Thread: شریک جرم

Home Forums Siasi Discussion شریک جرم

This topic contains 21 replies, has 9 voices, and was last updated by  Atif 1 year, 10 months ago. This post has been viewed 817 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 22 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    مطیع اللہ جان

    طبل جنگ بج چکا ہے۔اس کی آواز صرف ان تیس صحافیوں کو سنائی دی ہے جنھیں خصوصی طور پر جی ایچ کیو میں طلب کر کے بریفنگ دی گئی۔سینئر صحافی شاہین صہبائی نے چار گھنٹے پر محیط اس “آف دی ریکارڈ” بریفنگ کے بارے میں سوشل میڈیا پر انکشاف کیا۔ صہبائی نے سوال اٹھایا کہ میڈیا کے اینکرز اور ایڈیٹرز آرمی چیف کی طرف سے دی گئی بریفنگ کے بارے میں خاموش کیوں ہیں۔
    راقم کسی جی ایچ کیو کی میٹنگ میں مدعو ہونے کے لئے “صداقت اور امانت ” کے کڑے معیار پر پورا تو شاید نہیں اترتا مگر پھر بھی بطور صحافی شاہین صہبائی کےاٹھائے گئے سوال کو جائز سمجھتا ہوں۔آرمی چیف سے چار گھنٹے کی بریفنگ لینے والے خوش قسمت صحافیوں میں ایسے ایسے نام بھی شامل ہیں جن کی صحافتی ساکھ پر یقیناً کوئی انگلی نہیں اٹھا سکتا ۔ اسی لئے اتنی طویل اور اہم ترین”آف دی ریکارڈ” بریفنگ سے متعلق شہریوں کے جاننے کے آئینی حق کو عارضی طور پر نظر انداز کر نا ان کے نزدیک ایک پیشہ ورانہ اخلاقی مجبوری ہو گی۔ بطور صحافی ہم میں سے کوئی بھی ہمارے سامنے ہونے والی “آف دی ریکارڈ” گفتگو کو کبھی بھی بطور خبر نشر کرنا نہیں چاہے گا۔

    “آف دی ریکارڈ” گفتگو سے مراد کسی اہم اور مجاز عہدیدار کا صحافی کے ساتھ رازداری کی شرط پر اہم معلومات فراہم کرنا ہوتا ہے۔بدقسمتی سے “آف دی ریکارڈ” کے اس تسلیم شدہ صحافتی اصول کا کبھی کبھی ناجائز فائدہ بھی اٹھایا جاتا ھے- صحافیوں کو ایسی معلومات دینے کے تین مقصد ہوتے ہیں۔ پہلا مقصد صحافی کو مخصوص اہم معلومات کے دوسرے ذرائع سے آ حصول کی امکان کی صورت میں اس خبر کی اشاعت سے روکنے کے لئے “آف دی ریکارڈ” کی شرط لگا دی جاتی ہے۔ دوسرا مقصد مخصوص حلقوں تک اپنا پیغام پہنچانے کے لئے صحافی یا صحافیوں کو ایک ڈاکیے کے طور پر استعمال کرنا اور تیسرا سب سے اہم مقصد کچھ صحافیوں کو مخصوص صورتحال میں خاص معلومات یا رائے کا اظہار بشرط عدم اشاعت کر کے انہیں خبردار کرنا ہوتا ہے۔آسان الفاظ میں ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ کوئی طاقتور ادارہ صحافت کے بڑے ناموں کو بلا کر بالواسطہ طور پر خبردار کر رہا ہوتا ہےکہ کسی خاص قومی معاملے میں ہم یہ سوچ رکھتے ہیں اور اس حوالے سے اگر میڈیا نے کوئی متبادل رائے قائم کرنے کی کوشش کی تو نتائج کا ذمہ دار وہ خود ہو گا۔ پنجابی کی کہاوت ہے “نہ کجھ کرے جگے نہ کسی نوں دسے جگے” (نہ کچھ کر سکتے ہیں، نہ کسی کو کچھ بتا سکتے ہیں)۔ ایسی “آف دی ریکارڈ” بریفنگوں میں ایسے صحافیوں کو ایسی ہی صورتحال کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

    اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جو صحافی “آف دی ریکارڈ” جیسے پیشہ ورانہ حلف کا پابند ہے ، کیا وہ ایسی بریفنگوں میں متعلقہ حکام کے اپنے پیشہ ورانہ حلف اور آئین اور قانون سے برخلاف باتوں کو بھی عوام سے چھپانے کا پابند ہے۔ دوسرے لفظوں میں اگر کوئ ادارہ اپنی ہے حکومت کے خلاف آف دس ریکارڈ بریفنگ کرتا ھے تو کیا صحافی اس آئینی خلاف ورزی پر بھی خاموش رہنے کے پابند ہونگے؟

    بین الاقوامی صحافتی اصولوں کے تحت کوئی بھی صحافی اپنی سورس (ذریعہ خبر وہ شخص جو نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبر دیتا ہے) ظاہر نہیں کرتا۔ مگر جب کوئی سورس ملک کے آئین ، قانون اور اپنے پیشہ وارانہ حلف سے روگردانی کرتے ہوئے کسی “آف دی ریکارڈ” بریفنگ میں کچھ باتیں کرتا ہے جو صریحأ ایک جرم ہو تو کیا صحافی ایسے واقعے پر بھی اپنے “آف دی ریکارڈ اصول ” کا پردہ ڈال دیں گے ؟ اور پھر جو صحافی ایسی اہم ترین بریفنگوں میں موجود نہیں ہوتے ،کیا وہ بھی اس “آف دی ریکارڈ” حلف کے پابند ہوتے ہیں جومیٹنگ میں شریک صحافیوں نے اٹھایا ہوتا ہے؟ اور کیا ایسی بریفنگوں میں شریک نہ ہونے والے صحافی اپنے “ذرائع” استعمال کرتے ہوئے ان بریفنگوں کاحال عوام تک نہیں پہنچا سکتے؟ ایسی صورتحال میں ایسے اجلاسوں میں شریک کچھ صحافیمفاد عامہ میں اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر شریک نہ ہونے والے صحافیوں کا “ذریعہ خبر” بن سکتے ہیں؟

    راقم کی رائے میں جب خبر خود صحافت اور میڈیا کے عوامی مفاد کے منافی کردار سے متعلق ہو تو صحافی بھی ذریعہ خبر بن سکتے ہیں۔ تو جناب جی ایچ کیو میں آرمی چیف کی ملک کے نامور صحافیوں کو چار گھنٹے کی بریفنگ کے بعد چوبیس گھنٹے تک عوام کو اندھیرے میں رکھا جانا یقیناً ایک خبر ہے اور اس بریفنگ میں کیا باتیں ہوئی، یہ جاننا بھی عوام کا حق ہے۔ چونکہ راقم الحروف اس میٹنگ میں موجود نہیں تھاتو “قابل اعتماد ” صحافتی ذرائع کا سہارا لیتے ہوئے اس اجلاس کا محض اتنا خلاصہ بیان کیا جا سکتا ہے کہ آرمی چیف نے پاکستان کی موجودہ سیاسی صورتحال پر کھل کر اپنامؤقف بیان کیا۔ اگر یہ مؤقف “آف دی ریکارڈ” نہ ہوتا اور پاکستان ٹیلی ویژن پر نشر کیا گیا ہوتا تو پارلیمنٹ کی بالادستی اور عدلیہ کی آزادی کا رہا سہا بھرم بھی نہ رہتا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی نااہلی در نااہلی کے اور آنے والے عدالتی فیصلوں پر من و عن عمل کروانے کے لئےتمام ضروری اقدامات بلا جھجک اٹھائے جائیں گے۔ذرائع کے مطابق دلیل یہ ھے کہ جرائم پیشہ افراد چاہے جتنے بھی ووٹ لے لیں یا بڑے جلسے کر لیں، ہر عدالتی فیصلے پر عملدرآمد لازمی ہو گا کیونکہ ایک شخص کے پیچھے پورے ملک کو داؤ پر نہیں لگایا جا سکتا- ظاہر ھے وہ ایک شخص نواز شریف ہے۔عدالتیں جو فیصلہ بھی کریں گی، فوج ان کے پیچھے کھڑی ہے۔ ذرائع کے مطابق یہ بھی واضح کیا گیا کہ نیب کا ادارہ سب کا بلا امتیاز، بلاتفریق احتساب کرے گا۔ملک کی معیشت کی حالت دگرگوں ہے اور ہماری پالیسیاں ناکام ۔ فوج ملکی سالمیت کی خاطر تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے گی۔امریکہ میں حال ہی میں مقرر کئے گئے نوجوان سفیر علی صدیقی کی قابلیت اور تجربے پر سوال اٹھایا گیا۔ چار گھنٹے کی اس ملاقات میں جو کچھ بھی ہو ا، اس کو کسی صورت بھی غیر سیاسی قرار نہیں دیا جا سکتا ۔یہ “آف دی ریکارڈ” تاریخی ملاقات ایک ایسے وقت میں ہوئی کہ جب سابق وزیراعظم نواز شریف اور انکی جماعت عدالتی فیصلوں کے باوجود اور ان کے خلاف عوام کو سڑکوں پر لانے میں بظاہر کامیاب نظر آ رہی ہے۔ کچھ لوگ آئندہ انتخابات کو ملکی عدلیہ کے ان فیصلوں سے متعلق ریفرنڈم بھی قرار دے رہے ہیں۔آرمی چیف کی صحافیوں سے اس طویل ترین ملاقات کا وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی اور انکی حکومت کو علم ہو نہ ہو مگر ایک بات واضح ہے کہ یہ آئین اور جمہوری اداروں کی بالادستی ہر گز نہیں۔ اگر آئندہ انتخابات کے بعد بھی ایسی ہی کمزور سیاسی حکومت وجود میں آنی ہے کہ جس کے ماتحت ادارے “آف دی ریکارڈ” میٹنگوں میں اپنے پیشہ وارانہ اور آئینی حلف سے روگردانی کرتے ہوئے سیاسی بیان بازی کریں تو پھر پاکستان کے “عوام لنڈورے ہی بھلے”۔ ایسی ہی بریفنگوں سے ان الزامات کو تقویت ملتی ہے کہ فوج اور عدلیہ مل کر ایسا ماحول بنا رہے ہیں کہ جس سے عوام کے ذہنوں کو کسی مخصوص سیاسی جماعت کے خلاف پراگندہ کیا جائے اور بلوچستان میں “سیاسی ” تبدیلی کے بعد اب سینیٹ چیئرمین کے انتخابات کے معاملات بھی ایسے ہی خدشات کو تقویت دیتے ہیں۔ اصولی طور پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو جی ایچ کیو میں ہونے والی اس میٹنگ کا نوٹس لینا چاہیے اور آئندہ کے لئے صحافیوں کو بھی ایسی غیر آئینی سرگرمیوں کا حصہ نہیں بننا چاہیے۔”آف دی ریکارڈ” جیسے صحافتی اصولوں کو کسی صورت بھی ڈھال بنا کر آئین اور جموری اداروں کے خلاف بیان بازی کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔پاکستان کے صحافیوں نے جمہوریت کے لئے طویل جنگ لڑی ہے اور کسی کو بھی یہ حق حاصل نہیں کہ ہماری ماضی کی قربانیوں کا سودا ایسی غیر آئینی “آف دی ریکارڈ” بریفنگوں میں شریک ہو کر اور پھر خاموش رہ کر کریں۔ وگرنہ تاریخ ایسے پاکستانی صحافیوں کوان الفاظ میں یاد کرے گی۔”شریک جرم نہ ہوتے تو مخبری کرتے”۔

    http://www.pakistan24.tv/2018/03/11/10890

    #2
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    #3
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 342
    • Posts: 7767
    • Total Posts: 8109
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: شریک جرم

    فوج اپنا نقطہ نظر واضح کرنے کیلئے میڈیا پرسنز کے ساتھ ضرور ملے اور بیانات بھی دے مگر اس گفتگو کو عوامی بنایا جاے نہ کہ آف دی ریکارڈ کا ٹیگ لگا کر میڈیا کو اپنا پیغام دیا جاے تاکہ آئندہ ہر ٹاک شو اور کالم میں اس نقطہ نظر کی ملاوٹ کی جاے

    اب دو چار دنوں میں ہی شامل اینکرز کی گفتگو کچھ اسطرح سے شروع ہوا کرے گی، کہ بہت ہی قابل اعتماد (دوسرے جیسے ناقابل اعتبار ہوں) ذرائع نے بتایا کہ ملک کے اہم ترین مفادات کیلئے کسی قسم کی رعایت نہیں کی جاے گی وغیرھم

