Thread: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

Home Forums Hyde Park / گوشہ لفنگاں ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

This topic contains 61 replies, has 14 voices, and was last updated by  Ghost Protocol 3 months, 1 week ago. This post has been viewed 1599 times

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 62 total)
  • Author
    Posts
  • #1
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    حال ہی میں میری ملاقات ایئر فورس کے ایک سابقہ اعلی افسرسے ہویی، جو خود بھی فائٹر پائلٹ ہونے کے ساتھ ساتھ حساس عہدوں پر بھی فائز رہے ہیں اور آج بھی کسی نہ کسی طرح حکومت وقت اور فوج سے وابستہ ہیں اور ماضی قریب کے واقعات سے ذاتی طور پر واقفیت رکھتے تھے، .
    محفل کی ابتدا میں انہوں نے انتہائی محتاط رویہ اپنایا اور کچھ کہنے سے قبل شرکا محفل کو تولنے کی کوشش میں لگے رہے. عمومی پاکستانی کردار کے بر خلاف کہ جو بڑھکوں اور خود نمائی سے شروع ہو کر اسی پر ختم ہوتا ہے ، موصوف باوجود میری کوششوں کے کچھ بھی کہنے میں احتیاط کرتے نظر آے مگر تقریبا پانچ گھنٹوں پر محیط اس محفل کے اختتام تک مجھے اندازہ ہوگیا تھا کہ انہوں نے شروع میں ایسا رویہ کیوں اپنایا تھا .
    گفتگو میں سوات آپریشن، فائٹ اگینسٹ ٹیرر ،ڈرون حملوں، اسامہ بن لادن کی ایبٹ آباد میں موجودگی اور امریکی آپریشن، جنرل پاشا اور پی ٹی آئ کی سپورٹ، بلوچستان آپریشن، جے ایف ١٧ تھنڈر کی ڈیولپمنٹ جیسے موضوعات پر گفتگو ہویی .
    اگر دانشگردوں کو دلچسپی ہو تو اس گفتگو کی کچھ جھلکیاں یہاں میں پیش کرنے کا کشٹ اٹھا سکتا ہوں تو اپنی راے سے مجھے آگاہ کردیں اور یہ بھی بتادیں کہ اوپر بیان کردہ کس موضوع کو جاننے میں آپ کو زیادہ دلچسپی ہے؟

    • This topic was modified 3 months, 3 weeks ago by  الشرطہ.
    #2
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 346
    • Posts: 7867
    • Total Posts: 8213
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    آپ سارے ہی سوالات کا جواب دے دیں مثلا ایبٹ آباد میں دنیا کا موسٹ وانٹڈ پرسن فوج نے کیوں رکھا ہوا تھا اور کویٹہ میں دنیا کا دوسرا موسٹ وانٹڈ ملا عمر شوری سمیت کیوں چھپایا ہوا تھا؟

    یہ تو ہو نہیں سکتا کہ امریکی اس سے بے خبر رہے ہوں  امریکیوں نے افغانستان میں اپنا بھاری جانی نقصان کروایا آج تک کروا رہے ہیں مگر پھر بھی صبر کرتے رہے اور پاک فوج کو سزا دینے سے گریز کیا ؟

    اب پاک فوج کی کیا سوچ ہے کیا پالیسی بدلے گی؟؟

    #3
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 169
    • Posts: 2200
    • Total Posts: 2369
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    As time progressed he opened up, curious what was he drinking in those 5 hours.

    • This reply was modified 3 months, 3 weeks ago by  Shirazi.
    #4
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    As time progressed he opened up, curious what was he drinking in those 5 hours.

    Cranberry juice

    :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

    #5
    Salman
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 129
    • Total Posts: 129
    • Join Date:
      27 Oct, 2019

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    جو جتنا بڑا منافق ہے اتنا ہی بڑا جمہورا ہے

    :serious:

    #6
    Zed
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 117
    • Posts: 1173
    • Total Posts: 1290
    • Join Date:
      17 Feb, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    Yes, please share the details.

