Thread: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

Home Forums Siasi Discussion شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

This topic contains 14 replies, has 6 voices, and was last updated by  Awan 3 months, 1 week ago. This post has been viewed 316 times

Viewing 15 posts - 1 through 15 (of 15 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Muhammad Hafeez
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 494
    • Posts: 3413
    • Total Posts: 3907
    • Join Date:
      13 Oct, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    خبر کے مطابق شہباز شریف نواز شریف سے مولانا فضل الرحمٰن کے مارچ کے حوالے سے تبادلہ خیال کرنے جا رہے ہیں جبکہ پنجاب حکومت صرف جمعرات کو ہی اہل خانہ اور رشتہ داروں سے ملاقات کی اجازت دیتی ہے ، یہ بات تعجب خیز ہے کہ سوموار کو بھی ملاقات کی اجازت مل گئی جبکہ نون لیگ حکومت مخالف تحریک کیلئے مولانا کو اپنے تعاون کی یقین دہانی کراچکی ہے ، کیا یہ ملاقات بزدار یا نیازی کے علم میں ہے یا انتظامیہ کو کہیں اور سے ہدایت ملی ہے؟؟

    یہ ایک دلچسپ صورتحال ہے

    Guidelines on agitation: Nawaz for ‘sticking to Constitution’ if fresh poll announced

    https://www.dawn.com/news/1510784

    #2
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    Shahbaz Sharif has signature on the most projects last ten years. Why he is not behind bars; simple answer that military establishment plus NAB behind him to protect. Shahbaz don’t want a single step without the direction of establishment but tries to take his brother on board but sometimes it become hard.

    #3
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 698
    • Posts: 7766
    • Total Posts: 8464
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    آپ کے کہنے کا مطلب ہے کے چھوٹے شریف صاحب وہ فرقہ باجوین پر ایمان رکھتے ہیں ، اور اس وجہ سے ان سے کوئی باز پرس نہی کی جاوے گی ؟

    Shahbaz Sharif has signature on the most projects last ten years. Why he is not behind bars; simple answer that military establishment plus NAB behind him to protect. Shahbaz don’t want a single step without the direction of establishment but tries to take his brother on board but sometimes it become hard.
    #4
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    آپ کے کہنے کا مطلب ہے کے چھوٹے شریف صاحب وہ فرقہ باجوین پر ایمان رکھتے ہیں ، اور اس وجہ سے ان سے کوئی باز پرس نہی کی جاوے گی ؟

    میاں نواز شریف اپنی وزارتِ عظمیٰ کے دوران جب برطانیہ میں ہارٹ سرجری کے لیے گئے ہوئے تھے تو ایک موقع پر شہباز شریف اور چوہدری نثار علی خان اُن سے ایمرجنسی ملاقات کے لیے پہنچے۔ ذرائع کے مطابق موضوعِ بحث اُس وقت کے آرمی چیف جنرل راحیل شریف تھے۔

    شہباز شریف اور چوہدری نثار علی خان وزیراعظم سے درخواست کر رہے تھے کہ جنرل راحیل شریف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کر دیں ورنہ مارشل لا کا خطرہ ہے۔ شہباز اور نثار واقعی پریشان تھے لیکن نواز شریف جو اپنی ہارٹ سرجری کے بعد آرام کر رہے تھے، نے اُنہیں صاف صاف کہہ دیا کہ وہ کسی صورت ایکسٹینشن نہیں دیں گے۔ ذرائع کے مطابق جب نواز شریف سے اس خوف کا اظہار کیا گیا کہ پھر مارشل لا بھی لگ سکتا ہے تو اُنہوں نے دونوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کچھ بھی ہو، میں ایکسٹینشن نہیں دوں گا۔

