہوئے یہ کچھ پہلو تھے، جن پر میرے دوست کو اعتراض تھا کہ یہ میری شخصیت کے تضادات ہیں۔۔۔۔۔ آخری نکتہ کا گھوسٹ صاحب بھی طعنہ مارتے ہیں۔۔۔۔۔ ابھی حالیہ اَتھرا صاحب نے بھی مجھ پر، اور قرار اور شیرازی پر بھی یہی بات کی کہ جب ہم لوگ کسی خدا کو نہیں مانتے تو پھر ہمیں خدا(اللہ) کو کسی صورت بھی اپنی زندگی میں شامل نہیں کرنا چاہئے۔۔۔۔۔ اکثر لوگوں کا خیال ہوتا ہے کہ ذات پر بات نہیں ہونی چاہئے۔۔۔۔۔ میرا خیال ہے کہ بات ہونی ہی ذاتی نظریات(ذات) پر چاہئے ورنہ باقی سب تو ذہنی عیاشی ہے۔۔۔۔۔ اور پھر عنوان کچھ کچھ میری اِس فورم کی شناخت(کالی بھیڑ) سے بھی کچھ مطابقت رکھتا ہے۔۔۔۔۔ اَتھرا, Ghost Protocol, Shirazi, Qarar

    مجھے اس تحریر میں ایک سے زیادہ نکات کو موضوع بنانا ہے اور ان نکات کا روئے سخن کئی دوسرے اراکین فورم کی طرف بھی ہو سکتا ہے، فرداً فرداً اسلئے نہیں کیونکہ ان نکات کو جوڑنے والی مرکزی رَو ایک ہی ہے (ہر ایک کو جواب دیتے ہوئے یہ تمہید اور سیاق و سباق بطور تتمہ اس طرح نتھی نہیں کیا جا سکتا کہ تحریر کی روانی بھی برقرار رہے) وہ ہے قول و فعل یا تحریر و رویے کا تضاد/منافقت جو مجھ سمیت ہر ہر رکن میں یہاں درجہ بدرجہ پائی جاتی ہے اور میری کوشش ہوتی ہے کہ وہ مجھ میں کم سے کم ہو اور دوسروں میں ممکن حد تک شائستہ طریقے سے (اور بعض اوقات کسی حد تک ناشائستہ طریقے سے بھی) اس کی نشاندہی کی جائے تاکہ ہمارے کردار میں مثبت رجحانات فروغ پائیں، اب جو اس فورم پر میرا خیر خواہ ہے وہ اس سلسلے میں میری مدد کر سکتا ہے سوائے نطفہء ناتحقیق کے

    اس فورم پر ورود ہوا تو دیکھا کہ کچھ لوگ اپنے تئیں خود کو اعلی تراور زیادہ/بڑی عقل والا سمجھتے ہیں ( جس میں کوئی ایسی برائی نہیں اور نہ ہونی چاہیے) اور اسی بنیاد پر  اپنی دلیل و منطق کو بھی اعلی تر اور بھاری گردانتے ہیں (یہاں تھوڑا سا مسئلہ پیدا ہو جاتا ہے، لیکن پھر بھی زیادہ نہیں) اور اسی دلیل و منطق کے زور پر اپنے سے بظاہر کم عقل لوگوں کے نظریات، عقائد و اعمال کو انکی مذہبی کتب میں درج عبارات سے جوڑ کر تضادات/منافقتیں تلاش کرتے ہیں (اب یہاں کافی بڑا مسئلہ پیدا ہو جاتا ہے۔ کیسے؟ اس پر تھوڑی دیر بعد میں آتے ہیں) اور ان تضادات کے نمک رچ لگے پرچار سے انہیں اپنے عقائد سے بدظن کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور بات حد سے تب نکل جاتی ہے جب دہریہ پن/عقلیت بیچ چوراہے ننگے بدن ماتم کرنے لگتی اور تضادات کا یہ بھونڈا پرچار تبرّے میں بدل جاتاہے اب اس میں بھی ان/آپ سب کے درجے ہیں۔ اور اس میں بھی انت اس نطفہء ناتحقیق نے کیا جب اس نے نبیؐ کو گالی دی اور اس سے بھی صدمے کی بات یہ کہ فورم کا سیٹھ اپنی بیٹھک کا چسکہ قائم رکھنے کیلئے اس کی حمائت میں آیا بجائے کسی تادیب کے

    فکری بیوگی یا رنڈاپا ایک بلیغ استعارہ ہے یہ حامل کیلئے کسی بھی مذہب پرست کی عقیدت کو گالی دینا انتہائی آسان بنا دیتا ہے کونکہ حامل کو یقین ہے کہ اسے اسی سطح کی زک/تکلیف نہیں پہنچائی جا سکتی