    #7
    Guilty
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 0
    • Posts: 4552
    • Total Posts: 4552
    • Join Date:
      6 Nov, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    پروٹوکول ۔۔۔۔۔

    مجھے زاتی طور پر اوپر کسی بھی ٹاپک میں کوئی دلچسپی نہیں ہے ۔۔۔۔۔

    دوسرے میں توقع بھی نہیں رکھتا کہ ۔۔۔۔ کوئی فوجی ۔۔۔۔ کسی قسم کی دا نشمندا نہ بات کرسکتا ہے ۔۔۔

    میں اکثر ٹی وی پر ۔۔۔۔ آ دھ درجن فوجی جرنیلیوں کو سنتا رھتا ہوں ۔۔۔ ان کی گفتگو کا لیو ل ۔۔۔۔۔۔ مبشر لقمان  سے زیادہ نہیں دیکھی گئی ۔۔۔۔

    ۔۔۔۔

    لیکن اگر آپ اس فوجی سے کوئی خاص بات پوچھ سکے ہیں ۔۔۔۔ یا کوئی بھی قابل زکر ۔۔۔۔ انفارمیشن نکوالا پا ئے ہیں تو ضرور شیئر کریں ۔۔۔۔۔

    • This reply was modified 3 months, 3 weeks ago by  Guilty.
    #8
    Salman
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 0
    • Posts: 129
    • Total Posts: 129
    • Join Date:
      27 Oct, 2019

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    Yes, please share the details.

    اگر تو فکشن لکھنے پر کوئی ایوارڈ ہے دینے کیلئے، تو ایسی فرمائشیں کرو

    کیونکہ اگر اسے اپنے منافقانہ فوج مخالف رونے دھونے پر ایوارڈ نہ ملا تو اس نے پھر سے بَین ڈالنے شروع کر دینے ہیں

    :bigsmile: :bigsmile:

    #9
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    اسامہ بن لادن اور امریکی حملہ
    اس بارے میں میرا ان سے سوال تھا کہ کیا واقعی اسامہ ایبٹ آباد میں رہائش پزیر تھا اور امریکی آپریشن پاکستان کی ملی بھگت سے ہوا تھا؟ اسکے جواب میں وہ گویا ہوے کہ بلکل یہی سوال کافی سارے لوگ پوچھتے ہیں یہاں تک کہ آرمی کی ہائی کمانڈ میں سے بھی یہ سوال انسے بطور خاص پوچھا جاتا ہے خصوصا اس لئے کہ فضائی سر حدوں کی نگہبانی ایئر فورس کے فرائض میں آتی ہے- اور یہی سوال انہوں نے جنرل پاشا سے بھی پوچھا تھا کہ کیا واقعی اسامہ اس کمپاونڈ میں تھا تو جنرل پاشا نے بتایا کہ حملے کے بعد اسامہ کی بیوہ اور بچوں کو آئ ایس آی نے اپنی تحویل میں لے کر تفتیش کی اور دوران تفتیش اسکی بیوہ سے بھی یہی سوال پوچھا گیا کہ واقعی اسامہ وہاں تھا ؟ تو اسکی چھوٹی بیٹی نے روتے ہوے کہا کہ میرے باپ کو میرے سامنے امریکیوں نے گولی ماری ہے آپ لوگ کیسی باتیں کرتے ہیں.
    اس بات سے معلوم ہوتا ہے کہ واقعی اسامہ وہاں رہ رہا تھا مگر اجنسی کو اسکی موجودگی کا علم نہیں تھا.
    میں نے پوچھا کہ کیا ڈی این اے سے تصدیق نہیں ہویی ؟
    تو انہوں نے جواب دیا کہ اسکا انکو علم نہیں ہے.
    پھر میں نے پوچھا کہ ایئر فورس امریکی حملہ کا بر وقت پتہ چلانے میں کیوں ناکام رہی؟
    انکا جواب تھا کہ امریکیوں کو ہم دوست سمجھتے تھے اور مغربی بارڈر سے تقریبا لا پرواہ تھے ہماری توجہ کا مرکز ہمیشہ مشرقی سرحد ہوتی ہے اور اس کی ہی نگرانی ہم لوگ کررہے تھے
    پھر میں نے پوچھا کہ اصل میں تو امریکیوں کو مشکوک ٹیلی فون کال کی اطلاع آئ ایس آئ نے ہی دی تھی تو پھر امریکی نے کیوں آپریشن تنہا کیا ؟
    اب انکا جواب کچھ چونکانے والا تھا کہنے لگے کہ ہم نے امریکیوں کو جان بوجھ کر مشکوک کال کی اطلاع نہیں دی تھی . اصل میں پاکستان سے ہونے والی ہر کال کا سکرپٹ آئ ایس آئ کے پاس ہوتا ہے اور انٹلیجنس شیرنگ کے تحت امریکیوں نے یہ سکرپٹ طلب کرنا شروع کردیا تھا اور نسبتا نچلے درجہ کے افسروں نے تمام کالز کا ڈیٹا بغیر کسی باقاعدہ اجازت کہ امریکیوں کو فراہم کرنا شروع کردیا تھا . اسی ڈیٹا کے تجزیہ کے ذرئیے امریکیوں کو مشکوک کال کا علم ہوا اور باقی کی کہانی کا تو سب کو علم ہے . بس امریکیوں نے پاکستانیوں پر اعتماد کرنے کا خطرہ مول لئے بغیر آپریشن کیا
    آپریشن کے فوری بعد صدر زرداری نے بغیر کسی مشورے کہ امریکی سفیر کو کامیاب حملہ پر مبارک باد دی فوج کی اعلی قیادت کو جب اسکا علم ہوا تو انہوں نے صدر زرداری کی اچھی خاصی کلاس لی تو دوسرے دن امریکی سفیر کو بلاکر رسمی احتجاج کیا گیا.
    پھر میں نے پوچھا کہ ایبٹ آباد کمیشن کی رپورٹ کیوں سامنے نہیں آنے دی گئی
    انکا جواب تھا کہ یہ سرکاری طور پر اعتراف کے مترادف ہوتا کہ ہم نے اسامہ کو چھپایا ہوا تھا دنیا میں کویی ہماری اس بات پر اعتماد نہیں کرتا کہ ہم کو علم ہی نہیں تھا – اور اگر وہ کر بھی لیتے تو ہم نا اہل قرار پاتے . کنفیوزن کا ایک فائدہ تو یہ ہے کہ دنیا سمجھتی ہے کہ ہم نے اتنا عرصہ اسامہ کو کامیابی سے چھپایا ہوا تھا

