Thread: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

Home Forums Hyde Park / گوشہ لفنگاں ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

This topic contains 61 replies, has 14 voices, and was last updated by  Ghost Protocol 2 months, 1 week ago. This post has been viewed 1573 times

Viewing 20 posts - 41 through 60 (of 62 total)
  • Author
    Posts
  • #41
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 798
    • Total Posts: 816
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    کراچی میں لوگ انڈیا سے ٹرینڈ ہو کر آتے تھے ، جن کے رشتے دار انڈیا میں ہوتے تھے ، وہ بہانے سے رشتے داروں سے ملنے انڈیا جاتے اور پھر انہیں را چھ سے آٹھ ہفتے کی ٹریننگ دیتی اور تحائف کے ساتھ وآپس بھیج دیتی تھی ، کراچی آنے کے بعد یہ لوگ کراچی میں قتل و غارت کا بازار گرم رکھتے تھے وہ تو بھلا ہو سیکورٹی ایجینسیوں کا جو بیس سال سوتی رہی پھر اس گہری نیند سے جاگی اور کراچی میں امن قائم ہوا

    میرے خیال میں رینجرز کچھ عرصہ بعد ان کی صفائی وغیرہ کرتی رہتی ہے۔ نوے کی دہائی کے بعد اب کہیں جا کر کراچی ان دہشتگردوں کی غلاظت سے پاک ہوا ہے۔ 

    #42
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 698
    • Posts: 7766
    • Total Posts: 8464
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    ہاں جیسی صفائی راؤ انوار کرتا رہا تھا ، بھائی علاج بیماری کا ہوتا ہے اسے کی علامات کو دبانے یا چھپانے سے بیماری وہی رہتی ہے اور بگڑ بھی جاتی ہے

    میرے خیال میں رینجرز کچھ عرصہ بعد ان کی صفائی وغیرہ کرتی رہتی ہے۔ نوے کی دہائی کے بعد اب کہیں جا کر کراچی ان دہشتگردوں کی غلاظت سے پاک ہوا ہے۔
    #43
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 798
    • Total Posts: 816
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    ہاں جیسی صفائی راؤ انوار کرتا رہا تھا ، بھائی علاج بیماری کا ہوتا ہے اسے کی علامات کو دبانے یا چھپانے سے بیماری وہی رہتی ہے اور بگڑ بھی جاتی ہے

    جس بیماری کا علاج ہوا ہے اس کی علامت صولت مرزا نے بیان کردی تھی۔ جو دہشت گرد بھاگ گئے وہ اب باہر مملک میں بس اپنے زخم کی چاٹ سکتے ہیں۔ 

    #44
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    ہاں جیسی صفائی راؤ انوار کرتا رہا تھا ، بھائی علاج بیماری کا ہوتا ہے اسے کی علامات کو دبانے یا چھپانے سے بیماری وہی رہتی ہے اور بگڑ بھی جاتی ہے

    شامی بھائی،
    یہ رنڈی رونا تو ان لوگوں کا چلتا رہے گا ان صاحب کی تسلی کے لئے میں نے علحیدہ تھریڈ بنایا تھا -وہاں انکی قلابازیاں دیکھ کر فوجی بھی حیران رہ گیے -اب ان صاحب کی محض کوشش ہوتی ہے کہ بحث کا رخ تبدیل کیا جائے-میں نے تو ہڈی نہیں پھینکی آپ نے جتنی لفٹ کروائی انہوں نے اتنا ہی فری ہونا ہے

    :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    #45
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 698
    • Posts: 7766
    • Total Posts: 8464
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    نہی گھوسٹ بھائی – یہ کک باکسر بہت میسنا ہے ، اسے میں پہلے بتا چکا ہو اگر میں ایم کیو ایم کی باتیں کرو تو رات کو الطاف بھائی خواب میں آ کر مجھے ڈراتے ہیں

    یہ نہی چاہتا کے میری رات اچھی گزرے

    :17:

    شامی بھائی، یہ رنڈی رونا تو ان لوگوں کا چلتا رہے گا ان صاحب کی تسلی کے لئے میں نے علحیدہ تھریڈ بنایا تھا -وہاں انکی قلابازیاں دیکھ کر فوجی بھی حیران رہ گیے -اب ان صاحب کی محض کوشش ہوتی ہے کہ بحث کا رخ تبدیل کیا جائے-میں نے تو ہڈی نہیں پھینکی آپ نے جتنی لفٹ کروائی انہوں نے اتنا ہی فری ہونا ہے :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:
    #46
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 798
    • Total Posts: 816
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    شامی بھائی، یہ رنڈی رونا تو ان لوگوں کا چلتا رہے گا ان صاحب کی تسلی کے لئے میں نے علحیدہ تھریڈ بنایا تھا -وہاں انکی قلابازیاں دیکھ کر فوجی بھی حیران رہ گیے -اب ان صاحب کی محض کوشش ہوتی ہے کہ بحث کا رخ تبدیل کیا جائے-میں نے تو ہڈی نہیں پھینکی آپ نے جتنی لفٹ کروائی انہوں نے اتنا ہی فری ہونا ہے :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    تجھے تو ہڈی منہ میں لینے کا اتنا لالچ ہے کہ آج کل ہر کسی کا پائنچہ پکڑ رہے ہو۔ منافقت تجھ پر ہی ختم ہے ۔ باقی رہی تیرے تھریڈ کی بات۔ وہاں پہلے ہی ایک دو پوسٹس میں تیرا زیر جامہ اتار چکا تھا ۔ ایک دو سوالوں کے جواب تو تم دینے سے قاصر ہو۔ اور رہی تیرے ایم کیو ایم کی بہادری کی بات تو کتنے ورکرز سلطان آباد میں مرغے بن کر معافیاں مانگتے تھے 