    جب دوسری طرف سے دوبارہ اصرار ہوا تو میاں صاحب نے کہا کہ اگر ایسا ہے تو آپ دونوں میں سے کوئی وزیراعظم بن جائے، میں تو ایسا نہیں کر سکتا۔

    https://jang.com.pk/news/689273-ansar-abbasi-column-14-10-2019

    #5
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    اعوان بھائی کی شہباز سے الفت اپنی جگہ مگر عوام میں قبولیت صرف نواز کی ہے
    شہباز اور شہباز سے کہیں قابل پروجیکٹ مینجر آپ ماہانہ تنخواہ پر بھرتی کرسکتے ہیں مگر ووٹ لینے کا موقع آے گا تو انکے گھر والے بھی انکو ووٹ نہ دیں.
    آج شہباز جو بھی ہے نواز شریف کے بھائی ہونے کی وجہ سے ہے چونکہ عوام میں اسکے بیٹے اور اسکی قبولیت نہیں ہے تو وہ طاقت کے دوام کے لئے بوٹوں کی طرف دیکھتا ہے . شہباز کی کویی سیاسی میراث نہیں ہے

    Awan

    #6
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 343
    • Posts: 7773
    • Total Posts: 8116
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    شہباز کا کام کرنے کا ایک طریقہ ہے جو اس نے نوازشریف سے ہی سیکھا تھا  اقتدار آنے کے بعد چونکہ نوازشریف  بزی ہوگیا لہذا شہباز نے اس طریق پر کام کروا کر کافی نام کما لیا تھا

    اب آتے ہیں اس طریقے کی طرف۔ اس طریقے کے مطابق اگر کسی سڑک کیلئے ایک کروڑ دیا جاتا ہے تو کنٹریکٹر کیلئے ضروری ہے کہ وہ آدھا کھاے اور آدھا لگاے ہاں آدھے سے زیادہ ایک دھیلا بھی لینے کی کوشش کرے گا تو جیل میں سڑ رہا ہوگا اور بلیک لسٹ کردیا جاے گا

    پنجاب میں جو ترقیاتی کام ہوے ہیں وہ آدھے بجٹ کے ساتھ ھوتے رہے پھر بھی باقی صوبوں سے دس گنا زیادہ کام ہوا آدھا بجٹ اسٹیبلشمینٹ اور کنٹریکٹر کے اکاونٹس میں جاتا تھا

    #7
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    میاں نواز شریف اپنی وزارتِ عظمیٰ کے دوران جب برطانیہ میں ہارٹ سرجری کے لیے گئے ہوئے تھے تو ایک موقع پر شہباز شریف اور چوہدری نثار علی خان اُن سے ایمرجنسی ملاقات کے لیے پہنچے۔ ذرائع کے مطابق موضوعِ بحث اُس وقت کے آرمی چیف جنرل راحیل شریف تھے۔ شہباز شریف اور چوہدری نثار علی خان وزیراعظم سے درخواست کر رہے تھے کہ جنرل راحیل شریف کی مدتِ ملازمت میں توسیع کر دیں ورنہ مارشل لا کا خطرہ ہے۔ شہباز اور نثار واقعی پریشان تھے لیکن نواز شریف جو اپنی ہارٹ سرجری کے بعد آرام کر رہے تھے، نے اُنہیں صاف صاف کہہ دیا کہ وہ کسی صورت ایکسٹینشن نہیں دیں گے۔ ذرائع کے مطابق جب نواز شریف سے اس خوف کا اظہار کیا گیا کہ پھر مارشل لا بھی لگ سکتا ہے تو اُنہوں نے دونوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کچھ بھی ہو، میں ایکسٹینشن نہیں دوں گا۔ جب دوسری طرف سے دوبارہ اصرار ہوا تو میاں صاحب نے کہا کہ اگر ایسا ہے تو آپ دونوں میں سے کوئی وزیراعظم بن جائے، میں تو ایسا نہیں کر سکتا۔ https://jang.com.pk/news/689273-ansar-abbasi-column-14-10-2019