    #10
    Bawa
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 147
    • Posts: 13117
    • Total Posts: 13264
    • Join Date:
      24 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    جو جتنا بڑا منافق ہے اتنا ہی بڑا جمہورا ہے :serious:

    اور بوٹ چاٹنے والے سارے صادق اور امین ہیں

    :bigsmile:

    #11
    Believer12
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 346
    • Posts: 7867
    • Total Posts: 8213
    • Join Date:
      14 Sep, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    اسامہ بن لادن اور امریکی حملہ اس بارے میں میرا ان سے سوال تھا کہ کیا واقعی اسامہ ایبٹ آباد میں رہائش پزیر تھا اور امریکی آپریشن پاکستان کی ملی بھگت سے ہوا تھا؟ اسکے جواب میں وہ گویا ہوے کہ بلکل یہی سوال کافی سارے لوگ پوچھتے ہیں یہاں تک کہ آرمی کی ہائی کمانڈ میں سے بھی یہ سوال انسے بطور خاص پوچھا جاتا ہے خصوصا اس لئے کہ فضائی سر حدوں کی نگہبانی ایئر فورس کے فرائض میں آتی ہے- اور یہی سوال انہوں نے جنرل پاشا سے بھی پوچھا تھا کہ کیا واقعی اسامہ اس کمپاونڈ میں تھا تو جنرل پاشا نے بتایا کہ حملے کے بعد اسامہ کی بیوہ اور بچوں کو آئ ایس آی نے اپنی تحویل میں لے کر تفتیش کی اور دوران تفتیش اسکی بیوہ سے بھی یہی سوال پوچھا گیا کہ واقعی اسامہ وہاں تھا ؟ تو اسکی چھوٹی بیٹی نے روتے ہوے کہا کہ میرے باپ کو میرے سامنے امریکیوں نے گولی ماری ہے آپ لوگ کیسی باتیں کرتے ہیں. اس بات سے معلوم ہوتا ہے کہ واقعی اسامہ وہاں رہ رہا تھا مگر اجنسی کو اسکی موجودگی کا علم نہیں تھا. میں نے پوچھا کہ کیا ڈی این اے سے تصدیق نہیں ہویی ؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ اسکا انکو علم نہیں ہے. پھر میں نے پوچھا کہ ایئر فورس امریکی حملہ کا بر وقت پتہ چلانے میں کیوں ناکام رہی؟ انکا جواب تھا کہ امریکیوں کو ہم دوست سمجھتے تھے اور مغربی بارڈر سے تقریبا لا پرواہ تھے ہماری توجہ کا مرکز ہمیشہ مشرقی سرحد ہوتی ہے اور اس کی ہی نگرانی ہم لوگ کررہے تھے پھر میں نے پوچھا کہ اصل میں تو امریکیوں کو مشکوک ٹیلی فون کال کی اطلاع آئ ایس آئ نے ہی دی تھی تو پھر امریکی نے کیوں آپریشن تنہا کیا ؟ اب انکا جواب کچھ چونکانے والا تھا کہنے لگے کہ ہم نے امریکیوں کو جان بوجھ کر مشکوک کال کی اطلاع نہیں دی تھی . اصل میں پاکستان سے ہونے والی ہر کال کا سکرپٹ آئ ایس آئ کے پاس ہوتا ہے اور انٹلیجنس شیرنگ کے تحت امریکیوں نے یہ سکرپٹ طلب کرنا شروع کردیا تھا اور نسبتا نچلے درجہ کے افسروں نے تمام کالز کا ڈیٹا بغیر کسی باقاعدہ اجازت کہ امریکیوں کو فراہم کرنا شروع کردیا تھا . اسی ڈیٹا کے تجزیہ کے ذرئیے امریکیوں کو مشکوک کال کا علم ہوا اور باقی کی کہانی کا تو سب کو علم ہے . بس امریکیوں نے پاکستانیوں پر اعتماد کرنے کا خطرہ مول لئے بغیر آپریشن کیا آپریشن کے فوری بعد صدر زرداری نے بغیر کسی مشورے کہ امریکی سفیر کو کامیاب حملہ پر مبارک باد دی فوج کی اعلی قیادت کو جب اسکا علم ہوا تو انہوں نے صدر زرداری کی اچھی خاصی کلاس لی تو دوسرے دن امریکی سفیر کو بلاکر رسمی احتجاج کیا گیا. پھر میں نے پوچھا کہ ایبٹ آباد کمیشن کی رپورٹ کیوں سامنے نہیں آنے دی گئی انکا جواب تھا کہ یہ سرکاری طور پر اعتراف کے مترادف ہوتا کہ ہم نے اسامہ کو چھپایا ہوا تھا دنیا میں کویی ہماری اس بات پر اعتماد نہیں کرتا کہ ہم کو علم ہی نہیں تھا – اور اگر وہ کر بھی لیتے تو ہم نا اہل قرار پاتے . کنفیوزن کا ایک فائدہ تو یہ ہے کہ دنیا سمجھتی ہے کہ ہم نے اتنا عرصہ اسامہ کو کامیابی سے چھپایا ہوا تھا

