Thread: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

Home Forums Siasi Discussion عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

This topic contains 23 replies, has 7 voices, and was last updated by  Muhammad Hafeez 1 month ago. This post has been viewed 439 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 24 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    وزیراعظم عمران خان نے بجٹ پیش کیے جانے کے بعد قوم سے اپنے خطاب میں اعلان کیا کہ وہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نواز کے گذشتہ ادوارِ حکومت میں ملکی قرضوں میں 24 ہزار ارب روپے کے اضافے کی وجوہات جاننے کے لیے اعلیٰ اختیاراتی کمیشن بنائیں گے۔

    ظاہر ہے کہ عمران خان کی نگرانی میں کام کرنے والا یہ کمیشن اُس وقت کی سیاسی قیادت، مثلاً کابینہ کے اراکین سے پوچھ سکتا ہے کہ ایسے کیا حالات تھے اتنے زیادہ قرضے لینے کی منظوری دی گئی۔

    اب حفیظ شیخ (وزیرِ خزانہ 2010 تا 2013) سے عمران خان یہ سوال کابینہ کے اجلاس میں پوچھیں گے یا علیحدہ میں، یہ تو وقت ہی بتائے گا مگر یہ کمیشن کن قرضوں کے بارے میں پوچھ گچھ کرے گا، یہ معاملہ قدرے دلچسپ ہے۔

    اس بات کو سمجھنے کے لیے ہمیں پاکستان کے قرضوں کی نوعیت کو سمجھنا پڑے گا۔

    قرضوں کی کہانیاں

    ملکی قرضے میں کیا کیا شامل ہوتا ہے؟


    پہلے تو یہ جاننا ضروری ہے کہ جب کہا جاتا ہے کہ پاکستان پر اتنا قرضہ ہے تو اس میں عموماً حکومتی قرضے کے ساتھ ساتھ دیگر قرضے مثلاً نجی شعبے کا بیرونی قرضہ، حکومتی واجبات، پبلک سیکٹر کمپنیوں کے قرض وغیرہ بھی شامل ہوتے ہیں۔

    ان میں کچھ ایسے بھی بیرونی قرضے ہوتے ہیں جو کہ حکومت نے ادا نہیں کرنے ہوتے بلکہ ان کا ذمہ دار نجی شعبہ ہوتا ہے مگر انھیں ملک کے کُل قرضوں میں اس لیے گِنا جاتا ہے کیونکہ پیسے تو آپ کے ملک سے ہی جانے ہیں۔

    اب چلتے ہیں وزیراعظم عمران خان کے بیان کی جانب۔

    سٹیٹ بینک کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق پاکستان کے قرضوں میں حکومتی قرضہ، نجی بیرونی قرضہ جات، اور دیگر کئی چیزیں شامل ہوتی

    سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعداد و شمار کے مطابق مالی سال 2007-08 کے اختتام سے مالی سال 2017-18 کے اختتام تک پاکستان کے کُل قرض میں 49 ارب ڈالر کا اضافہ ہوا اور وہ 46.2 ارب ڈالر سے بڑھ کر 95.2 ارب ڈالر ہو گیا۔ بظاہر تو یہ سو فیصد سے زیادہ کا اضافہ ہے۔

    اس 49 ارب ڈالر میں سے پیپلزپارٹی کے دور میں یعنی 2008 سے 2013 کے درمیان 14.7 ارب ڈالر جبکہ گزشتہ دورِ حکومت یعنی مسلم لیگ ن کے دور میں 34.3 ارب ڈالر قرض لیا گیا۔

    تحریکِ انصاف کی حکومت کے ابتدائی سات مہینوں میں پاکستان کا کل قرض 95.2 ارب سے بڑھ کر 105.8 ارب ڈالر ہو گیا ہے جو کہ 10.6 ارب ڈالر کے لگ بھگ اضافہ ہے۔

    ان قرضوں میں حکومت کے ملکی بینکوں سے لیے گئے قرضے، نجی کمپنیوں کے بیرونی قرضے، پبلک سیکٹر کمپنیوں کے ضمانت اور بغیر ضمانت والے قرضے بھی شامل ہیں۔

    مثالاً سعودی عرب اگر آج پاکستان کو اپنے زرِ مبادلہ کے ذخائر بہتر کرنے کے لیے تین یا چار ارب ڈالر دے، اور وہ قرضے کی مد میں نہ ہو، مگر پھر بھی وہ پاکستان کے واجبات میں گنا جائے گا۔

    مگر اگر ہم باقی باتیں چھوڑ کر صرف دو چیزوں، یعنی حکومت کا بیرونی قرضہ اور آئی ایم ایف سے لیا گیا قرضہ گنیں، تو کہانی تھوڑی سی مختلف ہے۔

    Economic Survey of Pakistan

    اگر ہم صرف حکومت کا بیرونی قرضہ اور آئی ایم ایف سے لیا گیا قرضہ جمع کریں تو مالی سال 2007-2008 کے اختتام سے مالی سال 2017-18 کے اختتام تک یہ 41.8 ارب ڈالر سے بڑھ کر 70.2 ارب ڈالر تک پہنچ گیا۔

    اگر 2008 سے 2013 تک پیپلز پارٹی کے دور کو دیکھا جائے تو اس دوران اس میں 6.3 ارب ڈالر کا اضافہ ہوا جبکہ مسلم لیگ نواز کے دور میں یہ رقم 48.1 ارب ڈالر سے بڑھ کر 70.2 ارب ڈالر تک جا پہنچی جو کہ 22.1 ارب ڈالر کا اضافہ ہے۔

    اگست 2018 میں تحریکِ انصاف کے برسرِاقتدار آنے کے بعد ابتدائی سات ماہ میں پاکستان کے حکومتی قرضوں میں چار ارب ڈالر کا اضافہ ہوا ہے۔

    قرضہ بڑھا تو دونوں طرح ہے، تو پھر فرق کیا پڑتا ہے؟

    اس بحث میں پڑے بغیر کہ یہ اضافہ جائز تھا یا نہیں، یہاں یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ عمران خان اب کنٹینر پر نہیں، وزیرِاعظم ہاؤس میں بیٹھے ہیں اور ان کے بیانات سٹاک مارکیٹ سے لے کر ملک کی شرحِ نمو تک ہلا سکتے ہیں۔

    اگر وزیراعظم کے بیان سے یہ تاثر آیے کہ گذشتہ دو حکومتوں نے 24 ہزار ارب روپے کے قرضے لیے ہیں تو یہ شاید درست نہیں ہو گا۔

    ایک اور بات اہم ہے اور وہ یہ کہ پیپلز پارٹی کے دور میں پرائیویٹ سیکٹر نے بیرونِ ملک سے 1.26 ارب ڈالر قرضے لیے مگر نواز شریف کے دور میں پرائیویٹ سیکٹر نے بیرونِ ملک سے 6.05 ارب ڈالر کے قرضے لیے۔ پرائیویٹ سیکٹر کے قرضے لینے کو عموماً ایک مثبت اشارہ سمجھا جاتا ہے کہ معیشت میں تیزی آ رہی ہے اور نواز دور میں اس کی ایک وجہ شاید سی پیک سے منسلک سرمایہ کاری ہو سکتی ہے۔