    #47
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 798
    • Total Posts: 816
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    نہی گھوسٹ بھائی – یہ کک باکسر بہت میسنا ہے ، اسے میں پہلے بتا چکا ہو اگر میں ایم کیو ایم کی باتیں کرو تو رات کو الطاف بھائی خواب میں آ کر مجھے ڈراتے ہیں یہ نہی چاہتا کے میری رات اچھی گزرے :17:

    وہ سانڈ تمہارے ہی ٹیکس پر پل رہا ہے ۔ اور سناؤ گنجے کا استقبال کرنے جا رہے ہو؟ 

    #48
    shami11
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 698
    • Posts: 7766
    • Total Posts: 8464
    • Join Date:
      12 Oct, 2016
    • Location: Pakistan

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    بھائی کے پاس اپنا اتنا پیسہ ہے ، آج کل ایم این اے اور ایم پی اے ادھار پر پکڑائے ہوئے ہیں ، اس کی منتھلی اتنی آ جاتی ہے کے سکون سے گزارا چل جاتا ہے ، بھائی کے شوق بھی غریبوں والے ہیں ، گھر میں ہی حلیم بنا لی اور سب کو کھلا بھی دی ، جس نے پسند نہی کی کچھ عرصے کے بعد اسی کی حلیم بنا ڈالی