    باوا بھائی یاد کریں نواز کی ناہلی کے بحد میں نے راحیل شریف کے لئے توصح کو ٹرننگ پائنٹ قرار دیا تھا راحیل شریف اپنی وردی پر داغ نہیں لگنے دینا چاہتا تھا اس لئے ایجنسیوں کی بدمحاشی کے باوجود نواز کو نااہل نہ ہونے دیتا اور میاں صاحب نہ اہل نہ ہوتے- نواز کے لئے یہ فیصلہ اتنا ہی مشکل تھا جتنا خان کے لئے آسان تھا – اس کے بحد بھی شہباز کے لئے کوئی گنجائش نکل سکتی تھا مگر میاں صاحب نے زبردست ری ایکشن دیا اور فوج کے لئے خان کے سوا کوئی چوئیس نہ چھوڑی – چلو اس بہانے دوستوں کا تبدیلی کا کیڑا تو مرا – باقی دو پارٹی سسٹم تو رہنا ہے ایک ہی پارٹی کا مسلسل راج ہمارے جمہوری نظام میں مشکل ہے گو انڈیا اور بنگلہ دیش کی مثال بھی اب موجود ہے –

    • This reply was modified 3 months, 2 weeks ago by  Awan.
    #8
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    اعوان بھائی کی شہباز سے الفت اپنی جگہ مگر عوام میں قبولیت صرف نواز کی ہے شہباز اور شہباز سے کہیں قابل پروجیکٹ مینجر آپ ماہانہ تنخواہ پر بھرتی کرسکتے ہیں مگر ووٹ لینے کا موقع آے گا تو انکے گھر والے بھی انکو ووٹ نہ دیں. آج شہباز جو بھی ہے نواز شریف کے بھائی ہونے کی وجہ سے ہے چونکہ عوام میں اسکے بیٹے اور اسکی قبولیت نہیں ہے تو وہ طاقت کے دوام کے لئے بوٹوں کی طرف دیکھتا ہے . شہباز کی کویی سیاسی میراث نہیں ہے Awan

    گھوسٹ بھائی نون لیگ آج بھی تقسیم نہیں ہے اس لئے اس امکان کو رد نہیں کر سکتے کہ نون کے اگلا الیکشن جیتنے پر جو نواز کا ووٹ ہو گا اس کی وجہ سے شہباز شریف ہی وزیر اعظم بنے – نون کے پاس بھی کوئی چوئیس نہیں ہے – مریم کو نہ اسٹبلشمنٹ نے وزیر اعظم بننے دینا ہے اور نہ پارٹی کی اکثریت حامی ہے پارٹی کے زیادہ جیتے گھوڑے شہباز ہی کے حق میں ہیں – جتنے کیس شہباز پر ہیں اور جتنے منصوبے اس کے سائن پر بنے اس کو جیل ڈالنا سب سے آسان تھا – ایسا لگتا ہے نواز اور مریم کا جیسے تیسے راستہ روک کر شہباز ہی آگے لایا جائے گا مشرف سے لے کر آج تک اسٹیبلشمنٹ کے لئے یہی قابل قبول تھا – بات محض پروجیکٹ مینیجر کی نہیں ہے تین بار سب سے بڑے صوبے کا وزیر اھلی رہ کر کر اور تین بار کے وزیر اعظم نواز کے بہت قریب رہ کر وہ نظام کو اندر سے سمجھتا ہے – وزیر اعظم بن کر وہ پروجیکٹ مینیجر تو پھر بھی نہیں بن سکے گا البتہ ایک ھوبی کے طور پر جاری رکھے گا –