    کیا پچھلی حکومتوں نے بہت مہنگے قرضے لیے؟
    حکومتی کمیشن بننے سے یہ تاثر بھی ملتا ہے کہ پاکستان کی ماضی کی حکومتوں نے بدنیتی کے ساتھ پاکستان کے لیے بہت مہنگے قرضے لیے۔

    اُس وقت قرض لینے کی کیا وجوہات تھیں یا کون سی مجبوریاں یا ضروریات تھیں جنھیں پورا کرنا تھا، یہ تو ایک طویل بحث ہے اور کمیشن بھی ممکنہ طور پر اس کا جائزہ لے گا تاہم فی الوقت اس بات کا جائزہ ضرور لیا جا سکتا ہے کہ حکومتی قرضوں پر سود کی شرح عالمی قیمتوں سے مطابقت رکھتی تھی یا نہیں۔

    پاکستان کو کس شرح سود پر قرضے ملتے ہیں، اس کے تعین میں بہت سے عناصر کارفرما ہوتے ہیں، جیسا کہ عالمی سطح پر شرح سود اور قرضہ دینے والوں کے خیال میں پاکستان کی اُن قرضوں کی واپسی کی صلاحیت وغیرہ۔ مگر ذیل دیے گئے گراف سے ہم دو نتائج اخذ کر سکتے ہیں:


    تاریخی تناظر میں پاکستان کو ملنے والے قرضوں کی اوسط شرحِ سود تقریباً اتنی ہی رہی جتنی یہ جنوبی ایشیا کے دیگر ممالک کے لیے تھی۔​
    2013 کے بعد سے رجحان دیکھیں تو پاکستان کو ملنے والے قرضوں پر شرحِ سود جنوبی ایشیا کے مقابلے میں زیادہ رہی۔​
    2008-2018 کے دوران پاکستان نے کتنا سود ادا کیا ہے؟
    اس حوالے سے وزیرِاعظم عمران خان کی یہ بات بالکل بجا ہے کہ حکومت جتنا ٹیکس اکھٹا کرتی ہے، اس کا ایک بڑا حصہ سود کی ادائیگیوں میں لگ جاتا ہے۔

    اگر کُل ادائیگیاں گنی جائیں تو پاکستان نے جون 2009 سے مارچ 2019 تک قرضے کی اصل رقم (یعنی پرنسپل) میں سے 37 ارب 211 ملین ڈالر ادا کیے ہیں اور اسی دوران 13 ارب 452 ملین ڈالر سود کی شکل میں دیے۔

    یہاں ہم ادائیگیاں ڈالروں میں اس لیے گنتے ہیں کیونکہ یہ ڈالروں کی شکل میں ہی کی جاتی ہیں اور روپے کی قدر میں اضافے یا کمی سے ان پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔

    مگر اگر اسی دورانیے میں ہم صرف حکومتی قرضے، آئی ایم ایف، اور زرِمبادلہ کے واجبات کے حوالے سے پرنسپل ادائیگی اور سود کو دیکھیں (یعنی پبلک سکیٹر کمپنیوں کے قرضے یا نجی کمپنیوں کے بیرونی قرضہ جات وغیر وغیرہ جیسے چیزیں نکال دیں) تو اصل رقم 31 ارب 263 ملین ہے اور سود 11 ارب 372 ملین ہے۔

    اب بات یہ ہے کہ جو واجب الادا ہے وہ تو دینا پڑے گا یعنی اس مسئلے سے نکلنے کا پاکستان کے پاس ایک ہی حل ہے کہ اپنی آمدنی اور ٹیکس کلیکشن بڑھائی جائے۔ اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کے لائحہِ عمل پر تو سوال اٹھائے جا سکتے ہیں مگر سمت پر نہیں۔ یہ ان کی حکومت کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے اور انھوں نے اس بارے میں متعدد بیان بھی دیے ہیں۔

    ماہرینِ معیشت میں ایک رائے یہ بھی پائی جاتی ہے کہ قرضہ کتنا ہے اس سے ملکوں کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔ اٹلی اور امریکہ جیسے کئی ممالک ہیں جن کے قرضوں مجموعی قومی پیداوار کے مقابلہ میں شرح کافی زیادہ ہوتی ہے۔

    اصل بات ہوتی ہے کہ ملک کی معیشت کا انجن چلتا رہے اور اتنا کام کرتا رہے کہ قرضوں کی ادائیگی ہوتی رہے۔ لوگ کمائیں گے تو ٹیکس دیں گے نا۔ اب عمران خان کی حکومت ٹیکس جمع کرنے کے عمل میں تو بہتری لانے کی کوشش کر رہی ہے مگر معیشت کا انجن کس حد تک زور پکڑتا ہے، یہ دیکھنا ابھی باقی ہے۔

    BBC

    #2
    Athar
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 96
    • Posts: 1815
    • Total Posts: 1911
    • Join Date:
      21 Nov, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    محمد حفیظ بھائی یقین مانیں مجھے اس سارے گورکھ دھندے کا ککھ کچھ پتا نہیں چلا

    میں تو سادہ سا بندہ ہوں اور سادی کی ضرب تقسیم سے بات کو اس طرح سے سمجھ سکتا ہوں کہ

    ایک باپ کی پانچ اولادیں ہیں وہ گھسٹ گھسٹا کر دو تین آٹھویں دسویں تک پڑھا لیتا ہے ایک دو کسی کام میں لگ جاتے ہیں لیکن دسویں آٹھویں کے بچوں کو اعلیٰ تعلیم اور ہنر سیکھنے والوں کو اپنا کاروبار کر کے دینے کے لیے وہ فرد کسی سے 15سال کی مدت کے قرض لیتا ہے سات آٹھ سالوں تک وہ قرض کی رقم تھوڑی تھوڑی کر کے اُتارتا رہتا ہے لیکن جب بچے اعلیٰ تعلیم یافتہ ہوکر اچھی ملازمتیں کرنا شروع کر دیتے ہیں ہنر مند بچوں کے کاروبار سیٹ ہوجاتے ہیں تو بقیہ مدت کا قرضہ نہ صرف وہ سب مل کر آسانی سے ادا بھی کر دیتے ہیں بلکہ اپنے بہتر معاشی حالات کی بنا پر قرضہ کی مدت سے قبل قرضہ اُتار کر سود کی مزید رقم ادا کرنے سے بھی بچ جاتے ہیں