    نہی بھائی – ملنے ملانے والا کام نہی ہوتے مجھ سے

    وہ سانڈ تمہارے ہی ٹیکس پر پل رہا ہے ۔ اور سناؤ گنجے کا استقبال کرنے جا رہے ہو؟
    #49
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    پی ٹی آئ اور آئ ایس آی لیں جی وہ مقام قیام آگیا ہے جس کے ڈر سے بوٹ چاٹیوں کی صفوں میں تھر تھلی مچی ہویی تھی تو پڑھیئے اس نیازی کی اصل کہانی. گفتگو کے دوران جنرل پاشا اور موصوف ایئر فورس کے افسر کے درمیان رابطوں اور گفتگو کا ذکر کئی مرتبہ ہوا تو ایسا کیسے ہوسکتا تھا کہ انسے پی ٹی آئ اور حنرل پاشا کے متعلق خبروں پر بات نہ ہوتی تو ایک مناسب موقع ملتے ہیں میں نے پوچھا کیا کبھی آپ نے جنرل پاشا سے پی ٹی آیئ کی سر پرستی کی بابت بھی گفتگو کی ہے ؟ تھوڑے توقف کے بعد انہوں نے صرف اتنا کہا کہ ” بلکل ہویی ہے” اب کمرے میں سکوت چھا گیا سب لوگ انتظار میں تھے کہ وہ کچھ مزید کہیں گے مگر انہوں نے آگے ایک لفظ نہیں کہا سر اگر آپ کو معلوم نہیں ہے یا یہ قومی راز کے ضمرے میں آتا ہے تو کویی بات نہیں- میں نے انکی مشکل آسان کرنا چاہی تو گویا ہوے کہ ارے نہیں نہیں ایسی کویی بات نہیں ہے میں تو بس سوچ رہا تھا کہ کہاں سے شروع کروں اور کتنا شئیر کرسکتا ہوں سر جتنی آپ کی مرضی ہو ہم سے شئیر کرلیں – خیر قصہ کچھ یوں ہے کہ مشرف کے جانے کے بعد ملک میں سیاسی طور پر صرف دو ہی آپشن تھے اور دونوں ہی کی حب الوطنی اور ٹریک ریکارڈ مشکوک تھا تو افواج پاکستان نے فیصلہ کیا کہ ان دونوں کے اثر رسوخ پر بند باندھنے کے لئے ایک تیسرا آپشن کی ضرورت ہے اس سلسلے میں نظر صرف عمران خان پر جاکر ٹہر رہی تھی کہ عوامی سطح پر اسکا امیج اچھا تو تھا مگر اسکے پاس ٹھوس تنظیم اور عوامی چہروں کی کمی تھی مگر ملٹری جس گھوڑے پر سر مایہ کاری کرتی ہے پہلے اسکا نفسیاتی تجزیہ بہت ضروری ہوتا ہے اور اس بات کا بھی خاص خیال رکھا جاتا ہے کہ کھلاڑی کا آئ قیو پچھتر سے زیادہ نہ ہو – اسکا ایک تو فائدہ یہ ہوتا ہے کہ اسکے برین کی واشنگ بہت آسان ہوجاتی ہے دوسرا جب تک اسکو گیم کی سمجھ آتی ہے دیر ہو چکی ہوتی ہے خان صاحب کے آئ قیو کے متعلق آئ ایس آئ ، آئ بی ، ملٹری پولیس اور اسلام آباد کی پولیس کا سکور پچپن سے ساٹھ کے درمیان تھا ویسے تو اتنے کم سکور کا شخص آئیڈیل ہوتا ہے مگر اسکے ساتھ خطرے بھی بڑھ جاتے ہیں کہ چوڑے میں نہ مروادے – خیر ا خان صاحب کی شخصیت کے تفصیلی جائزے، دماغی پیمائش، اور برین واشنگ کے لئے اس بات کا فیصلہ ہوا کہ اب پارہ بلڈنگ کے تہ خانہ میں واقع لیب میں انکو طلب کیا جائے – یہ لیب انفرا ریڈ برین سرچ ٢.٠ ، ایل جی برین واشنگ اینڈ ڈرائنگ مشین، نیازی٧١ سائکو انالیسس چیر جیسی جدید ترین مشینوں سے مزین ہے خیر وقت مقررہ پر خان صاحب تشریف لایے – تو انکو نیازی ٧١ چیر پر بیٹھنے کے لئے کہا گیا خان صاحب فورا آلتی پالتی باندھ کر بیٹھ گیے – انکے نفسیاتی تجزیہ کے لئے لانس نائیک آصف غفور صاحب خصوصی طور پر محاز جنگ چھوڑ کر، اس اہم قومی فریضہ کی ادائیگی کے لئے حاضر ہوے اور سوال جواب کا سلسلہ شروع ہوا آپ کو اگر ملک کا وزیر اعظم بنا دیا جائے تو سب سے پہلا کام آپ کیا کریں گے -لانس نائیک نے پوچھا خود کشی کرلوں گا – خان صاحب نے ہنستے ہوے جواب دیا ، ارے آپ ناراض مت ہوں ملک سے لوٹے گیے دو سو ارب ڈالر واپس لاؤں گا اتنے پیسوں کا آپ کیا کریں گے – لانس نائیک نے پوچھا ٹافیاں خریدوں گا – خان صاحب خشگوار موڈ میں تھے – لانس نائیک نے اپنے نچلے ہونٹوں کو اوپری دانتوں سے دبایا تو خان صاحب فورا سنجیدہ ہوگئے کہ یار کرنا کیا ہے سو ارب سے ای ایم ایف کے منہ پر ماروں گا اور سو ارب سے ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر بناؤں گا . سر یہ بندہ پاس ہے -لانس نائیک نے اپنے افسر کو پیج کیا اگلے مرحلہ میں انکے دماغ کا تعین کرنے کے لئے انفرا ریڈ برین سرچ ٢.٠ والے کمرے میں لایا گیا . خان صاحب کو مشین میں لگے بیڈ پر الٹا لٹایا گیا اور مشین نے سر تا پا انکا سکین مکمل کرکے انکے دماغ کی تلاش میں اپنی ناکامی کی رپورٹ پیش کی .اور رپورٹ میں لکھا آیا کہ نو برین ڈئیر . جب مشین کے سپلائیر سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے جواب دیا کہ یہ مشین ٥ ایم ایم سے چھوٹے دماغ کی نشاندھی نہیں کرسکتی اسکے لئے آپ کو مائس برین سرچ الٹرا وولئٹ سکینر لگوانا پڑے گا – خیر یہ نیا سکینر ٹی سی ایس سے منگوایا گیا اور ایک مرتبہ پھر خان صاحب کا سرتا پا سکین کیا گیا تو بلاخر ایک مقام پر مشین سے ٹوں ٹوں کی آواز آنے لگی بیڈ کے ارد گرد کھڑے سپاہیوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی رپورٹ میں بتایا گیا کہ خان صاحب کا برین ہیگ بوسن کی طرح عدم سے وجود اور پھر عدم کی طرف روانہ ہوجاتا ہے خیر جب انکو اگلے کمرے میں برین واشنگ کے لئے لایا گیا اور جب دھوبی کو خان صاحب کے دماغ کے سائز اور اسکی خصو صیات کے متعلق علم ہوا تو اسنے ایسے برین کی دھلائی اور خشکی کے مراحل میں دماغ کو نقصان پہنچنے کی ذمہ داری لینے سے انکار کردیا اس مرحلہ پر لانس نائیک اور سپاہیوں نے ملکر اس بات کا فیصلہ کرلیا کہ خان صاحب کو بغیر دھلائی کے قومی امور کا نگران مقرر کردیا جائے اور تمام سپاہی مینار پاکستان پر جلسے کی تیاریوں میں مصروف ہوگیے – اسکے بعد کی کہانی کا آپ سب کو علم ہی ہے خیر اوپر والی کہانی تو یوتھیوں کا خون خشک کرنے کے لئے لکھی تھی اب آجاییں اصل گفتگو کی طرف :lol: :lol: :lol: گفتگو کے دوران جنرل پاشا کے حوالے سے ذاتی رابطوں کا موصوف افسر نے بہت بار تذکرہ کیا تو میں نے پی ٹی آی کے متعلق حنرل پاشا کی سر پرستی کے حوالے سے استفسار کیا . تو انکا کہنا تھا جنرل پاشا سے اس سلسلے میں انکی گفتگو محض اتنی ہویی تھی کہ یہ بلکل ہمارا ایسٹ ہے مگر بہت حد تک اپنی لا ابالی شخصیت کی وجہ سے ہمیں مشکل میں ڈالتا ہے اور آگے جاکر بھی ڈالتا رہے گا . اس سے زیادہ انہوں نے اس موضوع پر گفتگو نہیں کی :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    گھوسٹ پروٹوکول بھائی جی

    زبردست، بہت زبردست، خصوصا پی ٹی آئی پر لچ تلنے والا حصہ تو بہت ہی زبردست ہے

    :bigsmile: :lol: :hilar: :clap: :clap: :clap:

    ایک چیز جو آپکی تحریروں میں بھی نمایاں ہے اور سیاست میں فوج کے کردار کے بارے میں جاننے والا ہر شخص محسوس کرتا ہے کہ فوج کا ملکی دفاع کے بارے میں کوئی فیصلہ کرے یا ملکی سیاست میں ملوث ہونے کا، بری فوج کبھی ایئر فورس اور نیول فورس کو کبھی اعتماد میں نہیں لیتی ہے