    Atif

    Bawa

    shami11

    • This reply was modified 3 months, 2 weeks ago by  Awan.
    #9
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    گھوسٹ بھائی نون لیگ آج بھی تقسیم نہیں ہے اس لئے اس امکان کو رد نہیں کر سکتے کہ نون کے اگلا الیکشن جیتنے پر جو نواز کا ووٹ ہو گا اس کی وجہ سے شہباز شریف ہی وزیر اعظم بنے – نون کے پاس بھی کوئی چوئیس نہیں ہے – مریم کو نہ اسٹبلشمنٹ نے وزیر اعظم بننے دینا ہے اور نہ پارٹی کی اکثریت حامی ہے پارٹی کے زیادہ جیتے گھوڑے شہباز ہی کے حق میں ہیں – جتنے کیس شہباز پر ہیں اور جتنے منصوبے اس کے سائن پر بنے اس کو جیل ڈالنا سب سے آسان تھا – ایسا لگتا ہے نواز اور مریم کا جیسے تیسے راستہ روک کر شہباز ہی آگے لایا جائے گا مشرف سے لے کر آج تک اسٹیبلشمنٹ کے لئے یہی قابل قبول تھا – بات محض پروجیکٹ مینیجر کی نہیں ہے تین بار سب سے بڑے صوبے کا وزیر اھلی رہ کر کر اور تین بار کے وزیر اعظم نواز کے بہت قریب رہ کر وہ نظام کو اندر سے سمجھتا ہے – وزیر اعظم بن کر وہ پروجیکٹ مینیجر تو پھر بھی نہیں بن سکے گا البتہ ایک ھوبی کے طور پر جاری رکھے گا – Atif Bawa shami11

    میرے خیال میں مسلم لیگ نوں کے پاس شاہد خاقان عباسی شہباز شریف سے بہت بہتر چوائس ہے

    شہباز شریف کی طرح نہ اس کی فیملی ملک چھوڑ کر بھاگی ہے اور نہ ہی اس کے دامن پر کرپشن کا کوئی داغ ہے. وہ ایک جرنیل کا بیٹا ہونے کے باوجود شہباز شریف کی طرح فوجیوں کا بوٹ چاٹیا نہیں ہے. سب سے بڑھکر وہ شہباز شریف کی طرح کنفیوزن کا شکار ہونے کی بجائے ڈٹ کر نواز شریف کے ساتھ کھڑا اور کھل کر کہتا ہے کہ نواز شریف کو فوج کے آگے نہ جھکنے کی سزا دی جا رہی ہے

    شہباز شریف کے ساتھ ساتھ خواجہ آصف اور احسن اقبال بھی مسلم لیگ نون کے بوٹ چاٹ گروپ میں شامل ہو چکے

    #10
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    باوا بھائی یاد کریں نواز کی ناہلی کے بحد میں نے راحیل شریف کے لئے توصح کو ٹرننگ پائنٹ قرار دیا تھا راحیل شریف اپنی وردی پر داغ نہیں لگنے دینا چاہتا تھا اس لئے ایجنسیوں کی بدمحاشی کے باوجود نواز کو نااہل نہ ہونے دیتا اور میاں صاحب نہ اہل نہ ہوتے- نواز کے لئے یہ فیصلہ اتنا ہی مشکل تھا جتنا خان کے لئے آسان تھا – اس کے بحد بھی شہباز کے لئے کوئی گنجائش نکل سکتی تھا مگر میاں صاحب نے زبردست ری ایکشن دیا اور فوج کے لئے خان کے سوا کوئی چوئیس نہ چھوڑی – چلو اس بہانے دوستوں کا تبدیلی کا کیڑا تو مرا – باقی دو پارٹی سسٹم تو رہنا ہے ایک ہی پارٹی کا مسلسل راج ہمارے جمہوری نظام میں مشکل ہے گو انڈیا اور بنگلہ دیش کی مثال بھی اب موجود ہے –

    اعوان بھائی

    آپ فوجیوں کی وردی پر کس داغ کی بات کر رہے ہیں؟

    ان کی وردی پر تو اتنے داغ لگے ہوئے ہیں کہ اب مزید داغوں کی گنجائش نہیں ہے

    یہ جرنیل ملک اور قوم کے نام پر سب سے بڑا داغ ہیں. آج ملک جس حالت میں ہیں وہ جرنیلوں کے کالے کرتوتوں کی وجہ سے ہی ہے