    ایسا ہی کچھ وہ “قومی مجرم”کر گئے تھے کہ قوم کے لیے سازگار ماحول اور بجلی گیس کی کمی ختم کر کے ہر فرد کو آزادانہ طور پر اپنی اپنی صلاحیتوں کے مطابق مناسب ماحول فراہم کر دیا تھا یہ قوم اتنی نکمی نہیں کہ وہ ایسے شاندار ماحول کے ملنے کے باوجود اپنے قرض نہ اُتار پاتی جس کا ثبوت اُس وقت کی سٹاک مارکیٹ دے رہی تھی اگر وہی تسلسل جاری رہتا تو اس وقت کاروبار کے اشارئے 6کے لگ بھگ پہنچ رہے ہوتے نہ ڈالر یک دم بے لگام ہوتا نہ پٹرول ڈیزل ہاتھوں سے اُڑتے۔

    یہی کام اگر زردآری یا نیازی ملعون کر دیتے تو بھی میرا جیسا فرد یہی کہتا کہ اُنہوں نے اپنے تئیں بہترین کوشش کی کہ قوم کو کاروبار کے لیئے دہشت گردی اور انرجی کےمسائل سے نجات دے کر سازگار ماحول فراہم کر دیا اگرصرف 5سال کی مدت میں یہ کچھ کر دیا تو اگلے پانچ سال میں اس کے ثمرات پوری طرح حاصل ہونا شروع ہوجانے تھے

    لیکن افسوس یہ کام “صادق اور امین سے پہلے”قومی مجرم”کر کے سزا کے مستحق پائے۔

    اتنی طویل تحریر میں املاکی غلطیوں کو نظر انداز کیا جائے۔شکریہ

    #3
    shahidabassi
    Participant
    Online
    • Expert
    • Threads: 31
    • Posts: 6918
    • Total Posts: 6949
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    محمد حفیظ بھائی یقین مانیں مجھے اس سارے گورکھ دھندے کا ککھ کچھ پتا نہیں چلا میں تو سادہ سا بندہ ہوں اور سادی کی ضرب تقسیم سے بات کو اس طرح سے سمجھ سکتا ہوں کہ ایک باپ کی پانچ اولادیں ہیں وہ گھسٹ گھسٹا کر دو تین آٹھویں دسویں تک پڑھا لیتا ہے ایک دو کسی کام میں لگ جاتے ہیں لیکن دسویں آٹھویں کے بچوں کو اعلیٰ تعلیم اور ہنر سیکھنے والوں کو اپنا کاروبار کر کے دینے کے لیے وہ فرد کسی سے 15سال کی مدت کے قرض لیتا ہے سات آٹھ سالوں تک وہ قرض کی رقم تھوڑی تھوڑی کر کے اُتارتا رہتا ہے لیکن جب بچے اعلیٰ تعلیم یافتہ ہوکر اچھی ملازمتیں کرنا شروع کر دیتے ہیں ہنر مند بچوں کے کاروبار سیٹ ہوجاتے ہیں تو بقیہ مدت کا قرضہ نہ صرف وہ سب مل کر آسانی سے ادا بھی کر دیتے ہیں بلکہ اپنے بہتر معاشی حالات کی بنا پر قرضہ کی مدت سے قبل قرضہ اُتار کر سود کی مزید رقم ادا کرنے سے بھی بچ جاتے ہیں ایسا ہی کچھ وہ “قومی مجرم”کر گئے تھے کہ قوم کے لیے سازگار ماحول اور بجلی گیس کی کمی ختم کر کے ہر فرد کو آزادانہ طور پر اپنی اپنی صلاحیتوں کے مطابق مناسب ماحول فراہم کر دیا تھا یہ قوم اتنی نکمی نہیں کہ وہ ایسے شاندار ماحول کے ملنے کے باوجود اپنے قرض نہ اُتار پاتی جس کا ثبوت اُس وقت کی سٹاک مارکیٹ دے رہی تھی اگر وہی تسلسل جاری رہتا تو اس وقت کاروبار کے اشارئے 6کے لگ بھگ پہنچ رہے ہوتے نہ ڈالر یک دم بے لگام ہوتا نہ پٹرول ڈیزل ہاتھوں سے اُڑتے۔ یہی کام اگر زردآری یا نیازی ملعون کر دیتے تو بھی میرا جیسا فرد یہی کہتا کہ اُنہوں نے اپنے تئیں بہترین کوشش کی کہ قوم کو کاروبار کے لیئے دہشت گردی اور انرجی کےمسائل سے نجات دے کر سازگار ماحول فراہم کر دیا اگرصرف 5سال کی مدت میں یہ کچھ کر دیا تو اگلے پانچ سال میں اس کے ثمرات پوری طرح حاصل ہونا شروع ہوجانے تھے لیکن افسوس یہ کام “صادق اور امین سے پہلے”قومی مجرم”کر کے سزا کے مستحق پائے۔ اتنی طویل تحریر میں املاکی غلطیوں کو نظر انداز کیا جائے۔شکریہ

    واقعی آپ معصوم ہو اطہر بھائی۔
    بجلی کے کارخانے، موٹر وے، اورنج ٹرین اور اسی طرح دوسرے پراجیکٹ تو سی پیک کے تحت بنے ہیں۔ یہ تو قرضوں میں شامل ہی نہی۔ اور اس کے علاوہ کچھ بنایا ہے تو پانچ سال کا بجٹ میں ترقیاتی بجٹ بھی ۵۰۰۰ ارب روپئے کا تھا۔ ادھار کے پیسے کی عیاشیوں سے سٹاک ایکسچینج ۵۳۰۰۰ ہزار تک پہنچ کر ن ہی کی حکومت میں ۴۲ ہزار پر آ چکی تھی۔
    رہی بات دو بیٹوں قرضہ لے کر پڑھانے اور پھر ان کی انکم سے قرض واپس کرنے کی تو میاں جی وہ قرض بھی خرچ ہوگیا لیکن انکم تو بڑھنے کی بجائے مزید کم ہوتی چلی گئی۔ یعنی جہاں سے قرض اتارنے کے لئے ڈالر آنے تھے وہ ایکسپورٹ تو مزید کم ہوگئی اور امپورٹس کو ٹربو لگا کر ۴۰ سے ۶۰ ارب کر دیا۔ یعنی ایک طرف قرضے لے لئے اور دوسری طرف ڈالروں کی آمدن ۲۰ ارب کم ہوگئی۔ میرا نہی خیال کہ یہ سمجھنا اتنا مشکل ہے۔