    اسکی بات پر مجھے یقین نہیں ہے کہ اسامہ کی ایبٹ آباد کے اس کمپاونڈ میں روپوشی کا ہای کمان کو کچھ علم نہیں تھا، ایبٹ آباد ایک خاص قسم کے ماحوال والا شہر ہے جہاں پر بہت بڑی فوجی کنٹونمنٹ اور کشمیری جہادی تنظیموں کا مکمل کنٹرول ہے، پھر ایبٹ آباد میں بھی اس کالونی میں جہاں چھاونی کے فوجی ملازمین آباد ہیں بلکہ یہ چھاونی کا ہی علاقہ ہے اسامہ ایک خاص قسم کے بنے ہوے گھر میں قیام پزیر تھا، اس گھر کو ایک بنکر کی طرز پر بنایا گیا تھا اور وقت پڑنے پر اس میں سے دفاعی لڑای لڑنے کا بھی انتظام تھا چونکہ میڈیا یہ سارا کچھ نوٹ کرسکتا تھا اس لئے اسے جلدی میں  ڈی مولش کروا دیا گیا حالانکہ اس کو رہنا چاہئے تھا، پاکستانی ڈاکٹر کو یہ علم ہوگیا تھا مگر فوج کو علم نہیں تھا، یہ تھیوری ہضم نہیں ہوسکتی

    میرے خیال میں وہاں کے مکین اتنی ہمت نہیں رکھتے کہ کوی بیان دے سکیں مگر ضرور وہاں کی نگرانی چابیس گھنٹے جاری رہتی ہوگی اردگرد کے گھروں میں  سے کچھ خفیہ اہلکاروں  کو دئے گئے ہونگے تاکہ وہ آنے جانے والوں کی نگرانی رکھیں لیکن امریکی سی آی اے کا مقابلے میں یہ بالکل فیل ہوگئے اور انہوں نے دن دیہاڑے ان کی آنکھوں میں دھول جھونک کر ایک ایسے بندے سے کام لیا جس کو یہ اپنا سمجھ رہے تھے، اسامہ کی ہلاکت کے فوری بعد انہوں نے ڈاکٹر کو پکڑ لیا حالانکہ امریکیوں نے تو ڈآکٹر کے رول پر ان سے کوی مشاورت کی ہی نہیں تھی، اس کا مطلب ہے کہ وہ جگہ ان کی نگرانی میں تھی تبھی انہیں پتا تھا کہ یہاں کون کون آتا رہا ہے؟