    پینسٹھ کی جنگ سے ایک دو ہفتے پہلے تک ایئر مارشل اصغر خان ایئر فورس کے سربراہ تھے لیکن انہیں جنرل ایوب خان کے آپریشن جبرالڈ کے بارے میں کوئی انفرمیشن نہیں تھی. بقول ایئر مارشل اصغر خان، جب میں نے کشمیر میں ٹینکوں کی نقل و حرکت کا پڑھا تو میں نے جنرل ایوب خان سے ملنے کا وقت لیا اور اس ملکر جنرل ایوب خان سے پوچھا کہ کیا آپ انڈیا پر حملہ کرنے جا رہے ہیں تو جنرل ایوب خان نے کہا کہ نہیں، نہیں ایسی کوئی بات نہیں ہے. میں نے جنرل ایوب سے کہا کہ آپ کشمیر میں کاروائی کریں گے تو انڈیا انٹرنیشنل بارڈر سے آپ پر حملہ کر دے گا اور پھر وہی ہوا

    اسی طرح جب جنرل پرویز مشرف اور اس کے دیگر تین ساتھی جرنیلوں نے کارگل میں مہم جوئی کی تو تب بھی ایئر فورس کو بے خبر رکھا گیا. جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ انڈیا نے ایئر فورس کا بھرپور استعمال کرکے ہمارے سینکڑوں فوجی شہید کر دیے جو انڈیا کی حدود میں غصے ہوئے تھے لیکن ایئر فورس اس مہم جوئی سے بے خبر ہونے کی وجہ سے حرکت میں نہ آ سکی

    میں نے تو مارشل لا دور میں شاید ہی ایئر فورس کا کوئی آفیسر کسی انتظامی عہدے پر دیکھا ہو یا انہیں فوج کے کوٹے پر سول انتظامیہ میں آتے دیکھا ہو. ایئر فورس والے بیچارے مسکین لوگ ہوتے ہیں جنھیں بری فوج والے کوئی زیادہ لفٹ نہیں کرواتے ہیں اس لیے ان کی معلومات بھی نہایت ہی محدود ہوتی ہیں. پاکستان کی اسٹبلشمنٹ بھی کور کمانڈرز پر ہی مشتمل ہے اور فوج کی ترجمانی بھی ہمیشہ بری فوج کے پاس ہی ہوتی ہے. حتی کہ فوجیوں کو ملنے والے تمغے بھی بری فوج ہی لے جاتی ہے. بڑی مشکل سے ایئر فورس نے جھوٹی سچی کہانی بنا کر راشد منہاس کیلیے ایک نشان حیدر حاصل کیا ہے ورنہ گیارہ میں سے دس نشان حیدر بری فوج ہی لے اڑی ہے

    جہاں تک پی ٹی آئی کے پھٹے ہوئے غبارے میں ہوا بھر کر اڑانے کی بات ہے تو اس میں فوج اور آئی ایس آئی خصوصا جنرل شجاع پاشا کا کردار بڑا واضح ہے. پی ٹی آئی کو کیوں اور کیسے ایک مقبول سیاسی پارٹی بنایا گیا تھا اور وہ سب کرنے والا کون تھا؟ آپکو علم ہے کہ عمران خان کے اکتوبر دو ہزار گیارہ والے جلسے سے پہلے اور دو ہزار تیرہ کے عام انتخابات تک پی ٹی آئی سترہ سال میں ایک سیٹ والی پارٹی تھی. زرداری حکومت کے دوران بھی پی ٹی آئی نے جتنے ضمنی انتخابات لڑے وہ سن کے سب ہارے. سترہ سال تک جو پارٹی اپنے عہدیدار بھی پورے نہیں رکھتی تھی اور ہر انتخاب میں اپنی ضمانتیں ضبط کرواتی تھی وہ مردہ پارٹی کیسے اچانک زندہ ہو گئی؟ جو لوگ آزاد الیکشن لڑ کر دس پندرہ ہزار ووٹ لے لیتے تھے وہ پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر پانچ ہزار ووٹ بھی نہ لے سکتے تھے. پھر یکایک پی ٹی آئی کے پاس کونسی جادو کی چھڑی آ گئی تھی کہ اسکے وارے نیارے ہو گئے؟

    عمران خان کے اکتوبر دو ہزار گیارہ والے جلسے سے چار پانچ ماہ قبل امریکی دو ہیلی کاپٹروں پر دندانتے ہوئے آئے تھے اور ایبٹ آباد میں کئی گھنٹے آپریشن کرکے شیخ اسامہ کو مار کر اسکی لاش لیکر چلے گئے تھے اور فوج اور آئی ایس آئی کو کانوں کان خبر نہ ہوئی تھی جس پر پوری قوم نے فوج اور آئی ایس آئی کا جو منہ کالا کیا تھا. اسوقت اسٹبلشمنٹ نے محسوس کیا کہ وہ تنہا رہ گئی ہے اور میثاق جمہوریت پر نواز شریف اور زرداری کے اکٹھے ہو جانے کی وجہ سے حکومت یا اپوزیشن میں سے کوئی بڑی سیاسی پارٹی حسب سابق اسکے حق میں آواز اٹھانے کے لیے میدان میں موجود نہیں ہے