    #4
    Athar
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 96
    • Posts: 1815
    • Total Posts: 1911
    • Join Date:
      21 Nov, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    واقعی آپ معصوم ہو اطہر بھائی۔ بجلی کے کارخانے، موٹر وے، اورنج ٹرین اور اسی طرح دوسرے پراجیکٹ تو سی پیک کے تحت بنے ہیں۔ یہ تو قرضوں میں شامل ہی نہی۔ اور اس کے علاوہ کچھ بنایا ہے تو پانچ سال کا بجٹ میں ترقیاتی بجٹ بھی ۵۰۰۰ ارب روپئے کا تھا۔ ادھار کے پیسے کی عیاشیوں سے سٹاک ایکسچینج ۵۳۰۰۰ ہزار تک پہنچ کر ن ہی کی حکومت میں ۴۲ ہزار پر آ چکی تھی۔ رہی بات دو بیٹوں قرضہ لے کر پڑھانے اور پھر ان کی انکم سے قرض واپس کرنے کی تو میاں جی وہ قرض بھی خرچ ہوگیا لیکن انکم تو بڑھنے کی بجائے مزید کم ہوتی چلی گئی۔ یعنی جہاں سے قرض اتارنے کے لئے ڈالر آنے تھے وہ ایکسپورٹ تو مزید کم ہوگئی اور امپورٹس کو ٹربو لگا کر ۴۰ سے ۶۰ ارب کر دیا۔ یعنی ایک طرف قرضے لے لئے اور دوسری طرف ڈالروں کی آمدن ۲۰ ارب کم ہوگئی۔ میرا نہی خیال کہ یہ سمجھنا اتنا مشکل ہے۔

    اپنی جگہ آپ درست کہہ رہے ہیں

    لیکن مجھے وہ وقت وہ حالت نہیں بھولتے جب پاکستانی مایوسیوں کی اتہا گہرائیوں میں گر چکے تھے

    کیا آپ کو نہیں معلوم کہ کوئٹہ میں قائد اعظم ریزی ڈینسی دھماکے سے اُڑا دی گئی تھی

    کیا آپ کو نہیں یاد کہ راولپنڈی جی ایچ کیومیں دھشت گرد حملہ ہوگیا تھا”جو کہ پاک افواج کا دل مانا جاتا ہے”

    کیا آپ کو نہیں یاد پاکستان کا 4ارب کا جاسوسی طیارہ تباہ کر دیا گیا تھا

    کیا آپ کو نہیں یاد کہ امریکی ایبٹ آباد میں دندناتے ہوئے آئے اور اپنا کام کر کے چلتے بنے اور ہمارے چوکیدار سوتے رہے؟

    کیا آپ کو نہیں یاد کہ گوگل پر آئندہ دس سالوں کے پاکستانی نقشوں میں ردوبدل دکھایا جانے لگا تھا

    بھائی جی اس اتہا گہرائیوں کی مایوسیوں سے نکالنے کے لیے اگر معیشیت کی گرتی ہوئی ساکھ کو بچانے اور عوام میں ایک حوصلہ و ہمت پیدا کرنے کے لیئے اگر کچھ آرٹی فشل بھی کیا تھا تو ان کے زہنوں کو سلام جنہوں نے یہ کرنے کا حوصلہ کیا ورنہ اس سب صورتحال کو اپنے زہن میں رکھ کر سوچیں کہ اگر آنے والے یہی رونا شروع کر دیتے کہ ہم برباد ہوگئے ہم کچھ نہیں کر سکتے ڈالر کو اسی طرح بے لگام چھوڑ دیا جاتا کاروباری افراد پر مایوسی طاری رہنے دی جاتی تو اس سے بھی برے حالات ہوتے جو اب اس نا اہل حکومت کی کارستانوں کی بنا پر دیکھ رہے ہیں۔

    سی پیک اب بھی موجود ہے منصوبے ابھی بھی جاری ہے تو پھر یہ کاروبار پر ہووووو کا عالم کیوں ہے ؟کیوں آپ کی صاد امین گورنمنٹ اپنے ہی مقرر کردہ اہداف پورے نہیں کر سکی آتے ہی دو بجٹ بھی دے لیئے تھے کہ جانے والے “قومی مجرم”غلط بجٹ دے گئے تھے اپنے لیئے خود اہداف مقرر کرنے کے باوجود ناکامی کیوں ہوئی؟کیونکہ اس مسلط شدہ صادق و امین کو کوئی صادق اور امین ماننے کو تیار نہیں۔

    چونکہ بحث برائے بحث ہی یہاں کا طرہ امتیاز ہے اس لیئے آپ اپنے رنگ میں مست رہئے مجھے نا ختم ہونے والی بحثوں میں الجھنے سے الرجی ہوجاتی ہے :cwl: ۔

    • This reply was modified 1 month, 1 week ago by  Athar. Reason: املا درستگی۔
    #5
    shahidabassi
    Participant
    Online
    • Expert
    • Threads: 31
    • Posts: 6918
    • Total Posts: 6949
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    اپنی جگہ آپ درست کہہ رہے ہیں لیکن مجھے وہ وقت وہ حالت نہیں بھولتے جب پاکستانی مایوسیوں کی اتہا گہرائیوں میں گر چکے تھے کیا آپ کو نہیں معلوم کہ کوئٹہ میں قائد اعظم ریزی ڈینسی دھماکے سے اُڑا دی گئی تھی کیا آپ کو نہیں یاد کہ راولپنڈی جی ایچ کیومیں دھشت گرد حملہ ہوگیا تھا”جو کہ پاک افواج کا دل مانا جاتا ہے” کیا آپ کو نہیں یاد پاکستان کا 4ارب کا جاسوسی طیارہ تباہ کر دیا گیا تھا کیا آپ کو نہیں یاد کہ امریکی ایبٹ آباد میں دندناتے ہوئے آئے اور اپنا کام کر کے چلتے بنے اور ہمارے چوکیدار سوتے رہے؟ کیا آپ کو نہیں یاد کہ گوگل پر آئندہ دس سالوں کے پاکستانی نقشوں میں ردوبدل دکھایا جانے لگا تھا بھائی جی اس اتہا گہرائیوں کی مایوسیوں سے نکالنے کے لیے اگر معیشیت کی گرتی ہوئی ساکھ کو بچانے اور عوام میں ایک حوصلہ و ہمت پیدا کرنے کے لیئے اگر کچھ آرٹی فشل بھی کیا تھا تو ان کے زہنوں کو سلام جنہوں نے یہ کرنے کا حوصلہ کیا ورنہ اس سب صورتحال کو اپنے زہن میں رکھ کر سوچیں کہ اگر آنے والے یہی رونا شروع کر دیتے کہ ہم برباد ہوگئے ہم کچھ نہیں کر سکتے ڈالر کو اسی طرح بے لگام چھوڑ دیا جاتا کاروباری افراد پر مایوسی طاری رہنے دی جاتی تو اس سے بھی برے حالات ہوتے جو اب اس نا اہل حکومت کی کارستانوں کی بنا پر دیکھ رہے ہیں۔ سی پیک اب بھی موجود ہے منصوبے ابھی بھی جاری ہے تو پھر یہ کاروبار پر ہووووو کا عالم کیوں ہے ؟کیوں آپ کی صاد امین گورنمنٹ اپنے ہی مقرر کردہ اہداف پورے نہیں کر سکی آتے ہی دو بجٹ بھی دے لیئے تھے کہ جانے والے “قومی مجرم”غلط بجٹ دے گئے تھے اپنے لیئے خود اہداف مقرر کرنے کے باوجود ناکامی کیوں ہوئی؟کیونکہ اس مسلط شدہ صادق و امین کو کوئی صادق اور امین ماننے کو تیار نہیں۔ چونکہ بحث برائے بحث ہی یہاں کا طرہ امتیاز ہے اس لیئے آپ اپنے رنگ میں مست رہئے مجھے نا ختم ہونے والی بحثوں میں الجھنے سے الرجی ہوجاتی ہے :cwl: ۔

