خدا ، مذہب، مکالمہ،

Home Forums Hyde Park / گوشہ لفنگاں خدا ، مذہب، مکالمہ، خدا ، مذہب، مکالمہ،

#127
Zinda Rood
Participant
Offline
  • Advanced
  • Threads: 8
  • Posts: 800
  • Total Posts: 808
  • Join Date:
    3 Apr, 2018
  • Location: NorthPole

Re: خدا ، مذہب، مکالمہ،

جنہوں نے تو پکی پکائی کھانی ہوتی ہے یعنی دوسروں کی فکر کا پھل کھانا ہوتا ہے وہ ٹھنڈ پروگرام کے پیروکار ہو تے ہیں اور کہانیاں گھڑنا تو ایک طرف، کہانیوں کی افادیت کو تسلیم کرنا بھی ان کی کوئی مجبوری نہیں ہوتی، ہاں مگر جن کی زندگی رک جاتی ہے، جن کے دل میں دردمندی اور اخلاص ہوتا ہے، صرف اپنے لئے ہی نہیں، تمام تخلیق کیلئے۔ نشان زد جملے کو چھوڑ کر آپ نے ایک مناسب بات لکھی لیکن اپ کے آخری جملے نے میرے پہلے پیرا کو دعوت دی اور وقت ضائع کیا، معلوم نہیں کب انکھیں پھاڑ دینے والی یہ حقیقت آپ پر طلوع ہو گی کہ میرے اپ کے درمیان ان بچگانہ باتوں کی کوئی جگہ نہیں ہے خیر ہم آپ کی اس بات پر متفق ہو جاتے ہیں کہ ہاں زیادہ امکان اسی بات کا ہے کہ مادے اور زندگی کو کسی نے تخلیق کیا ہے اب “ہو گا” اور “ہے” کو وجہ تنازع نہ بنائیے گا کیونکہ تخلیق ہے اور ہم ہر سانس اس کا تجربہ کرتے ہیں تو پھر کیا خیال ہے خالق نے (زیادہ امکان والی) تخلیق کی کوئی پروگرامنگ کی، اسے کوئی پروگرام دیا، اس کے ساتھ رابطہ رکھنے کا کوئی ذریعہ، کوئی دروازہ کھلا رکھا یا بس تخلیق کر کے ہاتھ دھو کر بیٹھ گیا؟؟

ہے اور ہوگا میں بہت فرق ہے جناب، امکان سے یقین تک کا سفر اتنا آسان نہیں، مجھے معلوم ہے آپ بحث کو کس جانب کھینچ  کر لے جانا چاہتے ہیں،  چلیے آپ کے مبینہ خالق پر تھوڑی سی بات کرلیتے ہیں۔ 

آپ کے ذہن میں مبینہ خالق کے بارے میں وہی سوال کیوں اٹھتے ہیں جن سے ظاہر ہو کہ وہ کوئی انسانوں کی طرح کی ہستی ہے، غالباً آپ کے شعور سے لے کر لاشعور تک میں بسے مذہبی خدا کی پرچھائی ہر جگہ کارفرما رہتی ہے۔ آپ کے ذہن میں یہ سوال کیوں نہیں اٹھتا کہ ضروری تو نہیں کہ وہ مبینہ خالق کوئی شخصی چیز ہو، وہ غیر شخصی بھی تو ہوسکتی ہے، وہ انرجی بھی تو ہوسکتی ہے، یا اگر آپ اس کو کوئی شخصی چیز ماننے پر ہی مصر ہیں تو اس کے لئے مذکر کا صیغہ ہی کیوں استعمال کرتے ہیں، وہ کوئی خاتون بھی تو ہوسکتی ہے۔۔۔؟؟

Navigation