    جب پوری قوم دو امریکی ہیلی کاپٹرز نہ روک سکنے پر فوج اور آئی ایس آئی کی نا اہلی پر لعنت بھیج رہی تھی تو اسوقت اسٹبلشمنٹ نے پی ٹی آئی کے مردہ جسم میں جان ڈالنے اور عمران خان کو میدان میں اتارنے کا فیصلہ کیا. اس وقت عمران خان وہ واحد سیاسی آدمی تھا جو کھل کر اسٹبلشمنٹ اور جنرل پاشا کی حمایت میں نکلا تھا اور ایبٹ آباد آپریشن کا زمہ دار زرداری حکومت کو ٹھہرایا. عمران خان کی تقریب رونمائی کی غرض سے فوج نے مینار پاکستان میں عمران خان کے جلسے کا انتظام کیا اور اس پھر جنرل پاشا عمران خان کو لیکر امریکی سفارتخانے گیا. امریکی سفیر سے ملاقات کا اعتراف عمران خان اور امریکی سفیر خود کر چکے ہیں. امریکی سفیر کا البتہ یہ کہنا تھا کہ اس کی جنرل پاشا اور عمران خان سے ملاقات اکٹھے نہیں بلکہ الگ الگ تھی کی الگ الگ ملاقات تھی

    پچھلے دھرنے سے پہلے عمران خان کی آئی ایس آئی کے سابق چیف جنرل شجاع پاشا اور اسوقت کے آئی ایس آئی چیف جنرل ظہیر السلام سے کم از کم تین ملاقاتیں ہوئیں. عمران خان ان ملاقاتوں کا بھی اعتراف کر چکا ہے. ایک ملاقات تو دھرنے سے کچھ دن پہلے شفقت محمود کے گھر پر ہوئی تھی. اسکے علاوہ پی ٹی آئی کے اسوقت کے صدر جاوید ہاشمی اور اعظم سواتی اس بات کا کھلے اظہار کر چکے ہیں کہ دھرنے کو اسٹبلشمنٹ کی حمایت حاصل تھی. اس کے بعد پنامہ کے نام پر جو ڈرامہ ہوا وہ ابھی کل ہی کی بات ہے

    • This reply was modified 2 months, 2 weeks ago by  Bawa.
    #50
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

     میں نے تو مارشل لا دور میں شاید ہی ایئر فورس کا کوئی آفیسر کسی انتظامی عہدے پر دیکھا ہو یا انہیں فوج کے کوٹے پر سول انتظامیہ میں آتے دیکھا ہو. ایئر فورس والے بیچارے مسکین لوگ ہوتے ہیں جنھیں بری فوج والے کوئی زیادہ لفٹ نہیں کرواتے ہیں

    باوا جی،
    لگتا ہے مار شل لا نہ سہی تو موجودہ شب دیگ نظام میں ایئر فورس کے بھاگ جاگ گئے ہیں

    :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    #51
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

     جہاں تک پی ٹی آئی کے پھٹے ہوئے غبارے میں ہوا بھر کر اڑانے کی بات ہے تو اس میں فوج اور آئی ایس آئی خصوصا جنرل شجاع پاشا کا کردار بڑا واضح ہے. پی ٹی آئی کو کیوں اور کیسے ایک مقبول سیاسی پارٹی بنایا گیا تھا اور وہ سب کرنے والا کون تھا؟ آپکو علم ہے کہ عمران خان کے اکتوبر دو ہزار گیارہ والے جلسے سے پہلے اور دو ہزار تیرہ کے عام انتخابات تک پی ٹی آئی سترہ سال میں ایک سیٹ والی پارٹی تھی. زرداری حکومت کے دوران بھی پی ٹی آئی نے جتنے ضمنی انتخابات لڑے وہ سن کے سب ہارے. سترہ سال تک جو پارٹی اپنے عہدیدار بھی پورے نہیں رکھتی تھی اور ہر انتخاب میں اپنی ضمانتیں ضبط کرواتی تھی وہ مردہ پارٹی کیسے اچانک زندہ ہو گئی؟ جو لوگ آزاد الیکشن لڑ کر دس پندرہ ہزار ووٹ لے لیتے تھے وہ پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر پانچ ہزار ووٹ بھی نہ لے سکتے تھے. پھر یکایک پی ٹی آئی کے پاس کونسی جادو کی چھڑی آ گئی تھی کہ اسکے وارے نیارے ہو گئے؟ عمران خان کے اکتوبر دو ہزار گیارہ والے جلسے سے چار پانچ ماہ قبل امریکی دو ہیلی کاپٹروں پر دندانتے ہوئے آئے تھے اور ایبٹ آباد میں کئی گھنٹے آپریشن کرکے شیخ اسامہ کو مار کر اسکی لاش لیکر چلے گئے تھے اور فوج اور آئی ایس آئی کو کانوں کان خبر نہ ہوئی تھی جس پر پوری قوم نے فوج اور آئی ایس آئی کا جو منہ کالا کیا تھا. اسوقت اسٹبلشمنٹ نے محسوس کیا کہ وہ تنہا رہ گئی ہے اور میثاق جمہوریت پر نواز شریف اور زرداری کے اکٹھے ہو جانے کی وجہ سے حکومت یا اپوزیشن میں سے کوئی بڑی سیاسی پارٹی حسب سابق اسکے حق میں آواز اٹھانے کے لیے میدان میں موجود نہیں ہے جب پوری قوم دو امریکی ہیلی کاپٹرز نہ روک سکنے پر فوج اور آئی ایس آئی کی نا اہلی پر لعنت بھیج رہی تھی تو اسوقت اسٹبلشمنٹ نے پی ٹی آئی کے مردہ جسم میں جان ڈالنے اور عمران خان کو میدان میں اتارنے کا فیصلہ کیا. اس وقت عمران خان وہ واحد سیاسی آدمی تھا جو کھل کر اسٹبلشمنٹ اور جنرل پاشا کی حمایت میں نکلا تھا اور ایبٹ آباد آپریشن کا زمہ دار زرداری حکومت کو ٹھہرایا. عمران خان کی تقریب رونمائی کی غرض سے فوج نے مینار پاکستان میں عمران خان کے جلسے کا انتظام کیا اور اس پھر جنرل پاشا عمران خان کو لیکر امریکی سفارتخانے گیا. امریکی سفیر سے ملاقات کا اعتراف عمران خان اور امریکی سفیر خود کر چکے ہیں. امریکی سفیر کا البتہ یہ کہنا تھا کہ اس کی جنرل پاشا اور عمران خان سے ملاقات اکٹھے نہیں بلکہ الگ الگ تھی کی الگ الگ ملاقات تھی پچھلے دھرنے سے پہلے عمران خان کی آئی ایس آئی کے سابق چیف جنرل شجاع پاشا اور اسوقت کے آئی ایس آئی چیف جنرل ظہیر السلام سے کم از کم تین ملاقاتیں ہوئیں. عمران خان ان ملاقاتوں کا بھی اعتراف کر چکا ہے. ایک ملاقات تو دھرنے سے کچھ دن پہلے شفقت محمود کے گھر پر ہوئی تھی. اسکے علاوہ پی ٹی آئی کے اسوقت کے صدر جاوید ہاشمی اور اعظم سواتی اس بات کا کھلے اظہار کر چکے ہیں کہ دھرنے کو اسٹبلشمنٹ کی حمایت حاصل تھی. اس کے بعد پنامہ کے نام پر جو ڈرامہ ہوا وہ ابھی کل ہی کی بات ہے

