سی پیک اور پاکستانی مفادات

Home Forums Siasi Discussion سی پیک اور پاکستانی مفادات سی پیک اور پاکستانی مفادات

#12
shahidabassi
Participant
Offline
  • Expert
  • Threads: 28
  • Posts: 6304
  • Total Posts: 6332
  • Join Date:
    5 Apr, 2017

Re: سی پیک اور پاکستانی مفادات

یعنی یہ تو وہی سبسڈی کی بنیاد پر گردشی قرضے بڑھ جانے والے مسئلے کو ایک کمرے سے بڑھا کر محل میں تبدیل کر دیا گیا ہے اور پاکستان چاہے بھی تو اس نئی ایسٹ انڈیا کمپنی کی معاشی غلامی سے آزاد نہیں ہو سکتا؟؟ آپ نے تسلسل کے ساتھ ایکٹوٹی پر 20 فیصد سالانہ کی اصطلاح استعمال کی ہے اس کی کسی مثال سے وضاحت کر دیں

یہاں ایک بات اہم ہے کہ یہ پرافٹ گارنٹی کرنے کا کام شریف حکومت نے نہیں بلکہ زرداری حکومت نے شروع کیا تھا۔بس نواز شریف نے پھر اسی کو چینی انویسٹرز کو کو بھی آفر کر دیا۔
اس میں نہ صرف منافع گارنٹی کیا جاتا ہے بلکہ اگر فیول کی کمی یا گورنمنٹ کی کسی مجبوری سے وقتی طور پر ہمیں اس کارخانے سے بجلی نہیں چاہیے یا کم چاہیے تو پھر بھی ہمیں انہیں اس حساب سے ادائیگی کرنی پڑے گئ کہ جیسے کارخانہ پوری کیپیسٹی پر چل رہا ہو۔
مثال اس طرح ہے کہ چینی کمپنی ایک ہزار روپیہ اپنا اور ایک ہزار بنک سے ادھار لے کر دو ہزار کا کارخانہ لگاتی ہے۔
اب چونکہ ان کا اپنا پیسہ ایک ہزار ہے تو انہیں یہ گارنٹی ہے کہ تمام اخراجات ادا کرکے اگر انہیں کم از کم دو سو کا منافع نہیں ہوتا تو اسے حکومت ۲۰۰ تک پورا کرے گی۔ لیکن اگر منافع ۲۰۰ کی بجائے ۶۰۰ ہے تو پھر یہ ان کی چاندی۔
اب اس ۲۰۰ میں سے ۵۰ روپئے وہ بنک کو قسط کی ادائیگی میں دیں گے اور باقی ۱۵۰ اپنی جیب میں۔ مطلب یہ کہ انہیں گارنٹی ہے کہ انہیں کبھی نقصان نہیں ہوگا اور اپنے پیسے پر کم از کم ۲۰ فیصد کمائی۔
یہاں ایک مسئلہ اور بھی ہے کہ جیسے جیسے سال گزریں گے تو بنک کا قرضہ کم ہوتا جائے گا جبکہ ان کا اپنا حصہ یعنی ایکوٹی بڑھتی جائے گی تو کیا ۲۰ فیصد منافع ہر سال کی ایکئوٹی پر گارنٹیڈہے۔

اوپر مثال میں پہلے سال ایکئوٹی ۱۰۰۰ ہے اور قرض بھی ۱۰۰۰
پانچ سال ایکئوٹی ۱۴۰۰ اور قرض رہ جائے گا ۶۰۰
تو شاید اس وقت پھر ہم ۱۴۰۰ کا بیس فیصد گارنٹی کر رہے ہونگے، یعنی سال بھر کا ۲۰۰ نہیں بلکہ ۲۸۰۔
بحرحال یہ چینیوں کے لئے پیسے چھاپنے کی مشینیں ہیں جہاں صرف منافع ہی منافع ہے۔
کیا اس کی بجائے یہ بہتر نہ تھا کہ ۴ یا ۵ فیصد پر ان سے قرضہ لے کر یہ کارخانہ لگا لیتے۔

Navigation