    نتیجہ گفتگو یہ ہے کہ اسامہ انہی کی چھتر چھاوں میں رہتا تھا دوسر ثبوت ملا عمر ہے جو انہی کے پاس رہائش پزیر تھا بلکہ دو سال تک اس کی موت کا بھی علم نہ ہوسکا کیونکہ اسے چھپایا گیا تھا

    • This reply was modified 3 months, 3 weeks ago by  Believer12.
    #12
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 169
    • Posts: 2200
    • Total Posts: 2369
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    After listening to President Trump’s recent 48 minute speech I am convinced Abu Bakar AlBaghdadi was a bigger fish than Osama Bin Ladin and killing him was a bigger accomplishment.

    #13
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    وار اگینسٹ ٹیرر ، سوات آپریشن اور پائلٹس کا کورٹ مارشل
    اس موضوع پر گفتگو آگے بڑھاتے ہوے میں نے اپنے سوات سے تعلق رکھنے والے دوست کی روداد انسے شیر کی کہ سوات آپریشن میں ایئر فورس نے دہشت گردوں کی واضح موجودگی کو نظر انداز کرتے ہوے عام شہریوں پر بمباری کی
    انہوں نے اس بات سے اختلاف نہیں کیا کہ بہت سارے عام شہری اس جنگ کا شکار ہوے مگر اسکی وجہ انہوں نے غلط امریکی انٹلیجنس کو قرار دیا انکے بقول امریکہ پاکستان میں استحکام نہیں دیکھنا چاہتا تھا اور چاہتا تھا کہ فوج اور عوام باہمی دست و گریبان رہیں
    میں نے عرض کی حضور سوات تو ایک سیٹل علاقہ تھا اسمیں آپریشن کے لئے آپ لوگ امریکی انٹیلیجنس پر انحصار کررہے تھے ؟
    تو انکا جواب تھا بلکل ہم لوگ امریکی انٹلیجنس پر انحصار کررہے تھے
    بات پھر بھی میرے حلق سے نہیں اتر رہی تھی تو میں نے پوچھا کہ کیا یہ جواز کافی ہے کہ اپنے شہریوں پر آپ جنگی طیاروں کا استعمال کریں؟
    اس موقع پر فورم پر موجود بوٹ چاٹیوں کی طرح محفل میں موجود بوٹ چاٹیوں نے مداخلت کی اور کہا کہ دیکھیں امریکی بھی جب ڈرون حملے کرتے ہیں تو کوشش کرتے ہیں کہ انٹلیجنس درست ہو مگر کبھی انکی بھی اطلاعات درست نہیں ہوتیں ہیں اور انسے غلطی ہوجاتی ہیں
    میں نے عرض کی کہ امریکی اپنے لحاظ سے دشمن ملک میں کاروائی کررہے ہیں یا اپنے ملک میں ؟
    جواب آیا امریکی تو ہم کو دشمن سمجھتے ہیں اور یہی سمجھ کر کاروائی کرتے ہیں
    میں نے عرض کی کہ امریکی اپنے دشمن کو مارنے میں حد درجہ احتیاط کرتے ہیں اور ڈرون جیسے انتہائی نفیس ہتیار کا استعمال کرتے ہیں تاکہ کولیٹرل ڈیمیج کم سے کم ہو جبکہ آپ اپنے ملک میں اندھا دھن بمباری کسطرح کرسکتے ہیں؟ کیا کبھی امریکیوں نے یا کسی اور ملک نے اپنے شہریوں پر بمباری بھی کی ہے ؟
    اب یہاں انہوں نے ایک اور نئی بات بتائی جو میں نے کبھی میڈیا میں نہیں سنی کہ بہت سارے پائلٹس نے اپنے لوگوں پر بمباری کرنے سے انکار کردیا تھا جسکے نتیجہ میں انکو کورٹ مارشل کا سامنا کرنا پڑا اور اپنی جاب سے بھی ہاتھ دھونا پڑا
    میرا سوال تھا کہ کیا پائلٹس کا یہ اقدام درست تھا ؟
    کہنے لگے کہ پروفیشنل پائلٹس کی ٹریننگ کا سب سے اہم سبق ہی یہ ہوتا ہے کہ کمانڈنگ افسر کا جو بھی حکم ملے اس پر بلا سوچے سمجھے عمل کرنا ہے
    میں نے پوچھا کہ چاہے آپ کو علم ہو کہ مرنے والے اپنے بے گناہ شہری ہی کیوں نہ ہوں ؟
    کہنے لگے بلکل
    میرا اگلا سوال تھا کہ اگر یہی صورتحال اگر پنڈی یا لاہور میں پیش آے تو پھر بھی ایئر فورس کے بیشتر پائلٹس ایسا ہی کریں گے؟
    کہنے لگے ایسی صورتحال میں زیادہ لوگوں کا کورٹ مارشل کا امکان ہوگا