    میرا اس نکتے پر اتفاق ہے کہ ذات پر مائیکروسکوپ ضرور آنی چاہیے، عامی نہ سہی لیکن مبلغ کی ذات پر تو ضرور۔ منافقت تبلیغ و عمل میں بُعد ہی تو ہے، ہاں یہ ہو سکتا ہے کہ کچھ لوگ دل کے بہلانے کو فورم پر تحریر کو دائرہ عمل سے باہر سمجھتے ہوں لیکن فورم پر لیکچر کی روح پر اطلاق کی ذمہ داری سے پھر بھی نہیں بچا جا سکتا۔ اور یہ منافقت اعلی تر مدارج میں تب داخل ہوتی ہے جب ایک رُکن کو لیکچر کا حوالہ دیتے ہوئے دوسرے رُکن کی ذاتی معلومات فورم پر ظاہر کرنے پر ایک ہفتے کیلئے بین کر دیا جاتا ہے

    اب اتنا عرصہ اس بیٹھک میں گذارنے اور مختلف مباحث و مکالموں کے بعد کچھ باتیں واضح ہو گئیں ہیں کہ اعلی تر عقل کسی کے پاس بھی نہیں، عقلیت کے دعویدار دہریوں کے پاس تو بالکل ہی نہیں ہے اور یہی اوقات انکی دلیل و منطق کی ہے۔ ان دو باتوں پر سوائے نطفہء ناتحقیق کے ابھی بھی کسی کو اعتراض ہے تو بازو دوبارہ آزمائے جا سکتے ہیں

    اب جب ذاتی/شخصی تضادات کی بنیاد یعنی عقل پر ہی سوال اٹھ گیا اور وہی بھمبھل بھوسے میں پڑ گئی تو یہ تسلیم کرنے میں کوئی حرج نہیں کہ قول و فعل یا تحریر و رویے کا تضاد/منافقت درجہ بدرجہ مجھ سمیت سب میں پائے جاتے ہیں اسلئے کیوں نہ صدیوں کی دانش کے سنہری اصول پُرامن بقائے باہمی پر عمل کرتے ہوئے سب اپنی سابقہ زیادتیوں، گالیوں پر ندامت کا اظہار کر کے اپنی خامیوں، کجیوں اور تضادات کو قبول کریں اور ایک شائستہ ماحول میں مکالمے کو فروغ دیکر ان پر قابو پانے کی کوشش کریں

    پُرامن بقائے باہمی میں، امن کا مطلب ہے تشدد سے خالی اور تشدد میں ذہنی تشدد بھی شامل ہے خاص طور پر جو دوسروں کے نظریات و عقائد کو بذریعہ تبرّا نشانہ بنا کر کیا جائے، اظہار کی پوری آزادی لیکن معاشرتی/محفل کے امن کی ضمانت کے تحت

    پہلے بھی لکھا جا چکا ہے کہ آپ کو یعنی آپکی ذات/شخصیت کو انہی اقدار کی روشنی تولا جا رہا ہے جن کا آپ یہاں پرچار کرتے ہیں (جو کہ میری نظر میں ایک اچھی بات ہے) اور موضوعِ بحث سے متعلق وہ اقدار ہیں خالص پن/دوئی سے تہی، فکری دیانت اور شفافیت۔ خالص پن یا دووئی سے تہی قدر کا تقاضا ہے کہ اگر اللہ نہیں ہے تو وہ بول چال میں کسی سے مستعار بھی نہیں لینا چاہیے اور ایسا نہیں ہے کہ لفظ اللہ استعمال نہ کرنے پر آپکی زندگی یا کلام رک جائیں گے بس ایک ذرا کمٹمنٹ کی بات ہے راستے نکل آئیں گے۔ اپنی اعلان کردہ اقدار پر پرکھنے کا حوالہ آپ جی پی کو کئی مرتبہ دے چکے ہو

    میری رومانیویت اور صُلحِ کُل (پُرامن بقائے باہمی) مجھے بھی یہی درس دیتے ہیں کہ میں جب کسی سِکھ یا عیسائی سے ملوں تو اسے ست سری اکال یا مَیری کرسمس کہوں لیکن اس کو نہیں جو دن رات میرے عقیدے میں کیڑے ڈھونڈتا ہو اور میرے نبیؐ کو بھری محفل میں ننگی گالی دیتا ہو

    ثقافت کا مذہب نہیں ہوتا اور مذہب کی ثقافت نہیں ہوتی: نہیں معلوم یہ جملے کس مخصوص تناظر میں لکھے گئے ہیں، بظاہر اس سے غلط بات کوئی ہو نہیں سکتی کیونکہ ثقافت کا مذہب بھی ہوتا ہے اور مذہب کی ثقافت بھی ہوتی ہے۔ بجھن اور نعت مذہب کی ہی ثقافت ہیں اسی طرح مسجد اور مندر بھی۔ جب عورتوں کو حکم (یہاں صحیح یا غلط زیرِبحث نہیں) دیا جاتا ہے کہ اپنی زینت کو چھپا کر چلیں اور مردوں کہ یہ حکم کہ اپنی نظریں نیچی رکھا کرو (یہاں صحیح یا غلط زیرِبحث نہیں) اور اصناف کے آپس میں بلا ضرورت اختلات کی حوصلہ شکنی کی جاتی ہے تو اس سے ایک ثقافت جنم لیتی ہے اور اسی طرح جب یہ کہا جاتا ہے کہ فاطمہ بنتِ محمدؐ کا ہاتھ بھ چوری کرنے پر کٹ جاتا، اس سے بھی

    Ghost Protocol Atif JMP

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 242 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation