پاکستانی سیاست کی نئی صورتحال

Home Forums Siasi Discussion پاکستانی سیاست کی نئی صورتحال پاکستانی سیاست کی نئی صورتحال

#30
Awan
Participant
Offline
Thread Starter
  • Professional
  • Threads: 151
  • Posts: 2943
  • Total Posts: 3094
  • Join Date:
    10 Jun, 2017

Re: پاکستانی سیاست کی نئی صورتحال

اعوان بھائی، ڈسکہ کے انتخابات میں اصل خبر یہ نہیں ہے کہ یہ نون لیگ کا روایتی حلقہ ہے یا نون لیگ یہاں ضمنی انتخاب جیت گئی ہے اصل خبر یہ ہے کہ ٢٠١٨ کے انتخابات کی طرح اس مرتبہ بھی انتخابات کے نتائج تبدیل ہوئے اور سرکاری نتیجہ پی ٹی آئ کے حق میں آگیا مگر مریم کی قیادت میں نون لیگ کے مقامی ورکرز ڈٹ گئے اور دھاندلی کو قبول کرنے سے انکار کردیا الیکشن کمیشن اور سپریم کورٹ پر دباؤ ڈال کر پورے حلقے میں دوبارہ انتخابات کا مطالبہ منوالیا. پچھلے ضمنی انتخاب کے تجربہ کی روشنی میں حکومت کی ہمت نہیں ہویی کہ اب کی مرتبہ کچھ گڑ بڑ کرتے اور نتیجہ سب کے سامنے ہے یہ محض ایک ضمنی انتخاب نہیں تھا بلکہ ایک بیانیہ کی فتح ہے آپ کو ایسی مثال شائد اپنی تیس سالہ تجربہ کی روشنی میں نہیں ملے گی اور یہاں ہی آپ تبدیل ہوتی زمینی سیاست سے نا بلد نظر آرہے ہیں فوجی جنتا بھی ٹیک اوور کرنے سے قبل موافق حالات تشکیل دیتی ہے اور موقع دیکھ کر کاری ضرب لگاتی ہے یہ بات تسلیم ہے کہ سیاسی جماعتوں کے حق میں وہ موافق حالات ابھی نہیں آئے ہیں اور لوگ ٹینکوں کے نیچے لیٹنے کے لئے راضی نہیں ہیں مگر منزل کی طرف سفر تو جاری ہے اور رفتار پکڑ رہا ہے اور یہ وقت ہے کہ فوجی جنتا پر دباؤ بڑھایا جائے اور مزید خلا کو پر کیا جائے . میرا نہیں خیال کہ میاں صاحب اب بھی وزیر اعظم بننے کے لئے اتاولے ہو رہے ہوں گے وہ اب زیادہ مطمئن نظر آتے ہیں کھل کر چوکے چھکے لگاتے ہیں ورنہ اقتدار کے دنوں میں تو انکا چہرہ کسی قبض کے مرض میں مبتلا مریض کا چہرہ لگتا تھا کہ بس نہیں چلتا تھا اور کہ کچھ کہہ یا کر سکیں . آپ اطمینان رکھیں میاں صاحب اور شہباز شریف کا دور مک گیا ہے اگلا دور مریم کا ہے اور وہی ملک کا مستقبل ہے

گھوسٹ بھائی پٹھو جیسے خان ہے کے دور میں فوج کے حق میں قانون سازی ہو رہی ہے – کھل کر مخالفت کرنے والوں کو فوج اقتدار میں آنے نہیں دے گے – ایک حلقے کی بات الگ ہے اس سے کسی کو کچھ فرق نہیں پڑتا تھا اسلئے طاقت ور حلقوں نے اس میں مداخلت نہیں کی لیکن آپ کا کیا خیال ہے کہ پورا ملک اینٹی فوج کو جا رہا ہو تو وہ چپ بیٹھیں گے ؟ ابھی وہ وقت نہیں آیا کہ آپ فوج کو للکار کر اقتدار لے لیں اور اقتدار سے باہر بیٹھ کر آپ کچھ نہیں کر سکتے – میاں صاحب ملک سے باہر بیٹھ کر بڑھکیں مار رہے ہیں ملک کے اندر اینٹی فوج بیانئے کے لئے کوئی شیر کا بچہ نہیں ہے – مریم زیادہ چر چر کرے گی تو اسے بھی جیل میں بند کر دیا جائے گا -نون لیگ کا ووٹر سڑکوں پر ماریں نہیں کھاتا – اگر فوج ان کے خلاف اٹھ کھڑی ہوئی تو یہ بز دل تاجر دبک کر گھر بیٹھ جائیںگے – میرا ہمیشہ سے یہی موقف رہا ہے کہ سول سپریمیسی کی جنگ ابھی نہیں جیتی جا سکتی – مشرف نے اپنے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ میں نے صرف شہباز شریف کو وزارت عظمیٰ کی پیشکش کی اور یہ پیشکش بار بار کئی سال جاری رہی – ابھی نواز کو اتارنے کے بھد بھی یہ پیشکش تھی خان کو مجبورا لایا گیا کوئی اور راستہ نہ بچا – شہباز اقتدار کا بھوکا ہوتا تو وزارت عظمیٰ کی کرسی نے بار بار پیچھا کیا مگر اس نے ٹھکرایا – ملک کے لئے اور سول سپریمیسی کے لئے بہتر یہی ہے کہ فلحال ایک ایسی پارٹی قیادت میں ہو جو نہ تو مکمل فوج کی پٹھو ہو جیسے خان حکومت اور نہ مکمل اینٹی فوج ہو جیسے نواز – درمیانے راستے پر چل کر آگے جا کر جمہوریت کی مضبوطی کی صورت میں سول سپریمیسی کی جنگ جیتی جا سکتی ہے مگر ملک میں خان جیسے مکمل فوج پٹھو لوگوں کی کوئی کمی نہیں ہے وہ آتے رہیں گے اور سول سپریمیسی کبھی حاصل نہیں ہو گی –

×

Navigation

DanishGardi