    #4
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 342
    • Posts: 7767
    • Total Posts: 8109
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: شریک جرم

    نادان کو ٹیگ کررہے ہیں اس کے پاس جواب ہوتا تو پہلے میرے سوالات کا جواب نہ دے دیتیں

    :thinking:

    #5
    نادان
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 93
    • Posts: 14273
    • Total Posts: 14366
    • Join Date:
      31 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    #6
    Democrat
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 46
    • Posts: 1312
    • Total Posts: 1358
    • Join Date:
      17 Oct, 2016

    Re: شریک جرم

    بھائی جی یہ رپورٹ ٹائمز میں چھپی ھے اور اسی کا پوسٹ مارٹم صبح تھریڈ کی صورت کیا تھا لیکن تھریڈ ابھی بھی پوسٹ کرنے سے قاصر ھوں

    بحرحال ابھی اطلاع ملی ھے کہ کوئٹہ میں پشتون اور لمبرون فوج آمنے سامنے کھڑے ھو گئے ھیں اور خونریزی کا خطرہ ھے

    اپکے پاس کیا اطلاع ھے؟اگر ایسا ھوا تو آج رات فوج تختہ الٹ بھی سکتی ھے

    اس خبر کے بارے یہ بھی کہ دوں کہ ھو سکتا ھے جرنیل نے عوامی مزاج جاننے کے لئے یہ حرکت کی ھو تاکہ اس کے مطابق قدم اٹھایا جا سکے،بحرحال اب نوازشریف صاحب کا امتحان شروع ھے اور یہی وقت ھے بیشک مریم کو اگے کر دیں ،خوشی کی بات یہ ھے کہ اب لیگی متوالوں میں بھی وہی روح آنے کے اثار لگتے ھیں جو جیالوں میں بھٹو صاحب نے پھونکی تھی

    میاں صاحب اب اسے کیسے طاقت بناتے ھیں یہ اصل کام ھو گا اور انکے ساتھ بھی بھٹو یا بینظیر والا کام بھی ھو سکتا ھے

    • This reply was modified 1 year, 10 months ago by  Democrat.
    #7
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 488
    • Posts: 4282
    • Total Posts: 4770
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    بھائی جی یہ رپورٹ ٹائمز میں چھپی ھے اور اسی کا پوسٹ مارٹم صبح تھریڈ کی صورت کیا تھا لیکن تھریڈ ابھی بھی پوسٹ کرنے سے قاصر ھوں بحرحال ابھی اطلاع ملی ھے کہ کوئٹہ میں پشتون اور لمبرون فوج آمنے سامنے کھڑے ھو گئے ھیں اور خونریزی کا خطرہ ھے اپکے پاس کیا اطلاع ھے؟اگر ایسا ھوا تو آج رات فوج تختہ الٹ بھی سکتی ھے اس خبر کے بارے یہ بھی کہ دوں کہ ھو سکتا ھے جرنیل نے عوامی مزاج جاننے کے لئے یہ حرکت کی ھو تاکہ اس کے مطابق قدم اٹھایا جا سکے،بحرحال اب نوازشریف صاحب کا امتحان شروع ھے اور یہی وقت ھے بیشک مریم کو اگے کر دیں ،خوشی کی بات یہ ھے کہ اب لیگی متوالوں میں بھی وہی روح آنے کے اثار لگتے ھیں جو جیالوں میں بھٹو صاحب نے پھونکی تھی میاں صاحب اب اسے کیسے طاقت بناتے ھیں یہ اصل کام ھو گا اور انکے ساتھ بھی بھٹو یا بینظیر والا کام بھی ھو سکتا ھے

    bilkul theek baatain ki hai

    mere khayal se is waqt sab se Brave Politician Maryam Nawaz Shrif hai

    #8
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 488
    • Posts: 4282
    • Total Posts: 4770
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    Captain shahid abbasi , Brigadier Sohail Ejaz Mirza , Major Saleem raza hazir hoon

    #9
    SaleemRaza
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 669
    • Posts: 12083
    • Total Posts: 12752
    • Join Date:
      13 Oct, 2016
    • Location: سہراب گوٹھ ۔