    باوا جی،
    آپ کی حوصلہ افزائی کا شکریہ،
    عمران خان کے کے مردہ وجود میں روح پھونکنے کی ان تفصیلات سے سیاست پر نظر رکھنے والے حضرات بخوبی واقف ہیں ایک اہم واقعہ شاید پارلیمنٹ کی ان کیمرہ بریفنگ میں پیش آیا تھا جہاں جنرل پاشا پارلیمنٹرینز کو اسامہ آپریشن پر بریفنگ دینے آے تھے جہاں نون لیگ نے انکو بہت ٹف ٹائم دیا تھا اور بعد میں وہ یہ کہتے پاے گیے تھے کہ نون لیگ کو کٹ ٹو سائز کردیں گے

    #52
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    باوا جی، آپ کی حوصلہ افزائی کا شکریہ، عمران خان کے کے مردہ وجود میں روح پھونکنے کی ان تفصیلات سے سیاست پر نظر رکھنے والے حضرات بخوبی واقف ہیں ایک اہم واقعہ شاید پارلیمنٹ کی ان کیمرہ بریفنگ میں پیش آیا تھا جہاں جنرل پاشا پارلیمنٹرینز کو اسامہ آپریشن پر بریفنگ دینے آے تھے جہاں نون لیگ نے انکو بہت ٹف ٹائم دیا تھا اور بعد میں وہ یہ کہتے پاے گیے تھے کہ نون لیگ کو کٹ ٹو سائز کردیں گے

    گھوسٹ پروٹوکول بھائی

    جنرل پاشا اور جنرل کیانی پارلمنٹ میں بریفنگ دیتے ہوئے اپنی نا اہلی اور بزدلی کا اعتراف کر رہے تھے اور فوجیوں کا سلیکٹڈ وزیر اعظم جنرل نیازی کی طرح امریکہ میں بیٹھا بھڑکیں مار رہا تھا کہ امریکہ کو اسامہ بن لادن کے بارے میں ہم نے بتایا تھا

    شکر کرے کہ امریکی نے جوتے اتار کر فوجیوں کے سلیکٹڈ وزیر اعظم کے سر پر مارنے شروع نہیں کر دیے تھے

    :hilar: :hilar: :hilar:

    #53
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    پی ٹی آئ اور آئ ایس آی
     گفتگو کے دوران جنرل پاشا کے حوالے سے ذاتی رابطوں کا موصوف افسر نے بہت بار تذکرہ کیا تو میں نے پی ٹی آی کے متعلق حنرل پاشا کی سر پرستی کے حوالے سے استفسار کیا . تو انکا کہنا تھا جنرل پاشا سے اس سلسلے میں انکی گفتگو محض اتنی ہویی تھی کہ یہ بلکل ہمارا ایسٹ ہے مگر بہت حد تک اپنی لا ابالی شخصیت کی وجہ سے ہمیں مشکل میں ڈالتا ہے اور آگے جاکر بھی ڈالتا رہے گا . اس سے زیادہ انہوں نے اس موضوع پر گفتگو نہیں کی :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    #54
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    باوا جی،
    جنرل پاشا نے جسطرح بودی بھیڑوں کی طرح لوگوں کو غول در غول فرقہ عمرانیہ کی طرف ہانکا وہ تو اہل نظر سے کبھی بھی پوشیدہ نہیں تھا مگر اب اس کھیل میں شریک اور متاثرین رازوں سے پردہ اٹھانا شروع ہوگئے ہیں
    عامیوں سے تو کویی گلا ہے نہ شکوہ ہے کہ شاید انکے علم میں واردات پاشا و عمرانی ہو ہی نہ مگر جن لوگوں کے سامنے یہ راز روز روشن کی طرح عیاں تھا وہ بھی اسکی حمایت کے بد ترین جرم میں شریک رہے بلکہ بہت ہی ڈھٹائی سے اس شیطانی کھیل کا دفاع کرتے رہے
    اسی لئے میں نونیوں کو شک کا فائدہ دیتا ہوں کہ دوران واردات ضیاء الحق، انکے سامنے محض پینتیس سالہ اور وہ بھی ٹوٹی پوٹھی تاریخ تھی ، نہ شعور تھا نہ آزادی تھی نہ سوال تھے نہ جواب تھے
    مگر فرقہ عمرانیہ کے سامنے پینسٹھ سالہ تاریخ تھی میڈیا نسبتا آزاد تھا شعور بہت بہتر تھا نوے کی تاریک دھائی تھی کارگل تھا دہشت گردی تھی ملا فضل اللہ تھا ، صوفی محمد تھا قادری پادری تھا ممبئی تھا پارلیمنٹ پر حملہ تھا
    اس لئے یہ لوگ تماشائی نہیں ہیں شریک جرم ہیں جو بویا ہے وہ کاٹنے کے حقدار ہیں

    #55
    Awan
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 121
    • Posts: 2401
    • Total Posts: 2522
    • Join Date:
      10 Jun, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    As time progressed he opened up, curious what was he drinking in those 5 hours.