    میں آپ کی بات سمجھ رہا ہوں۔ کسی بھی شخص جسے معاشیات کا علم نہی وہ یہ سب کچھ کہنے میں حق بجانب ہے کہ اسے جب معلوم یا سمجھ ہی نہی کہہ ملک کو کس گڑھے میں پھینک دیا گیا تو اس نے یہی کہنا ہے۔ بحرحال نون اور نیازی کو ایک منٹ کے لئے بھول کر غیر جانبدار ہو کر یہ سوچیں کہ آپ کو وزیرِاعظم بنا دیا گیا ہے اور حالات یہ ہیں کہ آپ کو اگلے سات ماہ میں ۲۹ ارب ڈالر ادا کرنے ہیں، بلکہ اگلے ہر سال کرنے ہیں۔ جبکہ عالمی مالیاتی ادارے آٹھ ماہ تک آپ سے ناک رگڑوا کر بھی چھ ارب سے ایک پائی زیادہ دینے پر تیار نہی اور وہ بھی ڈالر اور شرع سود پر اپنی شرائط منوا کر تو کیا قوم کو مزید عیاشی آپ کوئی ڈالر چھاپنے والی مشین ایجاد کرکے کرائیں گے۔ اگر کوئی اور طریقہ آپ کے پاس ہوتا تو کیا ہوتا۔

    اور ہاں وہ اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ساری دہشت گردی ختم کرنے میں نواز شریف کا رول ہے تو پھر آپ سے بحث بھی بے مقصد ہی رہے گی۔

    • This reply was modified 1 month, 1 week ago by  shahidabassi.
    #6
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 317
    • Posts: 7171
    • Total Posts: 7488
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    میں آپ کی بات سمجھ رہا ہوں۔ کسی بھی شخص جسے معاشیات کا علم نہی وہ یہ سب کچھ کہنے میں حق بجانب ہے کہ اسے جب معلوم یا سمجھ ہی نہی کہہ ملک کو کس گڑھے میں پھینک دیا گیا تو اس نے یہی کہنا ہے۔ بحرحال نون اور نیازی کو ایک منٹ کے لئے بھول کر غیر جانبدار ہو کر یہ سوچیں کہ آپ کو وزیرِاعظم بنا دیا گیا ہے اور حالات یہ ہیں کہ آپ کو اگلے سات ماہ میں ۲۹ ارب ڈالر ادا کرنے ہیں، بلکہ اگلے ہر سال کرنے ہیں۔ جبکہ عالمی مالیاتی ادارے آٹھ ماہ تک آپ سے ناک رگڑوا کر بھی چھ ارب سے ایک پائی زیادہ دینے پر تیار نہی اور وہ بھی ڈالر اور شرع سود پر اپنی شرائط منوا کر تو کیا قوم کو مزید عیاشی آپ کوئی ڈالر چھاپنے والی مشین ایجاد کرکے کرائیں گے۔ اگر کوئی اور طریقہ آپ کے پاس ہوتا تو کیا ہوتا۔ اور ہاں وہ اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ساری دہشت گردی ختم کرنے میں نواز شریف کا رول ہے تو پھر آپ سے بحث بھی بے مقصد ہی رہے گی۔

    شاہد بھای

    اگر مجھے کوی طاقتور بندہ کہے کہ سات ماہ میں انتیس ارب ڈالر ادا کرنے کیلئے مزید قرضے مانگو تو میں ایسی تجویز پر لعنت بے شمار ڈالتے ہوے جو اس سارے کتی چیکے کے ذمہ دار ہیں انہیں کہوں گا کہ اب تیار ہوجاو ملک ڈیفالٹ ہونے والا ہے جس کے نتیجے میں تمہاری فرٹیلائزر فیکٹریاں، کاروں اور سیمنٹ کے کارخانے، زرعی زمینینں اور رئیل سٹیٹ بزنس بھی ڈاون ہوجائیں گے

    تمہارے اوپر یورپ و امریکہ کے ویزے بھی بند ہوجائیں گے، تمہارے بچے اب امریکہ میں نہیں پڑھیں گے، دفاعی سودوں میں اربوں کی کمیشن اب نہیں ہوسکے گی

    لیکن کیا عمران حکومت میں اتنی ہمت ہے کہ طاقتور حلقوں کو یہ آئینہ دکھا سکے جو ملک کو برباد کرنے کے اصل میں ذمہ دار ہیں؟

    جرنیل تو ایسا ہرگز نہیں چاہیں گے اور سول حکومت کو مجبور کرتے رہیں گے کہ بھیک مانگو جو حکومت کو مانگنی پڑے گی کیونکہ یہ بات تو ماننی پڑے گی کہ عمران کو لانے والے جرنیل ہی ہیں

    ہاں غریب تو پہلے بھی بھوکا تھا ڈیفالٹ ہونے سے اس کی قلی میں کوی فرق نہیں پڑنا

    • This reply was modified 1 month, 1 week ago by  Believer12.
    #7
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    محمد حفیظ بھائی یقین مانیں مجھے اس سارے گورکھ دھندے کا ککھ کچھ پتا نہیں چلا میں تو سادہ سا بندہ ہوں اور سادی کی ضرب تقسیم سے بات کو اس طرح سے سمجھ سکتا ہوں کہ ایک باپ کی پانچ اولادیں ہیں وہ گھسٹ گھسٹا کر دو تین آٹھویں دسویں تک پڑھا لیتا ہے ایک دو کسی کام میں لگ جاتے ہیں لیکن دسویں آٹھویں کے بچوں کو اعلیٰ تعلیم اور ہنر سیکھنے والوں کو اپنا کاروبار کر کے دینے کے لیے وہ فرد کسی سے 15سال کی مدت کے قرض لیتا ہے سات آٹھ سالوں تک وہ قرض کی رقم تھوڑی تھوڑی کر کے اُتارتا رہتا ہے لیکن جب بچے اعلیٰ تعلیم یافتہ ہوکر اچھی ملازمتیں کرنا شروع کر دیتے ہیں ہنر مند بچوں کے کاروبار سیٹ ہوجاتے ہیں تو بقیہ مدت کا قرضہ نہ صرف وہ سب مل کر آسانی سے ادا بھی کر دیتے ہیں بلکہ اپنے بہتر معاشی حالات کی بنا پر قرضہ کی مدت سے قبل قرضہ اُتار کر سود کی مزید رقم ادا کرنے سے بھی بچ جاتے ہیں ایسا ہی کچھ وہ “قومی مجرم”کر گئے تھے کہ قوم کے لیے سازگار ماحول اور بجلی گیس کی کمی ختم کر کے ہر فرد کو آزادانہ طور پر اپنی اپنی صلاحیتوں کے مطابق مناسب ماحول فراہم کر دیا تھا یہ قوم اتنی نکمی نہیں کہ وہ ایسے شاندار ماحول کے ملنے کے باوجود اپنے قرض نہ اُتار پاتی جس کا ثبوت اُس وقت کی سٹاک مارکیٹ دے رہی تھی اگر وہی تسلسل جاری رہتا تو اس وقت کاروبار کے اشارئے 6کے لگ بھگ پہنچ رہے ہوتے نہ ڈالر یک دم بے لگام ہوتا نہ پٹرول ڈیزل ہاتھوں سے اُڑتے۔ یہی کام اگر زردآری یا نیازی ملعون کر دیتے تو بھی میرا جیسا فرد یہی کہتا کہ اُنہوں نے اپنے تئیں بہترین کوشش کی کہ قوم کو کاروبار کے لیئے دہشت گردی اور انرجی کےمسائل سے نجات دے کر سازگار ماحول فراہم کر دیا اگرصرف 5سال کی مدت میں یہ کچھ کر دیا تو اگلے پانچ سال میں اس کے ثمرات پوری طرح حاصل ہونا شروع ہوجانے تھے لیکن افسوس یہ کام “صادق اور امین سے پہلے”قومی مجرم”کر کے سزا کے مستحق پائے۔ اتنی طویل تحریر میں املاکی غلطیوں کو نظر انداز کیا جائے۔شکریہ