    Re: شریک جرم

    Captain shahid abbasi , Brigadier Sohail Ejaz Mirza , Major Saleem raza hazir hoon

    سہراب اس آرٹیکل میں کوئی جان نہیں ہے ۔۔۔جس کے لیے آپ آرمی کو طلب کر رہے ہیں ۔۔۔رہر کام  کے لیے آرمی کی طرف مت دیکھا کریں ۔۔ ۔ویسے بھی صاحب کاپی پیسٹ نے ہم کو ٹیگ نہیں کیا ۔۔

    ۔۔توسی جانو ۔۔تے تہاداکم جانے ۔۔

    #10
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 488
    • Posts: 4282
    • Total Posts: 4770
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    سہراب اس آرٹیکل میں کوئی جان نہیں ہے ۔۔۔جس کے لیے آپ آرمی کو طلب کر رہے ہیں ۔۔۔رہر کام کے لیے آرمی کی طرف مت دیکھا کریں ۔۔ ۔ویسے بھی صاحب کاپی پیسٹ نے ہم کو ٹیگ نہیں کیا ۔۔ ۔۔توسی جانو ۔۔تے تہاداکم جانے ۔۔

    ok ….

    #11
    Guilty
    Participant
    Online
    • Professional
    • Threads: 0
    • Posts: 4422
    • Total Posts: 4422
    • Join Date:
      6 Nov, 2016

    Re: شریک جرم

    طبل جنگ بج گیا ہے تو بہت اچھا ہے ۔۔

    یہ قوم ۔۔۔ ان کی فوج ۔۔۔۔ بکرے کی ماں آخر کب خیر منا ئے گی ۔۔۔۔۔

    ایک دن تو ۔۔۔ بقر عید نے آنا ہی ہوتا ہے ۔۔۔۔۔ اور ۔۔۔ پھر قصا ئی نے بھی آنا ہوتا ہے ۔۔۔۔

    اور ۔۔۔ پھر ۔۔۔۔لم لیٹ بھی ہونا ہوتا ہے  ۔۔۔ جس کے لیئے سب جمپیں مار مار کر ۔۔۔ ھلکان ہورھے ہوتے ہیں ۔۔۔

    #12
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 342
    • Posts: 7767
    • Total Posts: 8109
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: شریک جرم

    جی

    لسی کا ایک گلا س لا دیں

    :facepalm:

    #13
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    بھائی جی یہ رپورٹ ٹائمز میں چھپی ھے اور اسی کا پوسٹ مارٹم صبح تھریڈ کی صورت کیا تھا لیکن تھریڈ ابھی بھی پوسٹ کرنے سے قاصر ھوں بحرحال ابھی اطلاع ملی ھے کہ کوئٹہ میں پشتون اور لمبرون فوج آمنے سامنے کھڑے ھو گئے ھیں اور خونریزی کا خطرہ ھے اپکے پاس کیا اطلاع ھے؟اگر ایسا ھوا تو آج رات فوج تختہ الٹ بھی سکتی ھے اس خبر کے بارے یہ بھی کہ دوں کہ ھو سکتا ھے جرنیل نے عوامی مزاج جاننے کے لئے یہ حرکت کی ھو تاکہ اس کے مطابق قدم اٹھایا جا سکے،بحرحال اب نوازشریف صاحب کا امتحان شروع ھے اور یہی وقت ھے بیشک مریم کو اگے کر دیں ،خوشی کی بات یہ ھے کہ اب لیگی متوالوں میں بھی وہی روح آنے کے اثار لگتے ھیں جو جیالوں میں بھٹو صاحب نے پھونکی تھی میاں صاحب اب اسے کیسے طاقت بناتے ھیں یہ اصل کام ھو گا اور انکے ساتھ بھی بھٹو یا بینظیر والا کام بھی ھو سکتا ھے