    #14
    نادان
    Participant
    Offline
    • Expert
    • Threads: 93
    • Posts: 14273
    • Total Posts: 14366
    • Join Date:
      31 Aug, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    اسامہ بن لادن اور امریکی حملہ اس بارے میں میرا ان سے سوال تھا کہ کیا واقعی اسامہ ایبٹ آباد میں رہائش پزیر تھا اور امریکی آپریشن پاکستان کی ملی بھگت سے ہوا تھا؟ اسکے جواب میں وہ گویا ہوے کہ بلکل یہی سوال کافی سارے لوگ پوچھتے ہیں یہاں تک کہ آرمی کی ہائی کمانڈ میں سے بھی یہ سوال انسے بطور خاص پوچھا جاتا ہے خصوصا اس لئے کہ فضائی سر حدوں کی نگہبانی ایئر فورس کے فرائض میں آتی ہے- اور یہی سوال انہوں نے جنرل پاشا سے بھی پوچھا تھا کہ کیا واقعی اسامہ اس کمپاونڈ میں تھا تو جنرل پاشا نے بتایا کہ حملے کے بعد اسامہ کی بیوہ اور بچوں کو آئ ایس آی نے اپنی تحویل میں لے کر تفتیش کی اور دوران تفتیش اسکی بیوہ سے بھی یہی سوال پوچھا گیا کہ واقعی اسامہ وہاں تھا ؟ تو اسکی چھوٹی بیٹی نے روتے ہوے کہا کہ میرے باپ کو میرے سامنے امریکیوں نے گولی ماری ہے آپ لوگ کیسی باتیں کرتے ہیں. اس بات سے معلوم ہوتا ہے کہ واقعی اسامہ وہاں رہ رہا تھا مگر اجنسی کو اسکی موجودگی کا علم نہیں تھا. میں نے پوچھا کہ کیا ڈی این اے سے تصدیق نہیں ہویی ؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ اسکا انکو علم نہیں ہے. پھر میں نے پوچھا کہ ایئر فورس امریکی حملہ کا بر وقت پتہ چلانے میں کیوں ناکام رہی؟ انکا جواب تھا کہ امریکیوں کو ہم دوست سمجھتے تھے اور مغربی بارڈر سے تقریبا لا پرواہ تھے ہماری توجہ کا مرکز ہمیشہ مشرقی سرحد ہوتی ہے اور اس کی ہی نگرانی ہم لوگ کررہے تھے پھر میں نے پوچھا کہ اصل میں تو امریکیوں کو مشکوک ٹیلی فون کال کی اطلاع آئ ایس آئ نے ہی دی تھی تو پھر امریکی نے کیوں آپریشن تنہا کیا ؟ اب انکا جواب کچھ چونکانے والا تھا کہنے لگے کہ ہم نے امریکیوں کو جان بوجھ کر مشکوک کال کی اطلاع نہیں دی تھی . اصل میں پاکستان سے ہونے والی ہر کال کا سکرپٹ آئ ایس آئ کے پاس ہوتا ہے اور انٹلیجنس شیرنگ کے تحت امریکیوں نے یہ سکرپٹ طلب کرنا شروع کردیا تھا اور نسبتا نچلے درجہ کے افسروں نے تمام کالز کا ڈیٹا بغیر کسی باقاعدہ اجازت کہ امریکیوں کو فراہم کرنا شروع کردیا تھا . اسی ڈیٹا کے تجزیہ کے ذرئیے امریکیوں کو مشکوک کال کا علم ہوا اور باقی کی کہانی کا تو سب کو علم ہے . بس امریکیوں نے پاکستانیوں پر اعتماد کرنے کا خطرہ مول لئے بغیر آپریشن کیا آپریشن کے فوری بعد صدر زرداری نے بغیر کسی مشورے کہ امریکی سفیر کو کامیاب حملہ پر مبارک باد دی فوج کی اعلی قیادت کو جب اسکا علم ہوا تو انہوں نے صدر زرداری کی اچھی خاصی کلاس لی تو دوسرے دن امریکی سفیر کو بلاکر رسمی احتجاج کیا گیا. پھر میں نے پوچھا کہ ایبٹ آباد کمیشن کی رپورٹ کیوں سامنے نہیں آنے دی گئی انکا جواب تھا کہ یہ سرکاری طور پر اعتراف کے مترادف ہوتا کہ ہم نے اسامہ کو چھپایا ہوا تھا دنیا میں کویی ہماری اس بات پر اعتماد نہیں کرتا کہ ہم کو علم ہی نہیں تھا – اور اگر وہ کر بھی لیتے تو ہم نا اہل قرار پاتے . کنفیوزن کا ایک فائدہ تو یہ ہے کہ دنیا سمجھتی ہے کہ ہم نے اتنا عرصہ اسامہ کو کامیابی سے چھپایا ہوا تھا

