ہیں تلخ بہت بندہ مزدور کے اوقات

Home Forums Siasi Discussion ہیں تلخ بہت بندہ مزدور کے اوقات ہیں تلخ بہت بندہ مزدور کے اوقات

#457
Zia Yasir
Participant
Offline
  • Advanced
  • Threads: 48
  • Posts: 1165
  • Total Posts: 1213
  • Join Date:
    4 Apr, 2017
  • Location: London

Re: ہیں تلخ بہت بندہ مزدور کے اوقات

ضیا یاسر صاحب ۔ میں نے تو مذاقاً کچھ لکھا تھا۔ آپ نے قران کی آیات کوٹ کر کے شرمندہ اور گنہگار بھی کر دیا۔ دیکھیں اسلام کا اپنا ایک معاشرتی سسٹم ہے ۔ اور اس سسٹم کو جزوی طور پر رائج نہیں کیا جاسکتا۔ اس سسٹم کے سارے اجزا اور احکامات انٹر کونیکٹڈ ہیں۔ اگر کوئی بھوکا ہونے کی وجہ سے چوری کرتا ہے تو اس کا ہاتھ نہیں کٹے گا بلکہ حکمران کٹہرے میں کھڑا ہو گا۔ اسی طرح اگر زنا کا کیس ہے تو سب سے پہلے تو آپ وہ گواہ ڈھونڈیں کے جو نہ صرف تعداد میں پورے ہوں، خود کسی بھی الزام سے بری ہوں، ان کی ان زانیوں سے کوئی ذاتی رنجش نہ ہو وغیرہ ۔ پھر انہوں نے اپنی آنکھوں سے گناہ ہوتے دیکھا ہو۔ اس کے بعد یہ سوال ہوگا کہ جو دیکھا وہ زنا کے ذمرے میں آتا ہے یا نہیں۔ کیا انہوں نے انہیں صرف قابلِ اعتراض حرکتیں کرتے دیکھا یا حالتِ نکاح میں۔ اس کے بعد اب آپ ایک گروہ ایسے ایماندار بندوں کا ڈھونڈنے نکلیں جو کہ خود پاک صاف ہوں۔۔۔ جب یہ سب ہو جائے تو اگر دو بندے زانیوں کی طرف سے یہ گواہی دے دیں کہ ہمیں گواہ بنا کر ان دونوں نے متعہ کیا تھا تو جہاں سے شروع ہوئے تھے وہیں آ کھڑے ہوں گے۔ ویسے میرے خیال میں کوڑوں سے بڑی سزا وہ شرمندگی ہے جو ایسی سزا جھیلنے کے بعد اسی معاشرے میں زندہ رہنے میں ہے۔

شاہد عباسی صاحب، میرا ارادہ ہرگز آپ کو شرمندہ کرنے کا نہیں تھا، میں انجانے میں ہوئی اپنی اس غلطی پر معذرت خواہ ہوں۔۔۔  اب آتے ہیں آپ کے دلائل کی طرف، چلیے ہم اسلامی معاشرتی سسٹم کو جزوی طور پر نہیں بلکہ کلی طور پر رائج کرتے ہیں، تو کیا آپ اس نظام کے حق میں ہوں گے۔۔۔؟ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ اسلام کا مذکورہ معاشرتی نظام آج کے دور کے ساتھ مطابقت رکھتا ہے اور دورِ حاضر کے تقاضے پورے کرتا ہے۔۔۔؟؟ آپ نے زناء ثابت کرنے کے سلسلے میں اسلام کی جو شرائط بیان کی ہیں، وہ اگرچہ ایک طرح سے پورا ہونا کافی مشکل ہیں، مگر آج کے دور میں ٹیکنالوجی کی بدولت زنا کو ثابت کرنا تو لمحوں کا کام ہے، ڈی این اے کی بدولت یہ کام آسانی سے ہوسکتا ہے، اگر آپ یہ اعتراض کرتے ہیں کہ اسلام میں ڈی این اے کا کوئی تصور نہیں تو اس کا مطلب ہے اسلامی نظام میں آپ کو ٹیکنالوجی کی بدولت حاصل اور بھی بہت سی سہولیات سے دستبردار ہونا ہوگا، یا پھر میں یہ بھی کہہ سکتا ہوں کہ اگر آج کے دور میں زنا کو بغیر گواہوں کے آسانی سے ثابت کیا جاسکتا ہے اور آپ اس کے باوجود گواہوں والی شرط پر مصر رہتے ہیں تو اس کا مطلب تو یہ ہوا کہ مقصد مسئلے کو حل کرنا نہیں بلکہ مقصد ایک مخصوص لائن فالو کرنا ہے، پھر تو یہ نظام آج کے مسائل حل کرنے میں ناکام ثابت نہ ہوا۔۔۔؟؟ میں ابھی بیلیور بھائی کے دو ٹوک جواب کا انتظار کررہا ہوں، دیکھتا ہوں وہ کیا جواب دیتے ہیں۔۔۔

Navigation