ریاست مدینہ کے دعوہ دار

Home Forums Siasi Discussion ریاست مدینہ کے دعوہ دار ریاست مدینہ کے دعوہ دار

#40
unsafe
Participant
Offline
  • Advanced
  • Threads: 46
  • Posts: 859
  • Total Posts: 905
  • Join Date:
    8 Jun, 2020
  • Location: چولوں کی بستی

Re: ریاست مدینہ کے دعوہ دار

زندہ رود صاحب اور انسیف صاحب۔۔۔۔۔۔ میں قطعا بھی آپ کی عقلی فرسٹریشن میں مزید ہوا بھرنے کی تمنا نہیں رکھتا۔۔۔۔ سادی سی بات ہےکہ ہر معاشرے میں کچھ شدت پسند عناصر ہوتے ہیں جن کو دوسرے کے ختنے اور ارتقائی نتھنے چیک کرنے کا شوق ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔آپ لوگ تو ان عناصر سے الگ تھلگ ہو کر اپنی ایک معتدل پہچان بنانے کا ہنر رکھتے ہیں تو پھر یہ روزانہ انہی جبری واعظین کی طرح دوسروں کو زندگی گزارنے کا ڈھنگ سکھانے کا درس کیوں دینا شروع کر دیتے ہو۔۔۔۔۔۔ آپ کے اکثردھاگے اسلام کو ٹارگٹ کرکے عجیب سا کُڑمس مچانے کی کوشش نظر آتے ہیں۔۔۔۔۔ آپ لوگوں کوکیا واقعتا لگتا ہے کہ یہ فورم آپ لوگوں کے تنقیدی سوالوں کا موثر جواب دینی والی علمی ہستیوں سے آراستہ ہے؟؟؟؟؟ لے دے کہ ایک بلیور صاحب ہیں جن کی اپنی علمی بنیادوں میں گیارہ پٹھانوں کا رائتہ بھرا ہوا ہے۔۔۔۔۔دوسرے لنڈن کے مشہور زمانہ تیلی صاحب اور انکے ابیوزنگ متر بڈاوہ جی ہیں ۔۔۔جو کبھی ضدی گجر کے گنڈاسے پر بیٹھ کر اور کبھی ظالم صوبیدار کے خاکی جہاز پر بیٹھ کر عالمِ حیض میں اپنے مخالفین کو تڑیاں لگاتے نظر آتے ہیں۔۔اگرآپ ان ست ربٹی نمونوں سے اپنی علمی پیاس بجھانے کی تمنا رکھتے ہیں تو میرے ناقص رائے میں آپ کی عقل دانیوں کو نیا سافٹ وئیر اپڈیٹ کرنے کی فوری ضرورت ہے۔۔۔۔ ۔سو میرے خیال سے اتنے دانشمند تو آپ لوگ ہو۔۔۔۔۔ کہ آپ لوگ بھی بخوبی جانتے ہو کہ اس دانشگردی کے خزینے میں آپ کے سوالوں کی تشنگی دور کرنے والے علمی سفینے نہیں ہیں۔۔۔۔۔پھر آپ لوگ جان بوجھ کر ایسے دھاگے اور نفرت انگیز مواد پوسٹاتے ہیں تاکہ انہیں پڑھ کر عام ماتڑ اور سطحی سا مذہبی علم رکھنے والے ممبرز تلملاتے پھریں۔۔۔۔۔۔اور آپ کے من کے اندر پائے جانے والے اس غیض و غضب کو شانتی مل سکے جوکبھی آپکے ذہن میں اٹھنے والوں سوالوں کے ردعمل میں آپکی فیملی، رشتہ داروں اور سماج کی طرف سے ، آپ لوگوں کو ذہنی اور جسمانی پھینٹی لگا کر دیا گیا تھا۔۔۔۔۔۔۔۔اور اس انسیف بیچارے کو تو لگتا ہے کچھ زیادہ ہی پھینٹی پڑی تھی۔۔۔۔۔۔ بھائی لوگو! میں آپ کی پرسنل چائسز کا احترام کرتا ہوں آپ کے قلبی احساسات ااور ان سے جُڑے رشتے بھی سر ماتھے پر۔۔۔۔ لیکن آپ لوگ بھی اپنی مشین گنوں کا رُخ موڑ کر دیگر اہداف کی لِینگراں اڑانے پر دیہان دیجئے۔۔۔۔ تاکہ آپ لوگوں کی آنے والی نسلیں بھی فخر کریں کہ ہمارے الحادی آباء میں برداشت و احترام کا کتنا وسیع مادہ تھا۔۔۔۔۔۔ہوپ فار بیسٹ۔۔۔۔