    یہ جرنیل وردی پہننے سے لیکر قبر میں جانے تک عوام کا خون چوستے ہیں. انکی تنخواہیں دیکھیں، انکی مراعات دیکھیں، انکی ریٹائرمنٹ پر انہیں ملنی والی زمین اور پلاٹس دیکھیں اور ریٹائرمنٹ کے بعد انہیں ملنے والے پر تعیش عہدے دیکھیں. ایک فوجی جب بریگیڈیئر اور اس سے اوپر والے عہدے پر پہنچتا ہے تو وہ اتنا کچھ لے کر گھر جاتا ہے جس پر اس کی آنے والی سات نسلیں عیاشی کی زندگی گزار سکتی ہیں لیکن پھر بھی ان جرنیلوں نے سیاست دانوں پر کرپٹ کرپٹ کہہ کر بھونکنا وطیرہ بنا رکھا ہے تاکہ عوام کا دھیان ان کی لوٹ مار کی طرف نہ جا سکے

    #11
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    اعوان بھائی آپ فوجیوں کی وردی پر کس داغ کی بات کر رہے ہیں؟ ان کی وردی پر تو اتنے داغ لگے ہوئے ہیں کہ اب مزید داغوں کی گنجائش نہیں ہے یہ جرنیل ملک اور قوم کے نام پر سب سے بڑا داغ ہیں. آج ملک جس حالت میں ہیں وہ جرنیلوں کے کالے کرتوتوں کی وجہ سے ہی ہے یہ جرنیل وردی پہننے سے لیکر قبر میں جانے تک عوام کا خون چوستے ہیں. انکی تنخواہیں دیکھیں، انکی مراعات دیکھیں، انکی ریٹائرمنٹ پر انہیں ملنی والی زمین اور پلاٹس دیکھیں اور ریٹائرمنٹ کے بعد انہیں ملنے والے پر تعیش عہدے دیکھیں. ایک فوجی جب بریگیڈیئر اور اس سے اوپر والے عہدے پر پہنچتا ہے تو وہ اتنا کچھ لے کر گھر جاتا ہے جس پر اس کی آنے والی سات نسلیں عیاشی کی زندگی گزار سکتی ہیں لیکن پھر بھی ان جرنیلوں نے سیاست دانوں پر کرپٹ کرپٹ کہہ کر بھونکنا وطیرہ بنا رکھا ہے تاکہ عوام کا دھیان ان کی لوٹ مار کی طرف نہ جا سکے

    باوا بھائی مشرف کے عبرتناک انجام سے سبق سیکھنا ہو یا وردی پر داغ نہ لگنے دینا ہو یا مارشل لاء یا موجودہ طرز حکومت میں مذاق اڑوانے کا ڈر ہو جو بھی وجہ تھی مگر اس نے نواز حکومت حکومت ختم کرنے اور نواز کو نہ اہل کرنے سے انکار کیا ورنہ سارا فوجی تناؤ اسی کے دور میں ہوا اور اس کے جاتے ہے جیسے رکاوٹ دور ہ گئی ڈیم ٹوٹ گیا – حکومت کے خلاف سازشیں شروع ، ججوں کو کنٹرول کر کے من مانے فیصلے ، ٹی وی کنٹرول کرکے کرپشن کرپشن کا راگ – یہ سب باجوہ کے آتے ہی شروع ہوا ورنہ ایک آدھ سال تو لگتا باجوہ کو پر پرزے نکالنے میں –

    راحیل شریف رہتا تو بچت ہو جاتی اور اس سے پہلے کہ مزید کوئی بڑی سازش بنتی نواز حلف لے چکا ہوتا –

