Home Forums Siasi Discussion کھیل تبدیل ہوا چاہتا ہے کھیل تبدیل ہوا چاہتا ہے

#44
Bawa
Participant
Offline
  • Expert
  • Threads: 154
  • Posts: 15517
  • Total Posts: 15671
  • Join Date:
    24 Aug, 2016

Re: کھیل تبدیل ہوا چاہتا ہے

فوجی تو اس مملکتِ خدا داد کے مالک ہیں بچہ دیں یا انڈہ، بات حکومت کی کارکردگی کی ہو رہی ہے باوا سائیں۔ رہے فوجی تو ان سے لڑنے کے لئے ان سیاست دانوں میں کسی کے گَٹوں میں پانی نہی ہے۔ ورنہ تو انقلابی مریم نواز یوں بار بار چپ کے روزے نہ رکھتی۔ جب بھی کسی طرح کوئی ڈیل شیل ہونے کی امید ہوتی ہے تو ٹیں ٹیں چھوڑ کر جھاڑو پوچے میں لگ جاتی ہے۔ حضرت بلیک شیپ نے خوب فرمایا تھا کہ فوج ان سب کے لئے کانسٹینٹ ہے، بلاول ہو یا عمران یا نواز اور اس کی بیٹی، یہ سب ان کا دستِ شفقت ہی تو چاہتے ہیں۔بس جس بچے کو کسی وقت کم شفقت مل رہی ہوتی ہے تو وہ اینٹ سے اینٹ بجانے کے نعرے مار کر یا دور بیٹھ کر بڑ بڑ کر کے اپنی کیفیت کا احساس دلاتے ہیں تاکہ مالکان پھر سے انہیں قابلِ شفقت سمجھ لیں۔ عوام بھی یہی چاہتے ہیں تو یہ بھی جمہوریت ہی ہوئی نا۔

شاہد عباسی بھائی

نہ تو میں کسی بوٹ چاٹنے والے کے کانسٹینٹ کو کانسٹینٹ مانتا ہوں اور نہ ہی کارگل میں اپنے شہیدوں کی میتیں چھوڑ کر دم دبا کر بھاگ نکلنے والے اور انہیں اپنے فوجی تسلیم کرنے سے انکار کرنے والے بزدلوں کو اس مملکت کا مالک مانتا ہوں

میرا ایک ہی کانسٹینٹ پر ایمان ہے جو اول سے ہے اور آخر تک رہے گا اور وہی اس مملکت سمیت کل کائنات کا مالک ہے. وہ چاہے تو خود کو کانسٹینٹ سمجھنے والے ہاتھیوں کے مالکوں کو ابابیل جیسے معمولی پرندوں سے نیست و نابود کروا دے

فوجیوں کے بوٹ چاٹنے والوں کے کانسٹینٹ اور آپکے مملکت خدا داد کے نام ان نہاد مالکوں کی اوقات بھی اتنی سی ہے کہ مشرقی پاکستان سے آ کر میاں افتخار الدین کی حویلی کے سرونٹ کوارٹرز میں ٹھہرنے والے ایک معمولی سیاسی کارکن نے ان پچانوے ہزار کانسٹینٹ کی پوری دنیا کے سامنے پتلونیں اتروا دی تھیں

وہ چاہے تو پھر کسی سیاست دان کی حویلی کے سرونٹ کوارٹرز میں قیام پزیر کسی معمولی سیاسی کارکن کو اس کی زمین پر خدا بنے بیٹھے ان کانسٹینٹ کو ذلیل و خوار کرنے کیلیے بھیج دے

بیشک وہ ہر چیز پر قادر ہے

×
arrow_upward DanishGardi