خدا کی دوا

Home Forums Non Siasi خدا کی دوا خدا کی دوا

#2
Guilty
Participant
Offline
  • Expert
  • Threads: 0
  • Posts: 5363
  • Total Posts: 5363
  • Join Date:
    6 Nov, 2016

Re: خدا کی دوا

دعا کے بارے لوگ بہت سے لوگوں کے اپنے اپنے طور پر خیالات پائے گئے ہیں ۔۔۔۔

کچھ لوگ کہتے ہیں کہ ۔۔۔ دعا قبول ہوتیں لیکن ۔۔۔۔ مقررہ وقت پر پوری ہوتی ہیں ۔۔۔

کچھ لوگ کہتے ہیں ۔۔۔ کہ ۔۔۔۔ ضروری نہیں کہ ھر دعا قبولیت کا شرف حاصل کرسکے ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دعا کے بارے میرا زاتی تجربہ بھی بہت دلچسپ ہے ۔۔۔۔۔۔۔

میں نے زندگی میں دو تین مرتبہ ہی شدت سے دعا مانگی ۔۔۔ ورنہ ۔۔۔۔ نماز یا عام زندگی میں ۔۔۔ عام دعائیں ہیں مانگتا رھاہوں ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

میں نے اپنی زاتی تجربے سے یہ دیکھا ہے کہ ۔۔۔۔ انسان دعا اپنے طور پر اپنے زاویے سے مانگتا ہے ۔۔۔۔ لیکن دعا کو پورا کرنے والا رب ۔۔۔۔ بندے کی دعا کو اپنے ہی انداز میں پوری کرتا ہے ۔۔۔۔

یہ ضروری نہیں ہے کہ ۔۔۔۔ انسان جس زاویے سے دعا ما نگ رھا ہے ۔۔۔۔ رب بندے کو اسی طرح ۔۔۔ من عن ۔۔۔۔ دعا پوری کرے ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

بہت سال پہلے ۔۔۔ اسلام آباد میں ۔۔۔۔ ایک بہت با اثر شخص نے ۔۔۔۔  میرے صرف تین سو ۔۔۔ روپے دینے تھے ۔۔۔

وہ شخص سرگودھا کا رھنے والا تھا ۔۔۔ بہت بااثر تھا ۔۔۔ اس کے بھائی رشتہ دار ۔۔۔ افسر۔۔۔ اداروں ۔۔۔ ایف اآئی اے ۔۔۔ میں لگے ہوئے تھے ۔۔۔

نوکروں کی فوج ہی ۔۔۔۔ پچیس تیس ۔۔۔سرگودھا کے مشٹنڈوں کی تھی ۔۔۔۔

میں جب اس کے پاس پیسے مانگنے جاتا وہ شخص مجھے ٹال دیتا ۔۔۔۔ مہینے کا وقت دے دیتا ۔۔۔

پھر جاتا وہ پھر ۔۔۔ نیا وقت دے دیتا ۔۔ اس طرح دو سال گزر گئے۔۔۔

میں خود بھی کھاتا پیتا انسان تھا ۔۔۔۔ کسی چیز کی کمی نہیں تھی ۔۔۔۔ لیکن اس شخص سے میں دل برداشتہ سا ہوگیا ۔۔۔۔

