میثاق جمهوریت 2.0

Home Forums Siasi Discussion میثاق جمهوریت 2.0 میثاق جمهوریت 2.0

#96
Qarar
Participant
Offline
Thread Starter
  • Professional
  • Threads: 97
  • Posts: 2333
  • Total Posts: 2430
  • Join Date:
    5 Jan, 2017

Re: میثاق جمهوریت 2.0

Is democracy weak in India? If yes, then what is making it weak and what is the purpose of having a futile exercise every five years? India’s example is quoted here because we are twin nations with a lot of similarities and India has the democracy we or more appropriately our pol leaders dream for. From this perspective, the above correlation appears a fallacy. Again, excluding the Western democracies, is there any region or the country in the world whose progress (both growth and development) in the last 70 years (our age as a nation) can be attributed to the existence of the twin factors of press freedom and democratic process? From this perspective also, the above correlation appears a fallacy. Therefore, what we need to understand is that pol evolution and credible democratic decision making are a subset of socio-eco evolution. The latter is a prerequisite for the former to have a meaningful transition. Otherwise harking on and harping for democracy, we would be stuck in time like we have been for the last 50 years or be toiling and trudging along like India; and life will remain a crucifying punishment for faceless and voiceless teeming millions and their aspirations.

جناب … شاید آپ نے میرے پوسٹ پر سرسری  نظر ہی  ڈالی ہے کیونکہ میں نے یہ  نہیں لکھا کہ جمہوریت خوشحالی لاتی ہے بلکہ یہ کہا تھا کہ جمہوریت عوام کو اپنا لیڈر خود چننے کا اختیار دیتی ہے …یہ عوام پر منحصر ہے کہ وہ کونسا لیڈر چنتے ہیں …آپ  فیراری  کار خرید کر ایک سائیکل چلانے والے کو ڈرائیور رکھ لیں تو قصور کار کا نہیں ہوگا

آپ سے سوال یہ بھی ہے کہ جب تک سوشیو اکنامک ریفارمز کی شکل میں پہلا مرحلہ مکمل نہیں ہوجاتا تو اس وقت تک …جمہوریت نہیں تو کس نظام کے تحت ملک کو  چلایا جاۓ؟

بھارت میں جمہوریت کافی کامیاب ہے اور پریس کی آزادی بھی …اور وہاں آرمی والے اخباروں  اشتہارات پر پابندی نہیں لگاتے …کیبل آپریٹرز کو دھمکی آمیز کالیں کرکے ٹی وی چینل بند نہیں کرتے …صحافیوں کی ٹارگٹ کلنگ نہیں کرتے …اور نہ ہی دھرنے والوں کو پیسے بانٹتے ہیں…اور پارلیمنٹ میں کہے گئے ہر لفظ کو مکمل تحفظ حاصل ہے

پاکستان میں جمہوریت ہوتی ..مارشل لاء ہوتا یا کچھ اور ….ترقی کی رفتار بھارت کے لگ بھگ ہی ہوتی اگر قوم جہادی سرگرمیوں میں ملوث ہو کر اکانومی کا بیڑا غرق نہ کرتی

کسی قوم کی نظریاتی اور فکری آسودگی … اور بنیادی انسانی حقوق کے لیے جمہوریت بہت ضروری ہے …جمہوریت ایسے قوانین کی شکل میں  ٹولز فراہم کرتی ہے جن کو استعمال کرکے کمزور اور پسے ھوئے طبقات کا تحفظ ممکن ہے ….چیک اینڈ بیلنس کا نظام اپنی افادیت رکھتا ہے …معاشرے میں ہم آہنگی قائم کرنے کے لیے جس ڈائلاگ کی ضرورت ہے وہ جمہوریت میں ہی ممکن ہے
لیکن یہ بھی ممکن ہے کچھ  حضرات کو صرف اکانومی سے غرض ہو اور انسانی حقوق زیادہ اہم نہ لگتے ہوں …میں کچھ عرصہ  چین میں رہا ہوں اور وہاں عام لوگوں کا نقطہ نظر یہ ہے کہ چین میں جمہوریت کی کوئی ضرورت نہیں …جمہوریت میں صرف لوگ بحث کرکے وقت ضائع کرتے ہیں …لہذا انہیں وہ لیڈر چاہیے جوکہ فوراً اور جلدی فیصلہ کرسکے
میں ذاتی طور پر ایسے معاشرے میں نہیں  رہ سکتا جہاں مجھے بولنے اور لکھنے کی آزادی نہ تک نہ ہو …آزادیوں کی ویلیو صرف وہی انسان سمجھ سکتا ہے جس نے آزادی انجوے کی ہو ..اور پھر وہ آزادی  اس سے لے لی  جاۓ

Navigation