منافقت چھوڑیں اور اپنی اپنی پارٹی کا نام بتائیں

Home Forums Siasi Discussion منافقت چھوڑیں اور اپنی اپنی پارٹی کا نام بتائیں منافقت چھوڑیں اور اپنی اپنی پارٹی کا نام بتائیں

#82
Haidar asmari
Participant
Offline
  • Advanced
  • Threads: 76
  • Posts: 382
  • Total Posts: 458
  • Join Date:
    4 Dec, 2016

Re: منافقت چھوڑیں اور اپنی اپنی پارٹی کا نام بتائیں

پھر وہی اردو بولنے والوں اور پنجابی بولنے والوں کی گھسی پٹی لائنیں کہ جو ہم جانتے ہیں وہ کوئی نہیں جانتا ،، سوال یہاں یہ تھا کہ پچیس سال میں کسی نہ کسی طرح اقتدار کے مزے لوٹتے رہے رابطہ کمیٹی والے ..اپنی اولادوں کو امریکا دبئی کینڈا میں سیٹل کر وہ لیا پیچھے رہ گئے کارکن تو وہ تو ہیں ہی قربانی کے بکرے .. کبھی رینجرز کے ہاتھوں مارے گئے کبھی اپنے ہی گنینگز کے ہاتھوں .. کراچی کے لئے کیا کیا ان پچیس سالوں میں کب کب ہڑتالیں کراچی کے مسائل کے لئے کی گئی . کبھی نہیں .. کراچی میں ہڑتال صرف قائد کی شان میں گستاخیوں پر ہی کی جاتی رہی ایک منٹ میں پورا کراچی بند کروانا بائیں ہاتھ کا کھیل ہوا کرتا تھا اب قائد منتیں ترلے کر کر تھک گیا تو کوئی ٹھیلے والا ٹھیلا بند کرنے پر راضی نہیں ہوتا اور باتیں کراچی کے مینڈیٹ کی … بہت سے لوگ دکھی ہیں بہت سے لوگوں کو مجبور کر کر کے اس نہج پر پہنچایا گیا کہ آج اس قائد کا نام لینے والا کوئی نہیں جس اشارے پر گردنیں اڑا دی جاتی تھیں …منزل نہیں رہنما چاہئے .. اب کہاں ہے رہنما .. کہاں گئی عوام ..کیا سب زور زبردستی پھیر دے گئے یا رابطہ کمیٹی کے اندر بیٹھے لوگوں نے پی ایس پی میں آ کر پول کھولنے شروع کر دیے کہ حقیقت یہ ہے جس کے پیچھے مہاجر عوام کو چوتیا بنایا جاتا رہا .. سانحہ پکا قلعہ تاریخ کا سیاہ ترین باب ہے لیکن جو ظلم کی داستان کراچی کے اندر حقیقی اور الطافی گروپوں نے لکھی سانحہ پکا قلعہ کی داستان اس سے کم لگتی ہے .. حیدرآباد میں تو ٢٠٠ لوگ شہید کے گئے .. یہاں نسلیں اجاڑ دی گئیں آپس کی لڑائی میں .. ایک دوسرے کے گھروں میں گھس گھس کر خاندان کے خاندان ختم کر دے گئے ..مارنے والا بھی مہاجر مرنے والا بھی مہاجر .. حقیقی والوں نے بھی اسی گنگا میں ہاتھ دھو رکھے ہیں جس طرح الطافیوں نے دھوے .. پر ووٹ مظلوم بن کے مانگتے رہے .. بوری بند لاشوں کے تحفے پولیس سٹیشن سے نہیں آتے تھے بھائی .. زیادہ پرانی بات نہیں .. سب جانتے ہیں ان گٹکا کھاؤ لونڈوں نے کن کن لوگوں کا خون پیا ….. ٹارچر سیل کس کس کے نکلے یہ ڈھکی چپھی بات نہیں … تاجروں کو اغوا کر کر کے بھتے ہنڈی کے کے طور پر کہاں کہاں جاتے رہے بھائی وہ باتیں بتاؤں جو کسی کو پتا نہیں ہوں .یہاں پر کون کتنا حاجی ہے یہ سب کو پتہ ہے .. ریاست نے اور سندھی قوم پرستوں نے اتنا ظلم مہاجروں پر نہیں کیا جتنا ایم کیو ایم نے اپنے لیڈر کی چودھراہٹ قائم کرنے کے لئے اپنے اردو بولنے والوں پر کیا خیر روزے کیوجہ سے بحث کو یہیں ختم کرتے ہیں .. ظلم ہر کسی نے ہر کسی پر کیا ..مگر اقتدار کے مزے لوٹ کر بھی اس شہر کے لئے جو جماعت کچھ نہ کر سکی اس جماعت سے وابستہ ہر بندے سے پوچھنا یہ حق ہے کہ کیوں ایسا ہوا.. باقی ملحدوں کی محبت کی اور ان کی مثالیں کم از کم مجھ سے کسی بحث میں مت دیا کریں .. ان کی اوقات اور ان سے محبت کرنے والوں کی اوقات میرے نزدیک گلی کے بھونکنے والے کتوں سے زیادہ نہیں ..اور میں اس قبیلے کے کسی ٹٹ پونجئے کی کسی پوسٹ کو اس قابل نہیں سمجھتا کہ اس کا جواب دیا جائے .. اپنا خیال رکھیے گا

نا کرو یار غصہ کر جائے گا. صحافیوں کے تجزیوں کو گولی مارو ان کے ایک عظیم نے رو رو کر الطاف حسین کے بارے میں کیا بولا؟ مجھے لگتا ہے ناظم صاحب خفیہ جماعتی تھی.

یہ لکھے پڑھے جاہل ہے ان کو سمجھنا کچھ نہیں ورنہ اتنا رسوا نا ہوتے. اس دن بھی موصوف نے ایم کیو ایم کا جلسہ شیئر کیا تھا اس میں بھی مہاجر مہاجر کے نعرے لگے ان کا سارہ اثاثہ ہی یہی ہے. ہر حکومت کا حصہ رہنے کے باوجود کراچی بد سے بدتر ہوتا گیا.

ان کا دارومدار ان لنگڑوں،سرپھٹو اور کان کٹو پر تھا یہیں ان کی اصلیت ہے.

ان سر پھٹو کو ایک دو لاتیں پڑی تو پھر اس کے بعد رینجرز کا بندہ جس گلی سے جاتا  تو ایم کیو ایم والے رینجر زندہ باد تھانیدار پائندہ باد کے نعرے لگاتے.

رینجر غلط سمجھی تھی یہ لوگ جیب کترے ہے  کیونکہ جیب کترہ ہی پکڑے جانے پر پاوں پکڑ لیتا ہے

  • This reply was modified 3 days, 21 hours ago by  Haidar asmari.

Navigation