Home Forums Siasi Discussion تحریک انصاف کیلئے لمحہ فکریہ تحریک انصاف کیلئے لمحہ فکریہ

#23
Believer12
Participant
Offline
Thread Starter
  • Expert
  • Threads: 398
  • Posts: 9093
  • Total Posts: 9491
  • Join Date:
    14 Sep, 2016

Re: تحریک انصاف کیلئے لمحہ فکریہ

آپ درست کہہ رہے ہیں بیلیور بھیا میں نے کچھ بھی نہیں دیکھا ہے نزدیک و دور دونوں نگاہیں کمزور ہیں ویسے وہ کیا فرمایا ہے اپنے علامہ سیالکوٹی صاحب نے “دیکھا ہے جو کچھ میں نے اَوروں کو بھی دِکھلا دے” صوبہ سرحد کا ذکر تو آپ ایسے کررہے ہیں جیسا کہ وہ پاکستان کا ایک صوبہ نہیں ہے بلکہ کولمبیا ہو کہ منشیات اور اسلحہ کی فراوانی ہے بلکہ پڑوسی صوبوں میں برآمدات کرکے اچھا خاصہ زر مبادلہ بھی کماتا ہو؟ بھائی کیا وہاں آئین و قانون نام کی کویی چیز ہے یا نہیں؟ یہ آپ نے بڑی اہم بات بتائی ہے چلو اسلحہ آ بھی گیا تو آخر ہر شخص کو کلاشنکوف خریدنے کی ضرورت کیا پڑی ہے؟کیا غزوہ ہند کی تیاریاں ہو رہیں ہیں؟ آپ یہ کسی دور دراز کے پسماندہ علاقہ کی بات کررہے ہیں یا مرکزی شہروں کا بھی ذکر خیر ہے؟ ویسے تو سن گن ملتی رہتی تھی کہ پنجاب میں اشتہاریوں کی معاشرے میں خصوصی عزت ہوتی ہے مگر یہ جیپوں میں مسلح افراد کے نرغے میں نکلنا کیا انکی ضرورت تھی یا محض شودے بازی ہوتی ہے؟

گھوسٹ صاحب۔۔۔ ہم سرحد کا ایک علاقہ ہے جسے باڑہ بازار کہتے ہیں وہاں جاتے ہیں اب اس بازار میں رونق کم ہوگئی ہے کیونکہ ایک اور متبادل بازار زیادہ شد و مد سے اسلحہ اور ہر قسم کے امپورٹڈ سامان کی سمگلنگ اور خرید و فروخت کیلئے مشہور ہوچکا ہے اور کسٹمر ادھر کا رخ کرتے ہیں پھر بھی باڑہ بازار ابھی بھی بہت مشہور ہے وہاں جا ئیں اور کسی بھی اسلحہ کی دوکان کا رخ کریں اپنی پسند کا اسلحہ کلاشنکوف ہو امریکن گن یا پسٹل ، راکٹ لانچر یا ہینڈ گرنیڈز سب کچھ ملے گا، آپ اگر انہیں پے مینٹ کرکے اسلحہ آپکے گھر تک پنہچانے کا بھی کیہں گے اور اپنا ایڈریس بتا دیں تو اسلحہ آپ کو دو تین دن بعد مل جاے گا، اس کے بعد اسلحہ آپکی ذمہ داری ہوگا، ٹرانسپورٹ کمپنیوں کے ڈرائیور اس کام میں بہت ماہر ہیں، پنجاب میں کوئلہ سرحد سے ہی آتا ہے ہزاروں بھٹے ہیں جہاں پر کوئلہ کی ضرورت ہوتی ہے یہ پٹھان ڈرائیور بھی آپ کی چیز آپ تک پنہچا دیتے ہیں اور اس کام میں ہیرا پھیری کی گنجائش نہیں ہوتی

باقی نشہ تو وزیرستان یا سرحدی دیہاتوں میں بنتا ہے افغانستان سے چرس افیم وغیرہ کی را شکل میں سپلای جاری رہتی ہے اور پاکستان کی سرحد کے اندر بنای گئی فیکٹریاں اس کو ہیروئین، حشیش اور کوکین جیسے مہنگے ترین نشوں میں ڈھال کر پورے پاکستان کے گلی کوچوں میں سپلای کرتی ہیں، ایران اور ترکی کے راستے یہی نشہ یورپ بھی جاتا ہے اور پاکستان کے راستے ساری دنیا میں خاص کر سعودیہ اور یواے ای جاتا ہے

افغانستان سے امریکی فوج نےافیم کی فص کو اسی فیصد تک تباہ کردیا ہے جس کی وجہ سے موجودہ حکومت جس کے اندر کافی حد تک ڈرگز مافیا کے سمگلر بھی گھسے ہوے ہیں نے پاکستان کی اندر پوست کی کاشت کی اجازت باقاعدہ پارلیمینٹ سے حاصل کرلی ہے اور اب اس کی کاشت کھلم کھلا ہوگی پاکستان میں تمام دنیا کے نشئی آئیں گے اور خریدیں گے، موجودہ حکومت کی اس پالیسی کی وجہ سے پاکستان کا وہی حال ہوسکتا ہے جو افغانستان کا ہوا ہے کیونکہ نشے کا کام ایسا کام ہے جس پر قہر ہی نازل ہوسکتا ہے

×
arrow_upward DanishGardi