    آپ پنجاب سے ہیں ، شریکے کو اچھی طرح جانتے ہیں ، کچھ شریکے اپنے دوسرے شریکوں کی ترقی سے خوفزدہ ہوگئے تھے اگر یہ زیادہ ترقی کرگیا تو ہمارا دست نگر نہیں رہے گا

    #8
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    اپنی جگہ آپ درست کہہ رہے ہیں لیکن مجھے وہ وقت وہ حالت نہیں بھولتے جب پاکستانی مایوسیوں کی اتہا گہرائیوں میں گر چکے تھے کیا آپ کو نہیں معلوم کہ کوئٹہ میں قائد اعظم ریزی ڈینسی دھماکے سے اُڑا دی گئی تھی کیا آپ کو نہیں یاد کہ راولپنڈی جی ایچ کیومیں دھشت گرد حملہ ہوگیا تھا”جو کہ پاک افواج کا دل مانا جاتا ہے” کیا آپ کو نہیں یاد پاکستان کا 4ارب کا جاسوسی طیارہ تباہ کر دیا گیا تھا کیا آپ کو نہیں یاد کہ امریکی ایبٹ آباد میں دندناتے ہوئے آئے اور اپنا کام کر کے چلتے بنے اور ہمارے چوکیدار سوتے رہے؟ کیا آپ کو نہیں یاد کہ گوگل پر آئندہ دس سالوں کے پاکستانی نقشوں میں ردوبدل دکھایا جانے لگا تھا بھائی جی اس اتہا گہرائیوں کی مایوسیوں سے نکالنے کے لیے اگر معیشیت کی گرتی ہوئی ساکھ کو بچانے اور عوام میں ایک حوصلہ و ہمت پیدا کرنے کے لیئے اگر کچھ آرٹی فشل بھی کیا تھا تو ان کے زہنوں کو سلام جنہوں نے یہ کرنے کا حوصلہ کیا ورنہ اس سب صورتحال کو اپنے زہن میں رکھ کر سوچیں کہ اگر آنے والے یہی رونا شروع کر دیتے کہ ہم برباد ہوگئے ہم کچھ نہیں کر سکتے ڈالر کو اسی طرح بے لگام چھوڑ دیا جاتا کاروباری افراد پر مایوسی طاری رہنے دی جاتی تو اس سے بھی برے حالات ہوتے جو اب اس نا اہل حکومت کی کارستانوں کی بنا پر دیکھ رہے ہیں۔ سی پیک اب بھی موجود ہے منصوبے ابھی بھی جاری ہے تو پھر یہ کاروبار پر ہووووو کا عالم کیوں ہے ؟کیوں آپ کی صاد امین گورنمنٹ اپنے ہی مقرر کردہ اہداف پورے نہیں کر سکی آتے ہی دو بجٹ بھی دے لیئے تھے کہ جانے والے “قومی مجرم”غلط بجٹ دے گئے تھے اپنے لیئے خود اہداف مقرر کرنے کے باوجود ناکامی کیوں ہوئی؟کیونکہ اس مسلط شدہ صادق و امین کو کوئی صادق اور امین ماننے کو تیار نہیں۔ چونکہ بحث برائے بحث ہی یہاں کا طرہ امتیاز ہے اس لیئے آپ اپنے رنگ میں مست رہئے مجھے نا ختم ہونے والی بحثوں میں الجھنے سے الرجی ہوجاتی ہے :cwl: ۔

    اگر کوئی شخص مررہا ہو اور وہ ادھار لے کر اپنا علاج کروائے تو کچھ سالوں بعد اسے طعنے دئے جائیں کہ تم نے قرضہ کیوں لیا؟؟

    :thinking:

    #9
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    میں آپ کی بات سمجھ رہا ہوں۔ کسی بھی شخص جسے معاشیات کا علم نہی وہ یہ سب کچھ کہنے میں حق بجانب ہے کہ اسے جب معلوم یا سمجھ ہی نہی کہہ ملک کو کس گڑھے میں پھینک دیا گیا تو اس نے یہی کہنا ہے۔ بحرحال نون اور نیازی کو ایک منٹ کے لئے بھول کر غیر جانبدار ہو کر یہ سوچیں کہ آپ کو وزیرِاعظم بنا دیا گیا ہے اور حالات یہ ہیں کہ آپ کو اگلے سات ماہ میں ۲۹ ارب ڈالر ادا کرنے ہیں، بلکہ اگلے ہر سال کرنے ہیں۔ جبکہ عالمی مالیاتی ادارے آٹھ ماہ تک آپ سے ناک رگڑوا کر بھی چھ ارب سے ایک پائی زیادہ دینے پر تیار نہی اور وہ بھی ڈالر اور شرع سود پر اپنی شرائط منوا کر تو کیا قوم کو مزید عیاشی آپ کوئی ڈالر چھاپنے والی مشین ایجاد کرکے کرائیں گے۔ اگر کوئی اور طریقہ آپ کے پاس ہوتا تو کیا ہوتا۔ اور ہاں وہ اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ساری دہشت گردی ختم کرنے میں نواز شریف کا رول ہے تو پھر آپ سے بحث بھی بے مقصد ہی رہے گی۔

    آپ نے صرف اگلے سال اور اس سال نو نو ارب ڈالر ادا کرنے تھے اس سے اگلے سالوں میں صرف چار سے ساڑھے چار ارب ڈالر ادا کرنے تھے

