Home Forums Non Siasi ازدواجی تعلق ازدواجی تعلق

#3
Believer12
Participant
Offline
  • Expert
  • Threads: 398
  • Posts: 9095
  • Total Posts: 9493
  • Join Date:
    14 Sep, 2016

Re: ازدواجی تعلق

جے بھای ہم مسلمان شادی سے مراد نکاح کو لیتے ہیں جس کیلئے کاغذ پر دستخط کرنے کی کوی شرعی روک موجود نہیں ہے۔ شادی دراصل ایک قسم کا اعلان سمجھا جاتا ہے کہ یہ دو افراد آپس میں باہمی رضامندی سے شادی کرنے جارہے ہیں شائد اس اعلان کا مقصد بھی یہ ہو کہ اب کوی دوسرا شخص اس عورت سے نکاح کا پیغام مت بھیجے معاشرے میں رہتے ہوے اسطرح کی رسومات بھی ہوتی ہیں کہ جس لڑکی کی منگنی کسی سے ہوجاتی ہے وہ اس کی طرف سے بھیجا گیا کڑا پہن لیتی ہے یعنی کوی دوسرا پھر پیغام بھیجے تو اس کو برا سمجھا جاتا ہے اول تو کوی ایسا کرتا ہی نہیں ۔ اس سے پتا چلتا ہے کہ شادی ایک قسم ا اعلان ہی ہے۔ صدیوں پہلے کاغذ نہیں تھا تو کیا نکاح نہیں ہوتے تھے ؟

اصل رشتہ ازدواج جو اسلام میں بتایا گیا ہے وہ نکاح ہے۔ اس کے علاوہ اہل کتاب سے بھی شادی جائز ہے حتی کہ  یہ بھی پابندی نہیں کہ نکاح اسلامی طریقے سے ہی ہو۔ میرے بہت سارے دوستوں نے مجھ سے پوچھا ہے کہ انہوں نے ایک گوری کے ساتھ شادی رجسٹرڈ کروای ہے مگر دونوں علیحدہ رہتے ہیں تو میں نے انہیں بتایا کہ چاہے عدالت میں ہی شادی ہوی ہے مگر یہ شادی ہے تم لوگ میاں بیوی ہو اکٹھے رہ سکتے ہو ۔ ہوسکتا ہے میں غلط ہوں مگر شادی تو کسی جنگل میں جہاں صرف دو افراد ہوں ان کے مابین بھی ہوجاتی ہے۔ شادی اسلامی طریق پر ہو یا عیسای یا یہودی طریقے پر وہ جائز ہے بس دو گواہوں کی موجودگی ضروری ہے کیونکہ اس کا ذکر کیا گیا ہے۔ ہندووں میں پھیرے لینا بھی شادی ہی گنا جاے گا کیونکہ انکے ہاں یہی طریق رائج ہے حتی کہ کوی انڈونیشیا یا برازیل کے کسی قبیلے کی لڑکی سے انکے انداز میں عجیب و غریب رسومات سے گزر کر شادی کرتا ہے تو بھی اسے شادی ہی کہا جاے گا

ملالہ نے دراصل ان سب طریقوں سے ہٹ کر بات کردی ہے یعنی وہ شادی کی قائل ہی نہیں اور اس کے خیال میں دو لوگوں کو ساتھ رہنے کیلئے کسی واسطے کی ضرورت نہیں اگر وہ کہے کہ اعلان ہی کافی ہے سائین کرنے ضروری نہیں تو پھر وہ درست ہے کیونکہ کسی کاغذ پر سائین نہ بھی کئے جاییں تو نکاح ہوجاتا ہے شادی ہوجاتی ہے

آخر پر اس کا نچوڑ یہی نکلتا ہے کہ شادی ایک واحد معاملہ ہے جس کا مذہب سے کوی تعلق نہیں رکھا گیا تاکہ شادیاں کرنے کے خواہاں لوگوں کو مشکلات پیش نہ آئیں مقصد یہ کہ نسل انسانی چلتی رہے اور جب انکے درمیان  دو گواہان کی موجودگی میں کوی زبانی یا تحریری معاہدہ (شادی یا نکاح) ہو تو وہ اس کی پاسداری کریں

  • This reply was modified 1 month, 2 weeks ago by Believer12.
×
arrow_upward DanishGardi