    • This reply was modified 3 months, 2 weeks ago by  Awan.
    #12
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    باوا بھائی مشرف کے عبرتناک انجام سے سبق سیکھنا ہو یا وردی پر داغ نہ لگنے دینا ہو یا مارشل لاء یا موجودہ طرز حکومت میں مذاق اڑوانے کا ڈر ہو جو بھی وجہ تھی مگر اس نے نواز حکومت حکومت ختم کرنے اور نواز کو نہ اہل کرنے سے انکار کیا ورنہ سارا فوجی تناؤ اسی کے دور میں ہوا اور اس کے جاتے ہے جیسے رکاوٹ دور ہ گئی ڈیم ٹوٹ گیا – حکومت کے خلاف سازشیں شروع ، ججوں کو کنٹرول کر کے من مانے فیصلے ، ٹی وی کنٹرول کرکے کرپشن کرپشن کا راگ – یہ سب باجوہ کے آتے ہی شروع ہوا ورنہ ایک آدھ سال تو لگتا باجوہ کو پر پرزے نکالنے میں – راحیل شریف رہتا تو بچت ہو جاتی اور اس سے پہلے کہ مزید کوئی بڑی سازش بنتی نواز حلف لے چکا ہوتا –

    اعوان بھائی

    فوج کے فیصلے آرمی چیف نہیں کرتا ہے بلکہ فوج کی کوڑھ کمانڈر کمیٹی کرتی ہے. جنرل راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے نواز شریف کو اخلاقی اور آئینی برتری حاصل تھی اور پارلیمنٹ اس کے ساتھ کھڑی تھی. یہی وجہ تھی کہ جنرل راحیل شریف اور کوڑھ کمانڈر نواز شریف کے خلاف کوئی ظاہری اور عملی قدم اٹھانے سے گریزاں تھے. پاناما ڈاکومنٹس اگرچہ جنرل راحیل شریف کے آخری مہینوں میں سامنے آ چکے تھے لیکن ان میں نواز شریف کا براہ راست نام نہیں تھا اس لیے جنرل راحیل شریف اور فوج نواز شریف کو حکومت سے نکالنے سے اس وقت تک معزور تھے جب تک وہ جوڈیشری سے نواز شریف کے خلاف فیصلہ نہیں لے لیتے تھے. اسی دوران جنرل راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ کا وقت آ گیا اور اس کی جگہ جنرل باجوہ نے لے لی. جنرل راحیل شریف کو بھی ایکسٹینشن مل جاتی تو اس نے بھی وہی کرنا تھا جو بعد میں جنرل باجوہ نے کیا ہے. فوج کی پلاننگ میں کسی آرمی چیف کے آنے جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے. آخر فوج نے جوڈیشری کو استعمال کرکے نہ صرف نواز شریف کے خلاف فیصلہ لے لیا بلکہ اسے حکومت سے بھی نکلوا دیا. فوج نے یہ بہت سمارٹ موو چلی تھی. اس طرح فوج نے نواز شریف کو جوڈیشری کے ذریعے نا اہل کروا کر ایک منتخب وزیر اعظم کو براہ راست حکومت سے نکالنے کی وجہ سے اپنے منہ پر لگنے والی کالک سے خود کو بچا لیا