    Shirazi man, not that drink which you drink often. I  am also interested Ghost Protocol please go further. Thanks

    #56
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13003
    • Total Posts: 13150
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    باوا جی، جنرل پاشا نے جسطرح بودی بھیڑوں کی طرح لوگوں کو غول در غول فرقہ عمرانیہ کی طرف ہانکا وہ تو اہل نظر سے کبھی بھی پوشیدہ نہیں تھا مگر اب اس کھیل میں شریک اور متاثرین رازوں سے پردہ اٹھانا شروع ہوگئے ہیں عامیوں سے تو کویی گلا ہے نہ شکوہ ہے کہ شاید انکے علم میں واردات پاشا و عمرانی ہو ہی نہ مگر جن لوگوں کے سامنے یہ راز روز روشن کی طرح عیاں تھا وہ بھی اسکی حمایت کے بد ترین جرم میں شریک رہے بلکہ بہت ہی ڈھٹائی سے اس شیطانی کھیل کا دفاع کرتے رہے اسی لئے میں نونیوں کو شک کا فائدہ دیتا ہوں کہ دوران واردات ضیاء الحق، انکے سامنے محض پینتیس سالہ اور وہ بھی ٹوٹی پوٹھی تاریخ تھی ، نہ شعور تھا نہ آزادی تھی نہ سوال تھے نہ جواب تھے مگر فرقہ عمرانیہ کے سامنے پینسٹھ سالہ تاریخ تھی میڈیا نسبتا آزاد تھا شعور بہت بہتر تھا نوے کی تاریک دھائی تھی کارگل تھا دہشت گردی تھی ملا فضل اللہ تھا ، صوفی محمد تھا قادری پادری تھا ممبئی تھا پارلیمنٹ پر حملہ تھا اس لئے یہ لوگ تماشائی نہیں ہیں شریک جرم ہیں جو بویا ہے وہ کاٹنے کے حقدار ہیں

    گھوسٹ پروٹوکول بھائی جی

    اصل میں عمران خان اور اس کے یوتھیے بیس سال سیاست میں ذلیل و خوار ہونے کے باوجود صرف ایک سیٹ (وہ بھی جو جنرل پرویز مشرف نے ریفرنڈم کی حمایت کے صلے میں دی تھی) حاصل ہونے کی وجہ سے سخت مایوسی کا شکار تھے

    انکی خواہش تھی کہ کسی طرح عمران خان کو وہ کالی شیروانی پہننے کا موقع مل جائے (جس کے اب اس کے تابوت پر رکھنے کے آثار واضح ہو چکے تھے) بیشک انہیں اس کے عوض ساری عمر فوجیوں کے بوٹ چاٹنے پڑ جائیں

    دوسری طرف فوجی بھی میثاق جمہوریت کی وجہ سے پی پی پی اور مسلم لیگ نون کی طرف سے وہ پہلی سی حمایت نہ ملنے پر پریشان تھے. لہذا ان کیلیے ایک اچھا موقع تھا کہ عمران خان کو کالی شیروانی پہنا کر یوتھیوں دم توڑتی خواہش پوری کرکے ان سے ساری عمر بوٹ چٹوائیں

    #57
    Zed
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 114
    • Posts: 1116
    • Total Posts: 1230
    • Join Date:
      17 Feb, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    Ghost Protocol

    Why didn’t you ask him about the events of 12th May 2007?

    The list of humble workers issued by joint investigation team which was pasted on the front page of Pkpolitics.com?

    The truth behind that murder in London?

    Culprits of Baldia factory?

    MQM Haqiqi?

    Should we expect that you have left the best for the last? I am sure it’s full of tantalizing and eye opening details.

    #58
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4379
    • Total Posts: 4517
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    Ghost Protocol Why didn’t you ask him about the events of 12th May 2007? The list of humble workers issued by joint investigation team which was pasted on the front page of Pkpolitics.com? The truth behind that murder in London? Culprits of Baldia factory? MQM Haqiqi? Should we expect that you have left the best for the last? I am sure it’s full of tantalizing and eye opening details.

