طاقت

Home Forums Siasi Discussion طاقت طاقت

#119
Zinda Rood
Participant
Offline
  • Professional
  • Threads: 13
  • Posts: 1694
  • Total Posts: 1707
  • Join Date:
    3 Apr, 2018
  • Location: NorthPole

Re: طاقت

chal oye najeeb-ut-tarfain bastard . . . . thothni gum kar apni . . . . Why are you asking for a fresh dose of Kabongo, when your sufferings from your chronic pains are already unbearable?? . . . . . :bigsmile: :bigsmile: :bigsmile:

درویش بھائی۔۔ اب بات چل ہی نکلی ہے تو پھدو میاں کا ایک قصہ سناتا ہوں۔۔۔ 

بند کمرے میں بیڈ پڑا ہے، اوپر ایک اوٹ پٹانگ ہونق سا شخص بیٹھا ہے جو مستحب سمجھ کر بار بار ناک میں انگلی پھیر رہا ہے اور بنا کوئی میٹریل ضائع کئے منہ کے اندر تک پہنچا رہا ہے۔ سامنے لیپ ٹاپ دھرا ہے۔۔ ہونق شخص کو گھر والے پیار سے پھدو میاں کہہ کر بلاتے ہیں۔ پھدو میاں بڑی عرق ریزی سے لیپ ٹاپ میں گھسے ہوئے ہیں اور کچھ ٹائپ کررہے ہیں۔۔ تھوڑی دیر پھدو میاں یونہی لیپ ٹاپ کے ساتھ مشغول رہتے ہیں کہ یک دم ان کے چہرے کا رنگ بدلنا شروع ہوجاتا ہے،  ماتھے سے ٹھنڈے پسینے بہنے شروع ہوجاتے ہیں اور بدن پر کپکپی طاری ہوجاتی ہے، جسم پر تشنگی جھٹکے لگنے شروع ہوجاتے ہیں، پھدو میاں ایک دلدوز چیخ مار کر گر پڑتے ہیں، لیپ ٹاپ پرے جاگرتا ہے، لیپ ٹاپ کی سکرین پر کسی زندہ رود نامی ممبر کا کمنٹ جگمگا رہا ہوتا ہے۔۔ گھر والے دوڑ کر پہنچتے ہیں اور کیا دیکھتے ہیں کہ پھدو میاں کی حالت غیر ہے، بس کسی وقت میں دم نکلنے والا ہے۔۔ پھدو میاں کو فوراً گھر والے قریبی ہسپتال میں لے جاتے ہیں۔۔۔۔

دوسرے دن ڈاکٹر پھدومیاں کے گھر والوں کو بلاتا ہے اور پوچھتا ہے کہ یہ زندہ رود کون ہے۔۔ گھر والے حیرانی سے ایک دوسرے کو دیکھتے ہیں اور نفی میں سر ہلاتے ہیں۔۔ ڈاکٹر گھر والوں کو بتاتا ہے کہ پھدو میاں کو دل کا دورہ پڑا ہے، اگرچہ حالت سدھر گئی ہے مگر سوتے ہوئے وہ بار بار زندہ رود کو گالیاں دے رہا تھا، اور اس کے جسم کو جھٹکے لگ رہے تھے، ایسے جیسے کوئی شخص اس کی دھنائی کررہا ہو۔۔ یہ اس کی جو بھی حالت ہوئی ہے اس کا کارن زندہ رود ہے۔۔۔

قصہ مختصرزندہ رود کے ایک کمنٹ سے سنبھلنے میں پھدو میاں کو چھ مہینے لگ گئے، کیونکہ راتوں کو پھدومیاں کے خواب میں آکر اکثر زندہ رود ہاتھ میں بڑا سا ہنٹر پکڑ کر پھدو میاں کی ٹھکائی کرتا ، جس سے پھدو میاں کی حالت غیر ہوجاتی۔۔۔  پھدو میاں کو ایک نہایت حاذق طبیب کے پاس لے جایا گیا جس نے تشخیص کیا کہ پھدو میاں کو ایک نہایت نایاب مرض “مذہبی ذکاوتِ حس” لاحق ہے جس کا علاج پوری دنیا میں صرف اور صرف ایک ہی شخص طبیب اعظم جناب زندہ رود کے پاس ہے۔۔۔ جیسے ہی حاذق طبیب نے استاذ الحکما زندہ رود کا نام لیا، پھدو میاں دھڑام سے نیچے جا گرے۔۔۔۔  

Navigation