    تو وہ بے نظیر نے کیوں کہا کہ اسامہ کو فوت ہوئے زمانہ بیت گیا .

    فوج تو بقول آپ کے قابل اعتبار نہیں ..تو سیاست دان نے کس کھاتے جھوٹ بولا

    اور اتنی بڑی  کامیابی کو امریکہ نے دنیا کو دکھائے بغیر سمندر برد کیوں کر دیا

    #15
    Shirazi
    Participant
    Offline
    • Professional
    • Threads: 169
    • Posts: 2200
    • Total Posts: 2369
    • Join Date:
      6 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    I feel this fictional officer is no one but Ghost Protocol Sahib himself. He is giving his take on issues from the shoulders of this fictional Air force  officer, very much like Mohammad used God’s shoulder.

    #16
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 802
    • Total Posts: 820
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    پتہ نہیں کیوں مجھے ایسا لگتا ہے کہ ائیر فورس کا یہ خیالی سابقہ آفیسر، ایم کیو ایم نائن زیرو اور قبرستان کے آس پاس پتنگ اڑاتا تھا ۔

    آج کل کینیڈا میں آہیں بھرتا ہے 

    #17
    Zed
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 117
    • Posts: 1173
    • Total Posts: 1290
    • Join Date:
      17 Feb, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    ،سر جی

    میرے آبائی گاؤں میں خوشحال نامی ایک “رٹیر فوجی” تھے۔ یہ موصوف فوج سے فارغ ہو کر سعودیہ نوکری کرنے چلے گئے، وہاں ہر محفل میں موصوف اپنی فوج کی نوکری کا ذکر کرتے اِور خوب مصالحہ مار کےاپنی دلیری کی کہانیاں بیان کرتے مثلا میں نے فلاں جنگ میں اتنے ہندو مارے، سکھوں کا تنہا مقابلا کیا، اس جنگ میں ایسے ہوا ویسے ہوا ۔ باقی لوگ وطن کی یاد تازہ کرنے کے لیے ان کی محفل میں خوب شرکت کرتے اور مزے لے کر ان کے قصے سنتے۔

    پھر کچھ عرصے بعد کوئی شخص چھٹی پر گھر آیا اور کسی محفل میں بات کرتے خوشحال صاحب کا ذکر کرنے لگا تو اسی محفل میں شامل ریٹایرڈ فوجی نے چونک کر کہا

    “او خوشحال تے ٹھول کٹنا ہونا سا”

      (وہ خوشحال تو ڈھول بجایا کرتا تھا)

    پھر سب کو پتا چلا  کے موصوف فوجی بینڈ میں تھے اور جنگ تو کیا اس سے دور دور تک ان کا کوئی تعلق نہی تھا۔ اس کی بعد  لوگؤں نے خوشحال صاحب کا نام خوشحال خٹک رکھ  دیا اور ساتھ یہ  بات بھی پھیلا دی کے خوشحال ناصرف بہت اچھا ڈھول بجاتے ہیں بلکے بہترین خٹک ڈانس بھی کرتے  ہیں۔

    😂😁

    کیا آپ سمجھتے  ہیں کہ ایک عالی فوجی افسر  نجی محفلوں میں صرف چند پیگ  لگا کر سارے قومی راز افشاں کر سکتا ہے؟