    ایسا کچھ زیادہ مسلہ نہیں بس منظور پشتین نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس قافلے کے ساتھ وزیرستان میں بغیر وطن کارڈ جائے گا اور یہ بات آرمی کے اختیار کو چیلنج کرنے والی ہے اسلئے آرمی بھی مبینہ طور پر مورچے سنبھال کر بیٹھ گئی ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ آرمی کبھی بھی اس مارچ کو بزور طاقت روکنے کی حماقت نہیں کرے گی۔ کیونکہ پھر تمام پشتون اپنے مابین اختلافات بھلا کر اپنے علاقوں سے آرمی کو مار مار کر نکالیں گے۔ ویسے بھی آرمی کی اہلیت صرف یہ ہے کہ وہ نہتے لوگوں پر شیر ہوسکتی ہے یہاں معاملہ دوسرا ہے۔ یہاں ایک گھر بھی نہتا نہیں ہوتا تو اگر پوری قوم اٹھ گئی تو بس پھر ترکی کا سین دہرایا جائے گا یہاں بھی۔

    #14
    Sohail Ejaz Mirza
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 61
    • Posts: 2180
    • Total Posts: 2241
    • Join Date:
      28 Oct, 2017
    • Location: Middle East

    Re: شریک جرم

    ایسا کچھ زیادہ مسلہ نہیں بس منظور پشتین نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس قافلے کے ساتھ وزیرستان میں بغیر وطن کارڈ جائے گا اور یہ بات آرمی کے اختیار کو چیلنج کرنے والی ہے اسلئے آرمی بھی مبینہ طور پر مورچے سنبھال کر بیٹھ گئی ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ آرمی کبھی بھی اس مارچ کو بزور طاقت روکنے کی حماقت نہیں کرے گی۔ کیونکہ پھر تمام پشتون اپنے مابین اختلافات بھلا کر اپنے علاقوں سے آرمی کو مار مار کر نکالیں گے۔ ویسے بھی آرمی کی اہلیت صرف یہ ہے کہ وہ نہتے لوگوں پر شیر ہوسکتی ہے یہاں معاملہ دوسرا ہے۔ یہاں ایک گھر بھی نہتا نہیں ہوتا تو اگر پوری قوم اٹھ گئی تو بس پھر ترکی کا سین دہرایا جائے گا یہاں بھی۔

    ترکی اور جین جیسے حالات تک نوبت نہ آنے پائے اُس کے لیے مندرجہ ذیل کو سمجھنا ہو گا۔
    آرمی کے مزاج سے ایسا لگتا ہے مغربی سرحد پر جو باڑ لگانے کا کام کیا جا رہا ہے اگر اِسی رفتار سے جاری رہا تو چور دروازے کافی حد تک کنٹرول میں آ جایئں گے۔

    مُقامی آبادی کبھی آرمی کی دُشمن نہیں رہی۔ قبائیلی اپنے رسم و رواج کی حد تک آزاد رہنا پسند کرتے ہیں اور ایسا کرنا اُن کا حق ہے۔قبائلیوں کی اکثریت پاکستا ن کی رٹ تسلیم کرتی ہے۔ آرمی بھی اپنے لوگوں کی دُشمن نہیں ہے۔

    لوگوں کا یہ کہنا اور سمجھنا کہ پاکستانی آرمی اپنے ہی لوگوں کے خِلاف ہے اور اِن پر ظُلم کرتی ہے افسوسناک بھی ہے اور اُن حالات اور واقعات سے چشم پوشی بھی جو روس کے علاقعہ چھوڑ دینے اور مغربی افواج کے آنے سے پیدا ہوئے۔ضیاء صاحب اور میاں مُشرف اگر حُب الوطنی کا مُظاہرہ کرتے اور بُذدِلی نہ دِکھاتے تو کوئی وجہ نہیں تھی اِن علاقعوں میں اِستعمار اپنے پاؤں جما پاتا اور ایسے حالات پیدا ہو جاتے کہ دُشمنی کا شائبا ہو۔

    اگر آپ سمجھتے ہیں تو ٹھیک ہے نہیں تو میں واضع کرتا جلوں علاقعے کو کورڈن آف کیا جا رہا ہے اور سپلائی روٹس کو سیکیور کیا جا رہا ہے۔  یہ سٹریٹیجی جو جاری ہےاِس سے آگے کیا ہو گا اُسے کِسی مُصلحت کے تحت بیک برنر پر ڈالا گیا ہے، پوسٹپون نہیں کیا گیا۔اِس لیےکِسی بھی قسم کی چھیڑخانی سے اجتناب کیا جا رہا ہے۔جو کُچھ بھی کیا جا رہا ہے اُس کا فائدہ بہرحال قبایل کو ہی ہو گا۔

