نالائقی کا تعلق نہ جمہوریت نہ آمریت سے

Home Forums Siasi Discussion نالائقی کا تعلق نہ جمہوریت نہ آمریت سے نالائقی کا تعلق نہ جمہوریت نہ آمریت سے

#23
Qarar
Participant
Offline
  • Professional
  • Threads: 110
  • Posts: 2761
  • Total Posts: 2871
  • Join Date:
    5 Jan, 2017

Re: نالائقی کا تعلق نہ جمہوریت نہ آمریت سے

آُپ انڈیا کے حوالے سے صحیح کہہ رہے ہیں لیکن اس صورت کہ آپ راجیو کو اس سے نکال دیں۔ میرا قرار صاحب کو لکھا کمنٹ انہی کے معیار کو مدِنظر رکھ کر لکھا گیا تھا۔ کیونکہ انہیں موجودہ حکومت کا وہی کچھ کیا غلط لگتا ہے جو نرسیمہا راؤ اور من موہن نے مل کر ۱۹۹۱ سے ۱۹۹۶ تک کیا۔ جون ۱۹۹۱ میں نرسیمہا راؤ کو حکومت ملی تو انڈیا دیوالیہ ہونے کے قریب تھا۔ ان کے ریزروز ایک بلین ڈالر تھے اور فوری ادائیگیاں اس سے چار گنا زیادہ تھیں۔ کرنٹ اکاؤنٹ دس ارب ڈالر سے زیادہ تھا۔ امپورٹس آسمان سے باتیں کر رہی تھیں اور ایکسپورٹس کم ہورہی تھیں۔ من موہن نے کیا کیا؟ بلکل وہی کچھ جو آج ہم کر رہے ہیں۔ روپئے کو فری چھوڑا، امپورٹس دبا دیں اور ریزروز بنانے شروع کئے۔ آئی ایم ایف کے ساتھ مل کر سٹرکچرل ریفارمز کیں اور بہتری کا سفر شروع کیا۔ اب جب کہ یہ سب کچھ قرار صاحب کو برا لگتا ہے تو میری کیا مجال کہ من موہن کو کوئی کریڈٹ دے دوں۔ یہاں بھی قرار صاحب کا ہیرو راجیو ہونا چاہیئے کیونکہ اس نے بھی معیشت کے ساتھ وہی کیا تھا جو ہاتھ ن لیگ ہمارے ساتھ کر گئی۔ رہی بات مشرف کی آمرانہ حکومت کی تو اس نے معاشی محاظ پر بہت سے اچھے کام کئے تھے۔ گروتھ چھ سے سات فیصد تھی اور قرض چھ ہزار ارب تک رکھا (جو کہ آج پینتالیس ہزار ارب ہے)۔ بحرحال اصل بات یہی ہے کہ ہمیں افغان پالیسی تیس سال کا اچھا خاصہ ٹیکا لگا گئی ہے۔ سارے مسائل کی جڑ یہی ہے اور اس سے ہمارے سماج کا چہرہ مسخ ہو کر رہ گیا ہے۔ Qarar

شاہد عباسی صاحب
آپ نے بظاہر بلیک صاحب کا موقف تسلیم کرلیا ہے ہے کہ من موہن سنگھ کی وزارت خزانہ سے  حالات تبدیل ہونا شروع ھوئے …میں نے راجیو گاندھی کے پانچ پچھلے سال بھی اس میں شامل کرلیے تھے ….اگر یہ غلط بھی تھا تو میرے اندازے کے مطابق تقریباً پینتیس سال پہلے انڈیا کی پالیسی تبدیل ہوئی …بلیک شیپ صاحب کا موقف مانا جاۓ تو تیس سال پہلے ہونا شروع ہوئی …جبکہ آپ کا حالیہ ارشاد ہے کہ دس سے پہلے انڈیا کے مغربی ممالک کی طرف جھکاؤ کے بعد انڈیا میں تبدیلی آئی ورنہ انڈیا اور پاکستان دس سال پہلے تک ایک ہی سطح پر تھے

یار کچھ اپنی اداؤں پر غور کریں …پینتیس سے تیس کا میرا اندازہ تو اتنا دور نہیں تھا مگر حضور آپ تو میلوں دور ہیں …اپر سے آپ  صرف ..پر کیپیٹا جی ڈی پی کی بنیاد پر  ممالک کی اکانومی کی رینکنگ بھی کر رہے ہیں

یار آپ مجھے تو فوج کی سے نفرت کم کرنے کا درس دے رہے ہیں مگر آپ خود بھی عسکری عینک اتار کر ..اور انڈیا دشمنی کو پرے رکھ کر تجزیہ کیا کریں

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!