    زیڈ بھائی صاحب،
    آپ چونکہ صف اول کے بلاگر ہیں دو ٹکے کے مولوی نہیں ہیں تو آپ کے احترام میں جواب بنتا ہے .
    موصوف کا تعلق لاھور سے تھا اور اور جنرل پاشا کا ذکر کئی مرتبہ ذاتی دوست کی حیثیت میں آیا تھا تو انسے متعلقہ سوالات ہی کئیے گئے تھے .
    آپ کے پیش کردہ سوالات میں نے محفوظ کرلئے ہیں گر آئندہ کبھی ملاقات ہویی تو پوچھ لوں گا -اگر آپ کو وقت کی قلت کا سامنا ہو تو ایوان صدر فون کرکے دندان ساز صدر مملکت سے سوال کرسکتے ہیں کہ آپ کو اتنی بےچینی سے رات کے پچھلے پہر ایسے گھناونے جرائم کے ملزم کے فون کا کیوں انتظار تھا یا گالہ کے بنی کو پیج کرکے پوچھ سکتے ہیں کہ “اچھا ہے اچھا ہے” کیا ہوتا ہے پھر بھی تسلی نہ ہو تو انصاف کی ایک ہی آنکھ جناب جسٹس چودھری سے فون کرکے پوچھ سکتے ہیں کہ بھائی جو اپنے انصاف کا تاج پہننے کے لئے اتنے بندوں کی بلی چڑھ وادی مگر تاج پہن کر انکو کیوں بھول گیے ؟
    اب میرا آپ سے بھی سوال ہے کہ یہ جو پرویز الہی کہہ رہا ہے کہ کسطرح پاشا صاحب نے ان کے بندے توڑے تھے تو آپ دیانت داری سے بتایں کہ کیا آپکے علم میں یہ ایسے شواہد / اطلاعات نہیں تھے کہ فرقہ عمرانیہ کی یکا یک بڑھوتری میں ایجنسی اپنا انتقام لے رہی تھی؟
    یہ بلکل ممکن ہے کہ آپ کے علم میں بھی ہو مگر آپ دیانت داری سے اس آقا و غلام کے درمیان ساجھے داری کے اعلی و ارفع مقاصد پر ایمان بھی رکھتے ہوں

    #59
    Zed
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 114
    • Posts: 1116
    • Total Posts: 1230
    • Join Date:
      17 Feb, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    زیڈ بھائی صاحب، آپ چونکہ صف اول کے بلاگر ہیں دو ٹکے کے مولوی نہیں ہیں تو آپ کے احترام میں جواب بنتا ہے . موصوف کا تعلق لاھور سے تھا اور اور جنرل پاشا کا ذکر کئی مرتبہ ذاتی دوست کی حیثیت میں آیا تھا تو انسے متعلقہ سوالات ہی کئیے گئے تھے . آپ کے پیش کردہ سوالات میں نے محفوظ کرلئے ہیں گر آئندہ کبھی ملاقات ہویی تو پوچھ لوں گا -اگر آپ کو وقت کی قلت کا سامنا ہو تو ایوان صدر فون کرکے دندان ساز صدر مملکت سے سوال کرسکتے ہیں کہ آپ کو اتنی بےچینی سے رات کے پچھلے پہر ایسے گھناونے جرائم کے ملزم کے فون کا کیوں انتظار تھا یا گالہ کے بنی کو پیج کرکے پوچھ سکتے ہیں کہ “اچھا ہے اچھا ہے” کیا ہوتا ہے پھر بھی تسلی نہ ہو تو انصاف کی ایک ہی آنکھ جناب جسٹس چودھری سے فون کرکے پوچھ سکتے ہیں کہ بھائی جو اپنے انصاف کا تاج پہننے کے لئے اتنے بندوں کی بلی چڑھ وادی مگر تاج پہن کر انکو کیوں بھول گیے ؟ اب میرا آپ سے بھی سوال ہے کہ یہ جو پرویز الہی کہہ رہا ہے کہ کسطرح پاشا صاحب نے ان کے بندے توڑے تھے تو آپ دیانت داری سے بتایں کہ کیا آپکے علم میں یہ ایسے شواہد / اطلاعات نہیں تھے کہ فرقہ عمرانیہ کی یکا یک بڑھوتری میں ایجنسی اپنا انتقام لے رہی تھی؟ یہ بلکل ممکن ہے کہ آپ کے علم میں بھی ہو مگر آپ دیانت داری سے اس آقا و غلام کے درمیان ساجھے داری کے اعلی و ارفع مقاصد پر ایمان بھی رکھتے ہوں

    Sir,

    The simple answer to your questions is power politics. No matter how strong PTIs support was amongst youngsters, it was never enough to dislodge the ruling mafia of Punjab. As you can notice KPK was swept by PTI without any major turncoats but Punjab was a different ball game. I am sure you understand power politics.

    Having said that, I understand MQM’s reservations in Karachi but riding on the lap of a dictator and shooting innocent people for his pleasure, what’s the justification for that?

    Political parties took advantage of restoration of judiciary movement to dislodge a dictator. This is well within the norms of political maneuvering but violence against opponents can never be accepted.

    There is a long chargesheet against MQM, I don’t know how anyone can defend any of it. The typical defense is pointing fingers back at those who raise questions.

    Here is a small sample of MQM tactics.

    p.s. I am not frontline blogger at all, BlackSheep was very kind and generous with his praises. 😀

    • This reply was modified 2 months, 1 week ago by  Zed.
    #60
    casanova
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 490
    • Total Posts: 490
    • Join Date:
      4 Sep, 2018
    • Location: گلشن گلشن

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    Ghost Protocol Why didn’t you ask him about the events of 12th May 2007? The list of humble workers issued by joint investigation team which was pasted on the front page of Pkpolitics.com? The truth behind that murder in London? Culprits of Baldia factory? MQM Haqiqi? Should we expect that you have left the best for the last? I am sure it’s full of tantalizing and eye opening details.

    :serious:

    ارے زیڈ صاحب! سوال تو وہ پوچھے جاتے ہیں جن کی جانکاری لے کر چسکوری پھُبتیاں کسنا مقصود ہو۔۔۔۔لیکن  جن پرشّنوں کے جواب من کے لاکر میں پہلے ہی مدفون ہوں انکو کریدنے کی جستجو کون کرے۔۔۔۔

    • This reply was modified 2 months, 1 week ago by  casanova.
Viewing 20 posts - 41 through 60 (of 62 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!