    #10
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    میں آپ کی بات سمجھ رہا ہوں۔ کسی بھی شخص جسے معاشیات کا علم نہی وہ یہ سب کچھ کہنے میں حق بجانب ہے کہ اسے جب معلوم یا سمجھ ہی نہی کہہ ملک کو کس گڑھے میں پھینک دیا گیا تو اس نے یہی کہنا ہے۔ بحرحال نون اور نیازی کو ایک منٹ کے لئے بھول کر غیر جانبدار ہو کر یہ سوچیں کہ آپ کو وزیرِاعظم بنا دیا گیا ہے اور حالات یہ ہیں کہ آپ کو اگلے سات ماہ میں ۲۹ ارب ڈالر ادا کرنے ہیں، بلکہ اگلے ہر سال کرنے ہیں۔ جبکہ عالمی مالیاتی ادارے آٹھ ماہ تک آپ سے ناک رگڑوا کر بھی چھ ارب سے ایک پائی زیادہ دینے پر تیار نہی اور وہ بھی ڈالر اور شرع سود پر اپنی شرائط منوا کر تو کیا قوم کو مزید عیاشی آپ کوئی ڈالر چھاپنے والی مشین ایجاد کرکے کرائیں گے۔ اگر کوئی اور طریقہ آپ کے پاس ہوتا تو کیا ہوتا۔ اور ہاں وہ اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ساری دہشت گردی ختم کرنے میں نواز شریف کا رول ہے تو پھر آپ سے بحث بھی بے مقصد ہی رہے گی۔

    دہشت گردی ختم کرنے میں نواز شریف کا کردار نہ سہی اس کے مانگے ہوۓ قرضے اور اکٹھے کئے ہوۓ ٹیکس کا ضرور ہے

    #11
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    شاہد بھای اگر مجھے کوی طاقتور بندہ کہے کہ سات ماہ میں انتیس ارب ڈالر ادا کرنے کیلئے مزید قرضے مانگو تو میں ایسی تجویز پر لعنت بے شمار ڈالتے ہوے جو اس سارے کتی چیکے کے ذمہ دار ہیں انہیں کہوں گا کہ اب تیار ہوجاو ملک ڈیفالٹ ہونے والا ہے جس کے نتیجے میں تمہاری فرٹیلائزر فیکٹریاں، کاروں اور سیمنٹ کے کارخانے، زرعی زمینینں اور رئیل سٹیٹ بزنس بھی ڈاون ہوجائیں گے تمہارے اوپر یورپ و امریکہ کے ویزے بھی بند ہوجائیں گے، تمہارے بچے اب امریکہ میں نہیں پڑھیں گے، دفاعی سودوں میں اربوں کی کمیشن اب نہیں ہوسکے گی لیکن کیا عمران حکومت میں اتنی ہمت ہے کہ طاقتور حلقوں کو یہ آئینہ دکھا سکے جو ملک کو برباد کرنے کے اصل میں ذمہ دار ہیں؟ جرنیل تو ایسا ہرگز نہیں چاہیں گے اور سول حکومت کو مجبور کرتے رہیں گے کہ بھیک مانگو جو حکومت کو مانگنی پڑے گی کیونکہ یہ بات تو ماننی پڑے گی کہ عمران کو لانے والے جرنیل ہی ہیں ہاں غریب تو پہلے بھی بھوکا تھا ڈیفالٹ ہونے سے اس کی قلی میں کوی فرق نہیں پڑنا

    فرٹیلائزر فیکٹریاں، کاروں اور سیمنٹ کے کارخانے، زرعی زمینینں اور رئیل سٹیٹ بزنس والوں کے پہلے سے ہی غیر ملکی شہریت ہے انہوں نے کہنا بھاڑ میں جاؤ اور اپنا بوریا بسترا اٹھا کے ان ملکوں میں چلے جانا ہے

    #12
    Jibran PTI
    Participant
    Offline
    • Member
    • Threads: 1
    • Posts: 96
    • Total Posts: 97
    • Join Date:
      17 Apr, 2018

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    فرٹیلائزر فیکٹریاں، کاروں اور سیمنٹ کے کارخانے، زرعی زمینینں اور رئیل سٹیٹ بزنس والوں کے پہلے سے ہی غیر ملکی شہریت ہے انہوں نے کہنا بھاڑ میں جاؤ اور اپنا بوریا بسترا اٹھا کے ان ملکوں میں چلے جانا ہے

    Ro patwari ro. You people are scarred of accountability.

    #13
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    Ro patwari ro. You people are scarred of accountability.

    #14
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 317
    • Posts: 7171
    • Total Posts: 7488
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    ایک گندی مچھلی سارے تالاب کو گندہ کردیتی ہے اسی طرح ایک جاہل لیڈر ساری قوم کے اخلاق تباہ کردیتا ہے، کوی چاہے ورلڈ کپ جیت لاے یا سراج الحق کی طرح ڈینگی ٹوپی سر پر رکھ لے اندر سے تو وہی رہے گا ،،نرا جاہل

    #15
    shahidabassi
    Participant
    Online
    • Expert
    • Threads: 31
    • Posts: 6918
    • Total Posts: 6949
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    اگر کوئی شخص مررہا ہو اور وہ ادھار لے کر اپنا علاج کروائے تو کچھ سالوں بعد اسے طعنے دئے جائیں کہ تم نے قرضہ کیوں لیا؟؟ :thinking:

    یہاں کون مر رہا تھا ؟ نواز شریف یا شہباز شریف یا ان کے بچے اکاؤنٹس میں پیسے کم ہونے کی وجہ سے۔

    :lol: :lol:

    #16
    shahidabassi
    Participant
    Online
    • Expert
    • Threads: 31
    • Posts: 6918
    • Total Posts: 6949
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    شاہد بھای اگر مجھے کوی طاقتور بندہ کہے کہ سات ماہ میں انتیس ارب ڈالر ادا کرنے کیلئے مزید قرضے مانگو تو میں ایسی تجویز پر لعنت بے شمار ڈالتے ہوے جو اس سارے کتی چیکے کے ذمہ دار ہیں انہیں کہوں گا کہ اب تیار ہوجاو ملک ڈیفالٹ ہونے والا ہے جس کے نتیجے میں تمہاری فرٹیلائزر فیکٹریاں، کاروں اور سیمنٹ کے کارخانے، زرعی زمینینں اور رئیل سٹیٹ بزنس بھی ڈاون ہوجائیں گے تمہارے اوپر یورپ و امریکہ کے ویزے بھی بند ہوجائیں گے، تمہارے بچے اب امریکہ میں نہیں پڑھیں گے، دفاعی سودوں میں اربوں کی کمیشن اب نہیں ہوسکے گی لیکن کیا عمران حکومت میں اتنی ہمت ہے کہ طاقتور حلقوں کو یہ آئینہ دکھا سکے جو ملک کو برباد کرنے کے اصل میں ذمہ دار ہیں؟ جرنیل تو ایسا ہرگز نہیں چاہیں گے اور سول حکومت کو مجبور کرتے رہیں گے کہ بھیک مانگو جو حکومت کو مانگنی پڑے گی کیونکہ یہ بات تو ماننی پڑے گی کہ عمران کو لانے والے جرنیل ہی ہیں ہاں غریب تو پہلے بھی بھوکا تھا ڈیفالٹ ہونے سے اس کی قلی میں کوی فرق نہیں پڑنا

