Home Forums Non Siasi ازدواجی تعلق ازدواجی تعلق

#17
JMP
Participant
Offline
Thread Starter
  • Professional
  • Threads: 289
  • Posts: 4613
  • Total Posts: 4902
  • Join Date:
    7 Jan, 2017

Re: ازدواجی تعلق

جناب، محبت کی اچھی کہی۔ کیا محبت وقت کے ساتھ ساتھ بدلتی رہتی ہے ؟ کیا یہ عمر کے تقاضوں کی طرح ، مختلف سہاروں کی محتاج ہوتی ہے ؟ کیا محبت ، عقل وشعور ، سوچ بچار کے بعد ہوجاتی ہے / کی جاتی ہے ؟ وہ کونسے انسانی جسمانی تقاضے ہیں جب کے پس منظر میں محبت ہوجاتی ہے ؟ کیا محبت کے جذبےکی شدت کے پیش نظر اپنے ہمسفر کو بھی وقت کے ساتھ ساتھ تبدیل کردینا چاھیے ؟ کیا یہ صرف ایک پوٹینک رشتہ ہے جو انسانی جبلی تقاضوں کی روغیدگی سے پاک ہوتا ہے ؟ امید ہے اپنی پوسٹ کے تناظر میں ، آپ ان سوالوں کے جوابات سے نوازیں گے ۔ نیاز مند۔

محبت تو ہے ایک کاغذ کی ناؤ ادُھر بہتی ہے جس طرف ہو بہاؤ

Zaidi sahib

نادان sahiba

Believer12 sahib

محترم
بہت شکریہ

گو میں نے محبت کی نہیں بلکہ ہم آہنگی کی بات کی تھی جس میں محبت شامل ہو سکتی ہے اور نہیں بھی پھر بھی محبت ایک عنصر ہو سکتا ہے دو انسانوں کو قریب لانے میں

جہاں تک آپ کے پوچھے سوالوں کا تعلق ہے میں ہمیشہ کی طرح کوئی جاندار جواب نہیں دے سکوں گا مگر میری حقیر اور ممکن ہے غلط راۓ میں :

١) ہاں محبت وقت کے ساتھ بدل سکتی ہے اور یہ ایک بنیادی فرق ہے عشق اور محبت میں کہ عشق اٹل ہے اور محبت کم یا زیادہ یس شروع یا ختم ہو سکتی ہے
٢) جی ہاں محبت مختلف تقاضوں کی محتاج ہوتی ہے جس میں اکثر کچھ بدلے میں چاہیے ہوتا ہے چاہے وہ دوسرے کی محبت ہو، جسم ہو یا کچھ اور ہو جبکہ عشق بے لوث ہوتا ہے اور کسی تقاضہ کا محتاج نہیں ہوتا
٣) محبت گو شعور کے منافی ہو سکتی ہے مگر محبت شعور سے مستفید بھی ہوسکتی ہے . عشق شعور کو گھس بھی نہیں ڈالتا اور شعور عشق کی معراج تک نہیں پہنچ سکتا
٤) اگر کسی اور سے محبت ہو جاۓ تو ہم سفر بھی تبدیل ہو سکتا ہے اگر محبت ہونے والے شخص کی مرضی شامل ہو. اگر یک طرفہ محبت ہے تو شاید ایسا ممکن نہیں کہ موجودہ ہم سفر تبدیل کیا جا سکے
٦) آخری سوال نہیں سمجھ پایا

اکثر زندگی میں ایک شخص کسی سے محبت کرتا ہے مگر اس کو اپنا نہیں سکتا اور کسی اور کو اپنا لیتا ہے اور ضروری نہیں کے جس کو اپنائے اس سے محبت بھی کرے .

اس موضوع پر میرے خیال میں اس محفل کے کسی بھی محترم ہستی اور سب محترم ہستیوں کے لئے بات کرنا انتہائی مشکل ہے اور مجھے کوئی امید نہیں تھی کے کوئی اس موضوع پر بات آگے بڑھاے گا اور آپ اور محترمہ نادان صاحبہ اور محترم بلیور صاحب نے کچھ بات کی جس کی مجھے امید نہیں تھی

میں ایک بار پھر کہوں گا کے اگر مذہب اور مشرق کی اقدار جو تبدیل ہو رہی ہیں ان کو صرف ایک لمحہ کے لئے دور رکھیں تو وہ کونسی قباحت ہے جو کسی بالغ مرد اور عورت کو اپنی مرضی سے ساتھ رہینے میں رکاوٹ ہے . ایک اور بات یہ ہے کہ فطرت کی ضروریات مرد اور خاتوں دونوں میں ہوتی ہیں مگر ساتھ رہنے کا مقصد سرف وہ ایک فطری ضرورت نہیں ہے. ساتھ رہنے کی کچھ اور اہم وجوہات یا تقاضے ہو سکتے ہیں

ایک دو پہلو ہیں میری نظر میں اور ان کو میں بیان کر سکتا ہوں مگر میں دوسروں کی راۓ جاننا چاہوں گا

×
arrow_upward DanishGardi