    #15
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    ترکی اور جین جیسے حالات تک نوبت نہ آنے پائے اُس کے لیے مندرجہ ذیل کو سمجھنا ہو گا۔ آرمی کے مزاج سے ایسا لگتا ہے مغربی سرحد پر جو باڑ لگانے کا کام کیا جا رہا ہے اگر اِسی رفتار سے جاری رہا تو چور دروازے کافی حد تک کنٹرول میں آ جایئں گے۔ مُقامی آبادی کبھی آرمی کی دُشمن نہیں رہی۔ قبائیلی اپنے رسم و رواج کی حد تک آزاد رہنا پسند کرتے ہیں اور ایسا کرنا اُن کا حق ہے۔قبائلیوں کی اکثریت پاکستا ن کی رٹ تسلیم کرتی ہے۔ آرمی بھی اپنے لوگوں کی دُشمن نہیں ہے۔ لوگوں کا یہ کہنا اور سمجھنا کہ پاکستانی آرمی اپنے ہی لوگوں کے خِلاف ہے اور اِن پر ظُلم کرتی ہے افسوسناک بھی ہے اور اُن حالات اور واقعات سے چشم پوشی بھی جو روس کے علاقعہ چھوڑ دینے اور مغربی افواج کے آنے سے پیدا ہوئے۔ضیاء صاحب اور میاں مُشرف اگر حُب الوطنی کا مُظاہرہ کرتے اور بُذدِلی نہ دِکھاتے تو کوئی وجہ نہیں تھی اِن علاقعوں میں اِستعمار اپنے پاؤں جما پاتا اور ایسے حالات پیدا ہو جاتے کہ دُشمنی کا شائبا ہو۔ اگر آپ سمجھتے ہیں تو ٹھیک ہے نہیں تو میں واضع کرتا جلوں علاقعے کو کورڈن آف کیا جا رہا ہے اور سپلائی روٹس کو سیکیور کیا جا رہا ہے۔ یہ سٹریٹیجی جو جاری ہےاِس سے آگے کیا ہو گا اُسے کِسی مُصلحت کے تحت بیک برنر پر ڈالا گیا ہے، پوسٹپون نہیں کیا گیا۔اِس لیےکِسی بھی قسم کی چھیڑخانی سے اجتناب کیا جا رہا ہے۔جو کُچھ بھی کیا جا رہا ہے اُس کا فائدہ بہرحال قبایل کو ہی ہو گا۔

    مرزا صاحب! آپ نے ابھی تک ایک جانب کا موقف سنا اور سمجھا ہے۔ میں ان لوگوں کو دس سال سے اپنی آںکھوں سے خوار ہوتے دیکھ رہا ہوں جو یہاں کے رہائشی ہیں۔ میں وہ کہانیاں لکھ بھی نہیں سکتا جو میں نے یہاں کے لوگوں پر بیتتی ہوئے دیکھی ہےآرمی نے یہان کے جدی پشتی رئیس لوگوں اور متمول عوام کو جڑیں کھانے پر مجبور کردیا ہے اس پر مستزاد یہ کہ ان کی عزت نفس رول کر رکھ دی ہے۔ یہ کورڈن آف والا ڈرامہ پچھلے دس سال سے چل رہا ہے۔ دنیا کی نمبر ون آرمی اگر اپنے ہی ملک میں ایک علاقے میں جہاں مقامی لوگ بغیر مزاحمت اپنا علاقہ حوالے کردیں وہاں امن قائم نہیں کرسکتی تو ایسی آرمی سے صرف بھل صفائی، زیبرا کراسنگ کے پینٹ یا پھر شجر کاری کی مہمات شروع کروانی چاہییں۔ یہاں سارا مسلہ چلغوزے کی فصل، اسمگلنگ کی رقم اور منشیات کی کمائی کا ہے۔

    #16
    Sohail Ejaz Mirza
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 61
    • Posts: 2180
    • Total Posts: 2241
    • Join Date:
      28 Oct, 2017
    • Location: Middle East

    Re: شریک جرم

    مرزا صاحب! آپ نے ابھی تک ایک جانب کا موقف سنا اور سمجھا ہے۔ میں ان لوگوں کو دس سال سے اپنی آںکھوں سے خوار ہوتے دیکھ رہا ہوں جو یہاں کے رہائشی ہیں۔ میں وہ کہانیاں لکھ بھی نہیں سکتا جو میں نے یہاں کے لوگوں پر بیتتی ہوئے دیکھی ہےآرمی نے یہان کے جدی پشتی رئیس لوگوں اور متمول عوام کو جڑیں کھانے پر مجبور کردیا ہے اس پر مستزاد یہ کہ ان کی عزت نفس رول کر رکھ دی ہے۔ یہ کورڈن آف والا ڈرامہ پچھلے دس سال سے چل رہا ہے۔ دنیا کی نمبر ون آرمی اگر اپنے ہی ملک میں ایک علاقے میں جہاں مقامی لوگ بغیر مزاحمت اپنا علاقہ حوالے کردیں وہاں امن قائم نہیں کرسکتی تو ایسی آرمی سے صرف بھل صفائی، زیبرا کراسنگ کے پینٹ یا پھر شجر کاری کی مہمات شروع کروانی چاہییں۔ یہاں سارا مسلہ چلغوزے کی فصل، اسمگلنگ کی رقم اور منشیات کی کمائی کا ہے۔

    عاطف بھائی

    فوج مُقامی لوگوں سے ایسا کب اور کیوں کرتی ہے؟ کیا یہ کوئی خاص علاقعہ ہے جہاں نظرِ کرم ہو رہی ہے۔کونسا علاقعہ ہے؟ میرے اپنے کُچھ ورکر ہیں جو چار سدہ اور سوات سے تعلق رکھتے ہیں اور اُن سے اُن کے علاقعے بارے بات ہوتی رہتی ہے۔ کہیں آپ وزیرستان کی بات تو نہیں کر رہے؟

    #17
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    عاطف بھائی فوج مُقامی لوگوں سے ایسا کب اور کیوں کرتی ہے؟ کیا یہ کوئی خاص علاقعہ ہے جہاں نظرِ کرم ہو رہی ہے۔کونسا علاقعہ ہے؟ میرے اپنے کُچھ ورکر ہیں جو جار سدہ اور سوات سے تعلق رکھتے ہیں۔ کہیں آپ وزیرستان کی بات تو نہیں کر رہے؟

    جی بالکل میں شروع سے وزیرستان اور سوات کی بات کررہا ہوں

    #18
    Sohail Ejaz Mirza
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 61
    • Posts: 2180
    • Total Posts: 2241
    • Join Date:
      28 Oct, 2017
    • Location: Middle East

    Re: شریک جرم

    جی بالکل میں شروع سے وزیرستان اور سوات کی بات کررہا ہوں

    عاطف بھائی
    اِسی موضوع پر انشاء اللہ بات ہو گی۔

    #19
    Atif
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Expert
    • Threads: 156
    • Posts: 7304
    • Total Posts: 7460
    • Join Date:
      15 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    Bawa Democrat Sohraab نادان Sohail Ejaz Mirza

    پختون قومی موومنٹ کے کوئٹہ جلسے کی انتہائی دلچسپ ویڈیو دیکھیں۔ یہ شخص آئی ایس آئی کے پے رول پر ہے اور یہاں توجہ امریکہ کی طرف بھٹکانا چاہتا تھا۔

    میرا خیال ہے تحریک آہستہ آہستہ جس طرف جارہی ہے یہ عوام کے لئے بہت بہترین علامات ہیں۔

    https://twitter.com/Pashteen1/status/973253905378414592

    #20
    Sohraab
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 488
    • Posts: 4282
    • Total Posts: 4770
    • Join Date:
      23 Aug, 2016

    Re: شریک جرم

    Bawa Democrat Sohraab نادان Sohail Ejaz Mirza پختون قومی موومنٹ کے کوئٹہ جلسے کی انتہائی دلچسپ ویڈیو دیکھیں۔ یہ شخص آئی ایس آئی کے پے رول پر ہے اور یہاں توجہ امریکہ کی طرف بھٹکانا چاہتا تھا۔ میرا خیال ہے تحریک آہستہ آہستہ جس طرف جارہی ہے یہ عوام کے لئے بہت بہترین علامات ہیں۔

    سوال تو یہی ہے کے پاکستان میں امریکا کی جنگیں کون لڑتا تھا

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 22 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!