    یہ تو امام دین والا حل نکالا ہے۔ تو کیا آپ کے یہ تماشہ کرنے سے ۲۹ ارب ڈالر مل جائیں گے۔ یاد رکھیں ڈالرز کی بات ہو رہی ہے روپوں کی نہی۔ ویسے آپ کا اس مسئلے پر جواب پہلے بھی آچکا ہے کہ ہمیں ڈیفالٹ کر جانا چاہیئے تھا۔ یعنی وہی حل جو مولانا خادم رضوی نے بتایا تھا جب کہہ رہا تھا:۔ میں امریکیاں نوں کہواں گا کتیو جدھوں ہوون گے اس وقت دیواں گے تے سود اسی نہی اوں دیونا۔
    ڈیفالٹ کا مطلب تو آپ جانتے ہی ہونگے۔ بوریوں میں بھر کر روپئیے لاؤ گے ایک بریڈ خریدنے کے لئے۔
    اور ہاں یہ ۲۹ ارب ڈالر ہر سال چاہئیں صرف پہلے سال نہی۔ اور وہ بھی اس صورت کہ امپورٹس میں سالانہ بڑھوتی جو کہ ن لیگ کے دور میں ۲۷ فیصد تھی اسے اسی موجودہ لیول پر روک دیا جائے۔ ورنہ تو بات سالانہ ۵۶ ارب ڈالر تک بھی پہنچتی۔
    عجیب بات ہے کہ اپنی شرفا کے لئے محبت میں لوگ حالات کو سمجھ کر بھی عجیب عجیب تاویلیں دیتے ہیں لیکن یہ ماننے کے لئے تیار نہی کہ ملک کو کہاں پہنچا دیا گیا ہے۔

    • This reply was modified 1 month, 1 week ago by  shahidabassi.
    #17
    EasyGo
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 4
    • Posts: 837
    • Total Posts: 841
    • Join Date:
      5 Nov, 2016
    • Location: -

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    کب تک بیچو گےاس کو

    آخر دام گر جائیں گے

    #18
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 398
    • Posts: 2863
    • Total Posts: 3261
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    یہاں کون مر رہا تھا ؟ نواز شریف یا شہباز شریف یا ان کے بچے اکاؤنٹس میں پیسے کم ہونے کی وجہ سے۔ :lol: :lol:

    دہشتگردی سے ستر ہزار بندے مر گئے تھے سو ارب ڈالر کا نقصان ہوا تھا ، توانائی بحران کی وجہ سے آدھی انڈسٹری بنگلہ دیش منتقل ہو گئی تھی اور کسے زندگی موت کا مسئلہ کہتے ہیں آپ؟؟

    #19
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 317
    • Posts: 7171
    • Total Posts: 7488
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    یہ تو امام دین والا حل نکالا ہے۔ تو کیا آپ کے یہ تماشہ کرنے سے ۲۹ ارب ڈالر مل جائیں گے۔ یاد رکھیں ڈالرز کی بات ہو رہی ہے روپوں کی نہی۔ ویسے آپ کا اس مسئلے پر جواب پہلے بھی آچکا ہے کہ ہمیں ڈیفالٹ کر جانا چاہیئے تھا۔ یعنی وہی حل جو مولانا خادم رضوی نے بتایا تھا جب کہہ رہا تھا:۔ میں امریکیاں نوں کہواں گا کتیو جدھوں ہوون گے اس وقت دیواں گے تے سود اسی نہی اوں دیونا۔ ڈیفالٹ کا مطلب تو آپ جانتے ہی ہونگے۔ بوریوں میں بھر کر روپئیے لاؤ گے ایک بریڈ خریدنے کے لئے۔ اور ہاں یہ ۲۹ ارب ڈالر ہر سال چاہئیں صرف پہلے سال نہی۔ اور وہ بھی اس صورت کہ امپورٹس میں سالانہ بڑھوتی جو کہ ن لیگ کے دور میں ۲۷ فیصد تھی اسے اسی موجودہ لیول پر روک دیا جائے۔ ورنہ تو بات سالانہ ۵۶ ارب ڈالر تک بھی پہنچتی۔ عجیب بات ہے کہ اپنی شرفا کے لئے محبت میں لوگ حالات کو سمجھ کر بھی عجیب عجیب تاویلیں دیتے ہیں لیکن یہ ماننے کے لئے تیار نہی کہ ملک کو کہاں پہنچا دیا گیا ہے۔

    شاہد بھای، یہی امام دین والی بات کہ دو سو ارب ڈآلر واپس آ جائیں گے جب عمران کرتا تھا حتی کہ مشیر صندوقچی اسد عمر بھی دندیاں نکال کر تائیدی انداز میں اپنا تھوبڑا ہلاتا تھا تب تو آپ نے کبھی بھی انجواے نہیں کیا تھا؟

    ڈیفالٹ نہیں ہونا تو ڈالر کو باندھ کررکھتے چاہے مصنوی ہی سہی کیونکہ دنیا کے جو حالات ہورہے ہیں ڈالر بھی گرنے والا ہے جس کے بعد پھر موجاں ہی موجاں

    :bigthumb:

    #20
    shahidabassi
    Participant
    Online
    • Expert
    • Threads: 31
    • Posts: 6918
    • Total Posts: 6949
    • Join Date:
      5 Apr, 2017

    Re: عمران خان کا قومی قرضے پر کمیشن کا اعلان: نواز اور زرداری حکومتوں نے کتنا قرضہ ل

    شاہد بھای، یہی امام دین والی بات کہ دو سو ارب ڈآلر واپس آ جائیں گے جب عمران کرتا تھا حتی کہ مشیر صندوقچی اسد عمر بھی دندیاں نکال کر تائیدی انداز میں اپنا تھوبڑا ہلاتا تھا تب تو آپ نے کبھی بھی انجواے نہیں کیا تھا؟ ڈیفالٹ نہیں ہونا تو ڈالر کو باندھ کررکھتے چاہے مصنوی ہی سہی کیونکہ دنیا کے جو حالات ہورہے ہیں ڈالر بھی گرنے والا ہے جس کے بعد پھر موجاں ہی موجاں :bigthumb:

    بلیور بھائی، ڈالر کوئی کٹًا تو نہیں جِسے باندھ دیا جاتا۔ ہاں اس بات پر انہیں ضرور پشیمانی ہوگی کہ ڈالر نہی تو کم از کم ڈار کو ہی باندھ لیتے اور بھاگنے نہ دیتے۔

    :bigsmile:

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 24 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation