Home Forums Siasi Discussion پی ڈی ایم تحریک کی کامیابی کے امکانات پی ڈی ایم تحریک کی کامیابی کے امکانات

#15
JMP
Participant
Offline
  • Professional
  • Threads: 290
  • Posts: 4615
  • Total Posts: 4905
  • Join Date:
    7 Jan, 2017

Re: پی ڈی ایم تحریک کی کامیابی کے امکانات

Awan sahib

سیاست اور وہ بھی پاکستان کی سیاست پر مجھ کند ذہن کیا کہہ سکتا ہے

پاکستان جمہوری تحریک کی کامیابی یا ناکامی پر اس وقت کچھ تبصرہ ہو سکتا ہے جب یہ معلوم ہو کا اس تحریک کا مقصد اور ہدف کیا ہے / تھا

مجھے بلکل علم نہیں کے اس گیارہ جماعتی تحریک کا مقصد کیا ہے یا تھا . اگر کوئی دانشور مفکر اور تجزیہ نگار رہنمائی کرے تو شاید میں اپنی راۓ دے سکوں

مجھے ایسا لگا کے اس تحریک کا کوئی ایک نمایاں اور متفقہ مقصد نہیں تھا . مجھے تو بہت سارے انفرادی مقاصد سمجھ آے

١) اصل اور سب سے بڑے محترم میاں صاحب کے غصہ کی بھڑاس نکالنا
٢) محترم فضل الرحمان صاحب کا محترم عمران خان پر غصہ نکالنا اور کسی طرح سیاست میں اپنی بقا کو قائم رکھنا
٣) محترمہ مریم نواز صاحبہ کا یہ ثابت کرنا کے وہ قومی سطح کی سیاسی رہنما ہیں
٤) پیپلز پارٹی کا بلاول کو سیاسی رہنما پیش کرنا
٥) اپنے اپنے لئے کچھ چھوٹ کاحصول
٦) ایک دوسرے کے کندھے پر بندوق رکھ کر چلانا

کبھی تحریک، کبھی استعفیٰ ، کبھی کچھ. کہتے رہے کے ہم محترم عمران خان صاحب کو کچھ نہیں سمجھتے مگر بیشتر اوقات اور بیشتر تقریروں میں ذکر خان صاحب کا ہی کرتے رہے اور تنقید تو کرتے رہے مگر کچھ متبادل نہیں بتایا کے خود کیا کرتے اگر حکومت میں ہوتے . سمجھ نہیں آیا کے حکومت گرانا چاہتے ہیں، حکومت تبدیل کرنا چاہتے ہیں، حکمت کے پیچھے مبینہ قوتوں کو باز رکھنا چاہتے ہیں ، اپنی جماعتوں میں مبینہ اختلافات کی موجودگی میں اپنی جگہہ بنانا چاہتے ہیں ، کچھ اور نہیں ہے کرتنے کو تو شغل کرنا چاہتے ہیں ، نئے انتخابات چاہتے ہیں، اگلے انتخابات تک خود کو سیاست میں موجود رکھنا چاہتے ہیں یا کچھ اور

محترمہ مریم کی تقریر کا کوئی نہ کوئی سر نہ کوئی پیر . ایک بات تو طے ہے میری نظر میں کہ ان کو غصہ نہیں آتا . اگر غصہ جاۓ گا تو آے گا . انتہائی بھونڈی تقریریں اور اس سے بھی بھونڈا انداز میری نظر میں

بلاول کو چنگھاڑنے کے علاوہ کچھ کام کی بات کرتے نہیں دیکھا . وہی مرحوم بھٹو ، وہی مرحوم بینظیر کا بارے بار نام لینا ، وہی اموات کو شہادتوں کا نام دیکر بیچتے رہنا اور وہی ایک گانا بار بار بچاتے رہنا

شاید تحریک بلکل کامیاب ہو گئی کے نہ پہلے کو جمہوریت تھی نہ اب کسی کے آثار باقی ہیں

×
arrow_upward DanishGardi