کسا نوا …

بات یہ ہے جو شائد آپ سمجھنے سے قاصرہیں یا سمجنا نہیں چاہتے . کہ پبلک فورمز ایک کھلے اخبار کی طرح ہوتے ہیں . یہاں پہ آدمی اپنے خیالات کی تشہیر کے لئے پوسٹ کرتا ہے یا کسی بھی پہلو پر کوئی آرٹیکل لکھتا یا تھریڈ کھولتا ہے تو اس کا مقصد یہ نہیں ہوتا کہ وہ کسی سے بحث لگانا چاہتا ہے …. . سیدھی سی بات ہے اگر کچھ مسلمانوں کو وہ آرٹیکل یا تھریڈ پسند نہیں آتا تو وہ اس کو اگنور کر دیں …. بات ختم … اپ کی یہ سوچ کہ یہاں پہ اسلام کو ٹارگٹ کیوں کرتے ہو…. … اس میں اور یہاں پہ کچھ معزز بلاگر کی سوچ میں کوئی خاص فرق نہیں جو بقول اپ کے کہ مجھے پھینٹی لگا رہے ہوتے ہیں … وہ اصل میں مجھے پھینٹی نہیں لگا رہے ہوتے خود کو لگا رہے ہوتے ہیں دلیل کا جواب بد زبانی سے دے کر…. آپ ہمیں سمجھانے کے لئے تو بڑے لمبے چوڑنے فلسفیانہ لیکچر ریکارڈ کرواتے ہیں . کبھی کسی ایسے ہی تھریڈ میں جہاں پہ مجھے پھینٹی لگ رہی ہوتی ہے اور میری عقلی پھینٹی کے جواب میں ان کو عقلی قبض ہو جاتی ہے اور پھر فکری دست لگ جاتے ہیں . کبھی کسی ایسے تھریڈ میں آ کر آپ ان معزز بلاگر کو اپنا لمبا چوڑا بیان ریکارڈ کرواتے ہوے نظر نہیں اے … اس بات سے تو یہی نتیجہ اخذ کیا جا سکتا کہ جیسے آپ ان کی پشت پناہی کر رہے ان اہنوں نے اپ کی پشت پر ہاتھ رکھا ہے .

اور دوسری بات جو آپ کہنا چاہتے ہیں کہ  اس فورم پہ صرف  مسلمانوں کو حق حاصل ہے، کہ وہ ساری دنیا کے مذاہب، عقائد پر تنقید کریں ۔مغرب کے ہر ملک میں ‘شریعت’  کی بات کریں کریں   … جسکو چاہیں مرضی پھنٹی لگائیں اور پھر کاسا نوا کو مرہم رکھنے کے لئے بیجھ  دیں … اور ملحدوں کو تو بلکل حق نہیں اس فورم پہ اسلام کو ٹارگٹ کرنے کا … اور   مسلمان اپنے مذہب کے معاملے چاہے جس طرح کا مرضی  جارحانہ رویہ رکھیں کسنووا کی ساری تقریریں فلسفے صرف ملحد حضرات کے لئے ہیں  وہ کسنووا کی طرح  اپنے مذہب اور اپنے خدا کو دوسروں پرزبردستی ٹھونستے رہیں ۔ ان کی اور کاسنووا کی اسلامی دنیا میں کسی دوسری اقلیت یا ریشنل آواز کی  زرا بھر جگہ نہیں ہے ۔۔ جب کہ غیرمسلم ممالک میں جاکر جارحیت سے اپنی جگہ کلیم کرتے ہیں ۔۔ یہاں پہ بہت سے معزز بلاگر یورپین ملکوں میں رہائش پذیر ہیں … وہاں کافروں اور مشرکوں کے ساتھ اٹھنے بیٹھنے اور  ہر طرح کی سہولت سے لطف اندوز ہونے کے بعد جب فورم پہ آتے ہیں تو ان کو آپ کی طرح اسلام کی فکر لاحق ہو جاتی ہیں ابھی یہ مسلمان یوروپ میں دس دس مسجدیں بنوانے کے چکر میں ہیں  وہ مغرب کے برابری کے حقوق کے فلسفوں سے تو فائدہ اٹھا لیتے ہیں ان کی ثقافت، طرز زندگی، اقدار میں مداخلت کررہے ہیں لیکن اپنوں فورموں پر جب آتے ہیں تو آپ کی طرح ان کو اسلام خطرے میں نظر آنا شروع ہو جاتا ہے  ۔ مغرب کے خیمے میں گھستے ہوئے مسلم اونٹ پر اگر ان مسلمانوں کے نظریات اور عقائد پر تنقید کی جاے تو کسنووا کو برا لگ جاتا ہے ۔ 

جب کہ مسلمانوں اور کاسا نوا   کی نرگسیت کا تقاضہ ہے، کہ یک طرفہ ٹریفک ہو۔ مسلمان جس کو مرضی گالی دیں … جس کو مرضی پھیتنی لگائیں لیکن اگر مٹھی بھر ملحد  ان کو برا کہیں، ان پر کوئی تنقید نہ کرے …. دیکھ کاسا نوا جانی یہ مسلمان اپنے خدا کی اور تیری  لاڈلی امت ہوسکتے ہیں، انسانیت کی نہیں۔  جدید انسانی تہذیب کو انہوں نے ایک کالی کھوٹری کے گرد چکر لگوانے کے کچھ نہیں دیا …. دنیا گولوبل وللیج بن چکی ہے اس میں ایک دوسرے کو تسلیم کر کہ رہنا پڑھتا ہے … اس لئے آپ کو اور ..مسلمانوں کو اپنی سوچ بدنلے کی اشد ضرورت ہے 

  • This reply was modified 1 week, 3 days ago by unsafe.

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!