    کیا اتنےگہرے راز ایک فوجی افسر کی پاس ہوتے ہیں یا ملٹری کی ٹاپ براس کے پاس ہی ایسی معلومات ہوتی ہیں؟ 

    • This reply was modified 3 months, 3 weeks ago by  Zed.
    #18
    کک باکسر
    Participant
    Offline
    • Advanced
    • Threads: 18
    • Posts: 802
    • Total Posts: 820
    • Join Date:
      9 Dec, 2016

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    سر جی، میرے آبائی گاؤں میں خوشحال نامی ایک “رٹیر فوجی” تھے۔ یہ موصوف فوج سے فارغ ہو کر سعودیہ نوکری کرنے چلے گئے، وہاں ہر محفل میں موصوف اپنی فوج کی نوکری کا ذکر کرتے اِور خوب مصالحہ مار کےاپنی دلیری کی کہانیاں بیان کرتے مثلا میں نے فلاں جنگ میں اتنے ہندو مارے، سکھوں کا تنہا مقابلا کیا، اس جنگ میں ایسے ہوا ویسے ہوا ۔ باقی لوگ وطن کی یاد تازہ کرنے کے لیے ان کی محفل میں خوب شرکت کرتے اور مزے لے کر ان کے قصے سنتے۔ پھر کچھ عرصے بعد کوئی شخص چھٹی پر گھر آیا اور کسی محفل میں بات کرتے خوشحال صاحب کا ذکر کرنے لگا تو اسی محفل میں شامل ریٹایرڈ فوجی نے چونک کر کہا، “او خوشحال تے ٹھول کٹنا ہونا سا” (وہ خوشحال تو ڈھول بجایا کرتا تھا) پھر سب کو پتا چلا کے موصوف فوجی بینڈ میں تھے اور جنگ تو کیا اس سے دور دور تک ان کا کوئی تعلق نہی تھا۔ اس کی بعد لوگؤں نے خوشحال صاحب کا نام خوشحال خٹک رکھ دیا اور ساتھ یہ بات بھی پھیلا دی کے خوشحال ناصرف بہت اچھا ڈھول بجاتے ہیں بلکے بہترین خٹک ڈانس بھی کرتے ہیں۔ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ ایک عالی فوجی افسر نجی محفلوں میں صرف چند پیگ لگا کر سارے قومی راز افشاں کر سکتا ہے؟ کیا اتنےگہرے راز ایک فوجی افسر کی پاس ہوتے ہیں یا ملٹری کی ٹاپ براس کے پاس ہی ایسی معلومات ہوتی ہیں؟

    جس طرح منا بھائی ایم بی بی ایس میں سنجے دت کو دماغی کیمیکل لوچے کی وجہ سے ہر جگہ گاندھی نظر آتا تھا۔ اسی طرح گھوسٹ کو بھی دماغی پریشر کی وجہ سے ہر جگہ فوجی نظر آتے ہیں۔گھوسٹ وہی لکھتا ہے جو اس کا دماغ مانتا ہے۔ جسٹ انجوائے دس ایپوسوڈ 

    :hilar:

    #19
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    تو وہ بے نظیر نے کیوں کہا کہ اسامہ کو فوت ہوئے زمانہ بیت گیا . فوج تو بقول آپ کے قابل اعتبار نہیں ..تو سیاست دان نے کس کھاتے جھوٹ بولا اور اتنی بڑی کامیابی کو امریکہ نے دنیا کو دکھائے بغیر سمندر برد کیوں کر دیا

    محترمہ،
    آپ کو میرے بارے میں شدید غلط فہمی ہے اور میں اس بارے میں آپ کی کچھ زیادہ مدد نہیں کرسکتا ہوں.

    #20
    Ghost Protocol
    Participant
    Offline
    Thread Starter
    • Professional
    • Threads: 138
    • Posts: 4463
    • Total Posts: 4601
    • Join Date:
      7 Jan, 2017

    Re: ایئر فورس کے سابقہ افسر سے ایک ملاقات

    I feel this fictional officer is no one but Ghost Protocol Sahib himself. He is giving his take on issues from the shoulders of this fictional Air force officer, very much like Mohammad used God’s shoulder.

    Shirazi  bhai,

    Sometimes, facts are stranger than fictions. I can understand disturbance among ranks and files of boot lickers as next episode will put some light on connection between ISI and PTI and that too directly from general Pasha.  But I am just curious as  what part of this discussion made you think that its made up story?

Viewing 20 posts - 1 through 20 (of 62 total)

You must be logged in to reply to this topic.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!