اور ایک دن میں ۔۔۔ اپنے دل میں فیصلہ کیا ۔۔۔۔ جو عموماً میں کرتا نہیں تھا ۔۔۔۔۔۔
میں نے اپنے دل میں یہ کہا کہ ۔۔۔۔ میں آج کے بعد اس شخس کے پاس نہیں آؤن گا ۔۔۔۔ لیکن میں اس کی چودھراٹ اور بد معاشی
سے تنگ آکر ۔۔۔۔ اس شخص کو ۔۔۔۔ قیامت میں ۔۔۔ تین سو ۔۔۔ روپے ۔۔۔ معاف نہیں کروں گا ۔۔۔۔۔
یہ مغرور اور بگڑا ہوا شخص ۔۔۔ جب قیامت کے روز اٹھے گا تب اس کے کے گلے میں میرے تین سر روے ۔۔۔ کا حساب ہوگا ۔۔۔۔
میں نے بہت تنگ آکر یہ پہلی اس قسم کی دعا یا فیصلہ کرلیا ۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کچھ ھفتے گزر گئے ۔۔۔۔ ایک دن صبح حسب معمول جنگ اخبار اتھا یا ۔۔۔۔ اور پڑھنا شروع کیا ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کسی اچھی خاصی بڑی سرخ میں خبر درج تھی ۔۔۔ سرگودھا سے واپس آتے ہوئے ۔۔۔۔ اسلام کے قریب پیچارو گاڑی ۔۔۔ الٹ گئی ۔۔۔ اور ۔۔۔ سرگودھا کا ۔۔۔ چوھدری صاحب ھلا ک ہو گئے ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔م
مجھے یہ پڑھ کر رنج سا ہوا ۔۔۔ کہ ۔۔۔ چوھدری سے سرے سے فوت ہی ہوگیا ۔۔۔ میرا غصہ تھا جس پر ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔
مجھے خود بھی خدا سے ڈر لگا ۔۔۔۔ کہ یہ کیسا واقع ہے ۔۔۔۔۔۔
میں نے پھر سوچا ۔۔۔ چوھدری مر گیا ہے ۔۔۔۔ میں اپنے دل کا عہد ختم کرلیتا ہوں ۔۔۔۔
یہ سوچ کر کہ چوھدری کو ۔۔۔ قیامت میں تین سو روپے کا بوجھ نہ رھے ۔۔۔۔
میں ایک دن ۔۔۔ چوھدری کے بیٹے کے پاس چلا گیا ۔۔۔۔ اس کے نوکر نے پوچھا کیا کام ہے ۔۔۔۔ میں نے پیغام بجھوایا کہ ۔۔۔
چوھدری صاحب کے تین سو روپے ۔۔۔۔ دے دیں ۔۔۔۔ ان کے زمے تھے ۔۔۔۔ نوکر بہت حیران ہوا ۔۔۔۔
آپ صرف تین سو روپے لینے آئے ہیں ۔۔۔ میں نے کہا ۔۔۔۔ھان ۔۔۔۔ یہ میرا زاتی سے معاملہ ہے ۔۔۔ آپ تین سر روپے دے دیں ۔۔۔
نوکر نے کہا کہ ۔۔۔ رقم بہت تھوڑی سی ہے ۔۔۔۔ میں آپ کی بات پر یقین کرلیتا ہوں ۔۔۔۔ لیکن اس وقت صاحب گھر پر نہیں ہیں ۔۔۔
آپ پھر کسی وقت آجائیں میں اآپ کا پیغا م دے دوں گا ۔۔۔۔
میں نے جواب دیا ۔۔۔ میں اب نہیں آؤں گا ۔۔۔۔۔
میں گھر واپس آیا ۔۔۔ اور خدا کے خوف ۔۔۔سے ۔۔۔۔ چوھدری کو تین سو روپے ۔۔۔ اپنے دل میں معاف کردیئے ۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اس کے علا وہ ۔۔۔۔ پندرہ سال پہلے بھی ایک شخص نے کینیڈا میں مجھے بہت تنگ کررکھا تھا ۔۔۔۔
میں عموماً ۔۔۔ شدت سے دعائیں ما نگتا نہیں ہوں ۔۔۔۔ عام ریگولر دعا ئیں ما نگتا ہوں ۔۔۔۔
بحرحال ۔۔۔۔ پندرہ سال پہلے میں پھر ایک دعا مانگی جو ۔۔۔۔ میرے دل و دما غ کے حساب سے میری دعا تھا ۔۔۔
۔۔ لیکن وہ دعا ۔۔۔ کسی کے لیئے ۔۔۔ بد دعا ۔۔۔ بن جائے گی ۔۔۔ یہ مجھے پہلے معلوم نہ تھا ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
لیکن کچھ سال بعد ۔۔۔۔ اس دعا ۔۔۔ کا یہ ۔۔۔ نتیجہ نکلا کہ ۔۔۔۔
جس سے میرا کام تو ہوگیا ۔۔۔ لیکن بندے کے ساتھ جو ھوا ۔۔۔۔ وہ مجھے پسند نہیں اآیا ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اسی طریقے سے بہت سارے لوگ ۔۔۔۔ فلسطین کے لیئے دعائیں کرتے ہیں ۔۔۔۔ لیکن یہ ضروری نہیں ہے ۔۔۔۔
لوگوں کی دعا ؤؤں کے حساب سے ۔۔۔۔ فلسطین آزاد ہوجائے ۔۔۔ اسرائیل کا بارود ٹھنڈ پڑ جائے ۔۔۔۔ یہ بالکل بھی ضروری نہیں ہے ۔۔۔۔
لوگوں کی دعا ئیں پوری ہونے کے لیئے ۔۔۔۔ بہت سارے ۔۔۔ مختلف زاویے بھی ہوسکتے ہیں ۔۔۔
جو ان کے وھم و گمان بھی نہ ہوں ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دو صدی پہلے کالے افریقی غلاموں نے ۔۔۔ ٹیکساس میں ۔۔۔ دعا مانگی تھی کہ ۔۔۔۔ ھمیں غلا می سے نجا ت دے دے ۔ اور واپس اپنے ملک بھیج دے ۔۔۔
۔۔۔۔
خدا نے افریقن غلاموں کی دعا سن لی ۔۔۔۔۔۔ خدا نے ۔۔۔۔ دعا کی تعبیر میں ۔۔۔ کئی دھائیاں ۔۔۔ انتظار کروا یا ۔۔۔۔
لیکن خدا نے ۔۔۔۔افریقن غلا موں کو ۔۔۔ آزاد کرکے واپس ۔۔۔ افریقہ نہیں بجھوایا ۔۔۔۔ بلکہ ۔۔۔ خدا نے اپنے زاویے سے ۔۔۔۔ دعا قبول کرتے ہوئے ۔۔۔۔
افریقن غلاموں ۔۔۔۔ کو ۔۔۔۔ امریکہ ۔۔۔۔ کی ملکیت عطا فرما دی ۔۔۔۔ او ر ۔۔۔۔ امریکہ کی ۔۔۔ گوریاں ۔۔۔اور ۔۔۔۔ برگر بھی عطا فرماد یے ۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کس کو پتہ ۔۔۔ ہے ۔۔۔ فلسطین ۔۔۔ کی دعائیں ۔۔۔۔ فلسطین میں ہی پوری ہوتی ہیں ۔۔۔۔ یا ۔۔۔۔ یورپ میں ۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دعائیں مذاق نہیں ہوتیں ۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جب پوری ہوتی ہیں ۔۔۔ غلام ۔۔۔۔ ما لک بن جاتے ہیں ۔۔۔ اور ۔۔۔ ما لک ۔۔۔ غلاموں سے ڈر کر رھتے ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔

  • This reply was modified 1 month ago by Guilty.
×

Navigation

DanishGardi