سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا نوٹیفیکیشن معطل کر دیا

Home Forums Siasi Video سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا نوٹیفیکیشن معطل کر دیا سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا نوٹیفیکیشن معطل کر دیا

#119
Qarar
Participant
Offline
  • Professional
  • Threads: 101
  • Posts: 2516
  • Total Posts: 2617
  • Join Date:
    5 Jan, 2017

Re: سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا نوٹیفیکیشن معطل کر دیا

قرار جی آپ سے کہا تھا کہ لونڈی جوڈیشری کی اتنی اوقات نہیں ہے جو فوجیوں سے پنگا لے سکے لونڈی جوڈیشری پہلی بار فوجیوں کے نیچے نہیں لیٹی ہے، اس کی تو فوجیوں کے نیچے لیٹنے کی ایک طویل تاریخ ہے. فوجیوں کو خوش کرنے کی خاطر تو اس لونڈی نے سیاست دانوں کو پھانسی دینے اور تا حیات سیاست سے نا اہل قرار دینے سے بھی گریز نہیں کیا ہے ایک بات تو اب تقریبا یقینی ہے کہ نہ کبھی اس ملک سے فوج کی بدمعاشی اور اسکا ملک پر ناجائز قبضہ ختم ہوگا اور نہ ہی کبھی لونڈی جوڈیشری فوج کے ہاتھوں بکنے سے باز آئے گی کیونکہ جو ایک بار بکتی ہے وہ بار بار بکتی ہے جب سے وردی پوش دہشتگردوں نے اسلحے کے زور پر اس ملک پر قبضہ کیا ہے تب سے جوڈیشری فوج کی راکھیل بنی ہوئی ہے. یہ لونڈی کبھی فوج کے خلاف ایک لفظ بھی نہیں بول سکتی ہے اور اگر کبھی کچھ بولتی ہے تو فوجی اسے اسکی اوقات کے اندر گھسا دیتے ہیں. سول حکومت، سول اداروں اور سویلینز کے خلاف یہ جوڈیشری ہمیشہ شیر بنی ہوتی ہے اور فوج کی بات آئے تو اس جوڈیشری کے کانوں سے دھواں نکلنے لگتا ہے اور اسے نانی یاد آ جاتی ہے یہ آج نہیں ہوا ہے بلکہ ہمیشہ سے ہو رہا ہے. پی پی پی کے دور حکومت میں لونڈی جوڈیشری کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری اور جسٹس خلیل رمدے سمیت تین ججز کے سامنے اڈیالہ جیل سے کچھ لوگوں کی رہائی کے بعد جیل سے باہر نکلتے ہی اغوا کر لینے کا کیس تو آپکو یاد ہوگا. ان افراد کو رہائی کے بعد آئی ایس آئی والے ان افراد کو زبردستی گاڑیوں میں ڈال کر لے گئے تھے. لونڈی جوڈیشری ایک سال تک آئی ایس آئی کو ان لوگوں کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیتی رہی اور آئی ایس آئی اور ایم آئی والے اپنی لونڈی جوڈیشری کے آرڈرز کو اپنے جوتے کی نوک پر لکھتے رہے. اسکے بعد آئی ایس آئی نے ایک انتہائی بھونڈا ڈرامہ کیا اور ایک کہانی بنا کر لونڈی جوڈیشری کو سنا دی. لونڈی جوڈیشری نے ان افراد کو عدالت کے سامنے پیش کرنے والے اپنے آردرڈز بھلا کر اور کھسیانی ہو کر اس جھوٹی کہانی پر تالیاں بجائیں اور کیس ختم کر دیا. یہ کیس بھی جنرل باجوہ کی ایکٹینشن والے کیس کی طرح لونڈی جوڈیشری کی بے غیرتی اور بے شرمی کا منہ بولتا ثبوت تھا. کبھی موقع ملے تو اس کیس کو سٹیڈی ضرور کریں اس لونڈی کی اوقات ان فوجیوں کے سامنے ایک طوائف سے زیادہ نہیں ہے جسے فوجی وقتا فوقتا سول حکومتوں اور سیاست دانوں کے خلاف اپنے اشاروں پر نچاتے رہتے ہیں اور یہ لونڈی آزاد عدلیہ کے گیت گاتے یوتھیوں اور بوٹ چاٹیوں کی تالیوں کی گونج میں ٹھمکے لگا لگا کر فوجیوں کو خوش کرتی رہتی ہے

باوا جی …عدلیہ چاہے لونڈی ہے لیکن کیا کھوسے نے آرمی چیف کو اپوزیشن کا محتاج نہیں کر دیا؟

اگر آئینی ترمیم چاہیے تو اپوزیشن کے بغیر نا ممکن …اگر قانون چاہیے تو سینٹ میں اپوزیشن کی حمایت درکار ہے

ستم ظریفی یہ ہے اپوزیشن لونڈی بن کر ووٹ فراہم بھی کردے گی

آپ نواز شریف سے پوچھ کر بتائیں کہ غیرت کے پلیٹلیٹس کا کیا لیول ہے؟ باجوہ کو ووٹ دینا ہے؟

یہ بے شرم اور بیغیرٹ جرنیل پہلے سیاستدانوں کے خلاف نام نہاد کیسز بناتے ہیں …پھر کوئی ڈیل کرکے خود ساری پروموشنز اور فوائد لے لیتے ہیں اور سیاستدانوں کے وہ کیسز ختم کر دیتے ہیں جوکہ خود بد دیانتی سے بناۓ ہوتے ہیں …سیاستدانوں کو تو ڈیل میں کچھ بھی نہیں ملتا

Navigation

Do NOT follow this link or you will be banned from the site!