    #13
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    اعوان بھائی فوج کے فیصلے آرمی چیف نہیں کرتا ہے بلکہ فوج کی کوڑھ کمانڈر کمیٹی کرتی ہے. جنرل راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے نواز شریف کو اخلاقی اور آئینی برتری حاصل تھی اور پارلیمنٹ اس کے ساتھ کھڑی تھی. یہی وجہ تھی کہ جنرل راحیل شریف اور کوڑھ کمانڈر نواز شریف کے خلاف کوئی ظاہری اور عملی قدم اٹھانے سے گریزاں تھے. پاناما ڈاکومنٹس اگرچہ جنرل راحیل شریف کے آخری مہینوں میں سامنے آ چکے تھے لیکن ان میں نواز شریف کا براہ راست نام نہیں تھا اس لیے جنرل راحیل شریف اور فوج نواز شریف کو حکومت سے نکالنے سے اس وقت تک معزور تھے جب تک وہ جوڈیشری سے نواز شریف کے خلاف فیصلہ نہیں لے لیتے تھے. اسی دوران جنرل راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ کا وقت آ گیا اور اس کی جگہ جنرل باجوہ نے لے لی. جنرل راحیل شریف کو بھی ایکسٹینشن مل جاتی تو اس نے بھی وہی کرنا تھا جو بعد میں جنرل باجوہ نے کیا ہے. فوج کی پلاننگ میں کسی آرمی چیف کے آنے جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے. آخر فوج نے جوڈیشری کو استعمال کرکے نہ صرف نواز شریف کے خلاف فیصلہ لے لیا بلکہ اسے حکومت سے بھی نکلوا دیا. فوج نے یہ بہت سمارٹ موو چلی تھی. اس طرح فوج نے نواز شریف کو جوڈیشری کے ذریعے نا اہل کروا کر ایک منتخب وزیر اعظم کو براہ راست حکومت سے نکالنے کی وجہ سے اپنے منہ پر لگنے والی کالک سے خود کو بچا لیا

    باوا بھائی باجوہ ایک کمزور جنرل تھا شروع میں بحد میں تو ضیاء اور مشرف جیسے مریل بھی شیر ہو جاتے ہیں -جس طرح اقامے پر نواز کو نہ اہل کیا ، جس طرح واٹس اپ پر نواز کے خلاف تحقیقاتی کمیٹی بنی ، پوری نون لیگ کے خلاف کیسز کھول دئے گئے سب چینلز کو کرپشن کا راگ الاپنے کا کہا ، جیو کے انکار پر اس کا مکو ٹھپا گیا – نون کے ایک ایک امیدوار کو مارک کر کے ان کے خلاف عدالت یا میڈیا سے کردار کشی کی گئی ، حنیف عباسی اور چودہری نثار کے مخالف امیدوار کا انجام تو آپ کو یاد ہو گا – جج بشیر کا ٹارگٹ کر کے الیکشن سے تین ہفتے پہلے نواز کو سزا دینا – میں نہیں سمجھتا یہ سب راحیل شریف کے ہوتے ہو سکتا تھا – راحیل شریف کے جاتے ہی پوری فوج اور ایجنسیاں ایک منظم گروہ کی طرح نون کے خلاف میدان میں کود گئیں جو راحیل شریف کے ہوتے اس حد تک ہونا مشکل تھا –

    #14
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    باوا بھائی باجوہ ایک کمزور جنرل تھا شروع میں بحد میں تو ضیاء اور مشرف جیسے مریل بھی شیر ہو جاتے ہیں -جس طرح اقامے پر نواز کو نہ اہل کیا ، جس طرح واٹس اپ پر نواز کے خلاف تحقیقاتی کمیٹی بنی ، پوری نون لیگ کے خلاف کیسز کھول دئے گئے سب چینلز کو کرپشن کا راگ الاپنے کا کہا ، جیو کے انکار پر اس کا مکو ٹھپا گیا – نون کے ایک ایک امیدوار کو مارک کر کے ان کے خلاف عدالت یا میڈیا سے کردار کشی کی گئی ، حنیف عباسی اور چودہری نثار کے مخالف امیدوار کا انجام تو آپ کو یاد ہو گا – جج بشیر کا ٹارگٹ کر کے الیکشن سے تین ہفتے پہلے نواز کو سزا دینا – میں نہیں سمجھتا یہ سب راحیل شریف کے ہوتے ہو سکتا تھا – راحیل شریف کے جاتے ہی پوری فوج اور ایجنسیاں ایک منظم گروہ کی طرح نون کے خلاف میدان میں کود گئیں جو راحیل شریف کے ہوتے اس حد تک ہونا مشکل تھا –

    اعوان بھائی

    کیا حکومت نے آئی ایس آئی چیف ظہیر الاسلام کو دھرنے والوں کو انگلی دیتے ہوئے موقع پر جنرل راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے نہیں پکڑا تھا؟ جنرل راحیل شریف نے آرمی چیف ہوتے ہوئے ایک منتخب حکومت کے خلاف وردی پہن کر سازشیں کرنے والوں کا کیا کر لیا تھا؟

    میں نے پہلے بھی کہا ہے کہ فوج کے فیصلے آرمی چیف نہیں کوڑھ کمانڈر کرتے ہیں. آرمی چیف ان فیصلوں سے متفق نہ بھی ہو تو اسے اپنا منہ اور آنکھیں بند رکھنی پڑتی ہیں. راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے بھی فوج حکومت کو گرانے کیلیے جس حد تک جا سکتی تھی، گئی تھی. پاناما لکس نے فوج کو نواز شریف کو گھر بھیجنے کا ایک سنہری موقع فراہم کر دیا اور اس نے اس سے خوب فائدہ اٹھایا اور جوڈیشری سے مل کر نواز شریف کو حکومت سے نکالنے کیلیے اسے استعمال کیا

    #15
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: شہباز شریف کو کس نے اجازت دلوائی کہ وہ سوموار کو بھی ملاقات کیلئے جاپہنچے؟؟

    اعوان بھائی کیا حکومت نے آئی ایس آئی چیف ظہیر الاسلام کو دھرنے والوں کو انگلی دیتے ہوئے موقع پر جنرل راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے نہیں پکڑا تھا؟ جنرل راحیل شریف نے آرمی چیف ہوتے ہوئے ایک منتخب حکومت کے خلاف وردی پہن کر سازشیں کرنے والوں کا کیا کر لیا تھا؟ میں نے پہلے بھی کہا ہے کہ فوج کے فیصلے آرمی چیف نہیں کوڑھ کمانڈر کرتے ہیں. آرمی چیف ان فیصلوں سے متفق نہ بھی ہو تو اسے اپنا منہ اور آنکھیں بند رکھنی پڑتی ہیں. راحیل شریف کے آرمی چیف ہوتے ہوئے بھی فوج حکومت کو گرانے کیلیے جس حد تک جا سکتی تھی، گئی تھی. پاناما لکس نے فوج کو نواز شریف کو گھر بھیجنے کا ایک سنہری موقع فراہم کر دیا اور اس نے اس سے خوب فائدہ اٹھایا اور جوڈیشری سے مل کر نواز شریف کو حکومت سے نکالنے کیلیے اسے استعمال کیا

    باوا بھائی پہلے بھی کہا ہے راحیل شریف جمہوریت کا چیمپئن نہیں تھا اسے اپنا ادارہ مقدم تھا البتہ وہ ایک جمہوری حکومت کو گرانے کے حق میں بھی نہیں تھا اور اتنے بڑے پیمانے پر پولیٹیکل انجینیرنگ کی بھی وہ کبھی حمایت نہ کرتا – آرمی چیف کی ایک ٹیم ہوا کرتی ہے جو آرمی چیف کی ہمنوا ہوتی ہے چیف سے سینئر پہلے ہی ریٹائر ہو چکے ہوتے ہے – افغان امریکہ اشو پر مشرف نے ہمیشہ من مانی کی – آرمی چیف کی ٹیم کو آپ اس وقت کی آرمی حکومت که سکتے ہیں کوڑھ کمانڈر حمایت یا مخالفت کرتے ہیں لیکن اکثر آرمی چیف کی ٹیم اسے راضی کر لیتی ہے اب بھی ممکن ہے کچھ کمانڈر خان کے خلاف ہوں مگر چل آرمی چیف اور اس کی ٹیم کی ہی رہی ہے –

Viewing 15 posts - 1 through 15 (of 15 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!